Home » 2018 » November (page 30)

Monthly Archives: November 2018

عظیم قیادت اہم مقاصد کے حصول کے لیے یوٹرن لیتی ہے، عمران خان

ابوظہبی:وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ مخلص قیادت ملک کے مفادات میں جب کہ کرپٹ قیادت اپنی ناجائز دولت کو بچانے کے لیے یوٹرن لیتی ہیں۔ 

وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک پیغام میں ’یوٹرن‘ کی وضاحت کرتے ہوئے لکھا ہے کہ مقاصد کے حصول کے لیے یوٹرن لینا دراصل عظیم قیادت کی نشانی ہوتی ہے جب کہ چوری اور ناجائز طریقے سے دولت جمع کرنے والے اپنی کرپشن کی کمائی کو بچانے کے لیے یوٹرن لیتے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹر پر اپنے نئے پیغام میں دراصل سابق بیان پر تصدیق کی مہر ثبت کردی ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ جو حالات کے مطابق یوٹرن نہیں لیتا وہ لیڈر ہی نہیں ہوتا اور اگر ہٹلر اور نپولین نے اپنے غلط موقف پر یوٹرن لیے ہوتے تو حالات یکسر تبدیل ہوتے۔

وزیراعظم کے اس بیان پر ملک بھر میں بحث و مباحثہ شروع ہوگیا تھا جہاں حکومتی وزراء اور حکام نے بیان کی حمایت میں سرتوڑ کوشیش کیں وہیں اپوزیشن کی جانب سے سخت تنقید کا سامنا رہا۔ سوشل میڈیا پر بھی اس بیان پر خوب لے دے ہوئی اور طنزیہ و فکاہیہ پوسٹیں بھی شیئر کی گئیں۔

وزیراعظم عمران خان جو اس وقت متحدہ عرب امارات کے دور پر ہیں کو اپنے سابق بیان پر اُٹھنے والے طوفان کے زور کو توڑنے کے لیے ٹویٹر پر ایک اور بیان دینا پڑا جس میں وہ اپنے سابق موقف پر کھڑے نظر آتے ہیں۔

چوری کے ووٹ سے بننے والی حکومت سینہ زوری پر اتر آئی ہے، بلاول بھٹو

گلگت: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہےکہ چوری کے ووٹ سے بننے والی حکومت اب سینہ زوری پر اتر آئی ہے جب کہ 50 لاکھ  نئےگھروں کا نعرہ دینے والوں نےعوام سے چھت اورروزگار چھین لیا ہے۔

گلگت بلتستان میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ چوری کے ووٹ سے بننے والی حکومت اب سینہ زوری پر اتر آئی ہے یہ لوگوں کی عزتیں پامال کررہے ہیں ،  ان سے معیشت سنبھالی جارہی ہے اور نہ  ہی حکومتی امور چلائے جارہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کو 100 دن بھی پورے نہیں ہوئے اور یہ 100 سے زائد یوٹرن لے چکے ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ نئے پاکستان والوں نے پاکستان کی بنیادیں ہلاکررکھ دی ہیں، انتخابات سے پہلے قوم کو سبزباغ دکھائےگئے  یہ سبز باغ لوگوں کوتو یاد ہیں مگر  پی ٹی آئی والے خودبھول گئے ہیں، قرض مانگنے پر خودکشی کو ترجیح دینے والے آج قرض لینے پر مٹھائیاں بانٹ رہے ہیں۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ 50لاکھ  نئےگھروں کا نعرہ دینے والوں نےعوام سےچھت اورروزگارچھین لیا جب کہ ایک کروڑنوکری کاوعدہ کیا لیکن لوگوں سےتجاوزات کے نام پر ان کے ذریعہ روزگار چھینے جارہے ہیں یہ کیسا نیا پاکستان ہےجومعاشی بدحالی کی طرف لےجارہاہے ،10 کی روٹی اور 15 روپے کا نان ،یہ ہے نیا پاکستان واہ رے عمران خان ۔

