Pakistan-Tehreek-e-Insaf-PTI- 54

بطور وزیراعلیٰ صوبے میں کسی کو بھی غلط کام نہیں کرنے دوں گااور نہ خود

تفصیلات کےمطابق  محمودخان کی زیر صدارت صوبائی کابینہ کااجلاس سول سیکرٹریٹ پشاورمیں منعقدہواجس میں اہم فیصلوں کےعلاوہ وزیراعلیٰ نےصوبائی کابینہ اراکین بالخصوص نئےشامل ہونےوالےکابینہ اراکین کواپنےنظریےاور وژن کےبارےمیں تفصیلا ً آگاہ کیا۔کابینہ اجلاس کےحوالےسےپریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر اطلاعات شوکت علی یوسفزئی نے کہا کہ وزیراعلیٰ نے تمام وزراء کو ہدایت کی ہے کہ اپنے دفاتر میں حاضریاں یقینی بنائیں جبکہ وہ خود ہر ماہ وزراء کی دفاتر میں حاضریوں کی نگرانی کریں گے۔اُنہوں نےکہاکہ ہرصوبائی وزیراپناشیڈول مرتب کرے کہ کس دن دفترجانا ہےاورکس دن حلقےکیلئےمختص کرنا ہے۔اُنہوں نے واضح کیاہےکہ بطوروزیراعلیٰ صوبے میں کسی کوبھی غلط کام نہیں کرنے دوںگااور نہ خود کسی کوناجائزکام کاکہوںگا،صوبے میں میرٹ،انصاف اورسرکاری اُمور میں مزید شفافیت یقینی بنائی جائے گی اورواضح کیاکہ ہم نے ایک ٹیم بن کرکام کرنا ہے اورمحکموں میں کرپٹ عناصر کی نشاندہی کرنی ہے۔اُنہوں نےکہاکہ مجھےوزیراعظم عمران خان نےبطوروزیراعلیٰ اس صوبے کیلئے نامز د کیا ہے،ہماری حکومت کی ناکامی عمران خان کی ناکامی تصور کی جائے گی۔ اُنہوں نے کابینہ وزراء پر واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہرصوبائی وزیر نے اپنے اپنے ضلع کے صوبائی اسمبلی اراکین کو ساتھ لیکر چلنا ہے اور یقین دلایا کہ انشاء اللہ عمران خان کی قیادت میں ہم سب سرخروہوںگے،ہم نے تحریک انصاف کے وژن کے مطابق صوبے کے عوام کی خدمت کرنی ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ تمام وزراء محکموں میں اصلاحات لانے کیلئے ہوم ورک یقینی بنائیں،صوبے میں مصنوعی مہنگائی کی روک تھام کیلئے ترجیحی بنیادوں پر ٹھوس اقدامات اُٹھائے جائیں اور عوام کو تمام ممکنہ ریلیف مہیا کرنے کیلئے کام کریں۔
اجلاس میں تمام محکموں کو ہدایت کی گئی کہ وہ اگلے مالی سال کیلئے اپنے اپنے ترقیاتی پروگراموں کیلئے تیاری ابھی سے شروع کر لے۔کابینہ نے موجودہ مالی سال کے دوران خیبر پختونخوا بورڈ آف انوسٹمنٹ اینڈ ٹریڈکوآپرپشنل اخراجات کیلئے بطور گرانٹ۔ان۔ایڈ 60ملین روپے دینے کی منظوری دیدی۔کابینہ نے خیبر پختونخوا وائلڈ لائف اینڈ بائیو ڈائیورسٹی رولز2016ء میں ترمیم کی منظوری دیدی۔ اس ترمیم کے تحت صوبائی وزیر جنگلات وائلڈ لائف اینڈ بائیوڈائیورسٹی بورڈ میں بطور ممبر شامل ہوں گے۔کابینہ نے خیبر پختونخوا رولز آف بزنس 1985ء کے شیڈول۔II میں ترامیم کی منظوری دیدی۔ ان ترامیم کا تعلق محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کی نئی ذمہ داریوں سے ہے۔ 18ویں آئینی ترمیم کے نتیجے میں صوبائی محکمہ اطلاعات کی ذمہ داریوں میں کچھ نئی چیزوں کا اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے محکمے کے پرانے سروس رولز میں بعض چیزوں کے اضافے اور بعض کو چیزوں کو ختم کرنے کی ضرورت محسوس ہو رہی تھی۔کابینہ نے مجوزہ ترامیم کی منظوری دیدی۔کابینہ نے پیڈوکے بورڈز آف ڈائریکٹرز کیلئے بطور ممبر انجینئر حق نواز اور انجینئر بخت زمان کے ناموں کی منظوری دیدی۔پیڈو بورڈ کا ایک ممبر اپنی مدت پوری کر چکا تھا جبکہ دوسرے ممبر فواد اسحاق نے استعفیٰ بھیجا تھا۔کابینہ نے فواد اسحاق کا استعفیٰ بھی منظور کر لیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں