Home » 2018 » June » 02

Daily Archives: June 2, 2018

جانئے آج آپ کا دن کیسا رہے گا

حمل:
21مارچ تا21اپریل

کسی بھی معاملے میں جذباتیت کا مظاہرہ نہ کیجئے، کوئی شخص اگر آپ سے الجھنا بھی چاہے تو آپ درگزر سے کام لیجئے تاکہ حالات مزید خراب نہ ہو سکیں، کاروبار مزید ترقی کر سکتا ہے۔

ثور:
22اپریل تا20مئی

مخالفین سے الجھنے کی بجائے انہیں راہ راست پر لانے کی کوشش کیجئے اس سلسلے میں حسب سابق مصالحانہ طریقہ کار اختیار کرنا آپ کے لئے زیادہ بہتر ثابت ہو سکتا ہے۔

جوزا:
21مئی تا21جون

رشتہ داروں کے ساتھ ازسرنو تعلقات استوار ہو سکتے ہیں اگر کوئی شخص آپ سے ازخود صلح کرنا چاہے تو اسے مایوس نہ کیجئے خاص طور پر بھائیوں کے ساتھ صلح کرنا آپ کے لئے مناسب رہے گا۔

سرطان:
22جون تا23جولائی

کسی قریبی عزیز کے ساتھ جھگڑا ہو سکتا ہے اس جھگڑے کی بنیاد کوئی جائیداد یا رقمی لین دین بن سکتی ہے، آپ جذباتیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مشتعل نہ ہوں بلکہ خاموشی کے ساتھ یہ دنیاوی تماشا دیکھئے۔

اسد:
24جولائی تا23اگست

ہم نے گزشتہ بھی آپ کو یہی مشورہ دیا تھا کہ اپنے مزاج کی تیزی کو ختم کرنے کی کوشش کیجئے لہٰذا آنکھیں کھول کر حقائق کا سامنا کیجئے تاکہ کامیاب ہو سکیں اور دلجمعی سے کام کرتے رہیں۔

سنبلہ:
24اگست تا23ستمبر

یہ عرصہ آپکی دیرینہ آرزوئوں اور خواہشوں کی تکمیل کا باعث بن سکتا ہے خصوصاً غیر شادی شدہ افراد کو وہ خوشیاں لازمی حاصل ہو سکیں گی جس کی کہ تمنا وہ عرصہ دراز سے رکھتے ہیں۔

میزان:
24ستمبر تا23اکتوبر

اپنے جذبات پر قابو رکھیں اگر یہ بھڑک اٹھے تو نقصان آپ ہی کو برداشت کرنا پڑ سکتا ہے، کہیں سے کثیر رقم مل سکتی ہے، اسے فضول کاموں کی نذر کرنے کی بجائے کاروبار ہی میں لگا دیجئے۔

عقرب:
24اکتوبر تا22نومبر

چند ناراض رشتہ داروں کے ساتھ تعلقات بہتر ہونے کی توقع رکھی جا سکتی ہے، آپ کے مخالفین کو بھی خود بخود اپنی غلطیوں کا احساس ہو سکے گا اور وہ اظہار ندامت بھی کریں گے۔

قوس:
23نومبر تا22دسمبر

مکان کی تعمیر یا مرمت کے منصوبے کو عملی شکل دینے کا موقعہ مل سکتا ہے، گھریلو معاملات کے سلسلے میں دوسروں کے مشوروں کواہمیت دے کر اپنے پیروں پر خود کلہاڑی چلانے والی کہاوت کو سچا ثابت نہ کریں۔

جدی:
23دسمبر تا20جنوری

نزدیکی سفر شوق سے کیجئے، بفضل خدا یہ سفر وسیلہ ظفر بن سکتا ہے، شریک حیات سے وابستہ توقعات پوری ہو سکتی ہے، اپنے مزاج کو ٹھنڈا رکھیں اور جھگڑے فساد سے قطعی پرہیز کریں۔

دلو:
21جنوری تا19فروری

بسلسلہ شادی اپنے والدین کے فیصلے کو ہی تسلیم کرلینا آپ کے حق میں بہتر ثابت ہو سکتا ہے۔ غیر شادی شدہ افراد عشق و محبت کے ڈراموں کا حقیقی کردار بننے کی غلطی نہ کریں۔

حوت:
20 فروری تا 20 مارچ

بہت ساری خوبیوں کے ساتھ آپ میں چند خامیاں بھی ہیں۔ آپ خود کو زیادہ عقلمند سمجھ کر ہر معاملے کو حل کرنے کی کوشش کرتے ہیں، کاش آپ اگر ایسا نہ کریں تو زندگی بڑی ہی خوشگوار گزرے۔

انتخابات کسی صورت ملتوی نہیں ہونے دیں گے، نوازشریف

سابق وزیراعظم اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف نے دوبارہ حکومت میں آکر ملک سے بے روزگاری ختم کرنے کا عزم ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ انتخابات کو کسی صورت ملتوی نہیں ہونے دیں گے۔

فیصل آباد کے علاقے میانی میں مسلم لیگ (ن) کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا کہ انتخابات کی بھرپور تیاری کریں اور الیکشن میں مہریں پوری لگنی چاہیں۔

حکومت کی گزشتہ ادوار کی کارکردگی کو دہراتے ہوئے انھوں نے کہا کہ نوازشریف نے پاکستان کوایٹمی قوت بنایا، موٹر وے بنائے، دہشت گردی ختم کی، کیا یہ میرا جرم ہے۔

انھوں نے کہا کہ عدالت میں80 پیشیاں بھگتی ہیں لیکن کوئی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔

نواز شریف نے کہا کہ ملک میں بجلی آنہیں رہی بلکہ سستی بھی ہورہی ہے اور اگلی مدت میں فیصل آباد سے براہ راست لاہور جانے کے لیے موٹروے بنائیں گے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ آج ترقی دیکھنی ہے تو پنجاب آکر دیکھو، پنجاب میں سڑکیں بنیں، کارخانے لگے اور کالج بنے اور پنجاب میں اتنے منصوبے بنے کہ روز افتتاح ہوئے۔

پاکستان کے دیگر صوبوں کی حکومتوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انھوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا (کے پی) اور سندھ میں کوئی منصوبہ نہیں بنا، بلوچستان میں صرف ایک منصوبے کا افتتاح ہوا۔

انھوں نے کہا کہ لوڈشیڈنگ اور دہشت گردی ختم کرنے کا وعدہ پورا کردیا، امید ہے مسلم لیگ ن کی حکومت دوبارہ آئے گی اور مسلم لیگ ن کی حکومت آئی توکوئی بے روزگارنہیں رہےگا۔

اپنے خطاب میں نواز شریف نے کہا کہ الیکشن کسی صورت ملتوی نہیں ہونے دیں گے، فیصل آباد والوں نے بلوچستان اسمبلی کی قرارداد مسترد کردی ہے۔

نواز شریف نے بلوچستان اسمبلی میں انتخابات کے التوا کے لیے منظور ہونے والی قرار داد کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور مسلم لیگ (ن) کے حکومت گرانے کے حوالے سے ورکرز سے سوال کیا کہ حکومت گرانے والوں کو جانتے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریک انصاف سمیت دیگر تمام سیاسی جماعتوں نے الیکشن کے التوا کی مخالفت کی تھی تاہم کے پی کے سابق وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے انتخابات کو ایک ماہ تک ملتوی کرنے کے لیے خط لکھا تھا۔

حکومتی مدت پوری کرنے کاکریڈیٹ نوازشریف کوجاتاہے،مریم نواز

سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز حکومت کے 5 سالہ مدت پوری ہونے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف نے وزارت عظمیٰ کی قربانی دے دی اور ووٹ کی حرمت پرآنچ نہ آنے دی۔

انھوں نے کہا کہ نوازشریف نے آصف زرداری کی حکومت کو نہیں گرایا۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے اپنے وعدے پورے کردیے ہیں۔

حکومت کے 5 سالہ مدت مکمل ہونے پر بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ نوازشریف نے وزارت عظمیٰ کی قربانی دے دی،ووٹ کی حرمت پرآنچ نہ آنےدی اور جمہوریت کو گرانے نہیں دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ دوسری جمہوری حکومت نے اپنی مدت پوری کی اور حکومتی مدت پوری کرنے کا کریڈیٹ نوازشریف کو جاتا ہے۔

لاہور ہائی کورٹ نے انتخابات کیلیے کاغذات نامزدگی کالعدم قرار دے دیئے

لاہور: ہائی کورٹ نے عام انتخابات کے لئے ارکانِ پارلیمنٹ کی جانب سے تیار کردہ کاغذات نامزدگی کو کالعدم قراردے دیا ہے۔

عام انتخابات کے بروقت انعقاد  کو مزید ایک خطرہ لاحق ہوگیا ہے اور لاہور ہائی کورٹ نے پارلیمنٹ کے تیار کردہ کاغذاتِ نامزدگی کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔  لاہور ہائی کورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے آئینی ماہر سعد رسول کی درخواست پر محفوظ فیصلہ سنایا۔ سعد رسول نے الیکشن ایکٹ کی دفعہ 60، 110  اور 137 کو چیلنج کیا تھا۔

کاغذات نامزدگی میں غیر ملکی آمدن، زیرِ کفالت افراد کی تفصیلات چھپانے کا اقدام، مقدمات کا ریکارڈ، ٹیکس ڈیفالٹ چھپانے کا اقدام، قرضہ نادہندگی، دہری شہریت، یوٹیلٹی ڈیفالٹ، پاسپورٹس چھپانے کا اقدام اور کاغذات نامزدگی میں مجرمانہ سرگرمیاں چھپانے کا اقدام بھی کالعدم کردیا گیا ہے۔

عدالت کا الیکشن کمیشن کو نئے کاغذات نامزدگی تیار کرنے کا حکم

عدالت  نے پارلیمنٹ کے تیار کردہ کاغذات نامزدگی آئین سے متصادم قرار دیتے ہوئے الیکشن کمیشن کو نئے کاغذات نامزدگی تیار کرنے کا حکم دیا ہے۔ اور حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ  نئے کاغذات نامزدگی میں آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 کے تقاضے دوبارہ شامل کئے جائیں۔

پاکستان امن سے محبت کرنے والا ملک ہے، سربراہ پاک فوج

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ پاکستان امن سے محبت کرنے والا ملک ہے اور عالمی امن کے لیے کردار ادا کر رہا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق اقوام متحدہ کے زیر اہتمام انٹرنیشنل پیس کیپرز ڈے کا اہتمام کیا گیا جس میں یو این امن مشن میں شامل 7 پاکستانیوں کی قربانیوں کا اعتراف کیا گیا۔ اقوام متحدہ کی جانب سے یو این امن مشن کے دوران جام شہادت نوش کرنے والے پاکستانی جوانوں کو میڈلز سے نوازا گیا۔

اس موقع پر پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ پاکستان امن سے محبت کرنے والا ملک ہے اور عالمی امن کے لیے کردار ادا کر رہا ہے۔

ذوالفقار کھوسہ پی ٹی آئی میں شامل، دوست محمد کھوسہ کو پارٹی میں لینے سے انکار

لاہور: مسلم لیگ (ن) کے ناراض رہنما سردار ذوالفقار کھوسہ نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کرلی تاہم پی ٹی آئی نے دوست محمد کھوسہ کو پارٹی میں شامل کرنے سے انکار کردیا۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کئی روز سے سردار ذوالفقار کھوسہ کو پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے کے لیے قائل کررہے تھے۔ ان کی کامیابی کے بعد عمران خان دیگر پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ لاہور میں ذوالفقار کھوسہ کی رہائش گاہ پہنچے۔ عمران خان سے ملاقات کے دوران سردار ذولفقار کھوسہ نے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کردیا۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ذوالفقار کھوسہ کا مسلم لیگ (ن) میں ایک مقام تھا، ہم ذوالفقار کھوسہ کو پارٹی میں خوش آمدید کہتے ہیں۔

pti

اس موقع پر ذوالفقار کھوسہ کے بیٹے اور سابق وزیر اعلیٰ پنجاب دوست محمد کھوسہ نے بھی تحریک انصاف میں شمولیت کی خواہش ظاہر کی تاہم  تحریک انصاف نے انہیں پارٹی میں شامل کرنے سے انکار کردیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دوست محمد کھوسہ پر سپنا کیس کے حوالے سے مختلف الزامات تھے جس کے باعث انہیں تحریک انصاف میں شامل نہیں کیا گیا۔

واضح رہے کہ ذوالفقار کھوسہ کا شمار مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنماؤں میں ہوتا تھا، وہ پنجاب کے گورنر کی حیثیت سے بھی ذمہ داریاں سر انجام دے چکے ہیں تاہم اپنے آبائی علاقے میں روایتی انتخابی حریف فاروق لغاری مرحوم کے بیٹے اویس لغاری کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کے بعد پارٹی قیادت سے ان کے شدید اختلافات ہوگئے تھے۔

یاد رہے کہ ایک روز قبل ہی تحریک انصاف نے اداکارہ شبنم سے 1979ء میں زیادتی کے مرتکب سیاسی رہنما فاروق بندیال کو تحریک انصاف سے نکال دیا ہے وہ دو روز قبل ہی تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے۔

بلوچستان ہائیکورٹ نے کوئٹہ کی نئی حلقہ بندیوں کو کالعدم قرار دیدیا

کوئٹہ: بلوچستان ہائیکورٹ نے صوبائی دارالحکومت  کی نئی حلقہ بندیوں کو  کالعدم قرار دے دیا۔

نئی حلقہ بندیوں کے خلاف دائر درخواستوں پر سماعت جسٹس نعیم اختر افغان اور جسٹس عبداللہ بلوچ پر مشتمل 2 رکنی بنچ نے کی۔عدالت نے درخواستوں پر فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے کوئٹہ شہر کی حلقہ بندیاں کالعدم قرار دے دیں جب کہ خضدارکے حلقہ پی بی 39 اور پی بی 40 کی حلقہ بندی سے متعلق  درخواستیں خارج کردیں۔

عدالت نے الیکشن کمیشن کو فوری طور پر نئی حلقہ بندیاں کرنے کے احکامات جاری کرتے ہوئے جلد ازجلد یہ کام مکمل کرنے کی ہدایت کی۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ملک کے 10 مختلف اضلاع کی نئی حلقہ بندیاں کالعدم قرار دی جاچکی ہیں۔

خواجہ آصف کی تاحیات نااہلی کالعدم قرار

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے خواجہ آصف کی تاحیات نااہلی کو کالعدم قرار دیدیا ہے۔

سپریم کورٹ کے جسٹس عمر عطا بنديال كى سربراہى ميں 3 ركنى بينچ نے خواجہ آصف کی تاحیات نااہلی کے فیصلے کے خلاف نظر ثانی درخواست پر سماعت کی، اس موقع پر عثمان ڈار کے وكيل نے دلائل میں کہا کہ خواجہ آصف وفاقى وزير ہوتے ہوئے غير ملكى كمپنى ميں ملازمت كرتے رہے، ان کا یہ اقدام مفادات كا اقدام ہے۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے استفسار کیا کہ كيا مفادات كے ٹكراؤ سے نا اہلى ہو سكتى ہے، دنيا ميں مفادات كے ٹكراؤ پر بہت بحث ہوئى، امریکی صدر ٹرمپ كى بيٹى حكومتى معاملات ميں ذمہ دارياں سر انجام ديتى ہے اور ان کا داماد اپنا كام كرتا ہے لہذا  كيا مفادات كے ٹكراؤ پر نا اہلى ہونى چاہيے يا عوامى عہدے داروں كو وارننگ دى جائے۔

وکیل خواجہ آصف نے کہا کہ آرٹیکل 184 تھری کے مقدمہ میں شواہد کا بوجھ درخواست گزار کے کندھوں پر ہوتا ہے، ہر بھول یا غلطی پر آرٹیکل 62 ون ایف کا اطلاق نہیں ہوتا اور جہاں حقائق تسلیم کر لیے جائیں تو پینلٹی نااہلی ہوسکتی ہے، قانون کے تحت اثاثوں کے ذرائع بتانا لازمی نہیں، اثاثہ وہی ہوگا جوتنخواہ سے بچت ہوگی۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس میں کہا کہ گیارہ بجے بتائیں گے کہ فیصلہ سنانا ہے یا محفوظ کرنا ہے، کسی نتیجے پر پہنچے تو فیصلہ سنا دیں گے اور اگر کسی نتیجے پر نہ پہنچے تو فیصلہ محفوظ کر لیں گے۔

وقفہ کے بعد جب سماعت دوبارہ شروع ہوئی تو عدالت نے مختصر فیصلے میں خواجہ آصف کی تاحیات نااہلی کو ختم کرتے ہوئے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا، اس حوالے سے تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا تاہم عدالتی فیصلے کے بعد سابق وزیر خارجہ خواجہ آصف آئندہ الیکشن میں حصہ لے سکیں گے۔

نگراں وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک نے عہدے کا حلف اٹھالیا

 اسلام آباد: سابق چیف جسٹس ناصر الملک نے نگراں وزیراعظم کے عہدے کا حلف اٹھالیا ہے۔

نگراں وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک نے اپنے عہدے کا حلف اٹھالیا ہے، حلف برداری کی تقریب ایوان صدر میں ہوئی جس میں صدر ممنون حسین نے ناصر الملک سے عہدے کا حلف لیا۔ حلف برداری کی تقریب میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، سابق وزرا، ارکان پارلیمنٹ، چاروں گورنرز، سفارتکاروں، اٹارنی جنرل، انجینئر امیر مقام، ناصر جنجوعہ، کشمالہ طارق اور وفاقی سیکرٹریوں نے شرکت کی جب کہ اپوزیشن جماعتوں کا کوئی رہنما شریک نہیں ہوا۔

نگراں وزیر اعظم ناصر الملک وزیراعظم ہاوس پہنچے تو انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، قومی ترانہ بجایا گیا اور مسلح افواج کے دستے نے سلامی دی۔ اس موقع پر نگراں وزیر اعظم کا افسران اور اسٹاف سے تعارف بھی کرایا گیا جس کے بعد نگراں وزیر اعظم نے باضابطہ ذمہ داریاں سنبھال لیں۔

نگراں وزیر اعظم نے کہا کہ انشاء اللہ کابینہ بھی جلد حلف اٹھائے گی، نگران کابینہ مختصر ہوگی، ہمیں آئین کے مطابق الیکشن کمیشن کے کام میں سہولت فراہم کرنا ہے، جس کام کے لیے آئے ہیں اپنی وہ ذمہ داری پوری کریں گے، انتخابات بروقت اور شفاف ہوں گے۔

وزیر اعظم ہاؤس میں اپنی ذمہ داریاں سنبھالنے پر وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد نے نگراں وزیراعظم کو بریفنگ دی، اس موقع پر فواد حسن فواد نے نگراں وزیر اعظم کو اپنی خدمات سے سبکدوش کرنے کی درخواست کی، نگراں وزیراعظم نے فواد حسن فواد کو خدمات جاری رکھنے کی پیشکش کی تاہم پرزور اصرار پر نگران وزیراعظم نے سہیل عامر کو سیکرٹری برائے وزیراعظم جب کہ فواد حسن فواد کو ڈی جی سول سروس اکیڈمی لاہور اور ابو عاکف کو سیکرٹری کیبنٹ مقرر کردیا۔

واضح رہے کہ پاکستان کی تاریخ میں دوسری حکومت اپنی 5 سالہ آئینی مدت پوری کرنے کے بعد گزشتہ رات ختم ہوگئی تھی جس کے ساتھ ہی قومی وصوبائی اسمبلیاں اور وفاقی کابینہ بھی تحلیل ہوگئی ہیں۔

پاکستان میں مسلسل دوسری جمہوری حکومت نے اپنی 5 سالہ مدت پوری کی جس کے ساتھ ہی مسلم لیگ (ن) کی حکومت ملک میں دوسری آئینی مدت پوری کرنے میں کامیاب ہوئی اس سے قبل پاکستان پیپلزپارٹی کی حکومت نے 2013 میں اپنی 5 سالہ آئینی مدت پوری کی تھی۔

Google Analytics Alternative