Home » 2018 » October » 02

Daily Archives: October 2, 2018

پاک فوج کا پائیدار امن کیلیے انسداد دہشت گردی آپریشنز جاری رکھنے کا فیصلہ

 راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سربراہی میں کور کمانڈرز کانفرنس میں پائیدار امن کے لیے انسداد دہشت گردی آپریشنز جاری رکھنےکا فیصلہ کیا گیا ہے۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی سربراہی میں جنرل ہیڈ کوارٹرز راولپنڈی میں کور کمانڈرز کانفرنس ہوئی، جس میں ملکی سلامتی، لائن آف کنٹرول، ورکنگ باونڈری کی صورت حال، جیو اسٹریٹجک معاملات، آپریشن ردالفساد کے تحت کارروائیوں اور ملکی استحکام سے متعلق امور کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

اس موقع پر ملک میں جاری آپریشن ردالفساد کے تحت استحکام آپریشنز کی پیش رفت پر بھی غور کیا گیا، اس کے علاوہ آرمی چیف نے شرکا کو اپنے دورہ چین سے متعلق بھی آگاہ کیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق کور کمانڈرز کانفرنس میں عسکری قیادت کا کہنا تھا کہ ملک میں امن و استحکام شہدا کی قربانیوں کی وجہ سے ہے، کور کمانڈرز نے پائیدار امن کے لیے انسداد دہشت گردی آپریشنز جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔

 

قومی اسمبلی: وزیراعظم آزاد کشمیر کے ہیلی کاپٹر پر بھارتی فائرنگ کے خلاف قرارداد منظور

قومی اسمبلی میں وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کے ہیلی کاپٹر پر بھارتی فائرنگ کے خلاف قرار داد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔

قرار داد اپوزیشن لیڈر اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے پیش کی تھی، جس میں کہا گیا تھا کہ بھارتی فورسز نے سویلین ہیلی کاپٹر پر فائرنگ کی۔

اس میں مزید کہا گیا تھا کہ بھارتی افواج لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کی مسلسل خلاف ورزی کر رہی ہیں۔

قرار داد میں واضح کیا گیا کہ کشمیریوں پر بھارتی مظالم میں اضافہ قابل مذمت ہے جبکہ بھارت کی جانب سے ہیلی کاپٹر پر فائرنگ ریاستی جارحیت ہے۔

اس سے قبل قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کے ہیلی کاپٹر پر فائرنگ کا واقعہ قابل مذمت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایوان بدترین بھارتی جارحیت پر قرارداد منظور کرے اور ایک کمیٹی تشکیل دے کر قرار داد لائی جائے۔

جس پر وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ دفتر خارجہ اس معاملہ پر تفصیلی بیان دے چکا ہے۔

علاوہ ازین سابق اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے وزیراعظم آزاد کشمیر کے ہیلی کاپٹر پر فائرنگ کے واقع پر کہا کہ اس واقعہ کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم ہندوستان کے ساتھ برابری کی بنیاد پر تعلقات چاہتے ہیں نیچے گر کر نہیں اور ساتھ ہی مطالبہ کیا کہ بھارتی ہائی کمشنر کو بلا کر احتجاج کیا جائے۔

گزشتہ روز بھارتی فوج کی جانب سے آزاد کشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر کے ہیلی کاپٹر پر لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے قریب گاؤں کے سفر کے دوران فائرنگ کی گئی تھی۔

رپورٹ کے مطابق وزیر اعظم آزاد کشمیر جو 2 وزرا اور اپنے ذاتی اسٹاف کے ہمراہ ہیلی کاپٹر میں سوار تھے، عباس پور گاؤں کے قریب بھارتی فوج کے حملے سے بال بال محفوظ رہے۔

مذکورہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب راجہ فاروق حیدر اپنی کابینہ کے اراکین کے ساتھ ایک وزیر کے بھائی کی وفات پر تعزیت کے لیے جارہے تھے۔

کویتی وفد کا بیگ چوری کرنے کا معاملہ

اس کے علاوہ قومی اسمبلی میں کویتی وفد کا بیگ چوری کرنے کا معاملہ بھی زیر غور آیا جس کے حوالے سے سابق اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ اس واقعہ سے ملک کی جگ ہنسائی ہوئی ہے، معلوم کیا جائے کہ اس چوری کے پیچھے کیا محرکات ہیں۔

خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ کویتی وفد کے بیگ کا چوری ہونا انتہائی تشویشناک ہے، 20 ویں گریڈ کے افسر نے یہ بیگ چوری کیا، بتایا جائے کہ اس چوری کے پیچھے اصل محرکات کیا تھے؟

واضح رہے کہ یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا تھا جب کویتی وفد کے رکن نے پاکستانی حکام سے شکایت کی تھی کہ بڑی تعداد میں کویتی دینار سے بھرا ہوا ان کا بٹوہ اجلا س کے دوران غائب ہوگیا۔

اس شکایت کے بعد وزارت خزانہ میں تمام کمروں کی تلاشی لی گئی تھی، یہاں تک کہ نچلی سطح کے ملازمین سے سوالات پوچھے گئے تھے اور ان کی جامع تلاشی بھی لی گئی تھی لیکن بٹوہ نہیں ملا تھا۔

بعد ازاں کمرے میں لگے ہوئے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج دیکھی گئی تھی، جس میں ایک سینئر افسر کو بٹوہ چوری کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

خیال رہے کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کے منصوبوں پر تبادلہ خیال کے لیے آنے والے کویتی وفد کے رکن کا چوری ہوگیا تھا اور پاکستان کو شرمندگی کا سامنے کروانے میں ایک سینئر بیورکریٹ ضرار حیدر ملوث تھے۔

جس کے بعد پاکستان میں سرمایہ کاری کے منصوبوں پر تبادلہ خیال کے لیے آنے والے کویتی وفد کے رکن کا بٹوہ چوری کرنے والے 20 ویں گریڈ کے سرکاری افسر ضرار حیدر کو معطل کردیا گیا تھا۔

کے الیکٹرک کی بد انتظامی

بعد ازاں قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران کراچی میں کرنٹ لگنے سے ہلاکتوں اور بچے کے معذور ہونے کے واقع پر متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے رکن اسمبلی سید امین الحق نے کے-الیکٹرک کے خلاف توجہ دلاؤ نوٹس پیش کیا۔

امین الحق کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک میں بات سننے والا کوئی نہیں اور ادارے کی نجکاری کے بعد بد انتظامی اور کرپشن اپنی انتہا پر ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کے-الیکٹرک سالانہ اربوں روپے کما رہا ہے لیکن نظام کو اپ گریڈ نہیں کیا گیا۔

اس پر وفاقی وزیر عمر ایواب نے ایوان کو بتایا کہ یہ صرف کے الیکٹرک کا مسئلہ نہیں، تمام تقسیم کار کمپنیوں کے نظام میں بہتری ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ کرنٹ لگنے سے معذور ہونے والے بچے کے تمام اخراجات کے الیکٹرک برداشت کرے گا، جب تک وہ 25 سال کا نہیں ہو جاتا بچے کی تعلیم کے اخراجات بھی کے الیکٹرک برداشت کرے گا۔

عمر ایوب نے ایوان کو بتایا کہ عمر کے علاج کے لیے 50 لاکھ روپے کا بندوبست کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ میڈیا میں یہ واقعہ رپورٹ ہوا تھا کہ 25 اگست کو احسن آباد کے سیکٹر 4 کے رہائشی 8 سالہ عمر کو گھر کی چھت پر کھیلتے ہوئے 11 ہزاروولٹ کی کیبل سے کرنٹ لگا تھا۔

کرنٹ لگنے کے بعد اس کے دونوں بازو شدید متاثر ہوئے اور ڈاکٹرز کو اس کی جان بچانے کے لیے دونوں بازو کاٹنے پڑے تھے۔

جس کے بعد گورنر سندھ عمران اسماعیل نے افسوسناک واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کے الیکٹرک حکام سے واقعے پر وضاحت اور کمشنر کراچی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی تھی۔

مذکورہ واقعہ منظر عام پر آنے کے بعد پولیس نے نا صرف واقعے کا مقدمہ درج کیا تھا بلکہ 31 اگست کو سائٹ سپر ہائی وے پولیس نے بچے کو کرنٹ لگنے کے واقعہ پر غفلت برتنے کے الزام میں کے الیکٹرک گڈاپ کے دفتر پر چھاپہ مار کر 7 ملازمین کو حراست میں لے لیا تھا۔

الیکشن کمیشن کا سینئر وزیر پنجاب علیم خان کے خلاف کارروائی کا حکم

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے جعلی حلف نامے جمع کروانے پر پی ٹی آئی کے رہنما اور سینئروزیر پنجاب علیم خان کے خلاف کاروائی کا حکم دے دیا۔

