Home » 2017 » February

Monthly Archives: February 2017

عمران خان پاکستان کے بال ٹھاکرے نہ بنیں، مریم اورنگزیب

 اسلام آباد: وزیر مملکت برائے اطلاعات ونشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران خان سے کبھی دانشمندانہ بیان کی توقع نہیں وہ پاکستان کے بال ٹھاکرے نہ بنیں۔

عمران خان کی جانب سے پی ایس ایل کا فائنل لاہور میں کرانے کے فیصلے کو پاگل پن قرار دینے پر اپنے رد عمل کے اظہار میں مریم اورنگزیب نے کہا کہ پاکستان سپر لیگ کا فائنل لاہور میں ہونا ایک بڑی خوشخبری ہے، ایسے موقع پر عمران خان کا بیان دہشت گردوں کے سہولت کار ہونے کی عکاسی کرتا ہے، عمران خان سے کبھی دانشمندانہ بیان کی توقع نہیں وہ پاکستان کے بال ٹھاکرے نہ بنیں، عمران خان کو کئی مرتبہ سوچ کر بولنے کی تلقین کی گئی ہے۔

وزیر مملکت نے بلاول بھٹو پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ سے متعلق بلاول کا بیان نہ صرف غیرذمے دارانہ بلکہ غیرسنجیدہ بھی ہے، بلاول زرداری کو بلاول بھٹو بننے میں ابھی بہت وقت درکار ہے لہٰذا انہیں اپنی والدہ کی سیاسی بصیرت سے کچھ سیکھنا چاہیے۔ مریم اورنگزیب نے کہا کہ بلاول کا بیان اداروں کو دھمکانے کی ایک اور کوشش ہے جب کہ اپوزیشن پاناما کوسیاسی بیساکھی کے طور پر استعمال کرنا چاہتی ہے۔

تیز دانتوں والے دیوہیکل کیڑے کی دریافت

اونٹاریو: 

سائنسدانوں نے ایک ایسا خوفناک کیڑا دریافت کیا ہے جو اپنے تیز دانتوں والے جبڑے سے شکار کرتا تھا اور اب سے 40 کروڑ سال قبل زمین پر اس کی دہشت قائم تھی۔

اس کا فاسل ( ایک پتھر میں نقش) گزشتہ دو عشروں سے کینیڈا کے رائل اونٹاریو میوزیم میں رکھا تھا اور کسی نے اس پر توجہ نہیں دی تھی۔ لیکن اب اس فاسل کو غور سے دیکھنے پر معلوم ہوا ہے کہ اس کی جسامت ایک میٹر تک تھی اور یہ تیز دانتوں کا حامل بھی تھا۔

اس عظیم الجثہ کیڑے کے دانت ایک سینٹی میٹر تک بڑے تھے اور اسے ’یونیسڈ اور بوب ورمز‘ کے خاندان کا ایک قدیم فرد قرار دیا جاسکتا ہے۔ یہ ایک پھرتیلا شکاری تھا جو مچھلیوں، آکٹوپس اور اسکوئیڈز کو گرفت کرکے انہیں اپنے گڑھے نما گھروں میں دھکیل کر ان کی دعوت اڑاتا تھا۔

یہ فاسل 1994 میں ملا تھا اور تب سے میوزیم کے ریکارڈ کی زینت تھا۔ سائنٹفک جرنل میں شائع ہونے والی رپورٹس کے مطابق یہ سمندری کیڑا تھا۔ آج اسی نسل کے بوبٹ کیڑے سمندروں میں پائے جاتے ہیں اور وہ 10 فٹ تک لمبے ہوسکتے ہیں۔ وہ خاموشی سے مٹی میں دبے رہتے ہیں اور اپنے شکار مثلاً مچھلی یا آکٹوپس نظر آتے ہی تیزی سے اسے گرفت کرلیتے ہیں۔

اس جانور کوویبسٹر پرائن آرمسٹرانگائی  کا نام دیا گیا ہے جس کے فاسل میں اس کا جبڑا نمایاں ہے۔ اس کی لمبائی تین فیٹ تک ہے اور اب تک دریافت ہونے والا ایک نیا قدیم کیڑا ہے۔

نوکیا 3310 نئے فیچرز کیساتھ فروخت کیلئے پیش

دنیا کا مقبول ترین موبائل فون ایک بار پھر دھوم مچانے کے لیے آگیا،17سال بعد نوکیا 3310کو نئے فیچرز اور رنگوں کے ساتھ فروخت کے لیے پیش کردیا گیا ہے۔

