تازہ ترین
Home » 2018 » August » 03

Daily Archives: August 3, 2018

اپوزیشن کا وزیراعظم، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کیلیے متفقہ امیدوار لانے پر اتفاق

اسلام آباد: اپوزیشن جماعتوں کے درمیان وزیراعظم، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے لیے متفقہ امیدوار لانے پر اتفاق ہوگیا ہے۔ 

حالیہ نتائج کے خلاف متحدہ اپوزیشن کی دوسری آل پارٹیز کانفرنس اسپیکر ایاز صادق کے گھر پر منعقد ہوئی جس میں مسلم لیگ (ن)، پیپلزپارٹی، ایم ایم اے، اے این پی سمیت دیگر ہم خیال جماعتوں کے رہنماؤں نے شرکت کی۔

کانفرنس میں تحریک انصاف کو ٹف ٹائم دینے کے لیے وزیراعظم، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کا مشترکہ امیدوار لانے کے لیے جوائنٹ ایکشن کمیٹی تشکیل دی گئی جس میں مسلم لیگ (ن) سے مشاہد حسین سید، سعد رفیق، احسن اقبال ، پیپلزپارٹی سے شیری رحمان، قمر زمان کائرہ کو شامل کیا گیا جب کہ دیگر رہنماؤں میں میاں افتخار حسین، غلام احمد بلور، مولانا عبدالغفور حیدری، اویس نورانی ، لیاقت بلوچ، بیرسٹر مسرور،عثمان کاکڑ،رضامحمد رضا،  ملک ایوب ، انیسہ زیب طاہر خیلی اور سینیٹر میر کبیر شامل ہیں۔

بعد ازاں جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ارکان کے درمیان ملاقات ہوئی جس میں وزیراعظم ، اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کے لیے مشترکہ امیدوار پر اتفاق کیا گیا۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے سینیٹ میں قائد حزب اختلاف شیری رحمان کا کہنا تھا کہ دھاندلی زدہ الیکشن کو نہیں مانتے اسے مسترد کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کا امیدوارمسلم لیگ(ن)، اسپیکر کا امیدوار پیپلزپارٹی اور  ڈپٹی اسپیکر کا امیدوار ایم ایم اے سے ہوگا۔

شیری رحمان نے کہا کہ اپوزیشن کا اتحاد جعلی الیکشن اور سلیکشن کو مسترد کرتا ہے ہم ایک مضبوط جمہوری اپوزیشن کا کردار ادا کریں گے، تمام جماعتوں کی شناخت اور تشخص کو برقرار رکھیں گے اور مشترکہ فیصلہ کیا ہے کہ الیکشن کے خلاف احتجاج ایوان کے اندر اور باہر ہوگا جب کہ آر ٹی ایس سسٹم خراب نہیں ہوا بلکہ نادرا نے خود اعتراف کیا ہے کہ سسٹم میں کوئی خرابی نہیں ہوئی۔

اس سے قبل میڈیا سے بات کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ پاکستان کے عوام کا مینڈیٹ چوری کیا گیا، پی ٹی آئی کوبتائیں گے کہ حقیقی اپوزیشن کیا ہوتی ہے، طے ہوگیا ہے کہ تمام جماعتیں پارلیمنٹ میں جائیں گی جب کہ آگے کا لائحہ طے کرنے کے لیے کمیٹی بنائی گئی ہے جو ایوان کے اندراور باہرکی حکمت عملی تیارکرے گی۔

نہ خود پروٹوکول لوں گا اور نہ کسی کو لینے دوں گا، عمران خان

ذرائع کے مطابق چیئرمین تحریک انصاف عمران خان وزیراعظم ہاؤس میں نہیں رہیں گے تاہم منسٹر انکلیو کے اسپیکر ہاؤس میں قیام پر غور جاری ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ عمران خان نے وزیراعظم اور وفاقی وزرا سمیت صوبائی وزرا کا پروٹول کم سے کم رکھنے کی ہدایت کی ہے جب کہ تمام وزرا عمران خان کے بنائے گئے ایس او پیز کے پابند ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے پارٹی رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نہ خود پروٹوکول لوں گا اور نہ کسی کو لینے دوں گا جب کہ عوام کے ٹیکس کے پیسوں کا میں خود محافظ ہوں۔

