Home » کالم » احتساب عدالت کے متعلقہ جج نے مبینہ ویڈیو کو مسترد کردیا
adaria

احتساب عدالت کے متعلقہ جج نے مبینہ ویڈیو کو مسترد کردیا

مریم نواز کی جانب سے جاری کی گئی مبینہ ویڈیو کو متعلقہ جج نے دوٹو ک انداز میں مستر د کرتے ہوئے اس کو جعلی قراردیدیا ہے جبکہ مریم نواز یہ کہتی ہیں کہ ویڈیو کی تردید کرکے جج نے اس کی تصدیق کردی ہے ۔ حکومت کا کہنا ہے کہ وہ فرانزک آڈٹ کرائے گی اور اس حوالے سے تحقیقات بھی خود کرے گی جبکہ پیپلزپارٹی اور جماعت اسلامی نے اس حوالے سے عدالتی کمیشن بنانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ ن لیگ بھی فرانزک آڈٹ کیلئے تیار ہے جبکہ وہ کہتی ہے جب عدالت میں ویڈیو پیش کی جائے گی تو اس کے ساتھ مزید ثبوت بھی لف کردئیے جائیں گے ۔ ویڈیو جاری کرکے ن لیگ نے عدلیہ پر ایک حملہ کیا ہے جبکہ ویڈیو پیش کرنے کا یہ مناسب فورم بھی نہیں تھا ۔ اگر ایسا کوئی مسئلہ تھا تو عدالت میں جاکر ثبوتوں کے ہمراہ پیش کی جانی چاہیے تھی جبکہ پبلک فورم پر یہ اقدام اٹھا کر ملکی سیاست اور اداروں کو پراگندہ کرنے کی ناکام کوشش کی گئی ہے ۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت نمبر دو کے جج محمد ارشد ملک نے گزشتہ روز پاکستان مسلم لیگ (ن)کی نائب صدر مریم نواز شریف کے جانب سے جاری ویڈیو کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجھ پر بطور جج بلواسطہ یا بلاواسطہ کوئی دباءو نہیں تھا ۔ نواز شریف کیخلاف مقدمات کی سماعت کے دوران مجھے بارہا انکے نمائندوں کی طرف سے نہ صرف رشوت کی پیشکش کی گئی دباءو ڈالا گیا اور تعاون نہ کرنے کی صورت میں سنگین نتاءج کی دھمکیاں بھی دی گئیں جن کو میں نے سختی سے رد کرتے ہوئے حق پرقائم رہنے کا عزم کیا اورفیصلہ قانون کے مطابق کیا ، فیصلہ دباءو یا لالچ میں دیتا تو ایک کیس میں سزا اور دوسرے میں بری نہ کرتا، مختلف مواقع پر ہوئی گفتگو کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا، ناصربٹ اوراسکے بھائی سے پرانی شناسائی ہے عرصہ دراز سے کئی بارملتے رہے، خدا کو حاضر ناظر جان کر فیصلے کئے، الزامات جھوٹے، مریم نوازکی پریس کانفرنس فیصلوں کو متنازع بنانے اورسیاسی فوائد حاصل کرنے کیلئے تھی، ویڈیو جعلی اور جھوٹی ہے ملوث افراد کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے ۔ اپنے چیمبر سے جاری ویڈیو کے حوالے سے اپنے وضاحتی بیان میں کہا کہ مجھ پر سنگین الزامات لگاکر میرے ادارے، میری ذات اور میرے خاندان کی ساکھ کو متاثر کرنے کی سازش کی گئی ہے ۔ یہ پریس کانفرنس محض میرے فیصلوں کو متنازع بنانے اور سیاسی فوائد حاصل کرنے کیلئے کی گئی ہے، اس میں دکھائی گئی ویڈیو جھوٹی، جعلی اور مفروضی ہیں ، لہذا اس میں ملوث افراد کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جانی چاہئے ۔ دوسری جانب وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ حکومت نے آڈیواورویڈیوکا فرانزک ٹیسٹ کرانے کافیصلہ کیاہے،آڈیو،ویڈیوکی تحقیقات حکومت کرے گی، چورمچائے شورکے بیانیہ کونہیں چلنے دیں گے،روایتی ہتھکنڈے استعمال کرتے ہوئے معزز جج پرانگلیاں اٹھائی گئیں ،کسی بھی جج کو اسکینڈلائز کرنے پرقانونی کارروائی ہوسکتی ہے، آڈیو،ویڈیوکے مشکوک کردارکوبے نقاب کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے،بے نامی راجکماری کاکرداربھی سامنے لانا ضروری ہے ۔ مریم صفدر آج ہاتھ اٹھا اٹھا کر بے گناہی ثابت کر رہی ہیں ، لیکن عدالت میں اپنی بے گناہی ثابت نہیں کر سکیں ، آپ سرخرو ہونا چاہتے ہیں تو لائیں اپنے بھائیوں اور اپنے رشتہ داروں کو ، مریم نوا زشریف نے ویڈیو آڈیو ٹیپ کا ڈرامہ رچایا ہے ، وہ ڈرامہ بھر پور طریقے سے فلاپ ہو گیا ۔ ادھر وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ آڈیو، ویڈیوکی تحقیقات حکومت کرے گی، چورمچائے شورکے بیانیہ کونہیں چلنے دیں گے،روایتی ہتھکنڈے استعمال کرتے ہوئے معزز جج پرانگلیاں اٹھائی گئیں ،کسی بھی جج کو اسکینڈلائز کرنے پرقانونی کارروائی ہوسکتی ہے،آڈیو،ویڈیوکے مشکوک کردارکو بے نقاب کرنا حکومت کی ذمے داری ہے، اپوزیشن کی رہبر کمیٹی نہیں رہزن کمیٹی ہے ،سیاست کے12ویں کھلاڑی کی خواہش پر اے پی سی کرائی گئی،ان تلوں میں تیل نہیں ،یہ تنکے کا سہاراتلاش کررہے ہیں ،یہ لانگ مارچ یا ڈبل ٹرپل مارچ کریں ،کسی اقدام سے دلچسپی نہیں ۔ ایک قابل احترام جج پر انگلیاں اٹھائی گئیں ، آڈیو ویڈیو ٹیپ بنانے اور چلانے والے کردار سند یافتہ جھوٹے ہیں ۔ حکومت مریم صفدرکے الزامات کو منطقی انجام تک پہنچائے گی ۔ یہ بات انتہائی اہم ہے کہ اگر یہ ویڈیو محض اسکینڈلائز ہے تو اس کے کرداروں کو منطقی انجام تک پہنچنا ضروری ہے کیونکہ یہ ایک ایسے اہم ترین ادارے سے متعلق ہے کہ جہاں پر انصاف فراہم ہوتا ہے اور اس پر انگشت نمائی کرنا کوئی چھوٹی بات نہیں ۔

