Home » ہیڈ لائینز » ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں ایک اور صحافی کا قتل عام
aftab alam

ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں ایک اور صحافی کا قتل عام

کراچی: ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں ایک اور صحافی کو قتل کر دیا گیا۔

نارتھ کراچی کے سیکٹر الیون سی میں سینئر صحافی آفتاب عالم کو فائرنگ کرکے قتل کیا گیا۔

آفتاب عالم کو عباسی شہید اسپتال منتقل کیا گیا جہاں حکام نے بتایا کہ مقتول کے چہرے پر گولیاں لگیں جس سے ان کی ہلاکت ہوئی۔

نارتھ کراچی میں یو پی موڑ کے قریب ان کے گھر کے سامنے ہی 2 موٹر سائیکل سواروں نے آفتاب عالم پر فائرنگ کی۔

پولیس حکام کے مطابق آفتاب کا لم گھر سے گاڑی نکال رہے تھے کہ ان پر فائرنگ کی گئی۔

حکام کا کہنا تھا کہ حملہ آوروں نے ان کو تین گولیاں ماریں.

ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) ویسٹ فیروز شاہ کے مطابق آفتاب عالم کو گھر کے باہر نشانہ بنایا گیا وہ اس وقت اپنے بچوں کو اسکول سے واپس لانے کے لیے جا رہے تھے۔

ان کا کہنا تھاکہ پولیس کو جائے وقوع سے نائن ایم ایم پستول کے تین خول ملے ہیں جبکہ حملہ آوروں کی تعداد 2 تھی جن میں سے ایک موٹر سائیکل چلا رہا تھا جبکہ دوسرے نے فائرنگ کی۔

سیکیورٹی ذرائع کے مطابق راہزنی کے واقعات میں عمومی طور پر لوگوں کو فائرنگ کے دوران جسم کے نچلے حصہ پر نشانہ بنایا جاتا ہے جبکہ آفتاب عالم کو جسم کے اوپر حصے پر فائرنگ کرکے ہالک کیا گیا۔

آفتاب عالم کافی عرصے تک جیو نیوز کی بزنس ڈیسک سے پر کام کرتے رہے جبکہ بعد ازاں سماء نیوز سے وابستگی اختیار کر لی تھی البتہ آج کل کسی ادارے سے وابستہ نہیں تھے.

وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے آفتاب عالم کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے نے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی دوسری جانب وزیر داخلہ انور سیال نے ڈی آئی جی سینٹرل سے رپورٹ طلب کرلی.

صحافتی تنظیموں کی جانب پریس کلب پر احتجاج کرنے کا اعلان کیا گیا ہے.

کراچی یونین آف جرنلسٹس (دستور) کے صدر افسر عمران اور سیکریٹری شعیب احمد نے سینئر صحافی آفتاب عالم کی ٹارگٹ کلنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ 24 گھنٹوں کے دوران میڈیا سے وابستہ 2افراد کی شہادت نےکراچی آپریشن پر سوالیہ نشان کھڑا کردیاہے، قاتلوں کو فی الفور گرفتار کیاجائے.

خیال رہے کہ گزشتہ روز نجی ٹی نیوز چینل جیو کی گاڑی پر بھی فائرنگ کی گئی تھی جس سے ایک سیٹلائیٹ انجئیر ہلاک اور ایک انجنئیر زخمی ہوا تھا۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس مشہور صحافی حامد میر کو بھی کراچی میں ہی قتل کرنے کی کوشش کی گئی تھی، ان پر جناح ائر پورٹ سے شاہراہ فیصل پر نکلتے ہوئے فائرنگ کی گئی تھی، البتہ کئی گولیاں لگنے کے باوجود خوش قسمتی سے وہ محفوظ رہے تھے.

قبل ازیں جیو نیوز کے رپورٹر ولی خان بابر کو بھی کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں قتل کیا گیا تھا البتہ ان کے قتل کے مجرموں کی نشاندہی ہو گئی تھی جن کو بعد ازاں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے سزائے موت سنائی تھی جبکہ ان مجرموں میں سے ایک فیصل عرف موٹا 11 مارچ کو ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو سے گرفتار کیا گیا تھا.

امریکی صحافی ڈینیئل پرل کو بھی 23 جنوری 2002ء میں کراچی میں اغوا کے بعد قتل کیا گیا تھا

About Admin

Google Analytics Alternative