دیکھیں گے ایم کیوایم نے پی ٹی آئی سے معاہدے میں کیا دیا اور کیا لیا: خورشید شاہ

اسلام آباد: پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ کا کہنا ہےکہ آگے چل کر دیکھا جائے گا کہ ایم کیوایم نے پی ٹی آئی سے معاہدے میں کیا دیا اور کیا لیا ہے۔

اسلام آباد میں جیونیوز سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ ایم کیو ایم نے پی ٹی آئی کے ساتھ کیا معاہدہ کیا ہے آگے چل کر دیکھا جائے گا، ایم کیو ایم کی مرضی ہے، کیا لیا ہے کیا دیا ہے؟

عمران خان کی جانب سے وزیراعظم ہاؤس کی بجائے اسپیکر ہاؤس میں رہنے کے سوال پر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ عمران وزیراعظم بننے کے بعد اسپیکر ہاؤس میں رہائش اختیار نہیں کرسکتے، اسپیکر ہاؤس پارلیمنٹ کی پراپرٹی ہے اور پارلیمنٹ کی پراپرٹی میں وزیراعظم نہیں آسکتے۔

انہوں نے کہاکہ اسپیکر ہاؤس میں اسپیکر قومی اسمبلی کے علاوہ اور کوئی رہائش اختیار نہیں کر سکتا، وزیراعظم کے لیے اس کا اپنا گھر موجود ہے۔

اثاثوں کی تفصیلات الیکشن کمیشن،ایف بی آر میں جمع کراچکا ہوں،علیم خان

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما علیم خان نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ اپنی کمپنیوں کے تمام اثاثوں کی تفصیلات الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) میں جمع کراچکے ہیں۔

بنی گالہ کے باہر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے علیم خان نے کہا کہ ’کچھ ٹی وی اینکرز مجھے کرپٹ ظاہر کرکے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔‘

انہوں نے کہا کہ ان کے اثاثوں سے متعلق کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں جاری ہے۔

علیم خان کا کہنا تھا کہ ’میں گزشتہ 11 سال سے اپوزیشن میں رہا ہوں اور آج تک میرے خلاف کرپشن کا ایک الزام بھی ثابت نہیں ہوا۔’

ان کا کہنا تھا کہ ’میں عمران خان کے ساتھ ہوں اور پاکستان میں تبدیلی کے مقصد کو آگے بڑھاؤں گا۔‘

علیم خان نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے کبھی ایک پیسے کی بھی کرپشن نہیں کی اور نہ ہی خیبر پختونخوا میں کسی زمین پر قبضہ کیا جہاں گزشتہ دور حکومت میں ان کی جماعت اقتدار میں تھی۔

خیال رہے کہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ کے لیے تحریک انصاف کے امیدواروں میں علیم خان کا نام بھی شامل ہے، تاہم ان کے خلاف مبینہ بے ضابطگیوں کی تحقیقات جاری ہیں۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے انہیں 8 اگست کو غیر قانونی ذرائع سے آمدن کے کیس کے سلسلے میں طلب کیا ہے۔

نیب، علیم خان کے خلاف آف شور کمپنی کے حوالے سے بھی تحقیقات کررہا ہے۔

علیم خان کے خلاف مجرمانہ کارروائی شروع کرنے کا فیصلہ

کیپٹل ڈیولپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے علیم خان کے خلاف مجرمانہ کارروائی شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سی ڈی اے کے بلڈنگ کنٹرول سیکشن نے پی ٹی آئی رہنما علیم خان کو حتمی نوٹس جاری کیا ہے۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ علیم خان 8 اگست کو پیش ہوں، پی ٹی آئی رہنما کو 10 نوٹس بھیجے جاچکے ہیں لیکن انہوں نے کسی کا جواب نہیں دیا۔