الیکشن کمیشن میں انتخابی عذرداریوں سے متعلق مختلف درخواستوں کی سماعت ہوئی۔  درخواستوں پر سماعت چیف الیکشن کمشنر سردار رضا کی سربراہی میں 5 رکنی کمیشن نے کی۔

مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے جعلی حلف نامے پیش کرنے پر پی ٹی آئی رہنما اور سینئروزیرپنجاب علیم خان کے خلاف درخواست دائر کی جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ علیم خان نے پرانی حلقہ بندیوں کے تحت این اے  120 میں ہونے والے انتخابات کو کالعدم قرار دینے کے لیے الیکشن کمیشن میں جعلی حلف نامے جمع کرائے۔

الیکشن کمیشن نے علیم خان کے خلاف سردار ایاز صادق کی درخواست منظور کرتے ہوئے حکم دیا کہ ایاز صادق اپنی درخواست سیشن کورٹ میں دائر کریں، جب کہ الیکشن کمیشن نے صوبائی وزیر علیم خان کے خلاف کارروائی کا حکم دے دیا۔

 

عمران خان سب سے پہلے اپنا گھرقانون کے دھارے میں لائیں، چیف جسٹس

اسلام آباد: بنی گالہ تجاوزات کیس میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیے ہیں کہ عمران خان سب سے پہلے اپنا گھر قانون کے دھارے میں لائیں اور سب سے پہلا جرمانہ بھی انہی کو ادا کرنا ہوگا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت ہوئی، اس موقع پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا کہ سروے آف پاکستان نے کورنگ نالہ کا سروے کرکے رپورٹ دی ہے، کورنگ نالے پر لوگوں نے تجاوزات قائم کر رکھی ہیں، چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ نالے سے تجاوزات ختم کس نے کرنا ہے، عمران خان اس وقت وزیراعظم ہیں جب کہ عمران خان نے اسی عدالت عظمی کو خط لکھ کر معاملہ پر نوٹس لینے کی استدعا کی تھی، نوٹس لینے پر معلوم ہوا کہ بنی گالہ میں تجاوزات کی بھرمار ہے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ علاقہ کا گندہ پانی راول ڈیم میں جا رہا ہے، وزیراعظم اپنا گھر بھی ریگولر کریں اور دوسروں کے بھی کرائیں، جو قانونی جرمانہ ادا کرنا چاہیے وہ کیا جائے، واضح کیا تھا نالے کی حدود میں گھر مسمار کردیں گے جب کہ بنی گالہ کے حوالے سے جو کرنا ہے، حکومت فیصلہ کرے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ عمران خان بطور درخواست گزار عدالت آئے تھے اور آج وزیراعظم ہیں، عمران خان نے بنی گالہ تعمیرات کے حوالے سے کیا اقدامات کیے، عمران خان کے اپنے گھر کے این او سی کا بھی تنازع تھا، عمران خان سب سے پہلے اپنا گھر قانون کے دھارے میں لائیں اور سب سے پہلا جرمانہ عمران خان کو ادا کرنا ہوگا۔

عمران خان کے وکیل بابراعوان نے عدالت کو بتایا کہ وزیراعظم بنی گالہ کے حوالے سے تین اجلاس منعقد کر چکے ہیں، چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ جمعہ تک آگاہ کریں بنی گالہ کے حوالے سے کیا فیصلہ کیا گیا، رواں ہفتے ہی حکم جاری کرکے کیس نمٹا دیں گے۔ عدالت نے کیس کی سماعت جمعہ تک ملتوی کردی۔

بھارتی فوج کی لیپہ سیکٹر پر فائرنگ، پاک فوج کی بھرپور جوابی کارروائی

مظفر آباد: بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول کے لیپہ سیکٹر کے مختلف علاقوں میں فائرنگ اور گولہ باری کی ہے جس کا پاک فوج نے بھرپور جواب دیا ہے۔

بھارتی فورسز کی جانب سے ایک بار پھر سیزفائر معاہدے کی خلاف کی گئی اور بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول کے لیپہ سیکٹر کے مختلف علاقوں میں فائرنگ اور گولہ باری کا سلسلہ شروع کردیا۔

اطلاعات کے مطابق بھارتی فوج کی جانب سے فائرنگ لیپہ کے علاقوں چنیاں اور منڈا کلی میں کی گئی جس پر پاک فوج کی جانب سے بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا گیا ہے۔

