Home » 2017 » March » 09

Daily Archives: March 9, 2017

سوشل میڈیا کا بڑھتا رجحان نوجوانوں کی سماجی تنہائی کا سبب

واشنگٹن: ایک سروے سے انکشاف ہوا ہے کہ فیس بک، انسٹا گرام اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم استعمال کرنے والے نوعمر اور نوجوان لڑکے لڑکیوں میں معاشرے سے دور رہنے کا احساس زیادہ گہرا ہوجاتا ہے اور وہ سماج سے کنارہ کشی اختیار کرلیتے ہیں۔

پِٹس برگ یونیورسٹی میں میڈیا تحقیقی مرکز کے سربراہ ڈاکٹر برائن پرائمیک کا کہنا ہے کہ یہ ایک قدرے بڑا سروے ہے جس میں پورے امریکا سے لوگوں کا ڈیٹا حاصل کیا گیا ہے۔ اس میں 19 سے 32 سال کے 1800 افراد شامل تھے جن سے 2014 میں 20 منٹ کا آن لائن سوال کیا گیا تھا اور ہر ایک کو سروے کے لیے 15 ڈالر دئیے گئے تھے۔ سروے میں نصف خواتین تھیں اور 42 فیصد سیاہ فام امریکی بھی شامل کیے گئے۔

سروے میں فیس بک، ٹویٹر، گوگل پلس، انسٹاگرام، ٹمبلر اور ریڈ اٹ کے استعمال کا تناسب اور شرکا سے احساسِ تنہائی کے بارے میں پوچھا گیا تھا۔ سروے سے معلوم ہوا کہ ان نوجوانوں نے جتنا زیادہ سوشل میڈیا استعمال کیا وہ خود کو معاشرے سے اتنا ہی الگ تھلگ محسوس کررہے تھے یعنی سوشل میڈیا کے استعمال اور احساسِ تنہائی میں براہ راست تعلق دیکھا گیا ہے۔

سروے میں شامل افراد اوسطاً روزانہ 61 منٹ سوشل میڈیا پر ضائع کرتے ہوئے پائے گئے جب کہ جن افراد نے روزانہ 121 منٹ سوشل میڈیا پر گزارے ان میں روزانہ 30 منٹ سوشل میڈیا پر صرف کرنے والوں کے مقابلے میں الگ تھلگ رہنے کا احساس اور خواہش دُگنی تھی۔

لیکن ماہرین یہ جاننے سے قاصر ہیں کہ الگ تھلگ رہنے کا جذبہ سوشل میڈیا کا استعمال بڑھاتا ہے یا سوشل میڈیا کا استعمال نوجوانوں کو معاشرے سے دور کررہا ہے۔ یعنی کون سا عنصر کس رحجان کی وجہ بن رہا ہے اور تحقیقی سوالنامے میں یہ پہلو شامل نہیں تھا۔ تاہم یہ رحجان 19 سے 32 سال تک کے نوجوانوں میں دیکھا گیا جب کہ بڑی عمر کے افراد میں یہ موجود نہ تھا۔

اگر ان کا موازنہ ویب سے دور نوجوانوں سے کیا جائے تو سوشل میڈیا کا بھرپور استعمال کرنے والے نوجوانوں میں معاشرے سے دوری کا رحجان دُگنا بڑھ جاتا ہے۔

ماہرین کے مطابق معاشرے سے الگ اور تنہائی کے شکار افراد سوشل میڈیا کا استعمال اس لیے زیادہ کرتے ہیں تاکہ وہ اپنی بات لوگوں تک پہنچا کر اس کا ازالہ کرسکیں۔

کپاس کاشت سیزن، جعلی بیج، کھاد و ادویات کا کاروبار عروج پر

مختلف کمپنیوں کے ناموں سے جعلی وغیر معیاری زرعی بیج، کھاد وغیرہ کی کھلے عام فروخت کے باعث اور مقامی کاشت کاروں کو زراعت کی جانب سے معلومات فراہم نہ کرنے کے سبب کپاس کی فصل کی فی ایکڑ پیداوار انتہائی کم ہونے کے خدشات ہیں۔

بعض جعلساز ملٹی نیشنل کمپنیوں کی پیکنگ میں جعلی بیج، ادویات اور کھاد کی فروخت میں بھی ملوث ہیں۔ ذرائع کے مطابق جعلسازی کے کاموں میں ملوث افراد کو محکمہ زراعت کی مبینہ سر پرستی حاصل ہے، جس کی وجہ سے ضلع بھر کے شہروں وقصبات میں جعلی وغیر معیاری زرعی بیج، کھاد اور ادویات کا کاروبار کھلے عام جاری ہے۔

دوسری جانب محکمہ زراعت محض فائلوں کا وزن بڑھانے وکارکردگی دکھانے کی خاطر نمائشی چھاپوں ورسمی کارروائیوں تک ہی محدود ہے۔

مقامی کاشت کاروں کا کہنا ہےکہ جعلی وغیر معیاری بیج وکھاد وغیرہ کی کھلے عام فروخت سے فصلوں کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے اور کاشت کار طبقے کو معاشی پریشانیوں کا سامنا ہے۔