نوٹس کے مطابق علیم خان کی نجی ہاؤسنگ سوسائٹی نے اسلام آباد ہائیکورٹ کے احکامات اور سی ڈی اے بلڈنگ کوڈ کے خلاف تعمیر جاری رکھی ہوئی ہے۔

اگر حتمی نوٹس پر علیم خان نے پیش ہو کر جواب جمع نہ کرایا تو ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ جواب نہ دینے پر علیم خان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی بھی کی جائے گی اور ڈائریکٹر ہاؤسنگ سوسائٹی کو مذکورہ ہاؤسنگ سوسائٹی کا لے آوٹ پلان منسوخ کرنے کی ہدایت بھی کی جائے گی۔

’دیکھنا ہوگا ووٹوں کی گنتی کی اجازت دینا اور روکنا آرٹیکل 25 کی خلاف ورزی تو نہیں‘

لاہور ہائیکورٹ نے این اے 131 پر ووٹوں کی دوبارہ گتنی کے معاملے پر حکم دیا ہے کہ سیکریٹری الیکشن کمیشن خود پیش ہوں یا کسی ذمہ دار افسر کو ریکارڈ سمیت عدالت بھیجیں۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مامون الرشید نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور این اے 131 سے شکست کھانے والے امیدوار خواجہ سعد رفیق کی درخواست پر سماعت کی، اس دوران تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے وکیل بابر اعوان کے جونئیر وکیل پیش ہوئے۔

خیال رہے کہ عام انتخابات 2018 میں لاہور کے حلقہ این اے 131 سے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کامیاب ہوئے تھے جبکہ خواجہ سعد رفیق کو شکست ہوئی تھی۔

دوران سماعت عدالت نے ریمارکس دیے کہ بتایا جائے کہ کن حلقوں میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کروائی گئی اور کہاں درخواستیں مسترد کیں، دیکھنا ہو گا کہ کہیں ووٹوں کی گنتی کی اجازت دینا اور کہیں روکنا آئین کے آرٹیکل 25 کی خلاف ورزی تو نہیں۔

جونیئر وکیل نے عمران خان کی جانب سے جواب داخل کروانے کے لیے عدالت سے مہلت طلب کی اور بتایا کہ اس مقدمے میں عمران خان کی جانب سے بابر اعوان دلائل دیں گے۔

جسٹس مامون الرشید نے ریمارکس دیے کہ کہ آپ وقت لے لیں میں حکم امتناع جاری کردیتا ہوں، جس پر جونیئر وکیل نے کہا کہ میں عمران خان کے وکیل بابر عوان سے رابطہ کر کے آپ کو بتاتا ہوں، اس پر عدالت نے ریمارکس دیے کہ آپ لکھ کر دیں کہ بابرعوان کب پیش ہوں گے۔

دوران سماعت خواجہ سعد رفیق کے وکیل نذیر تارڑ نے کہا کہ عمران خان نے فتح کے بعد تاریخ ساز تقریر کی اور خود کہا کہ وہ حلقے کھولنے کو تیار ہیں، پھر وقت کیوں مانگا جارہا ہے۔

بعد ازان عدالت نے این اے 131 پر ووٹوں کی دوبارہ گتنی کے معاملے پر حکم دیا کہ سیکریٹری الیکشن کمیشن خود پیش ہوں یا کسی ذمہ دار افسر کو ریکارڈ سمیت عدالت بھیجیں۔

آئین کا آرٹیکل 25 کیا ہے؟

پاکستانی آئین کے آرٹیکل 25 کے مطابق پاکستان کا ہر شہری ملکی قوانین کے تابع ہے ، ذات، برادری، صنف یا عہدے کی بنیاد پر کوئی بھی شہری قانون سے بالاتر نہیں۔

یاد رہے کہ خواجہ سعد رفیق نے این اے 131 سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کی کامیابی کو چیلنج کرتے ہوئے متعلقہ ریٹرننگ افسر محمد اختر بھنگو کو ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست جمع کرائی تھی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ حلقہ این اے 131 میں پریزائیڈنگ افسر نے سیکڑوں ووٹ دانستہ طور پر مسترد کیے۔

بعد ازاں لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ 131 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی میں بھی عمران خان کو فاتح قرار دیا گیا تھا۔

دوبارہ گتنی کے بعد خواجہ سعد رفیق کے ووٹوں میں 125 ووٹ کا اضافہ ہوا تھا لیکن اس کے باوجود عمران خان کی 608 ووٹوں کی برتری سے فتح برقرار رہی تھی۔

تاہم دوبارہ گنتی کے بعد سعد رفیق کا کہنا تھا کہ قانون کے مطابق اگر ووٹوں کا فرق 5 فیصد سے کم ہو تو دوبارہ کی گنتی کی جاسکتی ہے۔

خیبرپختونخوا: وزارتِ اعلیٰ کے امیدوار ووٹوں کی دوبارہ گنتی میں اپنی نشست ہار گئے

پشاور: خیبرپختونخوا اسمبلی کے حلقہ پی کے 70 پشاور 5 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی پر عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے امیدوار خوش دل خان کامیاب ہوگئے۔

ڈان نیوز کو حاصل ہونے والے غیر حتمی نتیجے کے مطابق صوبے میں وزارتِ اعلیٰ کے اہم امیدوار اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما شاہ فرمان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

عوامی نیشنل پارٹی کے خوش دل خان کو 187 ووٹوں سے فتح حاصل ہوئی جس کے ساتھ خیبرپختونخوا اسمبلی میں اے این پی کی نشستوں کی تعداد 7 ہوگئی۔

واضح رہے کہ شاہ فرمان نے تحریک انصاف کے ہی ٹکٹ پر پی کے 71 پشاور 6 سے بھی انتخابات میں حصہ لیا تھا جہاں وہ کامیاب قرار پائے تھے۔

اے این پی کے خوش دل خان عام کو اس نشست پر پی ٹی آئی سے ابتدائی نتائج میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا، تاہم انہوں نے ریٹرننگ افسر کو ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست دی تھی۔

ریٹرننگ افسر نے اے این پی رہنما کی درخواست منظور کی جس کے بعد حلقے میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی گئی۔

اے این پی کے امیدوار نے 5 ہزار 5 سو 44 ووٹ حاصل کیے ہیں اور وہ ایک سو 87 ووٹوں سے پی ٹی آئی کے امیدوار شاہ فرمان سے آگے ہیں۔

عوامی نیشنل پارٹی کے حامیوں کی جانب سے علاقے میں خوشی میں ہوائی فائرنگ کرنے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

واضح رہے کہ خیبرپختونخوا میں پاکستان تحریک انصاف کی کامیابی کے بعد یہ اطلاعات موصول ہورہی تھیں کہ پرویز خٹک کے ساتھ ساتھ شاہ فرمان بھی وزارتِ اعلیٰ کے مضبوط امیدوار ہیں۔

عابد شیر علی ووٹوں کی دوبارہ گنتی میں بھی ناکام

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما عابد شیر علی کو این اے 108 (فیصل آباد) کے حلقے میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے بعد بھی ناکام قرار دے دیا گیا۔

واضح رہے کہ سابق وزیر مملکت برائے پانی و بجلی، عابد شیر علی نے پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار فرخ حبیب سے 1 ہزار 211 ووٹوں سے ہارنے کے بعد ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست جمع کرائی تھی۔

این اے 108 فیصل آباد 8 میں 394 پولنگ اسٹیشنز ہیں جس کے ریٹرننگ افسر شکیل احمد نے 220 پولنگ اسٹیشنز میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کرنے کے بعد نتائج جاری کیے۔

ان کے مطابق 220 پولنگ اسٹیشنز میں کوئی واضح فرق سامنے نہیں آیا جس کے مطابق فرخ حبیب ہی اس نشست سے فاتح قرار پائے ہیں۔

مسترد شدہ ووٹوں کی دوبارہ جانچ پڑتال کے بعد آر او نے حلقے کا نیا فارم 47 جاری کیا جس کے مطابق فرخ حبیب نے 1 ہزار 201 ووٹ سے برتری حاصل کی جو گزشتہ گنتی کے مقابلے میں 10 ووٹ کم تھے۔

’لوڈ ویڈنگ‘ کی رومانوی کہانی ’رنگیا‘ کی زبانی

پاکستانی اداکار فہد مصطفیٰ اور اداکارہ مہوش حیات کی جلد ریلیز ہونے والی فلم ’لوڈ ویڈنگ‘ کا نیا گانا ریلیز ہوگیا۔

اس گانے میں دکھایا گیا کہ فلم کے دونوں مرکزی کردار ایک ساتھ کتنا خوش ہیں۔

’رنگیا‘ نامی اس رومانوی گانے کی موسیقی اتنی خوبصورت ہے، کہ ہر فلم میں ایک ایسا گانا ضرور ہونا چاہیے۔

اس گانے کی ویڈیو میں مہوش حیات اور فہد مصطفیٰ کے کرداروں کے درمیان رومانوی کہانی کو پیش کیا گیا۔

یاد رہے کہ فلم ’لوڈ ویڈنگ‘ رواں سال عید الضحیٰ پر ریلیز ہوگی۔

اس فلم کی ہدایات نبیل قریشی دے رہے جبکہ فضا علی میرزا اس کی پروڈکشن کررہی ہیں۔

توہین عدالت کیس،طلال چوہدری نااہل قرار

adaria

سپریم کورٹ نے مسلم لیگ(ن) کے رہنما سابق وزیر مملکت طلال چوہدری کے خلاف توہین عدالت کا محفوظ فیصلہ سنا دیا ۔ عدالتی فیصلے میں طلال چوہدری توہین عدالت کے مرتکب قرار اور ان کو ایک لاکھ روپے جرمانہ 5سال کیلئے نا اہلی کے علاوہ عدالت کے برخاست ہونے تک قید کی سزا سنائی گئی۔ عدالت نے11 جولائی کو فیصلہ محفوظ کیا تھا ، طلال چوہدری عدلیہ مخالف بیانات کے زد میں آئے جسٹس گلزار کی سربراہی میں تن رکنی بنچ نے فیصلہ سنایا ، عدلیہ مخالف بیانات طلال چوہدری کو لے ڈوبے سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کو جب پانامہ کیس میں نااہل قرار دیا یا تو سابق وزیراعظم نے عدلیہ مخالف بیانات کو اپنا سیاسی مشن بنایا کھلے عام جلسوں ، جلوسوں میں عدلیہ کو حرف تنقید بنایا اور عدالتی فیصلہ کو تسلیم نہ کیا اور عوام کو بھی اس بیانیہ پر اکسایا، چند لیگی رہنماؤں اور سابق وزراء نے بھی بڑھ چڑھ کر عدلیہ کو حرف تنقید بنایا اور عدلیہ مخالف بیان بازی کی جس کے نتیجہ میں بعض نااہل ہوئے اور اسی عدلیہ مخالف بیانیہ کی بھینٹ طلا ل چوہدری بھی چڑھ نکلے۔ سابق وزیراعظم اور ان کی ٹیم نے عدلیہ کو نشانہ بنایا اور اداروں کی ساکھ کو بھی کاری ضرب لگائی حالانکہ بعض سینئر رہنماؤں نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور دیگر کو ادارں سے ٹکراؤ سے روکا تھا لیکن سابق وزیراعظم اور ان کے چند وزراء نے اس صائب مشورہ کو نظر انداز کیا اور عدلیہ مخالف بیانیہ میں شدت پیدا کردی اور عوام کو ووٹ کے ذریعے عدلیہ کے فیصلے کو مسترد کرنے کی تحریک دی گئی لیکن انتخابی نتائج سابق وزیراعظم اور ان کے پارٹی رہنماؤں کی امیدوں کے برعکس آئے عوام نے اپنا حق رائے دہی بھرپور طریقے سے استعمال کرتے ہوئے عدلیہ مخالف بیانیہ کو مسترد کردیا اور پی ٹی آئی قیادت پر اپنے اعتماد کا اظہار کیا ، سیاست میں برداشت اور رواداری کا ہونا ازحد ضروری ہوا کرتا ہے لیکن ہمارے سیاسی ناخدا برداشت کے جمہوری کلچر کو فروغ دینے میں قطعاً ناکام ٹھہرے ، زمام اقتدار پر براجمان رہنے والی اشرافیہ نے ذاتی مفاد کو قومی مفاد پر ترجیح دی جس سے ملک مسائل کی دلدل میں پھنستا چلا گیا ناقص حکومتی پالیسی نے معیشت کو بدحالی سے دوچار کردیا اور بیرونی قرضوں پر انحصار کرنا پڑا بیروزگاری اور مہنگائی میں اضافہ ہوا۔ سماجی انصاف بھی ایک سوالیہ نشان بنا رہا ، بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ تعلیم و صحت کی سہولتوں کا فقدان عوام کا مقدر ٹھہرا اور لوگ آہ وبکا کرنے لگے۔ کرپشن نے ادارں کا ستیاناس کردیا اور بدعنوانی نے ترقی کی راہوں کو مفلوج کردیا حکمران عیاشی کرتے رہے اربوں کھربوں بیرون ملک منتقل کرتے رہے اور عوام دو وقت کی روٹی کو ترسنے لگے اس صورتحال میں عدالت عظمیٰ نے بنیادی انسانی حقوق کی بحالی کیلئے ازخود نوٹس کیسز کی سماعت کرکے ایسے احکامات صادر فرمائے جو عاجز و بے بس عوام کی امنگوں کے ترجمان قرار پائے اور ان کے حقوق بحال ہوئے چیف جسٹس انصاف کی فوری فراہمی کے ساتھ ساتھ بنیادی عوامی حقوق کیلئے بھی قابل ستائش کردار ادا کررہے ہیں، جب عوام کو صاف پانی نہ ملے اقربا پروری ہونے لگے تو پھر عدلیہ نے ہی نوٹس لینا ہے۔ طلال چوہدری عدلیہ مخالف بیانات کے تناظر میں نا اہل قرار دئیے گئے ہیں۔ عدلیہ کا فیصلہ آئین و قانون کے تناظر میں ہوا کرتا ہے ، طلال چوہدری اس فیصلے کو کھلے دل سے تسلیم کریں اور آئندہ توہین عدالت کے مرتکب نہ ٹھہریں اس وقت ایک آزاد اور خودمختار عدلیہ موجود ہے جو آئین اورقانون کی روشنی میں فیصلے دے رہی ہے جن کے دور رس نتائج برآمد ہورہے ہیں۔

ایس کے نیازی کی پروگرام سچی بات میں گفتگو
پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے چیف ایڈیٹر اور روز نیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی نے پروگرام’’سچی بات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے آبائی سیٹ رکھی ہے،مبارکباد پیش کرتا ہوں،پنجاب کے لوگ تھانہ اور پٹواری کلچر کے عادی ہوتے ہیں،پنجاب کے ایم این ایز اور ایم پی ایز اپوزیشن میں نہیں رہ سکتے،پنجاب میں تحریک انصاف حکومت بنائے گی،پنجاب میں دن بدن پی ٹی آئی کی حکومت مضبوط ہوتی جائیگی،ٹیکس ایمنسٹی سے لوگوں نے بھرپور فائدہ اٹھایا،ٹیکس ایمنسٹی کا مقصد یہ تھا کہ ٹیکس بیس بڑھے گا،ایمنسٹی اسکیم میں2سے3فیصد پراپرٹی ظاہر کرنے پر دیا،ایمنسٹی اسکیم کاروباری طبقے کیلئے تھی،ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سیاستدانوں کیلئے نہیں تھی،پراپرٹی اسکیم میں ظاہر ہونے سے ٹیکس بیس میںآگئی،سیاستدانوں کو داخلی سیکیورٹی معاملات پر سوچنا چاہیے،عمران خان اگر ڈلیور نہیں کرے گا تو فارغ ہو جائے گا،ملک دشمن عناصر حالات سازگار نہیں دیکھنا چاہتے،پاک افواج اندرونی و بیرونی سیکیورٹی کی ذمہ دار ہیں،دشمن عناصر داخلی سیکیورٹی میں رخنہ ڈالنا چاہتے ہیں،امید ہے کہ ہماری خارجہ پالیسی بہتر ہو جائے گی،فواد چوہدری وزیراعلیٰ پنجاب کے مضبوط امیدوار ہیں،پنجاب میں فواد چوہدری کو ہی وزیراعلیٰ لگانا چاہیے۔سینئر تجزیہ کار خوشنود علی خان نے کہا ہے کہ مجھے نہیں لگتا کہ جمہوری سسٹم زیادہ دیر چل سکے،عمران خان نے کسی زمانے میں پرویز الٰہی کو ڈاکو کہا تھا،ملک میں افراتفری ہے،بندے توڑے جارہے ہیں،ہمیں ملک کے آئین اور قانون کو دیکھنا چاہیے،سیاستدانوں کو ہوش کرنے چاہئیں،ناردرن پنجاب کے لوگوں نے حکمرانوں کو الٹ دیا،جہانگیر ترین پر سوال اٹھ رہے ہیں کہ وہ نااہل ہیں،عمران خان کو لیڈر بننا پڑے گا،عمران خان اداروں کے ساتھ چلیں گے تو راستہ نکل آئیگا۔رہنما پی ٹی آئی بریگیڈیئر(ر)راحت امان اللہ نے کہا ہے کہ عمران خان کی نیت صاف ہے اور ہمیں اللہ پر بھروسہ ہے،ہماری جہاد میں14سال بعد کامیابی شروع ہوئی ہے،ہمیں کسی کا ڈر خوف نہیں،وزیراعلیٰ پنجاب کا فیصلہ عمران خان نے کرنا ہے۔رہنما مسلم لیگ(ن)پرویز رشید نے کہا کہ جس فضا میں انتخابات ہوئے اس سے سب واقف ہیں،ایسی فضا میں الیکشن ہوئے جسے صاف و شفاف نہیں کہہ سکتے، سابق اسپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ مرزانے کہا کہ بہت سارے لوگوں کو فارم 45نہیں ملے، فارم45وقت پر الیکشن کمیشن کو نہیں پہنچائے گئے،الیکشن2018بھی آر او کے الیکشن ہوئے ہیں،پروگرام سچی بات ناظرین میں مقبول عام ہے، ایس کے نیازی کی گفتگو دوررس نتائج کی حامل ہوا کرتی ہے جسے ناظرین شوق سے دیکھتے ہیں اور سیاسی حالات و واقعات سے آگاہی حاصل کرتے ہیں۔
کورکمانڈرز کانفرنس
ملک میں حالیہ عام انتخابات کے بعد پہلی کور کمانڈرز کانفرنس جی ایچ کیو میں منعقد ہوئی جس کی صدارت پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کی، اس212 ویں کور کمانڈرز کانفرنس میں شرکاء نے جو سٹرٹیجک صورتحال، خطے میں سلامتی کے حالات اورداخلی امور پر غور کیا،عسکری قیادت نے انتخابی عمل کے دوران شہید و زخمی ہونے والوں کو خراج تحسین جبکہ انتخابی عمل میں شرکت اور مسلح افواج کی حمایت پر عوام کا شکریہ ادا کیا ۔ سربراہ پاک فوج نے عسکری قیادت کو ہدایات دیں کہ دہشت گردی کے خلاف کامیابیوں کو مزید تقویت دی جائے، اجلاس میں علاقائی امن بالخصوص پاک افغان ایکشن پلان برائے امن و سلامتی کے لئے افغانستان کے ساتھ فوجی تعلقات کے فروغ پر اطمینان کا اظہار کیا۔اجلاس میں الیکشن کمیشن کی مدد پر آرمی الیکشن سپورٹ سینٹر اور فیلڈ فارمیشنز کو سراہا ۔

Google Analytics Alternative