125

ایک سال کے دوران پاکستان سے روزگار کے لیے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات جانے والے افراد کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے

وزارت سمندر پار پاکستانیز کے اعداد و شمار کے مطابق رواں سال کے پہلے 10 ماہ میں 2 لاکھ 58 ہزار 215 افراد روزگار کی تلاش میں سعودی عرب گئے جبکہ اسی عرصے میں ایک لاکھ 76 ہزار 947 افراد متحدہ عرب امارات گئے۔بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ نے بتایا کہ سعودی عرب جانے والوں کی یہ تعداد گزشتہ سال کے انہی مہینوں میں 84 ہزار تھی اور یہ ریکارڈ 207 فیصد اضافہ ہے۔ بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ کے مرتب کردہ ڈیٹا کے مطابق رواں سال کے پہلے دس مہینوں میں سعودیہ عرب کو افرادی قوت کی برآمد میں ریکارڈ 207 فیصد اضافہ ہوا ہے۔وزارت اوورسیز نے 2019 کے پہلے دس ماہ کے دوران 258215 سے زائد پاکستانیوں کی سعودی عرب میں تلاش روزگار میں مدد کی جبکہ یہ تعداد گزشتہ سال کے اسی مہینوں میں 84091 تھی۔ اس سال اومان میں نقل مکانی کرنے والوں کی تعداد 23998 تھی جو کہ پچھلے سال کے مقابلے میں 5.8 فیصد زیادہ ہے۔وزرات اوورسیز کے مطابق اس سال عمان نقل مکانی کرنے والوں کی تعداد 23998 تھی جو کہ پچھلے سال سے 5.8 فیصد زیادہ ہے۔اس حوالے سے وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانیز سید زلفی بخاری کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کی خیر سگالی کا شکریہ کہ میری وزارت سعودی عرب کو افرادی قوت کی برآمد میں 207 فیصد اضافے کے قابل ہوئی۔قبل ازیں 21 اکتوبر کو وزرات اوورسیز پاکستانیز نے رپورٹ جاری کی تھی جس کے مطابق رواں سال کے پہلے 9 ماہ میں 5 لاکھ 29 ہزار 430 افراد کو بیرون ملک ملازمت کیلئے رجسٹر کیا گیا تھا۔رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ اوورسیز پاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ خلیجی ممالک سے معاہدوں اور حکومتی اقدامات کے باعث ہوا،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں