Home » صحت » زیادہ مرچ مصالحہ کھانا نقصان دہ تو نہیں؟

زیادہ مرچ مصالحہ کھانا نقصان دہ تو نہیں؟

زیادہ مرچ مصالحے والے کھانے یقیناً منہ میں جلن اور زبان کو سن کردیتے ہیں، جسم سے پسینہ خارج ہونے لگتا ہے اور آنکھوں سے آنسو بھی بہہ سکتے ہیں۔

مگر یہ عادت جسم کو گرم موسم میں ٹھنڈا رکھنے کے ساتھ میٹابولزم اور جسمانی دفاعی نظام کو بھی مضبوط بناتی ہے۔

یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

نیو میکسیکو اسٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ زیادہ مرچ مصالحہ کھانے سے ذائقے کی حس متاثر نہیں ہوتی بلکہ یہ جسم کو ٹھنڈا رکھنے میں مدد دیتا ہے۔

تحقیق کے مطابق ہری مرچ کھانے سے ایک کیمیکل کیپcapsaicin جسم کا حصہ بنتا ہے جو منہ میں موجود درد کے ریسیپٹر کو متحرک کرتا ہے جو دماغ کو سگنل بھیجتے ہیں کہ منہ میں خطرناک حرارت پیدا ہورہی ہے۔

یہ ریسیپٹرز درحقیقت انسانوں کو ایسی غذاﺅں کو کھانے سے روکنے کا کام کرتے ہیں جو گوشت کو جلا سکتے ہوں۔

تو دماغ کو سگنل جانے کے بعد جسم خود کو پسینے کے ذریعے ٹھنڈا کرنے کی کوشش شروع کرتا ہے، خون چہرے کی جانب دوڑتا ہے اور آنکھوں یا ناک سے پانی بہنے لگتا ہے۔

مگر یہ کیمیکل اکثر افراد کے دماغ میں 2 نیورو ٹرانسمیٹرز اینڈروفین اور ڈوپامائن کو بھی ریلیز کرتا ہے جس سے لوگ اچھا محسوس کرتے ہیں۔

تحقیق کے مطابق زیادہ مرچ کھانے سے کسی ٹشو کو نقصان نہیں پہنچتا کیونکہ گرمی اور ذائقہ 2 الگ احساسات ہیں۔

مرچوں کا استعمال صرف ہیٹ ریسیپٹر کو متحرک کرتا ہے جس سے حس ذائقہ متاثر نہیں ہوتی۔

محققین کا کہنا تھا کہ مرچوں میں وٹامن اے اور سی کی مقدار کافی زیادہ ہوتی ہے جو جسمانی دفاعی کو مضبوط بنانے میں مددگار ثابت ہوتی ہے۔

اس سے قبل آسٹریلیا کی ایڈیلیڈ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ مرچ مصالحے سے بھرپور غذا لوگوں کو زیادہ کھانے سے روکنے کے ساتھ ساتھ جسمانی وزن میں کمی بھی لاتی ہے۔

مرچیں جسم میں جاکر معدے کو بھر دیتی ہیں اور ایسے اعصاب کو سرگرم کردیتی ہیں جو جسم کو کہتے ہیں کہ بہت کھالیا اور زیادہ کھایا ممکن نہیں رہتا۔

About Admin

Google Analytics Alternative