نوکیا 3310میں کمپنی اسنیک گیم کوشامل کرنا نہیں بھولی، اس کی رنگین اسکرین کے ساتھ فوٹوز اور ویڈیوز کیلئے ٹو میگا پکسل کا کیمرہ بھی شامل ہے۔

اس کا سب سے اہم فیچر تقریباً ایک ماہ تک چلنے والا بیٹری بیک اپ ہے جبکہ ایک بار چارج ہونے پر اس کی بیٹری کا ٹاک ٹائم 22گھنٹے ہوگا۔

انٹر نیٹ کنیکٹیوٹی ٹو پوائنٹ فائیو جی، ہونے کی وجہ سے آہستہ براؤزنگ رفتار کا حامل ہے۔

موبائل ورلڈ کانگریس میں فروخت کیلئے پیش کیے گئے فون کی قیمت تقریباً ساڑھے 5ہزار پاکستانی روپے کے برابر ہوگی۔

خرگوش کے وائرس سے بلڈ کینسر کے علاج میں پیش رفت

ساؤتھ کیرولینا: خون کے کینسر کی عام قسم ملٹی پل مائیلوما (ایم ایم) کے علاج کی ایک اُمید ایک بھولے بھالے جانور خرگوش سے پیدا ہوئی ہے۔ خاص طور پر صرف اسی جانور میں پائے جانے والے ایک وائرس مائکسوما (ایم وائی ایکس ڈبلیو) سے بلڈ کینسر کے علاج کی راہ ہموار ہوئی ہے۔

ملٹی پل مائیلوما کو ہڈیوں کے گودے کا کینسر بھی کہا جاتا ہے جس کا علاج بہت مشکل ہوتا ہے۔ لیکن خرگوشوں میں پایا جانے والا ایک وائرس مائکسوما مختلف جانوروں میں قدرتی دفاعی نظام (امنیاتی نظام) کو مضبوط کرتا ہے۔ اس سے ان میں سرطانی رسولیوں کو تباہ کرنے کی قوت پیدا ہوتی ہے۔

ملٹی پل مائیلوما خون کے سرطان کی دوسری مشکل ترین قسم ہے جو نہ صرف مہلک ہے بلکہ بار بار حملہ آور ہوتا ہے۔ یہاں تک کہ جدید ترین اسٹیم سیل طریقہ علاج سے بھی تمام کینسر زدہ خلیات ختم نہیں ہوپاتے۔

میڈیکل یونیورستی آف ساؤتھ کیرولائنا اور یونیورسٹی آف اوسلو، ناروے کے سائنسدانوں نے نے ایم وائی ایکس وی کو چوہوں پر آزمایا تو انکشاف ہوا کہ اس سے دو تہائی یعنی 66 فی صد چوہوں کی سرطانی رسولیاں ختم ہوگئیں جبکہ 25 فیصد چوہوں میں یہ مرض مکمل طور پر ختم ہوگیا؛ اس کی تفصیلات مالیکیولر تھراپی اونکولائٹکس میں شائع ہوئی ہیں۔

مطالعاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر ایرک باڑٹی کہتے ہیں: ’اس تحقیق کا سب سے دلچسپ پہلو یہ ہے کہ ایم وائی ایکس وی سے ایم ایم کا علاج کرتے ہوئے اس وائرس کی بجائے خود مریض چوہے کے جسم نے ردِعمل ظاہر کیا۔‘ اس سے ظاہر ہوا کہ یہ وائرس چوہوں کے قدرتی دفاعی نظام کو مضبوط بناتا ہے اور کینسر کو ختم کرتا ہے۔

ماہرین کے مطابق جن چوہوں میں یہ مرض ختم ہوگیا ان میں واپس لوٹ کر نہیں آیا لیکن ان کا تناسب 25 فیصد ہے اور اب اسے بڑھا کر 100 فیصد تک لے جانا ہی اصل چیلنج ہوگا۔ چونکہ ایم وائی ایکس وی انسانی جسم میں نہیں بڑھتا اس لئے یہ انسانوں کے قدرتی دفاعی نظام کو متاثر بھی نہیں کرے گا یعنی کوئی برا اثر نہیں ڈالے گا۔

تحقیق کے دوران معلوم ہوا کہ ہڈیوں کا گودا ویسا ہی رہا  اور نہیں بدلا جبکہ جسم اس قابل ہوگیا کہ وہ سرطانی خلیات سے لڑسکے۔ تاہم انسانوں پر آزمائش کے لئے مزید تحقیق اور تجربات کی ضرورت ہے۔

ایف بی آر پنجاب میں 8 ہزار مقدمات، 92 ارب کا ریونیو رک گیا

اسلام آباد: پنجاب کے 7اضلا ع میں ایف بی آر کے مقدمات 8ہزار سے تجاوز کرگئے جس کے باعث 92 ارب سے زائد کا ریونیو رک گیا ہے۔

ایف بی آر کے سینئر افسر کا کہنا ہے کہ ایف بی آر کی جانب سے ان کیسوں کی پیروی کرکے عدالتوں سے جلد نمٹنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ایکسپریس کو حاصل دستاویزات کے مطابق ڈائریکٹر لاڈائریکٹوریٹ لاہور اشتیاق احمد خان کی جانب سے ریجنل ٹیکس آفس آر ٹی او 2لاہور، ایل ٹی یو لاہور، آر ٹی او فیصل آباد، آر ٹی اوسرگودھا، آر ٹی او ملتان، آر ٹی او بہاولپور، آرٹی او گوجرانوالہ اور آرٹی او سیالکوٹ کو بھی اس سلسلے میں لیٹر ارسال کر دیے گئے ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ میں جو ایف بی آر کے ٹیکس کیسز ہیں ان کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے لہذا ٹیکس کے تنازعات کو حل کر کے غیر ضروری مقدمہ بازی سے اجتناب کیا جائے۔

مذکورہ بالا آر ٹی اوز نے چیف کمشنر ان لینڈ ریونیو کو کہا ہے کہ وہ اپنی اپنی حدود کے کیسوں کی تفصیلات بتائیں جو کیس عدالتوں میں ہیں، ان میں کتنا ریونیو پھنسا ہوا ہے اور ان کیسوں کی قانونی پیچیدگیوں سے بھی آگاہ کیا جائے اوریہ بھی بتایا جائے کہ کیسوں کی آخری سماعت کس کے حق میں ہوئی۔

ذرائع کے مطابق ریونیو شارٹ فال زیادہ ہونے کے باعث ایف بی آر رواںمالی سال کے باقی چند ماہ میں تمام ذرائع سے ٹیکس اکٹھا کرنا چاہتا ہے۔

اسٹاک مارکیٹ : مندی کا رجحان،انڈیکس49 ہزا ر سے نیچے آگیا

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے دوران مندی کا رجحان دیکھا گیا، 100 انڈیکس 49 ہزار کی سطح سے نیچے آگیا۔

پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کے آغاز پر رجحان منفی نظر آیا اور 100 انڈیکس 250 سے زائد پوائنٹس کی کمی سے 48750 کی سطح تک گرگیا۔

انسائٹ سیکیورٹیز کے ذیشان افضل کے مطابق کمپنیوں کے مالیاتی نتائج کا سیزن ختم ہونے کے بعد سرمایہ کاروں کو خریداری کی کوئی وجہ نظر نہیں آرہی ہے جبکہ ایس ای سی پی کی بروکرز کےخلاف کاروائی سے بھی سرمایہ کار محتاط ہیں، جس کی وجہ سے مارکیٹ میں کاروباری حجم کم ہے۔

16 ہزار 212 میگاواٹ بجلی کے 28 منصوبوں پرکام جاری

 اسلام آباد: پرائیویٹ پاور اینڈ انفرا اسٹرکچر بورڈ کے تحت ملک میں 16 ہزار 212 میگاواٹ بجلی کے حامل 28 منصوبوں پر کام جاری ہے، ان میں سے 3 منصوبے2017، 10 منصوبے 2020 جبکہ 15 منصوبے 2024 تک مکمل ہوں گے۔

پی پی آئی بی حکام کے مطابق ہائیڈل، کول اورگیس کے 28 توانائی منصوبوں پرکام جاری ہے۔ ان میں ہائیڈل کے 6 ہزار 339 میگاواٹ کے16منصوبے، کوئلے کے 9 ہزار 753 میگاواٹ کے 11 منصوبے اورگیس کا 120 میگاواٹ کا ایک منصوبہ شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق ان منصوبوں میں سے رواں سال 3 منصوبے مکمل ہوں گے جبکہ باقی آئندہ سال ایک، 2019 میں 2، 2020 میں 7، 2021 میں 3، 2022 میں سات، 2023 میں 2 اور 2024 میں 3 منصوبے مکمل ہوں گے۔

اوگرا کی پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کی سفارش

Google Analytics Alternative