Home » 2018 » July » 09

Daily Archives: July 9, 2018

نوازشریف! نیلسن منڈیلا بننے کی کوشش نہ کرنا،عمران خان

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے نوازشریف! نیلسن منڈیلا بننے کی کوشش نہ کرنا۔

ایبٹ آباد میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ 25 جولائی کو قوم پاکستان کےروشن مستقبل کا فیصلہ کرےگی، باریاں لینے والوں نے ملک کو تباہی کے دہانے پرلاکھڑا کیا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ چارٹرآف ڈیموکریسی پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ میں ایک مک مکا تھا، دونوں جماعتیں اقتدار میں پیسے بنانے آتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان 27 ہزار ارب روپے کا مقروض ہے جبکہ 10سال پہلے پاکستان پر 6 ہزار ارب روپے قرض تھا کیونکہ حکمرانوں نے پیسہ بنانے کے لیے کرپٹ لوگ اداروں میں بٹھائے۔

مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انیوں نے کہا کہ اطلاع ہے کہ باپ بیٹی جمعہ کو واپس پاکستان آرہے ہیں بسم اللہ ضرور آئیں لیکن نواز شریف! خدا کے واسطے نیلسن منڈیلا بننے کی کوشش نہیں کرنا، نیلسن منڈیلا نے اپنی قوم کی آزادی کے لیے 27 سال جیل میں گزارے کیونکہ وہ عظیم آدمی تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے پاکستانی عوام کے پیسے لندن میں 16 کمپنیوں میں رکھے اور جب اُن سے جواب مانگا گیا تو وہ کہتے ہیں کہ میرے خرچے زیادہ ہیں تو آپ کو اس سے کیا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ پیسہ چوری کیا ہے اور منڈیلا بنتے ہیں، ہاتھ ایسے ہلا رہے ہیں کہ کوئی معرکہ مارا ہو، باپ بیٹی معصوم بنتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کیپٹن(ر) صفدر ایسے گرفتاری دے رہے ہیں جیسے کشمیر فتح کرکے آئے ہیں۔

خیال رہے کیپٹن (ر) نیب کو گرفتاری دینے کے لیے مسلم لیگ (ن) راولپنڈی کے رہنماؤں اور کارکنان کی ایک بڑی ریلی کے ہمرا آئے تھے۔

دوسری جانب مریم نواز نے گزشتہ روز سوشل میڈیا میں اپنے پیغام میں کہا تھا کہ ڈاکٹرز والدہ کی طبیعت کے حوالے سے حتمی طور پر کچھ نہیں کہہ سکتے اس لیے ہم جمعہ (13 جولائی) کو واپس آئیں گے۔

خوشی ہے صفدر نے شیر کی طرح گرفتاری دی، مریم نواز

لندن: سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے کہا ہے کہ خوشی ہے کہ صفدر نے شیر کی طرح گرفتاری دی، مجھے بے نظیر سے نہ ملایا جائے میری اپنی الگ پہچان ہے۔

لندن میں میڈیا سے گفتگو کے دوران مریم نواز نے کہا کہ خوشی ہے کہ کیپٹن (ر) صفدر نے دلیرانہ طریقے سے شیر کی طرح گرفتاری دی، گرفتاری کیا، کوئی بھی قربانی دینا پڑی تو دیں گے کیوں کہ ہم اور کروڑوں لوگ ’’ووٹ کوعزت دو‘‘ کے جھنڈے تلے مارچ کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 25 جولائی کو ووٹ ڈال کر  عوام نواز شریف سے ہونے والی ناانصافیوں کا بدلہ لیں گے، عوام اب خود میاں صاحب کی مہم چلائیں گے کارکنوں کو کال دینے کی کوئی ضرورت نہیں، عوام خود میاں نواز شریف کے ساتھ ہیں۔

مریم نواز نے کہا کہ عمران خان ہوں یا ان کے ماسٹرز، سب کے ہاتھ سے کھیل نکل چکا ہے اور عمران خان کی ڈوریاں ہلانے والوں کے ہاتھ پچھتاوے کے سوا کچھ نہیں رہے گا

صحافی کی جانب سے بے نظیر ثانی کہلوانے کے سوال پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ میں بے نظیر بھٹو کی عزت کرتی ہوں ان کی ایک جدوجہد ہے لیکن میرا ان کے ساتھ موازنہ درست نہیں، میں مریم نواز ہوں اور میری پہچان مسلم لیگ (ن) ہے۔

