Home » 2018 » June » 01 (page 3)

Daily Archives: June 1, 2018

بھارت میں اقلیتیں محفوظ نہیں، امریکا

نیویارک:  امریکا نے مذہبی آزادی پر جاری کی گئی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ بھارت میں مسلمانوں سمیت کوئی بھی مذہبی اقلیت محفوظ نہیں ہے جب کہ بھارت کو ان ملکوں کی صف میں شامل کردیا گیا ہے جن کی نگرانی کی جائے گی۔

بھارتی ٹی وی کے مطابق امریکا کے مذہبی آزادی کے نگراں ادارے کمیشن آن انٹرنیشنل ریلیجیس فریڈم نے بھانڈا پھوڑدیا، امریکا کی مذہبی آزادی پر سالانہ رپورٹ نام نہاد سیکولر بھارت کا اصل چہرہ دنیا کے سامنے لے آئی۔ مودی کے بھارت میں ہندوتوا اور زیادہ مضبوط اور خطرناک ہوگئی۔

امریکا کے مذہبی آزادی کے نگراں ادارے کمیشن آن انٹرنیشنل ریلیجیس فریڈم کی مذہبی آزادی پر جاری رپورٹ کے مطابق بھارت میں نہ صرف مسلمان بلکہ نچلی ذات کے ہندو دلت بھی محفوظ نہیں۔ رپورٹ میں مرکزی وزیر داخلہ ہنس راج آہیر کا پارلیمنٹ میں دیاگیا بیان شامل کیا گیا ہے۔

بیان میں انھوں نے کہا تھا کہ2017میں822فرقہ وارانہ فسادات ہوئے جن میں111افراد ہلاک اور 2384 زخمی ہوئے۔ شدت پسند ہندو تنظیموں نے گزشتہ برس 10 مسلمانوں کو گائے ذبح کرنے کے الزام میں قتل کردیا۔ مذہبی رواداری میں موجودہ حکومت کے دور میں مزید کمی ہوئی ہے۔ آبادی میں اضافے کے باوجود قانون سازی میں مسلمانوں کا تناسب کم ہوا ہے، ریاست اتر پردیش میں مسلمانوں کی آبادی کا تناسب19فیصد ہے لیکن2017 میں ریاستی اسمبلی میں ان کی نمائندگی میں 6 فیصد کمی ہوئی۔

واضح رہے کہ وزیر اعظم مودی کے ہندو قوم پرست بی جے پی کے ریاستی اسمبلیوں میں 1400 وزرا میں صرف 4 مسلمان ہیں۔ مذہبی عدم تشدد میں اضافے کی وجہ سے بھارت کو 2018 میں ان ملکوں کی فہرست میں رکھا گیا ہے جن کی نگرانی کی جائے گی۔

حکومت کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ

 اسلام آباد: حکومت نے 7 جون تک پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے اپنے ٹوئٹ میں بتایا ہے کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی ہدایت پر 7 جون تک پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھی جائیں گی 7 جون کو نگراں حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں ردوبدل کے حوالے سے فیصلہ کرے گی۔

واضح رہے کہ اوگرا نے پٹرول مصنوعات کی قیمتوں میں 12 روپے تک اضافے کی سمری وزارت خزانہ کو ارسال کی تھی جس میں پٹرول کی قیمت میں 8 روپے تک اضافے کی سفارش کی گئی تھی تاہم موجودہ حکومت نے اپنے آخری دن اس اضافے کو نامنظور کرتے ہوئے قیمتیں برقرار رکھنے کا حکم دیا ہے۔

عید الفطر کے موقع پر اسٹیٹ بینک کی جانب سے نئے کرنسی نوٹ جاری

کراچی: اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے عید الفطر کے موقع پر 3 سو 50 ارب روپے کے نئے کرنسی نوٹ جاری کردیے جو جمعرات سے مخصوص بینکوں میں عوام کے لیے دستیاب ہوں گے۔

گزشتہ برس اسٹیٹ بینک نے 3 سو 42 ارب روپے کے کرنسی نوٹ جاری کیے تھے جو سال 2016 کے مقابلے میں 44 فیصد زائد تھے۔