’اب پاکستان میں مودی کا یار نہیں بلکہ ملک کا ہیرو وزیرِاعظم ہے‘

راولپنڈی: پنجاب کے وزیرِ اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ بھارت پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی کی کوشش نہ کرے، کیونکہ اب پاکستان کا وزیرِ اعظم مودی کا یار نہیں بلکہ ملک سے محبت کرنے والا شخص ہے۔

میٹ دی پریس کے دوران خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیرِ اطلاعات فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ ‘پاکستان امن قائم کرنے کی خواہش رکھتا ہے، لیکن بھارتی حکمرانوں کو پیغام دینا چاہتا ہوں کہ اپنے انتخابات جیتنے کے لیے اپنی قوم کو تباہی و بربادی کی جانب مت لے کر جاؤ‘۔

انہوں نے بھارتی وزیرِ اعظم، فوج، اور خفیہ ایجنسی ’را‘ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’میں پیغام دینا چاہتا ہوں کہ وہ دن چلے گئے جب مودی کے دوست، یار، شراکت دار، دلدار اور پیار اب پاکستان کا وزیرِ اعظم نہیں ہے، بلکہ اب یہاں وہ ہیرو ہے جو پاکستان کا ہیرو اور پاکستان کی جان ہے‘۔

صوبائی وزیرِ اطلاعات کا کہنا تھا کہ وزیرِ اعظم عمران خان پاکستان کے چپے چپے سے محبت کرنے والا ہے وہ بھارتی کاروبار یا ایجنٹ کے ساتھ تعلق رکھنے والا نہیں ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران نے کھیل کے میدان میں بھارت کے مقابلے میں پاکستان کو عزت دلائی، اللہ نہ کرے کہ دونوں ممالک کے درمیان جنگ کا ماحول پیدا ہو، ورنہ عمران خان جنگ کے میدان میں بھی پاکستان کو کامیابی سے ہمکنار کرائے گا۔۔

انہوں نے بھارت کو خبر دار کیا کہ ’اب پاکستان سے جنگ کرنے سے قبل یہ ضرور سوچ لینا کہ اب پاکستان میں ایسا وزیرِاعظم ہے جو پاک فوج کے ساتھ ایک صفحے اور ایک سطر پر کھڑے ہیں‘۔

فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ اب چوتھی اور پانچویں جنریشن کی جنگ کا زمانہ چلا گیا، جب پاک فوج اور حکمران علیحدہ علیحدہ رخ پر ہوتے تھے، اب وزیرِ اعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ایک پیج پر ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر بھارت نے پاکستان کے ساتھ جارحیت کرنے کی کوشش کی تو اس کو ایسا سبق سکھایا جائے گا جسے تاریخ یاد رکھے گی۔

پاکستان کی سیاسی صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ ملک میں گزشتہ 40 سال کے دوران کچھ خاندان جن کے گھر کے 50، 50 افراد وزیرِ اعظم اور وزیرِاعلیٰ کے مزے لوٹا کرتے تھے وہ عدالتوں میں رسوا ہوگئے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ خاندان اب غلط طریقے سے مرکز اور پنجاب میں پی ٹی آئی کی حکومتوں کو ناکام ظاہر کرنے کے لیے سوشل میڈیا پر جھوٹ پر مبنی مہمات چلا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں مسلم لیگ (ن) کی جانب سے وزیرِ اعظم عمران خان اور وزیرِاعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے حوالے سے جو منفی مہم چلائی جارہی ہے میں اس کی مذمت کرتا ہوں۔

میں مسلم لیگ (ن) کی قیادت کو پیغام دینا چاہتا ہوں کہ وہ یہ حرکتیں چھوڑ دیں اور جاتی عمرہ میں بیٹھ کر اپنے لیے دعائیں کریں۔

اجے دیوگن نے کاجول کی فلم ‘دل والے دلہنیا لے جائیں گے’ اب تک کیوں نہیں دیکھی؟

بالی وڈ اسٹارز کاجول اور شاہ رخ خان کی 1995 میں ریلیز ہونے والی مشہورِ زمانہ فلم ‘دل والے دلہنیا لے جائیں گے’ (ڈی ڈی ایل جے) کس نے نہیں دیکھی ہوگی، لیکن کاجول کے شوہر اجے دیوگن ایک ایسے انسان ہیں، جنہوں نے اب تک یہ فلم نہیں دیکھی اور اس کی اُن کے پاس ایک وجہ بھی ہے۔