قبل ازیں لندن میں ایک اور میڈیا گفتگو میں مریم نواز کا کہنا تھا کہ ہم چند روز میں لاہور آرہے ہیں، لوگ سزا سے بچنے کے لیے ملک سے باہر جاتے ہیں لیکن ہم گرفتاری دینے پاکستان آرہے ہیں، نواز شریف نے گرفتاری دینے کے فیصلے سے نئی روایت قائم کردی، ہماری قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی، قربانی ہم دیں گے اور اس کا فائدہ آنے والی نسلوں اور قوم کو ہوگا۔

رہنما مسلم لیگ (ن) مریم نواز کا کہنا تھا کہ ووٹ کو عزت دو کی تحریک فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے، میں اور نواز شریف پاکستان میں جمہوریت کے حامیوں کی نمائندگی کررہے ہیں، ہم جمہوریت دیکھنے والوں کی لڑائی لڑیں گے۔

مریم نواز کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف نے قدم بڑھا دیا ہے اور قوم ان کے پیچھے ہے، کچھ لوگ کمر درد کا بہانہ بناکر ملک سے بھاگ کر لندن آجاتے ہیں، ایسے بھی لیڈر ہیں جنہوں نے سزا سے بچنے کے لیے پاکستان سے باہر رہنے کو ترجیح دی۔

نیب نے کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا

 راولپنڈی: قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا۔

نیب کی ٹیم نے کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا ہے۔ کیپٹن صفدر دوپہر 2 بجے جلوس کی شکل میں ن لیگ کے مرکزی دفتر لیاقت باغ پہنچے۔ اس موقع پر مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کی بڑی تعداد ان کے ہمراہ تھی۔

کیپٹن صفدر کے 3 گھنٹے تک راولپنڈی کی سڑکوں پر جلوس اور تقاریر

کیپٹن صفدر 3 گھنٹے تک راولپنڈی کی سڑکوں پر جلوس نکالتے رہے اور تقاریر کرتے رہے۔ اس دوران پولیس نے انہیں گرفتار کرنے کی کوشش لیکن ن لیگ کے کارکنوں نے مزاحمت کرکے پولیس کو گرفتاری سے روک دیا۔ شام پانچ بجے نیب کی ٹیم نے حتمی کارروائی کرتے ہوئے کیپٹن صفدر کو گرفتار کرلیا۔

کیپٹن (ر) صفدر ایون فیلڈ ریفرنس میں جمعہ کو احتساب عدالت کی جانب سے ایک سال قید کی سزا سنائے جانے کے بعد روپوش ہوگئے تھے اور دو روز بعد ان کی گرفتاری عمل میں آئی۔

گرفتاری دینا غیرت کا تقاضا ہے پارٹی فیصلے کا احترام کروں گا، صفدر

کیپٹن (ر) صفدر نے آج صبح آڈیو بیان جاری کرتے ہوئے باضابطہ گرفتاری دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ مانسہرہ شہر سے گرفتاری دینے کا سوچا تھا، لیکن پارٹی فیصلے کے نتیجے میں کسی اور شہر سے گرفتاری دے دوں گا، گرفتاری دینا غیرت کا تقاضا ہے اور اس حوالے سے پارٹی فیصلے کا احترام کروں گا۔

صفدر دو روز سے راولپنڈی میں روپوش تھے، نیب ٹیمیں مانسہرہ میں تلاش کرتی رہیں

کیپٹن صفدر دو روز سے راولپنڈی میں روپوش تھے، لیکن نیب کی ٹیم انہیں ایبٹ آباد اور مانسہرہ میں تلاش کرتی رہی۔ مجرم کی گرفتاری کیلئے نیب راولپنڈی بیورو اور خیبرپختونخوا بیورو کی ٹیموں نے ایبٹ آباد اور مانسہرہ میں چھاپے مارے جب کہ ہری پور میں بھی کیپٹن صفدر کے گھر کی نگرانی کی جاتی رہی۔

احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کو 10 سال، مریم نواز کو 7 اور کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی ہے ۔ نواز شریف اور مریم نواز بیرون ملک ہونے کی وجہ سے تاحال نیب کی گرفت میں نہیں آسکے۔

واضح رہے کہ کیپٹن صفدر کو اس سے پہلے 9 اکتوبر 2017 کو بھی نیب مقدمے میں احتساب عدالت میں پیش نہ ہونے پر گرفتار کیا جاچکا ہے۔

نواز شریف تشویشناک حالت میں بیوی کو چھوڑ کر وطن واپس آرہے ہیں، شہباز شریف

بہاول نگر: پاکستان مسلم لیگ نواز کے صدر اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف اپنی اہلیہ کو زندگی اور موت کی کشمکش میں چھوڑ کر وطن واپس آرہے ہیں کیوں کہ ان کے دل میں قوم کی بہت محبت ہے۔

بہاولنگر میں ورکرز کنونشن سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے دن رات قوم کی خدمت کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ احتساب عدالت کے جج نے خود کہا کہ نواز شریف نے کرپشن نہیں کی ہے، ہم پر جھوٹے الزامات لگائے جاتے ہیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ 2013 میں بجلی 20، 20 گھنٹے جاتی تھی مگر واپس نہیں آتی تھی، اب صورت حال بہت بہتر ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ آپ نے جھوٹے خان کو سنا، کہتے تھے پورے پاکستان میں بجلی لائیں گے، اب کہتے ہیں بجلی بیٹھ گئی ہے، بجلی تاروں پر ناچتی ہے، انہیں نہیں پتہ، کیا دن رات جھوٹ بولنے والے کو پاکستان کا وزیراعظم بناؤ گے؟

انہوں نے کہا کہ کیا ایٹمی طاقت کے منصوبے سے نوازشریف کی تختی مٹائیں گے، بجلی اور سی پیک کے منصوبوں سے تختی مٹائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ٹھیک ہے کہ وہ ترقیاتی کام نہیں ہوئے جو ہونا چاہئے تھے۔

سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ ہمارے دور میں پکی سڑکیں بنیں اور دانش اسکول بھی بنے۔

انہوں نے کہا کہ چشتیاں کے ریگستان میں کھڑے ہو کر دانش اسکول بنایا تھا، کئی سو ارب روپے کے ترقیاتی کاموں کی میں نے سرمایہ کاری کرائی۔

شہباز شریف نے کہا کہ 10 سالوں میں جنوبی پنجاب میں کئی 100 ارب روپے کی سرمایہ کاری کرائی، ہم نے رحیم یار خان میں بہترین آئی ٹی یونیورسٹی بنائی ہے۔

انہوں نے کہا کہ خانیوال سے لودھراں 27 ارب کی دورویہ سڑک بنائی جبکہ مظفرگڑھ سے ڈیرہ غازی خان دو رویہ سڑک بنائی۔

شہباز شریف نے کہا کہ اگر ہندوستان اپنےچولستان کو سرسبز کرسکتا ہے تو ہم کیوں نہیں کرسکتے، ہم ضرور کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ سیلاب کا پانی سندھ میں گر کر سمندر میں غرق ہوجاتا ہے، یہ پانی ڈیم بنا کر جمع کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ پنجاب کو ملائشیا اور ترکی کے مقابلے میں نہ لایا تو میرا نام نہیں، وعدہ کرتا ہوں دن رات کام کروں گا۔

مریم نواز نے وطن واپسی کا شیڈول جاری کردیا

لندن: مسلم لیگ (ن) کی رہنما مریم نواز نے اپنا اور والد نواز شریف کی وطن واپسی کا شیڈول جاری کردیا، دونوں جمعے کو لندن سے براستہ ابوظہبی لاہور پہنچیں گے۔

مسلم لیگ ن کی رہنما و سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کے ٹوئٹ کے مطابق وہ اور ان کے والد نواز شریف 12 جولائی جمعرات کو لندن سے ابوظہبی پہنچیں گے بعد ازاں 13 جولائی کو ابوظہبی سے لاہور ایئرپورٹ کے لیے روانہ ہوں گے۔

مریم نواز کے مطابق ان کی فلائٹ شام ساڑھے چھ بجے لاہور ایئرپورٹ پر لینڈ کرے گی۔

نیب نے احتساب عدالت سے وارنٹ حاصل کرنے کے بعد ایئرپورٹ پر ہی دونوں مجرموں کی گرفتاری کے انتظامات مکمل کرلیے ہیں۔ دوسری جانب مسلم لیگ (ن) نے ملک بھر سے اپنے کارکنوں کو اپنے قائد کے استقبال کے لیے ایئرپورٹ پہنچنے کی ہدایت کی ہے۔

صرف نواز شریف نہیں تمام لوگوں کا احتساب ضروری ہے ، سراج الحق

کراچی: جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے احتساب سے مسئلہ حل نہیں ہوگا بلکہ ان تمام لوگوں کا بھی احتساب ضروری ہے جنہوں نے عوام اور ملک کے اداروں کو لوٹ کر قوم کو مقروض کیا ہے۔

کراچی کے علاقے بنارس میں انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق کا کہنا تھا کہ 40 سالوں میں شہر میں پانی کا ایسا بحران نہیں آیا، حکمرانوں کے لیے تو فرانس سے منرل واٹر آجاتا ہے لیکن یہاں لمبی لمبی قطاروں میں لوگ پانی کے لیے کھڑے ہوتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں بار بار متحدہ قومی موومنٹ اور پیپلز پارٹی کو موقع ملا لیکن انہوں نے حق ادا نہیں کیا اور مسائل میں اضافے ہی کیے ہیں جب کہ متحدہ مجلس عمل ایک کلین اور گرین پاکستان چاہتی ہے۔

سراج الحق کا کہنا تھا کہ حکمران خود تو امیر ہوگئے لیکن عوام کو غریب کرگئے ہیں، ملک کے بیروزگاروں کو روزگار نہیں دے سکے ہیں لہذا حکمرانوں کو شرم کرنی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ شہر کی ہر گلی و سڑک موہن جودڑو کے کھنڈرات کا منظر پیش کررہی ہے لیکن 25 سال تک اس شہر کے اقتدار پر قبضہ کرنے والوں نے مایوسی کے علاوہ کچھ نہیں دیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ سیاسی جماعتیں عوامی مفاد کے بجائے اپنے مفادات کے لیے آپس میں لڑ رہی ہیں اور ایک دوسرے کے ساتھ مل رہی ہیں۔

سراج الحق کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری خوش آئند ہے لیکن اس کے علاوہ پانامہ اسکینڈل میں ملوث 436 لوگوں سے زائد افراد کی فہرست چیف جسٹس کے سامنے پیش کی لیکن میں حیران ہوں کہ چیف جسٹس نے اب تک اس پر ایکشن نہیں لیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم احتساب چاہتے ہیں اور بے لاگ چاہتے ہیں، اگر یہ لوگ احتساب کے اس عمل کو مکمل نہیں کرسکے تو عوام 25 جولائی کو یوم احتساب منائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے احتساب سے مسئلہ حل نہیں ہوگا، ان تمام لوگوں کا بھی احتساب ضروری ہے جنہوں نے عوام اور ملک کے اداروں کو لوٹ کر قوم کو مقروض کیا ہے، ہم تمام ڈاکوؤں کا احتساب ہوتا ہوا دیکھنا چاہتے ہیں۔

خدا کی قسم میں اقتدار اپنے لیے نہیں, عوام کے لیے چاہتا ہوں، بلاول

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ’میں اقتدار اپنے لیے نہیں چاہتا میں اقتدار خدا کی قسم عوام کے لیے چاہتا ہوں، کسانوں کی فلاح کے لیے چاہتا ہوں، ملک کو دہشتگردی سے پاک کرنےکے لیے چاہتا ہوں، بھوک مٹانے کے لیےچاہتا ہوں‘۔

مظفر گڑھ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس ملک کا سب سے بڑا مسئلہ غربت ہے اور ہم نے سندھ میں غربت کے خاتمے کا منصوبہ دیا جس کے تحت آسان بلاسود قرضے دیے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت بینظیر کسان کارڈ کے ذریعے کسانوں کو رلیف دے گی اور بھوک مٹاؤ منشور کے تحت فوڈ کارڈز جاری کیے جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’میں استحصال سے پاک معاشرہ چاہتا ہوں، جہاں قانون کی حکمرانی ہو، عوام کی خدمت پاکستان پیپلز پارٹی کا نصب العین ہے‘۔

جنوبی پنجاب صوبے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ’پاکستان پیپلز پارٹی کا منشور وہ منشور ہے جس کے تحت جنوبی پنجاب صوبہ بنا کر رہیں گے‘۔

انہوں نے کہا کہ عوام کے حقوق اور معاشی انصاف جب تک یہ چیزیں پوری نہیں کروں گا تب تک خاموش نہیں بیٹھوں گا اور ہر جنگ لڑ کر محترمہ کا مشن پورا کرنا چاہتا ہوں۔

انہوں نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’آپ فیصلہ کریں کہ آپ کو میٹرو چاہیے یا معیاری تعلیم، معیاری صحت، زراعت یا بنیادی سہولتیں چاہییں۔

بلاول زرداری کا کہنا تھا کہ ’میں زندگی کے پہلے الیکشن کےلیے نکلا ہوں اور مجھے آپ سے امید ہے کہ آپ میرا ساتھ دیں گے‘۔

یو بی ایل، سمٹ اور سندھ بینکس کے سربراہان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سمٹ بینک، سندھ بینک اور یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ کے سربراہان اور جعلی اکاؤنٹس سے فائدہ اٹھانے والے دیگر افراد کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈالنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس اور ان سے ہونے والی منی لانڈرنگ کی تحقیقات کیلئے پاناما کیس طرز پر مشترکہ تحقیقاتی ٹیم (جے آئی ٹی) بنائی جائے جس میں مالیاتی ماہرین بھی شامل ہوں۔

سپریم کورٹ میں جعلی بینک اکاؤنٹس سے رقوم کی منتقلی پر از خود نوٹس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔

عدالت عظمیٰ نے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) بشیر میمن کو ریکارڈ سمیت ذاتی حیثیت میں طلب کررکھا تھا۔

کیس کی سماعت شروع ہوئی تو چیف جسٹس نے ڈی جی ایف آئی اے سے استفسار کیا کہ تفتیش کے مطابق کتنے ارب روپے کا معاملہ ہے؟ جس پر ایف آئی اے کے ڈی جی نے عدالت کو بتایا کہ 2010 میں ذرائع سے ملنے والی معلومات کی بنیاد پر انکوائری شروع کی گئی اور ابتدا میں 4 اکاؤنٹس کی نشاندہی کی گئی تاہم اب ان اکاؤنٹس کی تعداد 29 ہوگئی ہے۔

ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن نے عدالت عظمیٰ کو بتایا کہ ان اکاؤنٹس میں 16 سمٹ بینک، 8 سلک بینک اور 5 یو بی ایل کے اکاؤنٹس تھے جبکہ یہ اکاؤنٹس 7 افراد کے ناموں پر تھے اور ان اکاؤنٹس سے 35 ارب روپے کی ٹرانزیکشنز کی گئیں۔

انہوں نے بتایا کہ میرے احکامات پر سمٹ بینک کا سندھ بینک میں انضمام روکا گیا۔

اس موقع پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ 29 اکاؤنٹ ہولڈرز کے نام بھی بتائیں، جس پر ڈی جی ایف آئی اے نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ طارق سلطان کے نام پر 5 اکاؤنٹس، ارم عقیل کے نام 2 اکاؤنٹس، محمد اشرف کے نام پر ایک ذاتی اور 4 لاجسٹک ٹریڈر اکاؤنٹ کے ہیں، محمد عمیر کے نام پر ایک ذاتی اور 6 اکاؤنٹس حمیرا اسپورٹس کے نام پر ہیں۔

بشیر میمن نے عدالت کو بتایا کہ محمد عمیر بیرون ملک مقیم ہیں، عدنان جاوید کے 3 اکاؤنٹس لکی انٹرنیشنل کے نام پر ہیں، قاسم علی کے 3 اکاؤنٹس رائل انٹرنیشنل کے نام پر ہیں۔

ڈی جی ایف آئی اے نے بتایا کہ محمد اشرف نے سندھ ہائیکورٹ سے رجوع کررکھا ہے، جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ان کی درخواست یہاں منگوا لیتے ہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ 35 ارب روپے کا فراڈ ہے آپ نے ان لوگوں کو بلایا بھی نہیں، جس پر ڈی جی ایف آئی اے نے بتایا کہ ہم ان تمام افراد کو طلب کررہے ہیں۔

اس موقع پر جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ صرف سمن جاری کرنا کافی نہیں، چیف جسٹس نے ڈی جی ایف آئی اے سے استفسار کیا کہ اب تک تفتیش کے مطابق ان کے پیچھے کون ہے؟

ڈی جی ایف آئی اے نے بتایا کہ ہم نے سب کو نوٹس جاری کیے ہیں، ایک مقدمہ بھی درج کروادیا ہے، جس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کتنے دن میں یہ انکوائری مکمل کرلیں گے؟ کن لوگوں کے نام آپ چاہیں گے ای سی ایل میں ڈال دیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جن لوگوں سے آپ لڑنا چاہ رہے ہیں وہ آپ کے قابو میں نہیں آئیں گے، آپ کو سپریم کورٹ کی مدد درکار ہوگی، وائٹ کالر کرائم کو پکڑ لیا تو تمام مسائل حل ہوجائیں گے۔

انہوں نے مزید ریمارکس دیئے کہ سمٹ بینک، سندھ بینک اور یو بی ایل کے سربراہان کو بلا لیتے ہیں، اگر وہ ریکارڈ فراہم نہیں کرتے تو ہم دیکھ لیں گے، کیا نیب اور ایف آئی اے کی جوائنٹ ٹیم نہیں بن سکتی، پاناما طرز پر جے آئی ٹی بنائیں جس میں فنانشل ماہرین بھی ہوں۔

عدالت عظمیٰ نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ہمیں تعاون نہ کرنے والوں کے نام بتائیں نوٹس لیں گے، کیا سمٹ بینک کے صدر کے خلاف ایف آئی آر درج ہوئی؟ بینک کا صدر گرفتار ہوجائے تو اس سے ریکارڈ آسانی سے ملے گا، ذمہ دار افراد بیماری کا بہانہ بنا کر بیرون ملک چلے جائیں گے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی اے تفتیش کرے کہ پیسہ کہاں سے آیا اس کا ذریعہ کیا ہے، مشکوک ٹرانزیکشن کی تحقیق کریں، 35 ارب روپے کے بینفشریز کون ہیں؟

اس موقع پر ڈی جی ایف آئی اے نے عدالت کو بتایا کہ حسین لوائی اور دیگر کو گرفتار کر لیا ہے جن کا تعلق سمٹ بینک سے ہے، ناصر عبداللہ کے سمٹ بینک اکاؤنٹ میں 24 لاکھ 90 ہزار روپے منتقل ہوئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ7 کروڑ روپے انصاری شوگر مل کو گئے، اومنی کو 50 لاکھ، پاک ایتھانول کو ڈیڑھ کروڑ، چمبڑ شوگر 20 کروڑ، اینگرو فارم کو 57 لاکھ روپے گئے، اس کے علاوہ زرداری گروپ پرائیویٹ لمیٹڈ کو ڈیڑھ کروڑ روپے گئے، 35 ارب روپے سمٹ بینک سے نکالے جا چکے۔

عدالت عظمیٰ نے تمام متعلقہ بینکس کے سربراہان کو نوٹسز جاری کردیئے، اس کے علاوہ سمٹ بینک، سندھ بینک اور یو بی ایل کے سی ای اوز اور سربراہان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ جب تک انکوائری چل رہی ہے یہ بیرون ملک نہیں جاسکتے۔

سپریم کورٹ نے آصف زرداری اور فریال تالپور سمیت 13 بینیفشریزاور 7 ملزمان کو 12 جولائی کو طلب کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی سندھ آئندہ سماعت پران کی حاضری یقینی بنائیں۔

عدالت نے وزارت داخلہ کو حکم دیا کہ اکاؤنٹ کولڈرز اور اسکینڈل میں ملوث لوگوں کے نام ای سی ایل میں ڈالے جائیں۔

عدالت نے اسٹیٹ بینک کے سینئر افسران کو بھی نوٹسز جاری کیے اور اسٹیٹ بینک کو ہدایت کی کہ ایف آئی اے کو متعلقہ ریکارڈ کی حوالگی یقینی بنائی جائے۔

اس کے علاوہ عدالت نے سمٹ بینک کے اسٹیٹ بینک میں موجود 7 ارب کی ضمانت کی رقم کو منجمد کرنے کا حکم بھی دے دیا۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ سپریم کورٹ تحقیقات نہیں کر سکتی لیکن تحقیقاتی ایجنسی کو تعاون فراہم کر سکتی ہے۔

عدالت عظمیٰ نے آئی جی سندھ کو گرفتار حسین لوائی سمیت تمام افراد کی حاضری آئندہ سماعت پر یقینی بنانے کا حکم بھی دیا۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت 12 جولائی تک کے لیے ملتوی کردی۔

Google Analytics Alternative