انہوں نے محکمہ زراعت کے اعلیٰ حکام سےمطالبہ کیا ہےکہ جعلی وغیر معیاری زرعی بیج وکھاد وغیرہ کے کاروبار میں ملوث افراد کےخلاف فوری وموثر کارروائی کی جائے۔

ایف بی آر 1 لاکھ نان فائلر ود ہولڈنگ ایجنٹس کا بھی آڈٹ کرے گا

اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) نے عام ٹیکس دہندگان کے بعد اب ود ہولڈنگ ٹیکس اسٹیٹمنٹس جمع نہ کرانے والے 11لاکھ ہزار سے زائد ود ہولڈنگ ایجنٹس کو بھی نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے لیے ماتحت اداروں کو نان فائلرز کی فہرستیں مرتب کرکے ایف بی آر کو بھجوانے کی ہدایات بھی جاری کردی ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ ود ہولڈنگ ٹیکس اسٹیٹمنٹس جمع نہ کرانے والے ودہولڈنگ ایجنٹس کو نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ فروری کے آخری عشرے میں ایف بی آر ہیڈ کوارٹرز میں منعقدہ پہلی ود ہولڈنگ کمشنرز کانفرنس میں کیا گیا، ایف بی آر رسک بیسڈ قرعہ اندازی کے ذریعے منتخب ہونے والے 93ہزار سے زائد ٹیکس دہندگان، ٹیکس ایئر 2016 کے گوشوارے جمع نہ کرانے والے 2لاکھ سے زائد افراد کو بھی نوٹس جاری کرچکا ہے اور اب ودہولڈنگ ٹیکس اسٹیٹمنٹس جمع نہ کرانے پر مزید 1لاکھ نوٹسز جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جن 1لاکھ کے لگ بھگ نان فائلر ودہولڈنگ ایجنٹس کو نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ان میں انکم ٹیکس اور سیلز ٹیکس دونوں ود ہولڈنگ ایجنٹس شامل ہیں، اس وقت ملک بھر میں کم وبیش ڈھائی لاکھ ودہولڈنگ ایجنٹس ہیں جن میں رجسٹرڈ انکم ٹیکس ودہولڈنگ ایجنٹس کی تعداد ڈیڑھ لاکھ ہے جس میں وفاقی و صوبائی حکومتیں، ان کے ماتحت ادارے ومحکمے، کمپنیاں، ایسوسی ایشن آف پرسنز اور انفرادی ٹیکس دہندگان شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق ان میں سے 1لاکھ کے لگ بھگ ایسے ود ہولڈنگ ایجنٹس ہیں جو مسلسل ود ہولڈنگ ٹیکس اسٹیٹمنٹس جمع نہیں کرارہے اور انہیں ہی آڈٹ کے نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی جانب سے ٹیکس بچانے کے لیے اپنی آمدنی چھپانے والوں،کم ٹیکس دینے والوں اور ٹیکس ادا نہ کرنے والوں کے خلاف گھیرا تنگ کیا جا رہا ہے، ود ہولڈنگ ایجنٹس کے خلاف کارروائی بھی اسی پالیسی کا حصہ ہے۔

علاوہ ازیں ایف بی آر کے نئے چیئرمین ڈاکٹر ارشاد نے عہدے کا چارج سنبھالنے کے بعد ودہولڈنگ ٹیکس سیکٹر کو اہمیت دی اور ودہولڈنگ کمشنرز کی پہلی کانفرنس بلائی جس میں ود ہولڈنگ سیکٹر کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا اور اہم فیصلے کیے گئے جبکہ ودہولڈنگ ایجنٹس کی ٹیکس ڈائریکٹری شائع کرنے کا فیصلہ بھی اسی کانفرنس میں کیا گیا۔

’ایکسپریس‘ کو دستیاب دستاویز کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ریجنل ٹیکس آفسز(آر ٹی اوز)اور لارج ٹیکس پیئر یونٹس (ایل ٹی یوز)کے چیف کمشنرز کو ہدایات جاری کی ہیں کہ ود ہولڈنگ ٹیکس اسٹیٹمنٹس جمع نہ کرانے والے ود ہولڈنگ ایجنٹس کی فہرستیں مرتب کرکے ایف بی آر ہیڈ کوارٹرز کو بھجوائی جائیں اور نان فائلر ود ہولڈنگ ایجنٹس کو بلک میں نوٹس جاری کیے جائیں، ود ہولڈنگ ایجنٹس کو انکم ٹیکس آرڈیننس 2001کی شق 161 اور شق 205کے تحت آڈٹ نوٹس جاری کرکے ان سے ٹیکس وصولی کے لیے ڈیمانڈ بھی کی جائے اور آڈٹ میں کی جانے والی ٹیکس ڈیمانڈ کی ریکوری کے لیے بھی آرڈر جاری کیے جائیں۔ دستاویز کے مطابق ماتحت اداروںکو ٹیکس دہندگان کے آڈٹ میں ٹیکس ڈیمانڈ کے درست تعین اور تیز ترین ریکوری کو یقینی بنانے پر زور دیا گیا ہے۔