امریکہ طالبان مذاکرات ، مثبت پیشرفت کا امکان

قطر کے دارالحکومت دوحہ میں افغانستان میں 18 سال سے جاری جنگ کے خاتمے کیلئے افغان اور طالبان وفود کے مذاکرات جاری ہیں ۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق افغان اور طالبان نمائندوں کے اجلاس میں 70 افراد شامل ہیں ۔ کانفرنس روم میں داخل ہونے سے قبل تمام افراد کے موبائل فونز انتظامیہ کے حوالے کئے گئے ۔ جرمنی کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان اور پاکستان مارکس پوٹزل نے کہا یہاں کچھ روشن خیال ذہن موجود ہیں جو افغان معاشرے کے ایک حصے کی نمائندگی کررہے ہیں ۔ آپ سب کے پاس پر تشدد کشیدگی کو ایک پر امن مباحثے میں بدلنے کے طریقے تلاش کرنے کا ایک منفرد موقع اور ذمہ داری ہوگی ۔ طالبان کے دوحہ آفس کے ترجمان سہیل شاہین سمیت وفد نے مذاکرات سے قبل کانفرنس روم میں اپنی نشستوں پر پہنچے ۔ قطری وزات خارجہ کے نمائندہ برائے انسداد دہشت گردی مطلق القحطانی نے کہا کہ ہم تمام افغان بھائیوں اور بہنوں کی دوحہ میں ملاقات پر بہت خوش ہیں ۔ افغان اور طالبان وفود کو ثالثیوں کی موجودگی میں مذاکرات کے لیے تنہا چھوڑنے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم افغانستان کے مستقبل کی راہ کا تعین کرناچاہتے ہیں ۔ سابق صدر حامد کرزئی کی جانب سے طالبان کے ساتھ بات چیت کےلیے تشکیل کردہ اعلیٰ امن کونسل کی رکن اصیلہ وردک نے بتایا کہ ہر کوئی جنگ بندی پر غور کررہا ہے ۔ اصیلہ وردک نے مزید کہا کہ عباس استانکزئی نے خواتین کے کردار، معاشی ترقی اور اقلیتوں کے کردار پر طالبان کے موقف سے متعلق بات چیت کی ۔

وزیراعظم کا دورہ امریکہ، تعلقات کی نئی راہیں کھلیں گی

وزیراعظم پاکستان کا 22 جولائی کو امریکہ کا دورہ انتہائی اہمیت کا حامل ہوگا اس دورے سے پاک امریکہ تعلقات کی نئی راہیں کھلیں گی ۔ کیونکہ دونوں ممالک ایک دوسرے کیلئے لازم و ملزوم ہیں ، اگر دنیا میں امریکہ کی اہمیت ہے تو پاکستان بھی 22کروڑ لوگوں پر مشتمل ایک ایٹمی قوت ہے ۔ امریکہ بھی پاکستان کی اہمیت سے بخوبی واقف ہے کہ خطے میں اگر اس نے چلنا ہے تو پاکستان کی مدد کے بغیر ناممکن ہے ۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ کشمیر کے بغیر بھارت سے کسی صورت بات نہیں ہوگی ۔ پاکستان نے ہمیشہ مسئلہ کشمیر کو اٹھایا چاہے کوئی بھی فورم ہو پاکستانیوں اور کشمیریوں کے دل ایک ساتھ دھڑکتیں ہیں ، بھارت جتنے مرضی ظلم کرلے وہ کشمیریوں کو دبا نہیں سکتا اور ان کی آزادی کی نوید انتہائی قریب ہے، بھارت کو بھی یہ نوشتہ دیوار پڑھ لینا چاہیے ۔

About Admin

Google Analytics Alternative