اس حوالے سے جب اسٹیٹ بینک کے ترجمان عابد قمر سے رابطہ کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ نئے کرنسی نوٹوں کی حتمی مالیت کے بارے میں عیدالفطر کے بعد ہی بتایا جاسکتا ہے، کیوں کہ نئے نوٹوں کی طلب میں ہر سال اضافہ ہورہا ہے، چناچہ نئے نوٹوں کی رسد 3 سو 50 ارب روپے سے زائد ہوسکتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک نے تمام کمرشل بینکوں میں نئے نوٹ پہنچا دیے ہیں جو عوام کے لیے جمعرات سے دستیاب ہوں گے۔

اس ضمن میں اسٹیٹ بینک نے نئے کرنسی نوٹوں کے حصول کے لیے طریقہ کار بھی وضع کیا ہے جو بظاہر کم مالیت کے نوٹ کے خواہشمند افراد کے لیے پیچیدہ ہے، لیکن طلب کو دیکھتے ہوئے کہا جاسکتا ہے کہ عوام نئے نوٹ حاصل کرنے کے لیے کسی بھی طریقے پر عمل کرنے کے لیے تیارہیں۔

اسٹیٹ بینک کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ نوٹ کے خواہشمند افراد ایک ایس ایم ایس میسج 8877 پر بھیجیں گے، اس میسج میں اپنا 13 اعداد پر مشتمل قومی شناختی کارڈ نمبر یا اسمارٹ کارڈ نمبر اور برانچ نمبر لکھیں گے، مثلاً [1234567891234 KHI005], اور اسے 8877 پر بھیج دیں گے۔

اس میسیج کے جواب میں مذکورہ شخص کو ایک میسج موصول ہوگا جس میں ایک کوڈ، ای-برانچ کا پتا اور کوڈ کی معینہ مدت بتائی جائے، عمومی طور پر یہ کوڈ ایس ایم اسی کی تاریخ کے بعد سے 2 دن تک دستیاب ہوتا ہے۔

اس کے بعد صارف اپنے اصل قومی شناختی کارڈ یا سمارٹ کارڈ، قومی شناختی یا سمارٹ کارڈ کی کاپی، 8877 سے میسج میں موصول ہونے والے کوڈ کے ہمراہ متعلقہ بینک کی ای-برانچ سے نئے نوٹ حاصل کرنے کے لیے رابطہ کرسکتا ہے۔

واضح رہے ایک شخص انفرادی طور پر 10 روپے مالیت کے 3 پیکٹ، جبکہ 50 اور 100 روپے مالیت کے صرف ایک ایک پیکٹ حاصل کرسکتا ہے۔

ترجمان اسٹیٹ بینک کا مزید کہنا تھا کہ نئے کرنسی نوٹ اسٹیٹ بینک اور بینکنگ سروس کارپوریشن کے 16 ذیلی دفاتر اور کمرشل بینکوں کی مخصوص برانچوں میں دستیاب ہوں گے، جنہیں ای-برانچ کہا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ای- برانچ کا نمبر، عمومی برانچ کوڈ اور سوئفٹ کوڈ سے مختلف ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ موبائل فون سروس سے نئے کرنسی نوٹ یکم جون 2018 سے 14 جون 2018 تک حاصل کیے جاسکتے ہیں، اس سلسلے میں ملک بھر کے ایک سو 32 شہروں میں موجود ایک ہزار 5 سو 35 ای-برانچوں پر یہ سہولت فراہم کی جارہی ہے۔

کرنسی نوٹ کے حصول کے لیے بھیجے جانے والے ایس ایم ایس پر ڈیڑھ روپے فی ایس ایم ایس کے چارجز لاگو ہوں گے۔

اس سلسلے مخصوص ای برانچوں کا آئی ڈی نمبر اسٹیٹ بینک کی ویب سائٹ http://www.sbp.org.pk ، پاکستان بینکنگ ایسوسی ایشن کی ویب سائٹ http://www.pakistanbanks.org، اور کمرشل بینکوں کی ویب سائٹ سے معلوم کیا جاسکتا ہے۔