ادتیہ چوپڑا کی ہدایات میں بننے والی اس فلم نے اپنی ریلیز کے وقت باکس آفس پر تباہی مچادی تھی اور 100 کروڑ روپے سے زائد کا بزنس کیا تھا۔

دکن کرونیکل کی رپورٹ کے مطابق کاجول کا کہنا ہے، ‘ہاں! یہ میری وہ فلم ہے، جو اجے نے ابھی تک نہیں دیکھی۔ میں نے بہت مرتبہ ان سے یہ سوال پوچھا ہے لیکن انہوں نے مجھے کبھی کوئی تسلی بخش جواب نہیں دیا۔’

کاجول نے مزید بتایا، ‘اجے نے مجھے کہا کہ اس کی ایک وجہ ہے، لیکن میں وہ تمہیں نہیں بتاؤں گا۔’

ساتھ ہی کاجول نے صحافیوں سے کہا کہ ‘اگلی مرتبہ جب آپ کا اجے دیوگن سے ٹاکرا ہو تو اُن سے یہ سوال ضرور کریں اور پھر مجھے بھی بتائیں کہ انہوں نے ابھی تک ڈی ڈی ایل جے کیوں نہیں دیکھی؟’

کاجول کا مزید کہنا تھا، ‘فلم ‘دل والے دلہنیا لے جائیں گے’ کو دیکھ کر بہت سے جوڑوں نے اُسی انداز میں شادی کا فیصلہ کیا تھا، جبکہ وہ لوگ جن کی دوستی تھی، وہ بھی اس رومانٹک فلم سے اتنا متاثر ہوئے کہ انہوں نے بھی شادی کے بندھن میں بندھنے کا فیصلہ کیا۔’

واضح رہے کہ اجے دیوگن کے حوالے سے مشہور ہے کہ ان کی ڈی ڈی ایل جے میں کاجول کے ہیرو شاہ رخ خان سے کچھ زیادہ بنتی نہیں ہے۔

ایک حالیہ انٹرویو  میں کاجول بھی اس بات کا اعتراف کرچکی ہیں کہ ‘اجے اور شاہ رخ دوست نہیں ہیں، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ وہ ایک دوسرے کے دشمن ہیں’۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ‘اگر وہ ایک ساتھ پارٹی نہیں کرتے یا سیلفیز نہیں لیتے تو اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ وہ ایک دوسرے سے نفرت کرتے ہیں یا ایک دوسرے کی برائیاں کرتے ہیں’۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا، ‘شاہ رخ خان میرے بہت اچھے دوست ہیں، لیکن میں نے اپنی دوستیاں کبھی اجے دیوگن پر مسلط نہیں کیں اور نہ ہی انہوں نے کبھی ایسا کیا’۔

اگر کام کے حوالے سے بات کی جائے تو کاجول اپنی فلم ‘ہیلی کاپٹر ایلا’ میں مصروف ہیں، شاہ رخ خان اب فلم ‘زیرو’ میں نظر آئیں گے، جس میں وہ ایک بونے شخص کا کردار نبھائیں گے جبکہ اجے دیوگن فلم ‘تانا جی: دی اَن سنگ واریئر’ میں مصروف ہیں۔

