Home » سا ئنس اینڈ ٹیکنالوجی » گوگل پکسل 4 کی تاریخ رونمائی سامنے آگئی

گوگل پکسل 4 کی تاریخ رونمائی سامنے آگئی

اگر آپ 2019 کے سب سے بہترین کیمرا فون کے منتظر ہیں تو اچھی خبر یہ ہے کہ وہ اگلے ماہ متعارف کرایا جارہا ہے۔

جی ہاں گوگل کے نئے پکسل 4 فون کا انتظار ختم ہورہا ہے اور گوگل کی جانب سے اس کی تاریخ رونمائی کا اعلان کیا گیا ہے جو 15 اکتوبر کو نیویارک میں متعارف کرایا جائے گا۔

گوگل کی جانب سے بھیجنے جانے والے دعوت نامے میں لکھا ‘آکر وہ چند چیزیں دیکھیں جو گوگل نے تیار کی ہیں’۔

اس دعوت نامے میں بہت زیادہ تو نہیں بتایا گیا مگر گوگل روایتی طور پر اکتوبر میں ہی اپنے نئے پکسلز فون متعارف کراتا رہا ہے اور میڈ بائی گوگل برانڈ کو یہ کمپنی اپنی تیار کردہ مصنوعات کے لیے استعمال کرتی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ گوگل نے اس دعوت نامے میں تو پکسل 4 کا ذکر نہیں کیا مگر اس کی جانب سے گزشتہ چند ماہ کے دوران اس نئے فون کے بارے میں کچھ تفصیلات خود جاری کی گئیں۔

جیسے کمپنی نے اس فون کے کیمرے کی تصاویر ٹوئٹ کیں جبکہ اس میں نئی راڈار ٹیکنالوجی کا عندیہ دیا جو ٹچ اسکرین کو چھوئے بغیر مختلف کام ڈیوائس سے کچھ دور ہاتھ کی حرکت سے کرنا ممکن بنائے گی۔

گوگل نے اپنا پہلا پکسل فون 2016 میں متعارف کرایا تھا جسے پہلی بار میڈ بائی گوگل قرار دیا گیا تھا، اس سے پہلے وہ ایچ ٹی سی اور ایل جی وغیرہ کے ساتھ مل کر نیکسز فونز پیش کرتا رہا تھا۔

جہاں تک نئے گوگل پکسل 4 سیریز کے فونز کی بات ہے تو وہ ز فوٹوگرافی کے شوقین افراد کے لیے کچھ ایسا کرسکیں گے جو اب تک کوئی اسمارٹ فون کیمرا نہیں کرسکا اور وہ ہے آسٹرو گرافی یا ستاروں کی تصاویر لینا۔

اس حوالے سے پرو اینڈرائیڈ نے ممکنہ طور پر گوگل کی آفیشل مارکیٹنگ ویڈیو لیک کی ہے جس کے مطابق گوگل کے نئے اسمارٹ فون میں ایک موڈ نائٹ اسکائی کی تصاویر لینے کے لیے دیا جائے گا۔

تاہم ویڈیو میں اس نئے فنکشن کے حوالے سے تفصیلات بہت کم دی گئی ہیں بس یہ وعدہ کیا گیا ہے کہ آپ ستاروں کو بھی کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرسکیں گے۔

اور اگر یہ درست ثابت ہوا تو اس فیچر کے باعث آپ کو ٹرائی پوڈ کی ضرورت بھی نہیں رہے گی۔

اس فیچر سے یہ بھی عندیہ ملتا ہے کہ گوگل نے اپنے نائٹ سائٹ فنکشن کو بہت زیادہ بہتر بنالیا ہے اور یہ ایسا فیچر ہے جو اب تک اسمارٹ فون فوٹوگرافی میں ہونے والی تمام تر پیشرفت کے باوجود فون کیمرے سے ممکن نہیں ہوسکا۔

گوگل نے اگست میں تصدیق کرتے ہوئے بتایا تھا کہ یہ پہلا اسمارٹ فون ہوگا جس میں راڈار ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جائے گا جس کی بدولت صارفین دور سے محض ہاتھ کو حرکت دے کر متعدد فیچرز استعمال کرسکیں گے۔

گوگل کی جانب سے پراجیکٹ سولی کو پکسل 4 میں متعارف کرایا جارہا ہے۔

پراجیکٹ سولی میں یہ کمپنی ایسی ٹیکنالوجی تیار کررہی ہے جو مستقبل قریب میں اسمارٹ ڈیوائسز کو دور سے ہاتھ کی حرکت سے استعمال کرنے میں مدد دے گی۔

یہ ٹیکنالوجی انٹرایکٹو کنٹرول سسٹم ہوگا جس میں یوزر راڈار بیسڈ موشن سنسرز ہاتھوں کی حرکات کو شناخت کریں گے۔

اس ہینڈ جیسچر کو ویڈیو میں استعمال کرتے دکھایا گیا ہے اور فون سے کچھ دور کھڑی خاتون ہاتھ کو ہوا میں ہلا کر گانے بدل رہی ہے، جبکہ اس سے الارم کو بند کرنے کے ساتھ فون کالز کو موصول کرنا بھی ممکن ہوگا۔

ابھی واضح طور پر تو کہنا مشکل ہے کہ ہاتھوں کی حرکت سے فیچرز استعمال کرنے کی ٹیکنالوجی کس حد تک بہتر ہوسکتی ہے، تاہم یہ آغاز ضرور ہوسکتا ہے۔

اس سے قبل سامنے آنے والی لیکس کے مطابق پکسل 4 ایکس ایل میں 6.25 انچ ڈسپلے دیا جائے گا اور چونکہ اس میں بیزل کافی زیادہ ہیں تو یہ کافی بڑا فون محسوس ہوگا۔

پہلی بار اس سیریز میں بیک پر 2 یا اس سے زائد کیمرے دیئے جارہے ہیں، اس سے قبل گزشتہ سال پکسل تھری ایکس ایل کے فرنٹ پر تو 2 کیمرے تھے مگر بیک پر ایک ہی کیمرا دیا گیا تھا۔

کچھ عرصے پہلے لیک تصاویر سے تو عندیہ ملتا ہے کہ پکسل 4 ایکس ایل کے بیک پر 3 کیمروں کا سیٹ اپ ہوگا جبکہ فنگرپرنٹ سنسر ڈسپلے کے اندر منتقل کردیا جائے گا۔

About Admin

Google Analytics Alternative