جبکہ مذکورہ آئی ڈی نمبر نوٹ کے حصول کے لیے مختص برانچوں کے باہر نمایاں طور پر آویزاں بھی کیا جائے گا۔

خیال رہے گزشتہ برس 3 سو 42 ارب روپے کے نئے نوٹوں میں 100 روپے اور اس سے کم رقم کے 40 ارب روپے مالیت کے نوٹ جبکہ 500 اور اس سے زائد رقم کے 2 سو 96 ارب روپے مالیت کے نوٹ جاری کیے گئے تھے۔

لوڈشیڈنگ کا خاتمہ:’بجلی کے نظام میں 50 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ضرورت‘

اسلام آباد: وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی جانب سے جہاں ایک طرف پریس کانفرنس کے دوران ملک میں بجلی کے بحران پر قابو پانے کا دعویٰ کیا گیا تو وہی ایک خاص پارلیمانی پینل نے پاور ڈویژن کو بتایا ہے کہ لوڈ شیڈنگ کے مکمل خاتمے کے لیے ترسیل اور تقسیم کے نظام میں 40 سے 50 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ضرورت ہے۔

سینیٹ کی خصوصی کمیٹی کے اجلاس میں پاور ڈویژن کے ایڈیشنل سیکریٹری مصدق خان کا کہنا تھا کہ پاور سیکٹر کے ترسیل اور تقسیم کے نظام کو بڑے پیمانے پر اپ گریڈیشن اور مضبوط کرنے کی ضرورت ہے تاکہ لوڈشیڈنگ پر مکمل طور پر قابو پایا جاسکے۔

پاکستان تحریک انصاف ( پی ٹی آئی ) سینیٹر شبلی فراز کی سربراہی میں منعقدہ اجلاس میں مصدق خان نے بتایا کہ اس نظام کو حاصل کرنے کے لیے 40 سے 50 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کمیٹی کو بتایا کہ ملک میں کل 8 ہزار 631 فیڈرز ہیں، جنہیں نقصانات اور وصولی کے حساب سے 1 سے 7 کی درجہ بندی میں تقسیم کیا گیا ہے جبکہ 5 ہزار 367 فیڈرز ایسے ہیں جو 10 فیصد سے کم نقصانات میں ہیں اور انہیں درجہ اول میں شامل کیا گیا۔

بجلی کی پیداوار کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ پیر کے پیک آور تک 20 ہزار 100 میگا واٹ کا سنگ میل تک پہنچ گئے تھے لیکن یہ ٹرانسمیشن میں پیچھے ہے، کیونکہ ملک میں زیادہ تر ٹرانمیشن لائنز بیکار ہوچکی ہیں اور یہ نصف صدی سے زائد پرانی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ درجہ اول کے صارفین لوڈشیڈنگ سے مستثنیٰ ہیں لیکن نقصانات میں اضافے سے انہیں بھی لوڈ شیڈنگ کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اجلاس کے دوران جوائنٹ سیکریٹری پاور زرغام اسحٰق خان نے کمیٹی کو بتایا کہ اپریل 2013 میں پاور ڈویژن کو کل وصولی 410 ارب روپے ہوئی تھی جو 2017 میں بڑھ کر 729 ارب روپے تک پہنچ گئی جبکہ اس وقت اس مد میں 851 ارب روپے وصول ہورہے ہیں۔

دوسری جانب ادائیگیوں کو دیکھا جائے تو 2013 میں یہ 207 ارب روپے تھی، جو بڑھ کر 377 ارب روپے ہوئی اور اب یہ 573 ارب روپے تک پہنچ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نجی شعبے سے وصولی میں بھی اضافہ ہوا اور یہ 2013 میں 260 ارب روپے، 2017 میں 503 ارب روپے اور اپریل 2018 تک 565 ارب روپے تھی۔

اجلاس کے دوران کمیٹی نے بااثر لوگوں کی جانب سے بجلی کی چوری اور بلز کی عدم ادائیگی کو مالی دہشت گردی قرار دیتے ہوئے حکومت سے سوال کیا کہ حکومت اس کی روک تھام کے لیے ایک جیسی حکمت عملی بنائے۔

سینیٹر شبلی فراز کی جانب سے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ غریب عوام باقاعدگی سے بجلی کا بل ادا کرتے ہیں اور اگر وہ کبھی بل بھرنا بھول جائیں تو ان کی بجلی منقطع کردی جاتی ہے جبکہ بااثر لوگ مسلسل ڈیفالفر ہیں لیکن اثر و رسوخ کے باعث کوئی ان کا کے کنیکشن منقطع نہیں کرتا۔

انہوں نے کہا کہ بجلی کے بل کی ادائیگی نہ کرنے والے اور اثر و رسوخ سے سزاؤں سے بچنے والے مالی دہشت گرد ہیں، حکومت کو چاہیے کہ وہ ایسے مالی دہشت گردوں سے نمٹنے کے لیے ایک حکمت عملی بنائے اور اس میں انسداد دہشت گردی ایکٹ شامل کرے

شیاؤمی کا نیا فون آئی فون ایکس کا بہترین اور سستا متبادل؟

ٹیکنالوجی کا استعمال کیا گیا ہے، اس طریقہ کار کو ابھی صرف ایپل کے فیس آئی ڈی اور انٹیل کے رئیل سنس میں ہی استعمال کیا جارہا ہے۔

شیاؤمی می 8 ایکسپلورر— فوٹو بشکریہ شیاؤمی
شیاؤمی می 8 ایکسپلورر— فوٹو بشکریہ شیاؤمی

کمپنی کے مطابق اس فون میں فنگرپرنٹ اسکینر زیادہ تیزی سے فون کو ان لاک کرتا ہے۔

شیاﺅمی می 8 اور می ایٹ ایس ی جون کے پہلے ہفتے میں چین میں فروخت کے لیے پیش کیے جائیں گے جبکہ ایکسپلور ایڈیشن کی تاریخ کا اعلان ابھی نہیں کیا گیا۔

می ایٹ کی قیمت 2 ہزار 699 چینی یوآن (48 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) سے شروع ہوگی، جبکہ می ایٹ ایس ای کی قیمت 1 ہزار 799 یوآن (32 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) سے شروع ہوگی۔

اس کا ایکسپلورر ایڈیشن زیادہ مہنگا یعنی 3 ہزار 699 یوآن (66 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) میں پڑے گا۔

تجربہ گاہ میں تیار ہیرے 90 فیصد کم قیمت پر فروخت کرنے کا اعلان

ندن: ہیرے فروخت کرنے والی عالمی کمپنی ڈی بیئرز نے 130 سالہ تاریخ میں پہلی مرتبہ تجربہ گاہ میں تیارکردہ ہیروں کی فروخت اس سال شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ہیرے اصل کے مقابلے میں صرف 10 فیصد قیمت پر دستیاب ہوں گے۔

تجربہ گاہ میں اس طرح بننے والی اس شے کو ہیرا ہی کہا جائے گا عام آنکھ سے دیکھیں تو کان سے نکلے ہیرے اور تجربہ گاہ  کے ہیروں میں کوئی فرق نظر نہیں آتا۔

ڈی بیئرز نے لیب میں تیارکردہ ہیروں کو ’لائٹ باکس‘ کا نام دیا ہے جسے اس سال خزاں میں امریکا بھر میں فروخت کے لیے پیش کردیا جائے گا۔ ڈی بیئرز اب بھی ہیرے کی 90 فیصد عالمی مارکیٹ پر قابض ہے ایک قیراط قدرتی ہیرا پاکستانی روپوں میں 8 لاکھ میں فروخت ہوتا ہے جبکہ لائٹ باکس سیریز کا ایک قیراط ہیرا 80 ہزار روپے میں دستیاب ہوگا۔

ڈی بیئرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر بروس کلیور نے بتایا کہ تجربہ گاہوں میں ہیرے چند دنوں میں تیار ہوجاتے ہیں۔ اس میں کاربن کا چھوٹا ٹکڑا ایک ویکیوم خانے میں رکھا جاتا ہے اور اسے دباؤ فراہم کیا جاتا ہے۔

اسے میتھین اور ہائیڈروجن گیس سے 3000 درجے سینٹی گریڈ پر گرم کیا جاتا ہے جس کے بعد کاربن ایٹم جمع ہونا شروع ہوجاتے ہیں اور بعد میں تیزرفتار ہوا ڈال کر ان ہیروں کو صاف و شفاف بنایا جاتا ہے۔ اس طرح عین اصل ہیرے کی ایک کاربن کاپی تیار ہوجاتی ہے۔ ماہرین کے مطابق ایک گھنٹے میں 0.0002 ملی میٹر ہیرا نمو پذیر ہوتا ہے۔

اینڈرائیڈ فونز میں عجیب خامی سامنے آگئی

اگر آپ کے پاس اینڈرائیڈ اسمارٹ فون ہے اور اس میں کچھ عجیب دیکھنا چاہتے ہیں تو گوگل ایپ پر the1975..com ٹائپ کرکے دیکھیں۔

جی ہاں، ہم سنجیدہ ہیں، اسے آزما کر ضرور دیکھیں۔

اور اس کا نتیجہ ذہن الجھا دے گا کیونکہ آپ کے حالیہ ایس ایم ایس کی فہرست سامنے آجائے گی۔

سوشل میڈیا سائٹ ریڈیٹ کے ایک صارف نے اینڈرائیڈ فون کی اس خامی کو اتفاق سے اس وقت پکڑا جب وہ گوگل ایپ کی سرچ بار پر ایک میوزک بینڈ دی 1975 کی سائٹ جاننے کی کوشش کررہا تھا مگر غلطی سے 2 ڈاٹ ڈال دیئے۔

ون پلس، سام سنگ، ایل جی اور ہیواوے سمیت لگ بھگ تمام کمپنیوں کے فونز میں یہ عجیب خامی سامنے آئی ہے۔

ریڈیٹ کے صارف کا کہنا تھا ‘ یہ اب تک سامنے آنے والا سب سے حیران کن glitch ہے، جو کہ اتفاق سے ہی سامنے آگیا ہے’۔

ویسے اس گلچ یا خامی پر پریشان ہونے کی ضرورت نہیں کیونکہ جو میسجز سامنے آتے ہیں، وہ آپ کے اپنے ہی ہوتے ہیں، کسی اجنبی کے نہیں۔

اور اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ گوگل ایپ کو آپ نے ایس ایم ایس یا ٹیکسٹ پیغامات تک رسائی دی ہوئی ہوتی ہے۔

گوگل نے فی الحال اس حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

ڈیرن سیمی کے پشتو ٹوئٹس نے ایک بار پھر مداحوں کے دل جیت لیے

پشاور: پشاور زلمی کے چیرمین جاوید آفریدی کی جانب سے ٹوئٹ کے جواب میں ڈیرن سیمی نے پشتو ٹوئٹ کیا ہے جس نے مداحوں کے دل جیت لئے ہیں۔

پشاور زلمی کے چیرمین جاوید آفریدی کی جانب سے ٹوئٹ کے جواب میں  ڈیرن سیمی نے پشتو میں ٹوئٹ کیا اور کہا کہ وہ پشتو زبان زیادہ لکھ نہیں سکتے لیکن کچھ کچھ سمجھ  اور بول ضرور سکتے ہیں۔

ڈیرن سیمی نے کہا کہ پشتو زبان انہیں اپنے مداحوں کے دل کے مزید قریب لاتی ہے۔ جس پر جاوید آفریدی نے ان کا شکریہ ادا کیا۔ جاوید آفریدی نے ڈیرن سیمی کی ویڈیو بھی اپ لوڈ کی جس میں وہ زلمی اور پاکستان فینز کو کہہ رہے ہیں کہ میں آپ سب سے بہت پیار کرتا ہوں۔

Google Analytics Alternative