بھارت کی آزاد کشمیر کے وزیراعظم کے ہیلی کاپٹر پر فائرنگ

adaria

بھارت کا جنگی جنون کسی صورت تھمنے نہیں آرہا ، آئے روز کنٹرول لائن پر بلا اشتعال فائرنگ کرنا اس نے معمول بنارکھا ہے مگر ہمیشہ اس کو منہ کی کھانا پڑتی ہے ،اب تو دنیا بھی اس کے مکروہ چہرے سے واقف ہوچکی ہے کہ وہ کس طرح سرحد کے حالات جان بوجھ کر خراب رکھتا ہے کیونکہ مودی کی تاریخ اتنی اچھی نہیں ہے ،وہ ایک شرپسند ذہنیت کامالکہے ، اب یہ کہنا بجا ہے کہ بھارت کا زوال شروع ہوچکا ہے ، دنیا بھر میں اس کیخلاف مظاہرے ہورہے ہیں ، سکھ بھی میدان عمل میں نکل چکے ہیں، اندرون بھارت بھی حالات دگر گوں ہیں وہاں پر بھی مختلف آزادی کی تحریکیں چل رہی ہیں، ان حالات سے توجہ ہٹانے کیلئے مودی یا اس کا کٹھ پتلی آرمی چیف کوئی نہ کوئی بے سروپا بیان دیتا رہتاہے تاکہ وہ اپنی عوام کی توجہ اصل مسائل سے ہٹا سکے۔مودی کو انتخابات کا بخار چڑھا ہوا ہے، انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کیلئے بھارت نے ہمیشہ سے پاکستان دشمنی کا کارڈ کھیلا ہے مگر اس دفعہ اس کو کامیابی حاصل نہیں ہوگی، گزشتہ روزوزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کا ہیلی کاپٹر کنٹرول لائن پر بھارتی فوج کی فائرنگ سے بال بال بچ گیا۔ ہیلی کاپٹر پر بھارتی فوج کی چوکی سے فائرنگ تروڑی گاؤں کے قریب کی گئی۔ وزیراعظم آزاد کشمیر کے ہمراہ وزیر اطلاعات مشتاق احمد منہاس وزیر تعلیم بیرسٹر افتخار گیلانی اور پرسنل سٹاف افسر بدر منیر تھے۔ تاہم وزیراعظم سرحدی خطرے کی پروا کئے بغیر فارورڈ کہوٹہ میں آزاد کشمیر کے وزیر شاہرات چودھری محمد عزیز کے بھائی کی وفات پر تعزیت کرنے کے بعد بذریعہ ہیلی کاپٹر سماہنی گئے، جہاں مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما راجہ محمد رزاق کی وفات پر اظہار تعزیت کرنے کے بعد چار بجے اسلام آباد پہنچ گئے۔ وزیر اطلاعات مشتاق منہاس کے مطابقہم اسلام آباد سے سوا گیارہ بجے روانہ ہوئے اور تروڑی گاؤں کے قریب ہیلی کاپٹر پر پونے بارہ بجے فائرنگ ہوئی یہ سرحدی گاؤں فارورڈ کہوٹہ کے علاقے میں ہے۔ وزیراعظم آزاد کشمیر نے کہا کہ آزاد کشمیر کے عوام بھارتی فوج کی بزدلانہ کارروائیوں سے ڈرنے والے نہیں بھارتی فوج آئے روز آزاد کشمیر کے سرحدی علاقوں میں سویلین آبادی کو فائرنگ اور شیلنگ کا نشانہ بنا رہی ہے لیکن آزاد کشمیر کے بہادر عوام بھارتی جارحیت کے خلاف ڈٹے ہوئے ہیں۔ راجہ فاروق حیدر نے فائرنگ کے حوالے سے ردعمل میں کہا بھارتی فوج نالائق اور بزدل ہے۔ بھارت نے بہانہ بنایا ہیلی کاپٹر نے ایل او سی پار کیا۔ میرے پاس ایسا کیا تھا؟ کیا چھاپہ مارنے جارہا تھا۔ بھارت نے ایل او سی پر اسرائیلی آلات لگا رکھے ہیں جو زندہ چیز کی نشاندہی کرتے ہیں۔ بھارتی فوج نے سویلین ہیلی کاپٹر پر فائرنگ کی۔ میرے ساتھ کوئی گن شپ ہیلی کاپٹرز نہیں تھے۔ بھارتی بوکھلاہٹ روز روشن کی طرح عیاں ہے ایسے میں ہمارے سیاستدانوں کوبھی ایک پلیٹ فارم پر متحد ہوکر دشمن کو واضح پیغام دینا چاہیے کہ وطن کی حفاظت کی خاطر ہمارے لہو کا آخری قطرہ بھی حاضر ہے، پاکستان کی قوم کا بچہ بچہ وطن کی حفاظت کیلئے اپنی جان نچھاور کرنے کیلئے تیار ہے ۔ بھارت کسی دھوکے میں نہ رہے اگر اس نے کوئی بھی مذموم قدم اٹھایا تو پاکستانی قوم اس کو قطعی معاف نہیں کرے گی۔

