Home » بزنس » بٹ کوائن کی قیمت میں 10 ہزار ڈالر کی کمی

بٹ کوائن کی قیمت میں 10 ہزار ڈالر کی کمی

ورچوئل کرنسی بٹ کوائن کی قیمت میں حیران کن طور 10 ہزار ڈالر سے زائد کی کمی ہونے کے بعد اس کی قیمت گزشتہ 8 ماہ کی کم ترین سطح پر آگئی۔

بٹ کوائن کی قیمت میں 10 ہزار ڈالر کی کمی کے بعد اس کی قیمت محض 6 ہزار 752 ڈالر ہوگئی ہے۔

ورچوئل کرنسی کی قیمت میں ریکارڈ کمی کے بعد اب اس کی قیمت ایک سال قبل والی قیمت پر چلی گئی۔

ایک موقع پر بٹ کوائن کی قیمت 20 ہزار امریکی ڈالر تک پہنچ گئی تھی، تاہم گزشتہ 2 ماہ سے اس ڈیجیٹل کرنسی کی قیمت میں اتار چڑھاؤ جاری رہا۔

دسمبر 2017 تک بٹ کوائن کی قیمت 15 ہزار ڈالر سے تجاوز کر گئی تھی، جس کے بعد 2018 کے ابتدائی 3 ماہ میں اس کی قیمت ایک موقع پر 20 ہزار ڈالر تک بھی پہنچ گئی تھی۔

تاہم اب حیران کن طور پر بٹ کوائن کی قیمت میں 10 ہزار ڈالر کی کمی کے بعد اس میں سرمایہ کاری کرنے والے سیکڑوں افراد کے کروڑوں روپے ڈوب گئے۔

برطانوی اخبار ’دی گارجین‘ کی رپورٹ کے مطابق جنوبی کوریا کی ڈیجیٹل کرنسی ’کوئن ریل‘ کے ہیک ہونے کی وجہ سے اچانک بٹ کوائن کی قیمت میں حیران کن کمی ہوئی۔

جنوبی کوریا کی ورچوئل کرنسی ’کوئن ریل‘ کو گزشتہ ہفتے ہیک کرلیا گیا تھا، جس کے بعد گزشتہ روز جنوبی کورین حکام نے اس کی تصدیق کی۔

’کورین ریل‘ کے ہیک ہونے کے بعد اچانک سے ’بٹ کوائن‘ کی قیمت میں 10 ہزار ڈالر کی کمی ہوگئی۔

11 جون کی صبح تک ایک بٹ کوائن کی قیمت 6 ہزار 752 ڈالر تھی، جو پاکستانی 7 لاکھ 78 ہزار روپے سے زائد بنتی ہے۔

بٹ کوائن کیا ہے؟

بٹ کوائن ایک ڈیجیٹل کرنسی ہے جس کی کوئی ظاہری صورت نہیں ہوتی اور یہ صرف کمپیوٹروں کی میموری میں حروف اور اعداد کی صورت میں موجود ہوتی ہے۔ بٹ کوائن سمیت اسی طرح کی دیگر کرنسیاں ایسی آن لائن ایکسچینجز سے حاصل کی جا سکتی ہیں جو صرف کرپٹو کرنسی میں ڈیل کرتی ہیں۔

بٹ کوائن پہلی کرپٹو کرنسی تھی جو 2009 میں ستوشی ناکوموتو نامی ایک گمنام شخص/گروہ نے شروع کی تھی۔ یہ شخص/گروہ 2010 میں آن لائن کمیونٹی سے غائب ہوگیا تھا۔

محتاط اندازے کے مطابق اس وقت تقریباً 1 کروڑ 60 لاکھ 78 ہزار بِٹ کوائن گردش میں ہیں اور ان کی تعداد میں روزانہ کی بنیاد پر محدود اضافہ ہو رہا ہے۔

About Admin

Google Analytics Alternative