خام تیل کی قیمت سال کی کم ترین سطح پر آگئی

نیویارک میں لائٹ سوئٹ خام تیل کی قیمت 2 ڈالر 86 سینٹ کمی سے 50 ڈالر 28سینٹ پر بند ہوئی۔قیمت کم ہونے کی وجہ امریکی خام تیل کے ذخائر بنے جو مارکیٹ کی توقعات سے تین سو فیصد زائد رہے۔

خام تیل کی قیمتوں کو استحکام دینے کے لئے پیداوار کم کرنے کی حکمت عملی نے ابتداء میں کام کیا لیکن امریکی انوینٹری کے اعداد کے بعد اس کا اثر زائل ہورہا ہے۔

دوسری جانب امریکی شرح سود میں اضافے کی توقعات پر ڈالر کی قدر عالمی مارکیٹ میں بڑھ رہی ہے جو خام تیل کی قیمت کو مزید کم کررہی ہے۔

جنیوا موٹر شو: دنیا کی پہلی ڈرون کار متعارف

فرانس سے تعلق رکھنے والی ایئر بس مینو فیکچرز نے دنیا کی پہلی ڈرون کار پیش کی ہے جو ٹریفک کے شدید دباؤمیں دیوہیکل ڈرون کی مدد سے ہوا میں اُڑان بھر کر اس میں سوار شخص کو منزلِ مقصود تک پہنچا دیتی ہے۔

مکمل طور پر الیکٹرک اور مقناطیسی طاقت سے چلنے والی یہ دیدہ زیب ننھی کار جدید ترین ٹیکنالوجی سے مزین ہے اورماحول دوست ہے جو مستقبل قریب میں فضائی آلودگی کے خاتمے کا سبب بھی بن سکے گی۔

ویسٹ انڈیز کیخلاف ٹی 20 اور ون ڈے سیریز کیلیے 31 ممکنہ کھلاڑیوں کا اعلان

لاہور: ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی 20 اور ون ڈے سیریز کیلیے 31 ممکنہ کھلاڑیوں کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف ٹی 20 اور ون ڈے سیریز کیلیے 31 ممکنہ کھلاڑیوں کا اعلان کر دیا گیا ہے جب کہ تربیتی کیمپ 11 سے 17 مارچ تک قذافی اسٹیڈیم میں لگے گا۔ قومی سلیکشن کمیٹی کی جانب سے جاری کی جانے والی فہرست میں احمد شہزاد، محمد حفیظ، فخر زمان، اظہر علی، شان مسعود، بابر اعظم، شعیب ملک، عمر اکمل، آصف ذاکر، سعد علی، سرفراز احمد، کامران اکمل، فہیم اشرف، حسین طلعت، عماد بٹ، محمد عامر، حسن علی، وہاب ریاض، راحت علی، رومان رئیس، سہیل خان، جنید خان، سہیل تنویر، محمد عباس، عثمان شنواری، اسامہ میر، عماد وسیم، محمد اصغر، شاداب خان، محمد نواز اور یاسر شاہ شامل ہیں۔

لوک گلوکار پٹھانے خان کے گائے گیت آج بھی مقبول

ممتازلوک گلوکار غلام محمد عرف پٹھانے خان ء1920 میں جنوبی پنجاب کے علاقے کوٹ ادو میں پیدا ہوئے ، ان کے گائے ہوئے بے شمار لوک گیت اور صوفیانہ کلام آج بھی مقبول ہیں۔ان کے بڑے صاحبزادے اقبال خان نے برسی کے موقع پر اپنے والد کا کلام گاکر انہیں خراجِ عقیدت پیش کیا ۔

جنوبی پنجاب کے چھوٹے سے علاقے کوٹ ادو میں پیدا ہونے والے اس گلوکار نے اپنی گائیکی سے بڑ ا نام کمایا اور80 سے زائد ایوارڈ اپنے نام کئے۔

پٹھانے خان 9مارچ ء2000 کوجہانِ فانی سے کوچ کرگئے تھے،انہیں خراجِ عقیدت پیش کرنے کے لئے کوٹ ادومیں پٹھانے خان یادگار زیر تعمیر ہے۔

مراد سعید کے جھگڑنے کا واقعہ پہلا نہیں

اس سے پہلے اسی سال جنوری میں پارلیمنٹ میں ہونے والے ایک جھگڑے نے پوری قوم کا سر شرم سے جھکا دیا تھا، جب پی ٹی آئی اور ن لیگ کے اراکین آپس میں گتھم گتھا ہوگئے تھے، بات گالی گلوچ سے نکل کر دھکم پیل تک پہنچ گئی تھی۔

مراد سعیداسمبلی میں اسی سال ہونے والے جھگڑے کے موقع پر بھی موجود تھے اور غصے میں بھی تھے لیکن اس وقت انہیں شاہ محمود قریشی نے روکے رکھا تھا، لیکن آج انہیں مکا چلانے کا موقع مل گیا۔

Skip to toolbar
Google Analytics Alternative