چیف جسٹس آف پاکستان کاایس کے نیازی کو خراج تحسین
پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز اور روز نیوز کا ہمیشہ سے یہ طرہ امتیاز رہا ہے کہ اس نے ملک وقوم کی خاطر سب سے آگے بڑھ کر اپنی خدمات پیش کی ہیں خصوصی طورپر روزنامہ پاکستان کے چیف ایڈیٹر اور روز نیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی اس معاملے میں ہمیشہ اول رہے، ملک میں زلزلہ آئے، ڈینگی کے مسائل ہوں، پانی کے مسائل ہوں ایس کے نیازی نے ہمیشہ موثر آواز بلند کی اس بات کی گواہی چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثارکے روز نیوز کی جانب سے ڈیم فنڈ ریزنگ کی ٹیلی تھون ٹرانسمیشن میں جناب محترم عزت مآب چیف جسٹس صاحب کا ٹیلی فونک اظہار خیال تھا جس میں انہوں نے کہاکہ نیازی صاحب آپ کا صحافت میں ایک مقام ہے اور آپ نے ہمیشہ ایسے معاملات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا، میں آپ کو روز نیوز کی اس ٹرانسمیشن پر مبارکباد دیتا ہوں، انہوں نے کہاکہ بیرونی قوتیں نہیں چاہتیں کہ پاکستان میں خوشحالی ہو لیکن یقین دلاتا ہوں کہ ڈیم مہم میں اب کوئی رخنہ پیدا نہیں کرسکتا،جو امانت سونپی گئی آخری وقت تک اس میں خیانت نہیں کروں گا،روز نیوز کو میراتھون ٹرانسمیشن کرنے پر مبارکباد دیتا ہوں،روز نیوز نے ہمیشہ قومی مفاد میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ روز نیوز نے جونہی ٹرانسمیشن کا آغاز کیا پہلے ہی منٹ میں دو کروڑ 25لاکھ روپے کے فنڈ اکھٹے ہو گئے،روز نیوز کی ڈیم میراتھون ٹرانسمیشن میں چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی جانب سے بھی مزید ایک لاکھ روپے کا اعلان کیا گیا۔ یہ اہم بات ہے کہ اس وقت ملک میں پانی سب سے بڑا مسئلہ ہے اور ایس کے نیازی سالہا سال اس حوالے سے آواز بلند کررہے ہیں، بلوچستان میں پانی ناپید ہونے کے سلسلے میں روزنامہ پاکستان نے خصوصی ایڈیشن شائع کیے ،جبکہ روز نیوز پر خصوصی پروگرام کیے گئے، ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے بھی ایس کے نیازی کی خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں اور ڈیمز فنڈ ریزنگ کی ٹرانسمیشن کرکے روز نیوز نے تاریخ میں اپنا نام سنہرے حروفوں سے لکھوا لیا ہے۔
سی پیک اور چین کا حوصلہ افزاء بیان
پاکستان اور چین کی دوستی کوہ ہمالیہ سے بلند اور سمندر سے گہری اور شہد سے زیادہ میٹھی ہے، ہر دھوپ اور چھاؤں میں دونوں ممالک ہمیشہ ساتھ ساتھ رہے جہاں موقع ملا وہاں پاکستان نے چین کیلئے آواز بلند کی اور چین بھی اس معاملے میں کبھی پیچھے نظر نہیں آیا، سی پیک کا منصوبہ دشمنوں کی نظر میں سوئی بن کر کھٹک رہا ہے مگر پاکستان اور چین کے عزم نے دشمن کے مذموم عزائم کو ناکام بنا دیا ہے۔پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبے میں تبدیلیوں کے لیے تیار ہے اور اس حوالے سے پاکستانی حکومت کے ایجنڈے پر عمل کیا جائے گا۔پاکستان سے مشاورت کے ساتھ روڈ میپ تیار کیے جانے کی ضرورت ہے۔چین صرف ان ہی منصوبوں کو آگے بڑھائے گا جو پاکستان چاہتا ہے یا جس میں پاکستان کی رضامندی ہوگی۔ چین کی جانب سے یہ انتہائی مثبت بات سامنے آئی ہے کہ وہ ہر طرح سے پاکستان کی نئی حکومت سے تعاون کیلئے تیار ہے اور جس طرح پاکستان چاہے گا وہ سی پیک کے منصوبے کو اس حساب سے پایہ تکمیل تک پہنچائے گا، چین کے اس اقدام کے بعد سی پیک کے دشمنوں پر منوں اوس پڑگئی ہے اور اب انہیں کوئی ایسا راستہ نہیں دکھائی دے رہا کہ جس کو وہ ایشو بنا کر اس منصوبے کو سبوتاژ کرنے کے مذموم عزائم کو پایہ تکمیل تک پہنچا سکیں۔

Google Analytics Alternative