Home » کالم » امیر قطر کا دورہ پاکستان، بھاری سرمایہ کاری ،پاکستانی معیشت کیلئے سود مند
adaria

امیر قطر کا دورہ پاکستان، بھاری سرمایہ کاری ،پاکستانی معیشت کیلئے سود مند

امیر قطر دو دن کا دورہ مکمل کرنے کے بعد واپس چلے گئے، ان کے دورے کے دوران جو معاہدے ہوئے اس کے تحت نوجوانوں اور ہنر مند پاکستانیوں کیلئے قطر کے دروازے کھلیں گے ۔ دوطرفہ تجارت کو فروغ ملے گا، موجودہ صورتحال میں دونوں ممالک کے درمیان اس قسم کے معاہدے ہونا انتہائی ضروری تھے ۔ جب قطر میں پاکستانیوں کیلئے روزگار کے مواقع کھلیں گے تو یقینی طورپر اس کے بدلے میں پاکستان میں زر مبادلہ آئے گا، معاشی صورتحال بہتر ہوگی، دونوں ممالک کے مابین مختلف شعبوں میں تعاون کیلئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کیے گئے، امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی کے دورہ پاکستان کے دوران پاکستان اور قطر کے درمیان شراکت داری کو مزید مضبوط کرنے کا عزم بھی دہرایا گیا ۔ امیر قطر کو صدر مملکت عارف علوی نے ایوان صدر میں منعقدہ پروقار تقریب کے دوران اعلی ٰ ترین سول ایوارڈ ’’ نشان پاکستان ‘‘ سے بھی نوازا ۔ یہ ایوارڈ شیخ تمیم بن حمد الثانی کو باہمی تعلقات کو مزید بلندیوں پر لے جانے کے اعتراف میں حکومت پاکستان کی جانب سے عطا کیا گیا ۔ وزیراعظم اور امیر قطر کے مابین ون ٹو ون اور وفود کی سطح پر بھی ملاقات ہوئی ۔ ملاقات کے بعد اعلامیہ جاری کیا گیا جس کے تحت پاکستان اور قطر نے مضبوط سیاسی و اقتصادی شراکت داری کے فروغ کا عزم کرنے کے علاوہ دوطرفہ تجارت، زراعت اور خوراک کے شعبے میں تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ۔ ایل این جی اور ایل پی جی کے شعبے میں تعاون پر بھی اتفاق کیا گیا ۔ مذاکرات میں توانائی اور سیاحت کے شعبے میں سرمایہ کاری، قطر میں پاکستانیوں کے لئے روزگار کے مواقع بڑھانے پر بھی بات چیت ہوئی ۔ اعلامیے کے مطابق ہوا بازی، سمندری امور، اعلیٰ تعلیم اور دفاعی امور میں تعاون بڑھانے پر بھی گفتگو کی گئی ۔ دونوں ممالک کے مابین پہلا ایم او یو تجارت اور سیاحت اور مشترکہ ورکنگ گروپس کی تشکیل سے متعلق کیا گیا ۔ نیز منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کیلئے خفیہ معلومات کے تبادلے پر بھی اتفاق کیا گیا ۔ قبل ازیں وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے دوران شیخ تمیم نے قطر کی فٹ بال ٹیم کی شرٹ کا تحفہ دیا اور وزیراعظم نے انہیں اپنے دستخط والا بیٹ دیا ۔ اعلامیہ میں بتایا گیا کہ فیفا ورلڈ کپ قطر کو اپنی برآمدات پاکستان کیلئے بڑھانے کا نادر موقع فراہم کرے گا جبکہ پاکستان کی فٹ بال سازی کو بھی فروغ دیا جائے گا ۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کے دوران سعودی عرب کے بعد قطر کے امیر کا یہ دورہ سرمایہ کاری کے حوالے سے انتہائی اہمیت کا حامل ہے اس سے پاکستان کو درپیش معاشی مشکل صورتحال سے نکلنے میں مدد ملے گی ۔ دونو ں ممالک کے درمیان سیاسی و اقتصادی کی شراکت داری کے مزید فروغ کیلئے تعاون بڑھانے کے عزم کا اظہار کیا ۔ قائدین میں جن تجاویز پر اتفاق ہوا ہے انہیں ٹھوس اور عملی شکل دینے کیلئے متعلقہ وزراء اپنے متعلقہ شعبوں میں مذاکرات کے عمل کوآگے بڑھائیں گے ۔ وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی کے دورہ پاکستان سے دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں بھائی چارے پر مبنی تعلقات کو مزید فروغ دینے میں مدد ملے گی ۔

