Home » کھیل » باکسر محمد وسیم کی وطن واپسی ، ایئرپورٹ پر کوئی استقبال کرنے نہ آیا

باکسر محمد وسیم کی وطن واپسی ، ایئرپورٹ پر کوئی استقبال کرنے نہ آیا

کوئٹہ : ہمیشہ پاکستان کیلئے کھیلنا چاہتا تھا ، حکومتی سرپرستی نہ مل سکی جس کا افسوس رہے گا :وطن واپسی کے بعد ایئرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو . پاکستانی باکسر محمد وسیم ورلڈ باکسنگ کونسل کے سلور فلائی ویٹ ٹائٹل اپنے نام کر کے آبائی علاقے کوئٹہ پہنچ گئے تاہم ائیر پورٹ پر کسی بھی حکومتی عہدیدار کی عدم موجود گی پر افسوس کا اظہار کیا ۔ ائیر پورٹ پر محمد وسیم نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ پرفیشنل باکسنگ میں انٹرنیشنل باکسنگ فیڈریشن اور ورلڈ باکسنگ ایسوسی ایشن کے دیگر ٹائٹلز بھی جیتنا چاہتا ہے اور اپنے ملک کا نام روشن کرنے کا خواہش مند ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیشہ سے پاکستان کے لیے کھیلنا چاہتا تھا اور کھیلتا رہونگا تاہم حکومتی سرپرستی حاصل نہیں ۔ کوئٹہ ائیر پورٹ پر بھی حکومت کا کوئی نمائندہ نہیں آیا جس کا افسوس ہے ۔ باکسر وسیم کا کہنا تھا کہ سپیکر راحیلہ درانی اور صوبائی وزیر حامد اچکزئی اسلام آباد کی فلائٹ میں ساتھ تھے مگر ان سے نہیں ملے ۔ وسیم نے اپنی تمام تر کامیابیوں کا کریڈٹ اپنے کورین پروموٹر اینڈی کم کو دیتے ہوئے کہا کہ وہ اب تک ان کی ٹریننگ کوچنگ اور دیگر مد میں پانچ چھ کروڑ روپے لگا چکے ہیں ۔ پروفیشنل باکسر وسیم نے اتوار کے روز فلپائن کے باکسر جیدر اولیوا کو شکست دے کر جیت کی نئی تاریخ رقم کی ۔ صرف آٹھ نو ماہ میں ہی دس راؤنڈ کے مقابلے سے ابتدا کرتے ہوئے محمد وسیم 12 راؤنڈ کے مقابلے میں نہ صرف پہنچا بلکہ باکسنگ کونسل کا سلور فلائی ویٹ ٹائٹل بھی اپنے نام کیا

About Admin

Google Analytics Alternative