Home » صحت » چست جینز خواتین کی کمر میں شدید درد کی وجہ بن سکتی ہے، ماہرین
764843-jeans-1489496716-487-640x480

چست جینز خواتین کی کمر میں شدید درد کی وجہ بن سکتی ہے، ماہرین

لندن: برطانوی طبی ماہرین نے سروے کے بعد انکشاف کیا ہے کہ چست جینز پہننے والی خواتین کو کمر میں درد کا شدید خطرہ ہوتا ہے۔

2000 سے زائد برطانوی خواتین پر یہ نیا سروے برٹش کائریوپریکٹک ایسوسی ایشن (بی سی اے) نے کیا تھا جس کے نتائج ریسرچ جرنل ’اینلز آف ریومیٹک ڈزیزز‘ میں شائع ہوئے ہیں۔

سروے سے معلوم ہوا کہ چست جینز اور فیشن سے تعلق رکھنے والے دیگر ملبوسات پہننے والی تین چوتھائی خواتین کو کمر میں درد کی شکایت تھی۔ فیشن کے ملبوسات پہننے والی 73 فیصد خواتین کو کمر میں درد کی شکایت تھی مگر وہ اس بات سے ناواقف تھیں کہ اس کی وجہ کیا ہے۔ ان میں سے 27 فیصد خواتین کا کہنا تھا کہ انہیں اتنا اندازہ ضرور ہے کہ چست لباس ان کی کمر میں درد کی وجہ بن رہا ہے لیکن لباس خریدتے وقت وہ اس بات کو خاطر میں نہیں لاتیں۔

مطالعے کے نگراں رشی لواٹے نے وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ چست جینز پہننے والی خواتین کو حرکت کرنے میں زیادہ قوت صرف کرنا پڑتی ہے جس کا زیادہ اثر ان کی کمر اور اطراف کے پٹھوں اور ہڈیوں پر پڑتا ہے جبکہ بیٹھی حالت میں بھی ان کے مختلف جسمانی حصوں کو زیادہ دباؤ کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اگر یہ سلسلہ جاری رہے تو ان کی کمر میں مستقل درد ہوسکتا ہے جو بے حد تکلیف دہ ہوتا ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ دنیا بھر میں کمر کے درد کی شرح 9.4 فیصد ہے جس کی بڑی وجہ اٹھنے بیٹھے اور چلنے پھرنے کا غلط انداز ہے جبکہ خواتین میں اس انداز کی بڑی وجہ ان کا چست لباس بنتا ہے۔اسی لیے انہوں نے خواتین کو مشورہ دیا ہے کہ وہ چست لباس سے جس قدر ممکن ہو پرہیز کریں اور ایسے کپڑے پہنیں جو ڈھیلے ڈھالے ہوں اور جنہیں پہن کر چلنا پھرنا اور اٹھنا بیٹھنا بھی آسان ہو۔ خواتین کی صحت کےلیے یہی بہتر ہے۔

درد کی وجہ بننے والا دوسرا لباس وہ بھاری بھرکم اور لمبا اونی کوٹ ہے جس میں سرد ہوا سے بچنے کےلیے گرم ٹوپی بھی شامل ہوتی ہے جبکہ کمر کے درد میں فیشن سے تعلق رکھنے والی دیگر مصنوعات جیسے کہ بیک لیس شوز، بڑے ہینڈ بیگ اور بھاری ڈیزائنر جیولری بھی اپنا کردار ادا کرتی ہیں۔

واضح رہے کہ ماضی میں کیے گئے طبی مطالعات سے معلوم ہوچکا ہے کہ اونچی ایڑی کی سینڈلیں پہننے والی خواتین کو عام طور پر ریڑھ کی ہڈی میں تکلیف کی شکایت ہوجاتی ہے۔

Skip to toolbar
Google Analytics Alternative