85

اولمپک میڈل جیتنے والی ایرانی خاتون کھلاڑی نے بغاوت کا اعلان کردیا، ایرانی حکومت کو بڑا جھٹکا دے دیا

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) اولمپکس میں میڈل جیتنے والی واحد ایرانی خاتون کھلاڑی نے ہمیشہ کے لیے ایران چھوڑنے کا اعلان کر دیا۔ میل آن لائن کے مطابق کیمیا علی زادہ نے مارشل آرٹس میں ایران کے لیے کانسی کا میڈل جیتا تھا اور ایران کی واحد میڈل جیتنے والی خاتون کھلاڑی کا اعزاز اپنے نام کیا تھا۔ وہ ان دنوں یورپ میں موجود ہیں جہاں سے اپنے انسٹاگرام پر ایک پوسٹ کے ذریعے انہوں نے ہمیشہ کے لیے ایران چھوڑنے کا اعلان کیا ہے۔

کیمیا علی زادہ نے اپنی پوسٹ شروع کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ”مجھے ہیلو سے شروع کرنا چاہیے، گڈ بائے سے یا تعزیت سے؟ “ انہوں نے ایران کے سیاسی نظام کو منافقت، جھوٹ اور ناانصافی پر مبنی قرار دیتے ہوئے لکھا کہ ”میں نے زندگی میں مارشل آرٹس، سکیورٹی، خوشی اور صحت مندانہ زندگی کے سوا کچھ نہیں چاہا۔ میں ان کروڑوں خواتین میں سے ایک ہوں جو ایران میں جبر برداشت کر رہی ہیں اور سالوں سے ان کے ساتھ کھلواڑ کیا جا رہا ہے۔“

21سالہ کیمیا نے مزید لکھا کہ ”مجھے کیا پہننا ہے اور کیسے زندگی گزارنی ہے، یہ وہ لوگ مجھے بتاتے ہیں۔ میں جو کچھ بولتی تھی وہ ان لوگوں کے الفاظ ہوتے تھے جو میں دہرا دیتی تھی۔ ہم خواتین ان کے لیے کوئی اہمیت نہیں رکھتیں۔ مجھے یورپ میں کسی نے مدعو نہیں کیا۔ “ آخر میں ایرانی قوم کو مخاطب کرتے ہوئے کیمیا نے لکھا کہ ”پیارے ایرانی لوگو! میں جہاں بھی رہوں گی، ایران کی بیٹی بن کر رہوں گی۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں