Home » کالم » کرپشن کیخلاف آپریشن بلاتفریق۔۔۔ وقت کی ضرورت ہے
adaria

کرپشن کیخلاف آپریشن بلاتفریق۔۔۔ وقت کی ضرورت ہے

ہمارے ملک کے نظام کو کرپشن نے دیمک کی طرح چاٹ کربرباد کردیا ہے من حیثت القوم ہر جانب کرپشن کا دور دورہ ہے ۔ حکومت اس ناسور کو ختم کرنے کیلئے پرعزم ہے ۔ لیکن یہ وطن عزیز کے رگ و پے میں اس قدر رچ اور بس چکی ہے کہ ایک دم اس کا ختم ہونا ناممکن ہے تاہم اس حوالے سے آغاز کردیا گیا ہے ۔ حکومت کی کوشش ہے کہ معاشرہ صاف ، شفاف اور نظام زندگی کے احوال بھی شفافیت سے ہمکنار ہو کر چلیں ۔ وزیراعظم نے سندھ میں کرپشن کے حوالے سے توجہ مبذول کرائی ہے ۔ ہم اس سے اتفاق کرتے ہیں کہ وہاں کرپشن ہے اگر سندھ کو موردالزام ٹھہرا بھی دیا جائے تو کیا باقی تین صوبے پاک صاف ہیں ۔ تو اس کا جواب نفی میں ملتا ہے بلکہ اس وقت کرپشن کا ریٹ مزید بڑھ گیا ہے ۔ آپریشن حکومتی صفوں سے اور بلا تفریق کرنا ہوگا تب ہی یہ سسٹم درست ہوسکتا ہے کراچی میں وزیراعظم نے متحدہ کے اور جی ڈی اے کے وفود سے ملاقاتیں کیں ۔ حب میں 1320 میگاواٹ چائناحب پاور جنریشن کا پلانٹ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماضی میں چھوٹے سے ٹولے نے اپنی تجوریاں بھرنے کےلئے ملکی خزانے کو نقصان پہنچایا، ہماری حکومت کو ملکی تاریخ کا سب سے بڑا کرنٹ اکاءونٹ خسارہ ورثے میں ملا، لیکن حکومتی پالیسی نے اس پر موثر طریقے سے قابو پالیا ہے،ہماری حکومت دیانتدار ہے اس لئے بیرونی سرمایہ کاری پاکستان آنے کی خواہاں ہے، ہمارے ملک میں سب سے بڑا مسئلہ کرپشن رہا ہے، گزشتہ دور میں کرپشن کیسز کی وجہ سے باہر سے سرمایہ کاری ملک میں نہیں آئی،مستقبل محفوظ بنانے کےلئے صاف شفاف گورننس ناگزیر ہے، سی پیک پاکستان کے لئے بڑا موقع ہے سی پیک سے ہم آگے بڑھ رہے ہیں ،وزیراعلیٰ بلوچستان لسبیلہ میں خصوصی اقتصادی زون قائم کریں گے ۔ سی پیک کے تحت حب پاور جنریشن پلانٹ کے افتتاح پر خصوصی ہے اور سی پیک کے تحت مشترکہ منصوبے خوش آئند ہیں ۔ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے وزیر اعظم عمران خان نے پی ٹی آئی ممبران سندھ اسمبلی سے ملاقات کی ۔ ممبران نے اپنے حلقوں میں ہونے والے ترقیاتی کاموں اور مسائل سے آگاہ کیا ۔ اس موقع پروزیراعظم نے کہاکہ کراچی ملک کا معاشی حب ہے،وفاقی حکومت کو کراچی میں پانی ، ٹرانسپورٹ، ویسٹ مینجمنٹ اور عوام کو درپیش دیگر مسائل کا مکمل ادراک ہے، عوامی فلاح و بہبودکو مد نظر رکھتے ہوئے وفاق اپنے وسائل کے مطابق کراچی کے مسائل کے حل میں اپنا حصہ ڈال رہا ہے،بلدیاتی نظام کراچی کے مسائل کا حل نکالنے میں معاون ثابت ہو گا، اب ملک کی معاشی صورتحال بہت حد تک بہتر ہوچکی ہے، صوبہ سندھ کے معاشی حالات کرپشن کی وجہ سے ابتر ہوے ۔ حکومت کو تاریخ کا سب سے بڑا معاشی خسارہ ورثے میں ملا ۔ لیکن اب ملک کی معاشی صورتحال بہت حد تک بہتر ہوچکی ہے، وزیر اعظم نے وفاقی وزراء کو ہدایت کی کہ وہ کراچی کے ممبران اسمبلی سے رابطے مزید بڑھائیں ۔

