Home » تازہ ترین » مصنوعی مٹھاس سے جان لیوا امراض کا خطرہ، تحقیق

مصنوعی مٹھاس سے جان لیوا امراض کا خطرہ، تحقیق

ماہرین کے مطابق مصنوعی مٹھاس سے موٹاپا، کولیسٹرول کا بڑھنا، بلڈ پریشر اور دیگر امراض جیسے شکایات کا سامنا ہوسکتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ مصنوعی مٹھاس کا استعمال انتہائی مضر صحت ہے اس سے اکثر وزن میں تیزی سے اضافہ ہوتاہے اور موٹاپا تیزی سے بڑھتا ہے۔

جب کہ مصنوعی مٹھا س سے میٹابولزم، گٹ بیکٹیریا اور بھوک پر بھی منفی اثرات پڑتے ہیں۔

کینیڈا کی مینی ٹوبا یونیورسٹی میں کی جانے والی تحقیق کے مطابق چینی کے متبادل کوئی مصنوعی مٹھاس استعمال کرنا یا سکرولوس اور سٹیویا کا استعمال ہائی بلڈ پریشر اور دل کے امراض کا خدشہ زیادہ بڑھا دیتا ہے۔

کینیڈین میڈیکل ایسوسی ایشن جرنل میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق ایک ہزار سے زائد لوگوں کو 6 ماہ تک مصنوعی مٹھاس دی گئی اور ان کی صحت کا جائزہ لیا گیا جس سے پتا چلا کہ مصنوعی مٹھاس سے وزن کا متوازن رہنا یا کم ہونے کے اثرات سامنے نہیں آئے بلکہ یہ شوگر، موٹاپے، بلڈ پریشر، دل کے امراض اور دیگر بیماریوں کا سبب بنتی ہے۔

ماہرین کے مطابق مصنوعی مٹھاس صحت کا وزن متوازن اور برقرار رکھنے میں مثبت کردار ادا نہیں کرتی۔ اس لیے اپنی غذا میں خالص مٹھاس شامل رکھیں اور چینی کا استعمال بھی کم سے کم رکھیں۔

About Admin

Google Analytics Alternative