Home » کھیل » میسی، رونالڈو کی اجارہ داری ختم، موڈرچ ’بیلن ڈی اور‘ لے اڑے

میسی، رونالڈو کی اجارہ داری ختم، موڈرچ ’بیلن ڈی اور‘ لے اڑے

سال کے بہترین فٹبالر کے ایوارڈ بیلن ڈی اور میں کروشیا کے لوکا موڈرچ نے نئی تاریخ رقم کرتے ہوئے یہ ایوارڈ جیت کر دس سال بعد رونالڈو اور میسی کو اس ایوارڈ سے محروم کردیا۔

2008 سے 2017 تک مسلسل دس سال تک سال کے بہترین فٹبال کا سب سے قیمتی ایوارڈ ’بیلن ڈی اور‘ پرتگال کے کرسٹیانو رونالڈو یا ارجنٹینا کے لیونل میسی سوا کوئی اور نہ جیت سکا اور دونوں کھلاڑیوں نے 5، 5 مرتبہ یہ ایوارڈ اپنے نام کیا۔

تاہم عالمی کپ کے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈ جیتنے والے کروشیا کے لوکا موڈرچ نے اس جمود کو توڑتے ہوئے بیلن ڈی اور جیتنے کا اعزاز حاصل کر لیا۔

کروشیا کے لوکا موڈرچ بیلن ڈی اور جیتنے کے بعد ٹرافی کے ہمراہ موجود ہیں— فوٹو: اے ایف پی
کروشیا کے لوکا موڈرچ بیلن ڈی اور جیتنے کے بعد ٹرافی کے ہمراہ موجود ہیں— فوٹو: اے ایف پی

رونالڈو اور میسی سے قبل بیلن ڈی اور جیتنے والے آخری فٹبالر برازیل کے کاکا تھے جنہوں نے 2007 میں یہ ایوارڈ اپنے نام کیا تھا۔

موڈرچ نے رواں سال منعقدہ ورلڈ کپ میں عمدہ کھیل پیش کرتے ہوئے کروشیا کو تاریخ میں پہلی مرتبہ ایونٹ کے فائنل میں پہنچا دیا تھا جہاں ان کی ٹیم کو فرانس کے ہاتھوں شکست ہوئی تھی۔

اس کے ساتھ ساتھ وہ لگاتار تیسری مرتبہ چیمپیئنز لیگ جیتنے والی ریال میڈرڈ کی ٹیم کے بھی اہم رکن تھے جس کی وجہ سے ان کو ایوارڈ کے لیے سب سے مظبوط امیدوار تصور کیا جا رہا تھا۔

اس ایوارڈ کے لیے موڈرچ کے سب سے بڑے حریف رونالڈو تھے جنہوں نے ریال میڈرڈ کو چیمپیئنز لیگ جتوانے میں اہم کردار ادا کیا لیکن ان کے ملک پرتگال کی ٹیم عالمی کپ میں کچھ خاص پیش نہ کر سکی اور اس وجہ سے وہ دوسرے نمبر پر رہے۔

بہترین نوجوان کھلاڑی ایوارڈ فرانس کے کائلیان ایمباپے نے اپنے نام کیا— فوٹو: اے ایف پی
بہترین نوجوان کھلاڑی ایوارڈ فرانس کے کائلیان ایمباپے نے اپنے نام کیا— فوٹو: اے ایف پی

فرانس کے اینٹوئن گریز مین تیسرے، ان کے ہم وطن کائلیان ایمباپے چوتھے اور ارجنٹائن کے لیونل میسی پانچویں نمبر پر رہے۔

موڈرچ نے ایوارڈ ان تمام کھلاڑیوں کے نام کیا جو گزشتہ دس سال میں میسی اور رونالڈو کی اجارہ داری کے دوران یہ ایوارڈ جیتنے سے محروم رہے۔

تاہم فرانس کے کوچ ڈائیڈیئر ڈیشیمپ نے کہا کہ یہ ایوارڈ کسی فرانس کے کھلاڑی کو جیتنا چاہیے تھا۔

انہوں نے کہا کہ فرانس کے کھلاڑی یہ ایوارڈ جیتنے کے مستحق تھے کیونکہ ناصرف انہوں نے اپنے ملک کے لیے عالمی کپ جیتا بلکہ اپنے کلب کے لیے بہترین خدمات انجام دیں۔

بہترین نوجوان کھلاڑی کی ریمونڈ کوپا ٹرافی فرانس کے 19سالہ کائلیا ایمباپے جیتنے میں کامیاب رہے جنہوں نے عالمی کپ کے فائنل میں گول اسکور کیا تھا۔

ناروے کی ایدا ہرد برگ سال کی بہترین وومن فٹبالر قرار پائیں— فوٹو: اے ایف پی
ناروے کی ایدا ہرد برگ سال کی بہترین وومن فٹبالر قرار پائیں— فوٹو: اے ایف پی

فرانس کا فٹبال میگزین 1956 سے بیلن ڈی اور کا اعلان کر رہا ہے اور یہ فٹبال کی دنیا میں سب سے اہم اور قیمتی ایوارڈ تصور کیا جاتا ہے۔

اس سال تاریخ میں پہلی مرتبہ خواتین فٹبالرز کو بھی یہ ایوارڈ دینے کا اعلان کیا گیا اور اپنے کلب کے لیے تین مرتبہ چیمپیئنز لیگ جیتنے والی ناروے کی 23 سالہ ایدا ہرد برگ یہ ایوارڈ جیتنے میں کامیاب رہیں جنہوں نے گزشتہ سیزن میں فرانسیسی کلب لایون کے لیے کھیلتے ہوئے ریکارڈ 15گول اسکور کیے تھے۔

About Admin

Google Analytics Alternative