بھارتی جھوٹ کا پول کھولنے کیلئے پاکستان کا بڑا اقدام

بھارت کی الزام تراشیاں اور جھوٹے پراپیگنڈے انتہا کو پہنچ رہے ہیں اس جھوٹ کا پول کھولنے کیلئے پاکستان نے غیر ملکی سفیروں کو ایل او سی کا دورہ کرانے کی دعوت دی تاکہ بھارتی آرمی چیف جنرل راوت کے جھوٹ کو دنیا بھر کے سامنے بے نقاب کیا جائے ۔ ساتھ ہی پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو بھی دورے کی دعوت دی ، انڈین آرمی چیف نے دعویٰ کیا کہ اس کی فوج نے دہشت گردوں کے مبینہ کیمپ تباہ کئے ہیں ۔ جس پر ترجمان پاک فوج نے کہاکہ اگر بھارتی نمائندہ ایل او سی کے دورے پر ساتھ نہیں جاتا تو کم ازکم بھارت ٹارگٹڈ لوکیشن کی بھی نشاندہی کرے چونکہ انڈیا نے اور خصوصی طورپر مودی کی حکومت نے ہمیشہ جھوٹ کا سہارا لیا اور کبھی بھی حقائق پر مبنی کوئی بات نہیں ۔ دنیا بھر کے سامنے بھارتی چہرہ بے نقاب ہوچکا ہے ۔ ماضی قریب کی ہی تاریخ کا جائزہ لیا جائے تو معلوم ہوتا ہے کہ بھارت کی جانب سے ہمیشہ غلط ، جھوٹ اور بے بنیاد دعوے کئے گئے ۔ جن کا حقائق سے قریب قریب کا تعلق نہیں ۔ اب بھی ایل او سی پر اس نے کس بھی ٹھوس وجہ کے بغیر حملہ کیا جس پر جوابی کارروائی میں اس کے ہی 9 فوجی جہنم واصل ہوئے ۔ لہذا دنیا جان لے کہ بھارت نے ہمیشہ ہی لغو کا سہارا لیا اور خطے کا امن و امان تہہ بالا کرکے رکھا ہوا ہے ۔ ادھروزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے ملاقات کی، دونوں رہنماءوں نے لائن آف کنٹرول پر بھارتی فوج کی جانب سے شہری آبادی پر بلا اشتعال فائرنگ کی شدید مذمت کی اور بھارتی فوج کو منہ توڑ جواب دینے پر پاک فوج کی جرات و بہادری کو خراج تحسین پیش کیا ۔ اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت پاکستان میں انتشار پھیلانے کی کوشش کررہا ہے، بھارت کی سیزفائر کی خلاف ورزی کے پیچھے بدامنی ہے جبکہ مقبوضہ کشمیر پر ان کا بیانیہ پٹ گیا ہے ۔ ہر میدان میں شکست کے بعد کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے بھارت کچھ قوتوں کو آگے کرنا چاہتا ہے، سرحدوں پر شکست کے بعد ہندوستان، پاکستان کو اندرونی مسائل میں الجھانے کی کوشش کررہا ہے، بوکھلاہٹ کا شکار بھارت خطے کا امن تباہ کرنا چاہتا ہے ۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے خلاف کشمیری جوانوں کی جدوجہد رنگ لائے گی، کشمیر اور پاکستان لازم و ملزوم ہیں ،مقبوضہ کشمیر میں بھارت اپنی ساکھ اور کشمیریوں کی ہمدردی کھوچکا ہے، توجہ ہٹانے کیلئے کبھی وہ جعلی فلیگ آپریشن کا بہانہ بناتا ہے ۔

رہائشی علاقوں میں کمرشل سرگرمیوں کیخلاف جسٹس گلزار احمد کے قابل تحسین اقدامات

سپریم کورٹ آف پاکستان بار ایسوسی ایشن کے صدر امان اللہ کنرانی نے روز نیو کے پروگرام’’سچی بات‘‘ میں ایس کے نیازی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہاہے کہ جسٹس گلزار اپ راءٹ آدمی ہیں انہوں نے کراچی میں بہت بڑا صفایا کیا ہے، جتنے مارکیاں تھیں جو بڑے بڑے طاقت ور لوگوں کے تھے سب کو گرا دیا،یہ اتنا بڑا کام ہے کہ کراچی کو جس طرح صاف کیا ہے جس طرح غیر قانون تجاوزات کو ہٹوایا ہے یہ کسی اور کے بس میں نہیں تھا، میں سمجھتا ہوں کہ اللہ تعالیٰ ان کو زندگی دے ،ان کو جتنی مرضی ایکس ٹینشن دیں ، مجھے ایسے لوگوں پر اعتراض نہیں ہے،پاکستان میں الیکشن کے ایشوز آج سے نہیں ،ہمیشہ سے چلے آ رہے ہیں ،ادارے ریاست کے ہیں ان کو کسی صورت بھی نشانہ نہیں بنانا چاہیے،مولانا فضل الرحمان نے جیسے ڈنڈا بردار فورس تیار کی ایسے حکومتیں نہیں گرائی جا سکتیں ،صوبے وفاق سے اختیارات لینا چاہتے ہیں لیکن وہ اضلاع کو منتقل کرنے کیلئے تیار نہیں ،18ویں ترمیم پر بحث ہوتی تو اس کی اچھی اور بری چیزیں سب سے سامنے آ جاتیں ،عمران خان نے دھرنا دیا تو ان کے مطالبات بالکل واضح تھے ۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما قمر زمان کائرہ نے پروگرام میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ کوئی ابہام نہیں ہے کہ ہم مولانا فضل الرحمان کے ساتھ چلیں گے،مولانا فضل الرحمان دھرنا دینگے تو ساتھ نہیں بیٹھیں گے لیکن دعاگو ہوں گے،دھرنے کے حوالے سے اپنے تحفظات سے مولانا فضل الرحمان کو آگاہ کر چکے ہیں ۔ رہنما تحریک انصاف علماء ونگ مفتی عبدالقوی نے پروگرام میں حصہ لیتے ہوئے کہاکہ عمران خان نے ایک کاز کے لئے دھرنا دیا تھا،فضل الرحمان ،نواز شریف اور آصف زرداری کیساتھ شریک اقدار تھے تو ناموس رسالت آیاد نہیں آئی ۔

About Admin

Google Analytics Alternative