1

معیشت مستحکم، دسمبت 2020 تک گردشی قرضہ ختم کیا جائے گا، مشیر خزانہ

اسلام آباد:  وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ و محصولات ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ ملکی معیشت اس وقت مستحکم ہے اور دسمبر 2020ء تک گردشی قرضے کا خاتمہ کیا جائے گا۔

حکومتی اقدامات کے نتیجہ میں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں 63.1 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔ اینکر پرسنز سے گفتگو کرتے ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو کمزور معیشت ورثے میں ملی لیکن دوست ممالک کے ساتھ دوطرفہ معاہدوں اور آئی ایم ایف کی طرف سے معاونت کے نتیجہ میں قومی معیشت پر دباؤ میں کمی آئی۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کی ٹیم نے اپنے پہلے جائزے میں حکومت کی اقتصادی کارکردگی کے بارے میں اطمینان بخش رپورٹ دی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ آنے والی سہہ ماہیوں کے دوران حکومت محصولات میں اضافے اور اخراجات میں کمی کے لئے اپنی تمام تر توانائیاں بروئے کار لائے گی۔ مالی سال 2019-20ء میں حکومتی اخراجات میں کمی، سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام اور غربت میں کمی کے لئے کئی اقدامات کئے گئے ہیں۔

مشیر خزانہ نے کہا کہ برآمدات میں اضافے کے لئے ٹیکسوں میں چھوٹ دی گئی جبکہ اس کے ساتھ ساتھ بجلی اور گیس کے شعبوں میں زرتلافی بھی فراہم کی گئی۔ اسٹیٹ بینک، ایف بی آر، سیکیورٹی اینڈ ایکس چینج کمیشن آف پاکستان سمیت دیگر اداروں کو زیادہ خود مختاری دی گئی ہے تاکہ یہ ادارے آزادانہ طور پر کام کر سکیں۔

انھوں نے کہا کہ حکومت ہدف سے زیادہ غیر ٹیکس محصولات میں اضافے کے لیے بھی کوششیں کر رہی ہے۔ آنے والے مہینوں میں معیشت مستحکم ہو گی جس کے بعد ملکی اقتصادی خوشحالی کے دور کا آغاز ہو گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں