Home » 2018 » June » 09

Daily Archives: June 9, 2018

جانئے آج آپ کا دن کیسا رہے گا

حمل:
21مارچ تا21اپریل

غیر ملکی سفر کا امکان ہے نتائج حوصلہ افزاء برآمد ہو سکتے ہیں کوئی تعمیراتی منصوبہ عملی شکل اختیار کر سکتا ہے۔ راہ چلتے یا گاڑی چلاتے ہوئے محتاط رہیں کوئی دیرینہ آرزو پوری ہو سکتی ہے۔

ثور:
22اپریل تا20مئی

مکان تعمیر و مرمت کا پلان عملی شکل اختیار کر سکتا ہے بسلسلہ تعلیم شاندار کامیابی ہو سکے گی غیر شادی شدہ افراد اپنا دامن بچانے کی کوشش کریں ان کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے تاکہ کوئی نقصان نہ پہنچا سکے۔

جوزا:
21مئی تا21جون

آپکا کوئی دوست آپ سے مکمل تعاون کر سکتاہے۔ آپ بھی اسکے مشوروں کو قبول کریں تاکہ کسی کے ہی طفیل کامیابی آپ کا مقدر بن جائے۔ اگر آپ خود کو عقلمندوں کا بادشاہ سمجھنا چھوڑ دیں تو بہت کچھ ہو سکتا ہے۔

سرطان:
22جون تا23جولائی

گزشتہ کی طرح محتاط رہ کر ہر کام کیجئے۔ ناکامیاں کم ہی ہوں گی۔ کاروبار میں تھوڑی سی تبدیلی کی جاسکتی ہے۔ لیکن حالات و واقعات کو مد نظر رکھتے ہوئے تبدیی کیجئے تاکہ نقصان نہ ہو سکیں۔

اسد:
24جولائی تا23اگست

آپ کے لئے یہ عرصہ ہر لحاظ سے بہتر ثابت ہو سکتا ہے لیکن شرط یہ ہے کہ آپ کوئی موقع ہاتھ سے نہ جانے دیں اور ہر کام جلدی جلدی کرتے رہئے تا کہ حالات بہتر ہو سکیں۔

سنبلہ:
24اگست تا23ستمبر

اگر خوشگوار زندگی بہتر کرنا چاہتے ہیں تو بتدریج اپنے آپ کو بدلنے کی کوشش کیجئے۔ سب سے الگ تھلگ رہ کر زندگی گزارنا اچھے لوگوں کا دستور نہیں ہوا کرتا۔

میزان:
24ستمبر تا23اکتوبر

بعض جذباتی فیصلوں کی وجہ سے مخالفین کی قتوں میں اضافہ ہو سکتا ہے گھریلو ماحول خاصا الجھ سکتا ہے۔ بزرگان سے وابستہ توقعات پوری ہو سکتی ہیں۔

عقرب:
24اکتوبر تا22نومبر

اپنے جذبات پر حسب سابق قابو پانے کی کوشش کیجئے کاروباری حضرات کو خاصی محنت و جدوجہد کرنی پڑ سکتی ہے۔ بہر حال مایوسی نہیں ہو سکتی نیا کاروبار ہر گز نہ کریں۔

قوس:
23نومبر تا22دسمبر

آپ کا رویہ آپ کے چھوٹوں کے ساتھ بہت غلط ہوتا ہے آخر آپ اس حقیقت کو کیوں نظر انداز کر دیتے ہیں تا کہ آج کے چھوٹے کل کے بڑے ہوں گے اور اس وقت آپ کا مقام کیا ہو گا۔

جدی:
23دسمبر تا20جنوری

خود کو مزاجی طور پر قدرے سرد ہی رکھنے کی کوشش کیجئے شریک حیات کو ناراض ہونے کا موقع نہ دیجئے تا کہ گھریلو گاڑی متوازن طریقے سے منزل کی جانب گامزن رہ سکے۔

دلو:
21جنوری تا19فروری

آپ کے بعض کام بھی التواء میں پڑ سکتے ہیں مالی مشکلات سے بھی دوچار ہونا پڑ سکتا ہے لہٰذا ہمارا پہلا مشورہ یہ ہے کہ آپ کے پاس اگر کچھ رقم ہے تو اسے فضول کاموں کی نذر نہ کیجئے۔

حوت:
20 فروری تا 20 مارچ

چند اہم کاموں میں آپ نے حیران کن کامیابی حاصل کی ان کامیابیوں کے پیچھے ہمارے ان مشوروں کا کس قدر ہاتھ ہے جو ہم نے آپ کو ان صفحات پر دیئے تھے۔ اس کا بہتر اندازہ آپ ہی لگا سکتے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے مزید 4 فلسطینیوں کو شہید کردیا

غزہ: عالمی یوم القدس پر اسرائیلی فوج نے وحشیانہ کارروائی کرتے ہوئے غزہ کی سرحد پر جمع مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کرکے 4 فلسطینی نوجوان کو شہید اور 600 سے زائد کو زخمی کردیا۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق حق واپسی تحریک کے تحت 30 مارچ سے شروع ہونے والے ہفت وار گرینڈ مارچ کا سلسلہ جمعے کے روز بھی برقرار رہا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کی، مظاہرین میں نوجوانوں کی بڑی تعداد کے ساتھ ساتھ خواتین اور کم عمر لڑکے بھی شامل تھے۔

مظاہرین نے غزہ کی سرحد پر ٹائروں کو نذر آتش کیا اور اسرائیلی فوج پر پتھراؤ کیا جب کہ صہیونی فوج نے ظلم کے سلسلے کو برقرار رکھتے ہوئے نہتے فلسطینیوں پر براہ راست گولیاں چلائیں۔ اسرائیلی نشانہ باز اہل کاروں نے نوجوانوں کو نشانہ بناتے ہوئے 4 فلسطینیوں کو شہید جب کہ درجنوں کو زخمی کردیا۔

وزارت صحت کا کہنا ہے کہ صبح سے جاری احتجاج کے دوران اسرائیلی فوج کی فائرنگ اور آنسو گیس کی شیلنگ سے 600 سے زائد افراد زخمی ہوئے جن میں خواتین اور کم عمر لڑکے بھی شامل ہیں۔ اسرائیلی فوج کی جانب سے فائرکیا گیا آنسو گیس کا ایک شیل فلسطینی نوجوان کے منہ میں گیا جس سے وہ بری طرح زخمی ہوگیا اور اسے فوری طور پر اسپتال منتقل کردیا گیا۔

واضح رہے کہ 30 مارچ سے جاری احتجاجی تحریک میں صیہونی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 125 سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ ہزاروں  زخمی ہوئے  ہیں۔

نگراں وزیر اعظم کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس

اسلام آباد: نگراں وزیراعظم جسٹس ریٹائرڈ ناصر الملک کی سربراہی میں قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا ہے جس میں مختلف امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔

نگراں وزیر اعظم جسٹس ریٹائرڈ ناصر الملک کی سربراہی میں قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا ہے،جس میں تینوں مسلح افواج کے سربراہان، وزرائے داخلہ، خارجہ اور خزانہ کے علاوہ دیگر حکام نے شرکت کی۔

اجلاس کے دوران متعلقہ حکام کی جانب سے ملک کی موجودہ معاشی صورتحال، دہشتگردی کے خاتمے اور جاری آپریشن پر بریفنگ دی گئی، اجلاس میں منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی فنڈنگ پر نظر رکھنے والے عالمی ادارے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس(ایف اے ٹی ایف) کی گرے لسٹ سے نکلنے کے لئے حکمت عملی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ کمیٹی نے فیصلہ کیا کہ ایف اے ٹی ایف کو پاکستان کی جانب سے دہشت گردی کے خلاف اقدامات اور حکومت کی پالیسیوں سے آگاہ کیا جائے۔

دشمنوں کی شدید خواہش ہے کہ مجھے جیل میں ڈال دیا جائے،نوازشریف

منڈی بہاؤالدین: سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ چند لوگ 70 سالوں سے ملک کی تقدیر کا فیصلہ کرتے آئے ہیں لیکن ہم اب ایسا نہیں ہوں دیں گے جب کہ دشمنوں کی شدید خواہش ہے کہ مجھے جیل میں ڈال دیا جائے۔

منڈی بہاؤالدین میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ دشمنوں کی شدید خواہش ہے کہ مجھے پابند سلاسل کردیا جائے، ان دشمنوں کی خواہش پہلے بھی پوری ہوچکی ہے جب مجھے اٹک جیل میں ڈالا گیا، ملک بدر کیا گیااور اب یہ  پھر جیل میں ڈالنے کے خواہشمند ہیں اگر میں قید ہوبھی گیا تو عوام کا ساتھ نہیں چھوڑوں گا، میں جہاں بھی ہوں گا  وہاں تک آپ کی آواز مجھ تک پہنچے گی۔

مسلم لیگ(ن) کے قائد کا کہنا تھا کہ میں بزدل شخص نہیں ہوں اور نہ میں اپنی ذات کے لیے لڑرہاں ہوں بلکہ میں آئندہ آنے والی نسلوں کے لیے جدوجہد کررہا ہوں، لوڈشیڈنگ اور دہشت گردی کا خاتمہ کرنے اور ملک کو ایٹمی قوت بنانے والا شخص آج پیشیاں بھگت رہا ہے مجھے بیٹے سے تنخواہ نہ لینے کی سزا دی گئی،بیٹے کی تنخواہ نہ لینے پر وزات عظمیٰ سے فارغ اور پھر تاحیات نااہل کردیا گیا۔

’’ چند لوگ ملک کی تقدیر کا فیصلہ کرتے رہے ہیں ‘‘

نوازشریف نے کہا کہ   ملک میں ووٹ کا کوئی تقدس نہیں،70 سالوں سے ووٹ کو عزت نہیں دی گئی اور چند لوگ ملک کی تقدیر کا فیصلہ کرتے رہے لیکن اب ایسا نہیں ہوگا ہم چند لوگوں کو تقدیر کا فیصلہ کرنے نہیں دیں گے اور ووٹ کے تقدس اور اس کی عزت کو بحال کریں گے۔

’’ کس آئین کے تحت مشرف کواجازت دی گئی ‘‘

دوسری جانب احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نوازشریف کا کہنا تھا کہ ججوں کونظربند کرنے، 12 مئی کا واقعہ ، دوبارآئین توڑنے، بگٹی قتل کیس میں بھی پرویزمشرف شامل ہے، کس آئین کے تحت مشرف کواجازت دی گئی، اس کی شق ہمیں بھی پڑھادیں، ایسے شخص کوکیسے گارنٹی دی جا سکتی ہے اورمیں نے بیگم کی عیادت کے لئے تین دن کا استثنیٰ مانگا جو نہیں مل رہا۔

’’ سب کچھ قانون سے بالاترہورہا ہے ‘‘

نوازشریف نے کہا کہ ہماری عقل و فراست میں یہ بات نہیں آ رہی، سب کچھ قانون سے بالاترہورہا ہے، ایک طرف سنگین غداری کا مقدمہ دوسری طرف الیکشن لڑنے کی مشروط اجازت مل گئی، اب کہاں گیا آئین و قانون، آرٹیکل 6 اورکدھر گئے سارے مقدمے، ایک شخص کس طرح قانون اورآئین سے بالاترہوسکتا ہے۔

قرضہ معافی کیس:’اگر قوم کے پیسے واپس نہ کیے تو معاملہ نیب کو بھیج دیں گے‘

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے 54 ارب روپے کا قرضہ معاف کرانے والی 222 کمپنیوں سے ایک ہفتے میں تفصیلی جواب طلب کرلیا۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ نے قرضہ معافی سے متعلق ازخود نوٹس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ قوم کے 54 ارب روپے کھانے کے باجود کمپنیاں تاحال کام کر رہی ہیں، انہوں نے پیسے بھی ہضم کرلیے لیکن لینڈ کروزر اور کاروبار چل رہے ہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اگر قوم کے پیسے واپس نہ کیے تو معاملہ قومی احتساب بیورو (نیب) کے حوالے کردیں گے اور قرض نادہندگان کی جائیدادیں بھی ضبط کرلی جائیں گی۔

دوران سماعت فریقین کے وکلاء کی جانب سے کیس کی سماعت ملتوی کرنے کی استدعا کی گئی، جس پر چیف جسٹس نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ اس اہم کیس کو ملتوی نہیں کرسکتا، روزانہ کی بنیاد پر کیس کی سماعت ہوگی۔

عدالت میں وکلاء کی جانب سے استدعا کی گئی کی سیکیورٹی اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کے ذریعے کمپنی کو نوٹسز دیئے جائیں، اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ پبلک نوٹس کردیا ہے، اگر کوئی نہیں آتا تو اپنی ذمہ داری پر مت آئے، جو کمپنیاں نہیں آئیں گی ان کے خلاف یکطرفہ کارروائی ہوگی۔

بعد ازاں عدالت نے 222 کمپنیوں سے ایک ہفتے میں جواب طلب کرتے ہوئے سماعت 19 جون تک ملتوی کردی۔

خیال رہے کہ اس سے قبل گزشتہ سماعت میں عدالت نے تمام کمپنیوں کو عدالت میں پیشی کے لیے نوٹس جاری کیے تھے۔

یاد رہے کہ جسٹس (ر) جمشید کمیشن نے خلاف ضابطہ قرضے معاف کرانے والی 222 کمپنیوں کے خلاف مزید کارروائی کی سفارش کی تھی۔

کمیشن کی رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ 222 کمپنیوں نے 18 اعشاریہ 717 ارب کا قرضہ لیا اور قرضے کی رقم کا 8 اعشاریہ 949 ارب روپے واپس کیے۔

رپورٹ کے مطابق 222 کمپنیوں کی جانب اس وقت 11 اعشاریہ 769 ارب روپے کا قرض واجب الادا ہے، اس کے علاوہ ان کمپنیوں پر بینک سود کی مد میں 23 اعشاریہ 572 ارب روپے بھی واجب الادا ہیں۔

کمیشن کے مطابق مجموعی طور پر 620 قرضہ معافی کے مقدمات میں 84 ارب روپے معاف کیے گئے، 222 کمپنیوں کے 35 ارب روپے کے قرض سرکلر نمبر 2002/29 کے تحت معاف ہوئے۔

تحریک انصاف نے قومی و صوبائی اسمبلیوں کے امیدواروں کی فہرست جاری کردی

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف نے عام انتخابات کے لیے امیدواروں کی فہرست جاری کردی ہے جس کے مطابق عمران خان قومی اسمبلی کے 5 حلقوں سے انتخاب میں حصہ لیں گے۔

پی ٹی آئی نے قومی اسمبلی کے 173 اور صوبائی اسمبلیوں کے 290 امیداروں کی فہرست جاری کی ہے، چیئرمیں تحریک انصاف 5 حلقوں سے انتخاب لڑیں گے، عمران خان قومی اسمبلی کی نشستوں بنوں 35، میانوالی 95، اسلام آباد 53، لاہور 131 اور کراچی243 سے الیکشن لڑیں گے۔

شاہ محمود قریشی این اے 156 ملتان اور ان کے بیٹے زین قریشی این اے 157 ملتان سے انتخابات میں حصہ لیں گے جب کہ علیم خان لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 129، ڈاکٹر یاسمین راشد این اے 125 لاہور اور اعجاز چوہدری این اے 131 لاہور سے الیکشن لڑیں گے۔

ڈاکٹر عارف علوی کو این اے 247  اور علی زیدی کو این اے 244 کراچی سے ٹکٹ دیا گیا، فواد چوہدری این اے 67 جہلم سے انتخابی معرکہ لڑیں گے جب کہ ابرار الحق این اے 78 نارووال اور عثمان ڈار این اے 73 سیالکوٹ سے انتخابی دنگل لڑیں گے۔

پی ٹی آئی 25 فیصد خواتین کو ٹکٹ دینے کی شرط پر عمل نہ کرسکی، خیبر پختونخوا سے کسی خاتون کو قومی اسمبلی کا ٹکٹ جاری نہیں کیا گیا اور صرف صوبائی اسمبلی سے ایک خاتون کو ٹکٹ دیا گیا جب کہ صوبائی اسمبلی کے لیے چالیس سال سے زائد عمر کے 61 امیدواروں کو ٹکٹ جاری کیا گیا۔

گرمی کی وجہ سے انتخابات آگے بڑھ جائیں تو کوئی قباحت نہیں، نگراں وزیر اعلیٰ بلوچستان

کوئٹہ: بلوچستان کے نگراں وزیر اعلیٰ علاؤ الدین مری نے کہا ہے کہ اگر گرمی کی وجہ سے انتخابات 10 سے 15 روز تک آگے بڑھ جائیں تو کوئی قباحت نہیں۔

بلوچستان کے نگراں وزیر اعلیٰ علاؤ الدین مری نے اپنے عہدے کا حلف اٹھالیا، گورنر محمد خان اچکزئی نے ان سے حلف لیا جب کہ حلف برداری کی تقریب میں سابق وزیراعلیٰ میر عبدالقدوس بزنجو ، سردار صالح بھوتانی اور دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ نگراں وزیر اعلیٰ نے عہدے کا حلف اٹھاتے ہی ایک نئی بحث چھیڑ دی اور کہا کہ اگر گرمی کی وجہ سے الیکشن 10 تا 15 روز آگے بڑھ جائیں تو کوئی قباحت نہیں۔

نگراں وزیر اعلیٰ نے کہا کہ میرا کوئی سیاسی ایجنڈا نہیں، قیام امن اور شفاف انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنایا جائے گا، ہماری کوشش ہوگی کہ زیادہ سے زیادہ لوگ انتخابات میں اپنا حق رائے دہی استعمال کریں، انتخابات کو شفاف بنانے کے لیے تمام سیاسی جماعتوں سے رابطے کیے جائیں گے۔

علاؤ الدین مری نے مزید کہا کہ صوبائی کابینہ مختصر ہوگی حلقہ بندیوں کے حوالے سے سیاسی جماعتوں کے تحفظات برقرار ہیں۔

نگراں وزیراعظم گردشی قرضوں اور لوڈشیڈنگ کی حقیقت سے قوم کوآگاہ کریں، عمران خان

اسلام آباد: چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے کہ نگراں وزیراعظم ملک میں جاری توانائی بحران اور سابقہ وفاقی حکومت کی جانب سے 500 ارب کے گردشی قرضے کے حوالے سے قوم کو آگاہ کریں۔

’’حکومتی امور کی سرانجام دہی میں ناکامی کا کون ذمہ دار ہے ‘‘

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے نگراں وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک  کو خط لکھا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ وزیراعظم بجلی کے بحران کی حقیقی صورتحال پر قوم کو اعتماد میں لیں اور قوم کو بتایا جائے کہ پاور سیکٹر میں حکومتی امور کی سرانجام دہی میں ناکامی کا کون ذمہ دار ہے، جب کہ عوام کو گردشی قرضوں کی 500 ارب کی رقم کے حوالے سے بھی درست صورتحال بتائی جائے۔

’’ قوم کے ساتھ کیے گئے وعدے اور دعوے کس قدر پورے ہوئے ‘‘

عمران خان نے خط میں کہا ہے کہ طویل مشکلات برداشت کرنے والے عوام کا حق ہے کہ انہیں صحیح حقائق کا پتہ چلے، قوم کو پتہ چلنا چاہئے کہ ان کے ساتھ کیے گئے وعدے اور دعوے کس قدر پورے ہوئے، عوام شریف برادران کے اس دعوے پر بھی جاننا چاہتے ہیں کہ اب بجلی بحران کی ذمہ داری نگراں حکومت پر ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر عمران خان نے خط کے حوالے سے تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ  ملک میں بڑتی ہوئی گرمی کی لہر اور دوسری جانب پانی اور بجلی کے بڑھتے مسائل پر میں نے نگراں وزیر اعظم کو خط لکھا ہے کہ وہ اس معاملے پر قوم کو اعتماد میں لیں اور سچ بتائیں، عوام کو حق حاصل ہے کہ وہ مسلم لیگ (ن) کے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے جھوٹے دعوؤں کے بارے میں مکمل طور پر آگاہ ہوں، شہباز شریف کے لوڈ شیڈنگ کے حوالے سے یہ بیان کہ ’’اب لوڈ شیڈنگ کی ذمہ دار نگراں حکومت ہوگی‘‘ کی بھی وضاحت کریں۔

Google Analytics Alternative