وزیراعظم کو سلیکٹڈ کہنے پر پابندی

قومی اسمبلی کے اجلاس میں حکومت اوراپوزیشن کے مابین ابھی تک پنجہ آزمائی ہورہی ہے ۔ گزشتہ روز اس وقت ڈپٹی سپیکر انتہائی غصے میں نظر آئے جب اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم کو سلیکٹڈ کہا گیا انہوں نے اس پرباقاعدہ رولنگ دیدی کہ یہاں جو ممبر آتا ہے وہ ووٹ لیکر آتا ہے لہذا اس قسم کے الفاظ استعمال نہ کیے جائیں ۔ ڈپٹی سپیکر کی یہ بات بالکل درست ہے ہم تو یہ کہتے ہیں کہ ابھی تک جو ہنگامہ آرائی ہورہی ہے اس کو حل کرنے کیلئے بھی باقاعدہ رولنگ صادر فرما دی جائے تاکہ کم ازکم ایوان میں سکون تو آسکے ۔ قومی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری نے ایوان میں وزیراعظم عمران خان کے لیے سلیکٹڈ کا لفظ استعمال کرنے پر پابندی عائد کردی ۔ ڈپٹی اسپیکر نے وفاقی وزیر توانائی عمرایوب کی تحریک استحقاق پر رولنگ دیتے ہوئے کہاکہ جو بھی اس ہاوس کا ممبر ہے وہ ووٹ لے کر آیا ہے انہوں نے ہدایت کی کہ آئندہ کوئی بھی یہ لفظ ایوان میں استعمال نہ کرے ۔ ن لیگ کے احسن اقبال نے کہاکہ بجٹ آئی ایم ایف کی خوشنودی حاصل کرنے کیلئے بنایا گیا جس کا غریب آدمی سے کوئی تعلق نہیں ، اپنے5سال میں 10ہزار ارب قرضے کا حساب دینے کیلئے تیار ہیں حکومت بتائے انہوں نے ایک سال میں 5 ہزار ارب کا قرض لے کر کہاں لگایابھینسیں اور گاڑیاں بیچ کر سادگی کا ڈرامہ رچایا گیا، ہماری پگڑیاں اچھالی گئیں تو ملکی کی گلی محلے میں آپکی پگڑیاں اچھالیں گے وفاقی وزیر خسروبختیار کا کہنا تھاکہ ن لیگ کے دور میں ملک کی معیشت میں 12 کھرب اور قرضوں کی مد 13 کھرب کا اضافہ ہوا،ایک کھرب کہاں گیادنیا ترقی کر رہی تھی ،(ن)لیگ کی ساری توجہ صرف موٹرویز پر تھی،ملک کو میثاق معیشت کی ضرورت ہے حکومت اپنے مالیاتی اہداف ضرور حاصل کرےگی خسارہ کم کرنے کیلئے عالمی اداروں کے پاس جانا پڑا ۔ پیپلز پارٹی کے راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ حکومت کے کسی وزیر یا رکن نے بجٹ کے خدوخال پر بات نہیں کی بار بار پچھلی حکومتوں پر تنقید کا سہارہ لے کر کچھ نہ کرنے کا جواز پیش کیا جا رہا ہے ۔ حکومت تنقید ضرور کرے لیکن تضحیک نہ کرے آج حالات بہت خوفناک ہیں حکومت نے ہر طبقہ میں خوف پیداکردیا ہے ، احتساب ضرورکریں مگر کاروباری لوگوں ، انڈسٹری کا اعتماد بحال کریں ۔ وفاقی وزیر ترقی و منصوبہ بندی خسرو بختیار نے کہا کہ ملک کو اس وقت میثاق معیشت کی ضرورت ہے ، پاکستان کا جی ڈی پی ٹیکس ریشو 11فیصد ہے جو خطے میں سب سے کم ہے،ان حالات میں کوئی بھی ملک ترقی نہیں کر سکتا ، یہ ملک بغیر ٹیکس کے چل ہی نہیں سکتا ، حکومت کا پانچ سال میں جی ڈی پی ٹو ٹیکس ریشو 15فیصد کا ہدف ہے ، پانچ سال کے اندر ایک کروڑ نوکریاں دیں گے ۔

کرکٹ ورلڈ کپ میں پاکستانی ٹیم کی واپسی

پاکستان نے ورلڈ کپ کے ایک اہم میچ میں جنوبی افریقہ کو شکست دیدی جس کے بعد اب پاکستان کے ورلڈ کپ میں سیمی فائنل میں پہنچنے کے امکانات روشن ہوگئے ہیں ۔ تاہم پاکستان کو اگلے میچوں میں نیوزی لینڈ اور بنگلہ دیش کو شکست دینا ضروری ہوگیا ہے ۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کی ورلڈ کپ میں مجموعی پرفارمنس اتنی خاص نہیں تاہم آنے والے میچوں میں ٹیم کو فیلڈنگ پر خصوصی توجہ دینا ہوگی ۔ جنوبی افریقہ کے میچ میں بھی پاکستان نے یقینی کیچز ڈراپ کیے گو کہ پاکستان میچ جیت گیا جس کے بعد ان غلطیوں کو فراموش کردیا گیا ۔ اگرپاکستان نے بقیہ میچز میں اعلیٰ فیلڈنگ کا مظاہرہ کیا تو کوئی وجہ نہیں کہ قومی ٹیم ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں مرحلے میں پہنچنے کے بعد فائنل میں بھی رسائی حاصل کرسکے ۔ پاکستان اور جنوبی افریقہ کے میچ کو دیکھنے کیلئے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور آئی ایس پی آر کے ترجمان بھی لارڈز کرکٹ اسٹیڈیم میں موجود تھے جہاں پاکستان نے تاریخی کامیابی حاصل کی، آرمی چیف نے کھلاڑیوں کو مبارکباد بھی دی ۔

About Admin

Google Analytics Alternative