Home » کالم » آئی اےم اےف کے ساتھ ڈیل ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ !
khalid-khan

آئی اےم اےف کے ساتھ ڈیل ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ !

پاکستان پیپلز پارٹی کے چےئرمین بلاول زرداری نے کہا ہے کہ ;34; اگر بےن الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی اےم اےف) کے ساتھ ڈےل کو پارلیمنٹ سے منظور نہ کراےا گےا تو اسے قبول نہیں کرےں گے ۔ پٹرول ، بجلی اور گےس کی قےمتوں سے مہنگائی ہوئی ۔ عوام مہنگائی کی سونامی میں ڈوب رہے ہےں ۔ مزدور، کسان اور بزرگ پنشنرز کا معاشی قتل ہورہا ہے ۔ پاکستانی عوام مہنگائی سے پرےشان ہیں ۔ ;34;ہمارے سےاستدان جمہورےت اور پارلیمنٹ کا گردان دھراتے رہتے ہیں ۔ جمہورےت اور پارلیمنٹ کی کامرانی کےلئے ہر شہری دعاگو ہے لیکن ےہ جمہورےت اور پارلیمنٹ عوام کے حقوق اور مفادات کےلئے ہونا چاہیے ۔ بلاول زرداری کی بات میں وزن ہے کہ آئی اےم اےف کے ساتھ ڈےل کو پارلیمنٹ سے منظور کروانا چاہیے ورنہ قبول نہیں کرےں گے ۔ حقےقت میں ہونا یہ چاہیے کہ اب تک جتنے بھی قرضےلیے گئے ہیں ،اگر وہ پارلیمنٹ سے منظور نہیں کیے گئے ہیں تو جس حکومت نےلیے ہیں ان حکمرانوں کے جائےداووں کو نےلام کرکے قرضے واپس کرنے چاہئیں ۔ ےہ بھی حقےقت ہے کہ کھربوں روپے قرضےلیے گئے لیکن عوام کی حالت میں کوئی بہتری نہیں آئی بلکہ لوگ دو وقت کے کھانے کےلئے ترس رہے ہیں ۔ حکمرانوں نے ہمیشہ ملک اور عوام کا نام استعمال کرکے قرضےلیے ہیں لیکن ان قرضوں سے ملک اورملت کو فائدہ نہیں پہنچا بلکہ حکمرانوں کے اثاثہ جات میں اضافہ ہوا ۔ آئی اےم اےف کے شرائط بھی قابل غور ہیں ۔ آئی اےم اےف توانائی کے ذراءع بجلی ، گےس اور پٹرولیم مصنوعات کی قےمتوں میں اضافے کے شرائط پر زور دےتے ہیں لیکن حقےقی بچت ےعنی آئی اےم اےف ےہ شرط کیوں پیش نہیں کرتا کہ وزےراعظم ، وزےراعلیٰ، چےئرمین اور دےگر بالا تفرےق سب عہدہداران اپنی تنخواہ کے علاوہ کوئی مراعات نہ لےں ۔ دراصل آئی اےم اےف اےسی شرائط پرزور دےتا ہے جس سے غرےب عوام مزےد غرےب ہو ۔ مہنگائی کا اثر صرف اور صرف غرےب عوام پر پڑتا ہے ۔ غربت میں اضافے سے جرائم میں اضافہ ہوتا ہے اور لوگوں کا سکون برباد ہوجاتا ہے ۔ عوام مہنگائی سے بے حد پرےشان ہے ۔ بلاشبہ عوام مہنگائی کی سونامی میں ڈوب رہے ہےں لیکن عمران خان طفل تسلیاں دے رہا ہے ۔ ;34;اےک لطےفہ ہے کہ کسی نے اےک پٹھان سے پوچھا کہ کتنی عمر ہے;238; تو اس نے جواب دےا کہ پچاس سال ۔ اس شخص نے دس سال بعد دوبارہ پٹھان سے پوچھا کہ کتنی عمر ہے;238; پٹھان نے پھر وہی جواب دےا کہ پچاس سال ۔ اس شخص نے پوچھا کہ خان صاحب ! دس سال پہلے بھی پچاس سال اور اب دس سال کے بعد بھی پچاس سال ۔ ۔ ۔ ;238; پٹھان نے جواب دےا کہ دراصل خان کی اےک بات ہوتی ہے ۔ ;34; پٹھان اپنی بات اور الفاظ پر قائم رہتے ہیں ۔ ہمارے محترم وزےراعظم عمران خان صاحب اپنی حکومت سے پہلے فرماتے تھے کہ خودکشی کرلوں گا لیکن آئی ایم اےف سے قرض نہیں لوں گا ،ملکوں سے بھیک نہیں مانگوں گا اور اس کے علاوہ بڑے بڑے دعوے کرتے تھے ۔ خودکشی حرام ہے ،اس لئے اب عمران خان صاحب خودکشی نہ کرےں لیکن اپنے نام کے ساتھ خان کا لاحقہ نہ لگائےں کیونکہ خان کی بات اےک ہوتی ہے اور پٹھان ےو ٹرن نہیں لیتا ۔ وزےراعظم عمران خان صاحب ! لوگوں کو آپ پر اعتماد اور بھروسہ ہے لیکن آپ کی ٹےم میں زےادہ تر وہ صاحبان ہیں جو پچھلی حکومتوں میں رہ چکے ہیں ۔ اگر ےہ اتنے محنتی اور قابل ہوتے تو پھر ان لوگوں نے مشرف اور زرداری دور میں ملک کےلئے بڑے بڑے کارنامے سرانجام کیوں نہیں دیے;238;عمران خان صاحب پی ٹی آئی کے پرانے اور منتخب ورکرز پر مشتمل ٹےم بناتے تو شاےد ان کو ےوٹرن نہ لےنے پڑتے اورقرضوں کی بھیک نہ مانگنی پڑتی ۔ پہلے قرضوں سے مسائل حل نہیں ہوئے اور اب مزےد قرضوں سے کونسے مسائل حل ہونگے;238; قرضوں سے مسائل پےدا ہوتے ہیں ، قرضوں سے مسائل حل نہیں ہوتے ۔ قرضے مسائل کا حل نہیں ہےں ۔ آپ کی ٹےم تگڑی ہوتی تو وہ کھبی بھی آپ کو آئی اےم اےف وغےرہ سے قرضوں کےلئے محتاج نہ کرتے ۔ پاکستان قدرتی وسائل سے مالامال ہے اور انسانی وسائل بہت زےادہ ہیں ۔ پاکستان کے پاس جو کچھ ہے ،وہ بہت سے دےگر ممالک کے پاس نہیں ہے ۔ پاکستان میں مسئلہ صرف ےہ ہے کہ ےہاں پر انصاف کا فقدان ہے ۔ کرتا کوئی ہے لیکن بھگتا کوئی اور ہے ۔ غرےب عوام نے ہمیشہ سے قربانےاں دےں لیکن اےلےٹ طبقے نے ہمےشہ مفادات حاصل کیے ہیں ۔ چونکہ فےصلہ سازی کا اختےار اےلےٹ طبقے کے پاس ہے ،وہ کھبی قربانی دےنے کی طرف نہیں جاتے بلکہ غرےب طبقے سے قربانی مانگتے رہتے ہیں ۔ بہرحال اب بھی وقت ہے ،سب کو سنوارنے اور بہتری کی طرف جانا چاہیے ۔ بہترےن منصوبوں سے ملک اور ملت کی پوزےشن بہتر ہوسکتی ہے ۔ گاڑےوں اور بھینسوں کے بےچنے پر اکتفا نہیں کرناچاہیے بلکہ ملک و ملت کی خاطرسب کو بالاتفرےق تنخواہ کے علاوہ سب مراعات کو نہیں لینا چاہیے ۔ وطن عزےز کے خاطر صدر اور وزےراعظم سے لیکر سب کو مفت پٹرول ، بجلی ،گےس ، ٹےلی فون سمےت تمام مراعات کو نہیں لینا چاہیے ۔ سب کو ملک کےلئے چھوٹی سی قربانی دےنی چاہیے کیونکہ پاکستان ہماری جان اور پہچان ہے ۔

About Admin

Google Analytics Alternative