Home » کالم » اداریہ » اقوام متحدہ بھارتی افواج کے مظالم رکوائے
adaria

اقوام متحدہ بھارتی افواج کے مظالم رکوائے

مقبوضہ کشمیر میں لوک سبھا کے نام نہاد الیکشن کے خلاف احتجاج کرنے والے پرامن مظاہرین پر بھارتی فوج کی اندھا د ھند فائرنگ سے آٹھ کشمیری شہید اور 100 زخمی ہوگئے۔ بھارتی بربریت اور سفاکی کا سلسلہ تواتر سے جاری ہے جس کے خلاف اُمت مسلمہ سراپا احتجاج ہے لیکن اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل جیسے ادارے کبوتر کی طرح آنکھیں بند کیے دکھائی دیتے ہیں جو کہ لمحہ فکریہ ہے۔ بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والوں میں نوجوان محمد عباس نثار احمد میر، شبیر احمد بٹ،عادل واسع اور فیضان ڈار وغیرہ شامل ہیں۔اس کے علاوہ مظاہرین کو روکنے کے لیے بھارتی فوج کی جانب سے چھرے والی بندوق کا بھی استعمال کیا گیا جس کے نتیجے میں خواتین سمیت متعدد نوجوان زخمی ہو گئے۔پاکستان نے مقبوضہ کشمیرمیں نہتے کشمیریوں کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری اور انسانی حقوق کی تنظیموں سے مقبوضہ وادی میں بھارتی فوج کے مظالم کو فوری رکوانے کا مطالبہ کیا ہے۔بڈگام میں کئی مقامات پر مشتعل نوجوانوں نے پولنگ مراکز اور پولنگ عملہ کی گاڑیوں پر پتھراؤ کیا۔ کئی مقامات پر سکیورٹی فورسز نے مظاہرین پر فائرنگ کی جس کے نتیجہ میں درجنوں افراد زخمی ہوگئے۔ لوگوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے ہاتھوں کشمیریوں کے قتل عام کی شدید مذمت کی ہے ۔حالیہ ہفتوں کے دوران مظاہرین پر فائرنگ کے واقعات میں نوجوانوں کی شہادتوں کے باعث لوگوں میں شدید غم و غصہ ہے اور پولنگ مراکز میں خال خال ووٹرز ہی دیکھے جا رہے ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ سال حزب المجاہدین کے نوجوان کمانڈر برہان وانی کو شہید کیے جانے کے بعد سے حالات کشیدہ ہیں۔برہان وانی کے بعد وادی میں احتجاج کے دوران 84 سے زائد افرادکو شہید کردیا گیا جبکہ بھارتی فوج کی جانب سے عوام کے ہجوم پر شاٹ گن اور فائرنگ سے 12 ہزار سے زائد افراد زخمی ہوچکے ہیں۔دوسری جانب پاکستان نے بھارت کی جانب سے کشمیریوں کی مسلسل نسل کشی پرمذمت کرتے ہوئے کشمیریوں کی حق خود ارادیت کے لئے تحریک کی اخلاقی ، سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھنے کا اعادہ کیا ۔ بھارت کی جانب سے کشمیریوں کی نسل کشی قابل مذمت ہے ۔ اقوام متحدہ صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے مقبوضہ وادی میں قتل عام روکے ۔ بھا رتی فوج کی سفاکی کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے بھارت برسوں سے سلامتی کونسل کی قراردادوں کو دیدہ دانستہ نظر انداز کرتا چلا آرہا ہے اور کشمیریوں پر مظالم ڈھائے دکھائی دیتا ہے۔ پاکستان نے کئی بار عالمی اداروں کی توجہ ان مظالم کی طرف مبذول کروائی لیکن کوئی پیشرفت نہ ہوئی ۔ پاک بھارت تنازعات کا واحد حل مسئلہ کشمیر کا ادراک ہے جب تک مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوگا خطے میں پائیدار امن قائم نہیں ہوسکتا۔ اقوام متحدہ کو چاہیے کہ وہ بھارت پر اپنا دباؤ بڑھائے اور بھارتی افواج کی جارحیت کو روکنے کے سلسلے میں اپنا کردار ادا کرے ۔ مسئلہ کشمیر کا حل ہی خطے کے پائیدار امن کا ضامن ہے۔ آخر کب تک اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل جیسے ادارے بھارتی بربریت پر یوں ہی دم سادھیں دکھائی دیتے رہیں گے۔ دنیا کے منصفوں کو آگے آنا ہوگا اورکشمیریوں کو حق خودارادیت دلوانے میں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔مقبوضہ کشمیر میں بڑھتے بھارتی مظالم سلامتی کونسل کیلئے لمحہ فکریہ ہیں۔ کئی سالوں سے بھارت کی جارحیت اور بربریت کابازارگرم ہے اور انسانی حقوق کی کھلے بندوں خلاف ورزی کی جارہی ہے۔پاکستان ایک پرامن ملک ہے اورچاہتا ہے کہ مسئلہ کشمیر سمیت تمام متازع مسائل کاحل مذاکرات کیلئے ذریعے نکالاجائے۔
اسلام امن کا دین اور سلامتی کا درس دیتا ہے
امام کعبہ شیخ صالح محمد بن طالب نے کہا ہے کہ اسلام امن اور سلامتی کا دین ہے ‘ اسلام کا تعلق کسی دہشت گردی یا فرقہ واریت سے نہیں ‘ دہشت گردی ملکوں کی معیشت کو مفلوج کرتی ہے ‘ مدارس لوگوں کو دہشت گردی سے دور رکھنے کا در س دے رہے ہیں ‘ دہشت گردی کے نظریات کو رد کرتے ہیں ‘ ہمیں متحد ہو کر مقامات مقدسہ کی حفاظت کرنی چاہیے ‘ امت بہت مشکل وقت سے گزر رہی ہے ‘ پورے عالم کے مسلمانوں کو پاکستان سے امیدیں وابستہ ہیں ‘ پاکستان امت مسلمہ کی حفاظت کیلئے بھرپور کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ قرآن پاک کی آیت کا یہ پیغام ہے کہ آپس میں مت الجھو ‘ اسلام امن اور سلامتی کا دین ہے۔ مدارس لوگوں کو دہشت گردی سے دور رہنے کادرس دے رہے ہیں۔ دنیا بھر میں پھیلے مدارس خیر کا سبب ہیں۔ دہشت گردی ملکوں کی معیشت کو مفلوج کرتی ہے۔ ہمیں متحد ہو کر مقامات مقدسہ کی حفاظت کرنی چاہیے۔دہشت گردی کے نظریات کو رد کرتے ہیں۔ مسلمان دہشت گردی کے خلاف متحد ہیں۔ حکومت پاکستان کے دفاع حرمین کیلئے غیر متزلزل موقف پر مشکور ہیں۔ یہ امت بہت مشکل وقت سے گزر رہی ہے۔ علم کے مسلمانوں کی پاکستان سے امیدیں وابستہ ہیں۔ پاکستان امت کی حفاظت کیلئے بھرپور کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ امام کعبہ نے جے یو آئی کے اجتماع کے اخر میں دعا بھی کرائی۔ امام کعبہ نے بجا فرمایا ہے مسلمانوں کو دہشت گردی کیخلاف متحد ہوجانا چاہیے آپس کی نااتفاقیاں ختم کرکے اتفاق و اتحاد کا عملی مظاہرہ کرنا چاہیے ۔پاکستان امت مسلمہ کی حفاظت کی بھرپور صلاحیت کا حامل ہے جس کا اعتراف امام کعبہ نے اپنے خطاب میں فرمایا۔ مسلم ممالک کا اتحاد وقت کی ضرورت ہے اور اسی کی بدولت مسلمانوں کے مسائل حل ہوسکتے ہیں ورنہ مسلمانوں کا شیرازہ یوں ہی بکھرتا دکھائی دے گا۔
آپریشن ردالفساد،پانچ دہشت گرد ہلاک
آپریشن ردالفساد کے تحت پنجاب رینجرز نے کاروائیاں کرتے ہوئے 5دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ۔ مارے جانے والے 5دہشتگردوں میں سے 2 کی شناخت ہوگئی ۔ شناخت شدگان میں 2انتہائی مطلوب دہشتگرد ذوالفقار عرف ذولفی اورپیر بخش شامل ہیں ۔ مطلوب دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تنظیم بی ایل اے ہربیارمری گروپ سے تھا۔ ذولفی 7 اور پیر بخش15مقدمات میں مطلوب تھا ۔ پیر بخش کے سر کی قیمت 20لاکھ روپے مقرر تھی ۔ آپریشن میں شہید سپاہی کامران کی ملتان گریژن میں نمازجنازہ ادا کردی گئی جس میں کورکمانڈر ملتان ، ڈی جی رینجرز پنجاب اور سول وعسکری حکام نے شرکت کی۔ آپریشن ردالفسادڈیرہ غا زی خاں میں شہید ہونیوالے اہلکارکی نمازجنازہ جڑانوالہ میں ادا کردی پورے فوجی اعزاز کے ساتھ آ با ئی قبرستان میں سپرد خاک ۔ آپریشن ردالفساد جس تسلسل سے جاری ہے اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ پاک سرزمین سے دہشت گردی کا ناسور ختم ہو جائے گا اور یہ ملک امن کا گہوارہ بن پائے گا۔ آپریشن ضرب عضب کے تسلسل کو حالیہ آپریشن کے ذریعے جاری رکھنا اس امر کا عکاس ہے کہ عسکری قیادت دہشت گردی کے خاتمے کیلئے پرعزم ہے اور جب تک دہشت گرد ختم نہیں ہوتے آپریشن جاری رہے گا۔ آپریشن ردالفساد کے اہداف پورے کرنے کیلئے سیاسی و عسکری قیادت کا ایک پیج پر ہونا ضروری ہے۔ پاک فوج کی قربانیوں کے صلے میں دہشت گردوں کے کئی ٹھکانے تباہ کردئیے گئے ہیں اور کئی علاقے دہشت گردوں سے واگزار کروائے جاچکے ہیں اور امن کی فضا لوٹتی دکھائی دے رہی ہے دہشت گردی نے پاکستان کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے جس کے ازالے کیلئے آپریشن ناگزیر تھا۔ دہشت گرد ملک و قوم کے دشمن ہیں ان کو منطقی انجام تک پہنچا کر ہی ملک میں امن قائم کیا جاسکتا ہے۔

About Admin

Google Analytics Alternative