وزیراعظم کی شیخ محمد بن زید سے ملاقات، دوطرفہ تعلقات پر بات چیت

ابو ظبی: وزیراعظم عمران خان نے ولی عہد شیخ محمد بن زید سے ملاقات کی جس میں دوطرفہ تعلقات اور عالمی امور پر بات چیت کی گئی۔

وزیراعظم عمران خان متحدہ عرب امارات کے ایک روزہ دورے  پر پہنچ گئے ہیں، ابوظہبی ایئر پورٹ پر وزیراعظم کا استقبال وزیر مملکت سلطان بن جابر نے کیا جس کے بعد وزیراعظم صدارتی محل پہنچے جہاں ان کا استقبال ولی عہد شیخ محمد بن زید النہیان نے کیا، اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کو گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔

دورہ متحدہ عرب امارات میں وزیراعظم کے ہمراہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر توانائی، وزیرپٹرولیم، مشیر برائے تجارت اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی موجود ہیں۔

وزیراعظم عمران نے ولی عہد شیخ محمد بن زید سے ملاقات کی جس میں دوطرفہ تعلقات اور عالمی امور پر بات چیت کی گئی، اس کے علاوہ وزیراعظم عمران خان نائب صدر اور وزیر اعظم متحدہ عرب امارات سے بھی ملاقات کریں گے۔

’عوام کی نمائندگی نہ کرنے والی جمہوریت نہیں چل سکتی‘

جہلم: وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ جو جمہوریت عوام کے بارے میں نہیں سوچے گی وہ نہیں چل سکتی۔

ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیرِ اطلاعات کا کہنا تھا کہ پاکستان کے چھوٹے اضلاع وسائل سے محروم رہے ہیں، جو ٹیکس ادا کرتے ہیں لیکن ان کے پیسے ان ہی کے پاس دوبارہ نہیں پہنچتے۔

انہوں نے کوئٹہ کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ ’میں نے اسمبلی میں کہا کہ 15 سو ارب روپیہ بلوچستان گیا لیکن پھر بھی کوئٹہ میں بہتر ہسپتال موجود نہیں ہے‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بلوچستان میں کہیں بھی کوئی حادثہ پیش آتا ہے تو طیاروں کے ذریعے متاثرین کو کراچی منتقل کیا جاتا ہے۔

جب ماضی کی حکومتوں سے اس بارے سوال کیا جاتا ہے تو وہ سر پکڑ کے بیٹھ جاتے ہیں اور کہتے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں آگئی ہے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اگر آپ پارلیمنٹ اور بڑے ایوانوں میں یہ چاہتے ہیں کہ خاموشی سے وقت گزرتا رہے اور کوئی کسی سے کھربوں روپے کا سوال نہ کرے تو اب ایسا نہیں ہوگا۔

انہوں نے سوال کیا جو جمہوریت عام آدمی کی ہی نمائندگی نہیں کرے گی وہ نہیں چل سکتی۔

انہوں نے کہا کہ چھوٹے علاقوں کا بجٹ بھی بڑے شہروں میں اورنج لائن جیسے منصوبوں پر لگا دیے گئے ہیں۔

اپنے حریفوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کتنے ہی لوگ ایسے ہیں جنہوں نے سیاست شروع کی تھی تو ان کے پاس سائیکل اور موٹر سائیکل تھی، لیکن اب ان کے پاس لگژری گاڑیاں ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ جب ایسے افراد سے ان کی اس دولت کے بارے میں سوال کریں گے تو ملک میں جمہوریت خطرے میں آجائے گی۔

اپنے وعدے دہراتے ہوئے وفاقی وزیرِ اطلاعات کا کہنا تھا کہ ’ہم نے چوروں سے لوٹی ہوئی رقم واپس لانے کا وعدہ کیا تھا، وہ پورا کرکے دکھائیں گے‘۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ہمیں یہ دیکھنا ہے کہ وفاق اور صوبوں کا خزانہ عوام تک پہنچ رہا ہے یہ نہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیرِاعظم عمران خان ایسا نظام چاہتے ہیں جس کے ذریعے سرکار کا پیسہ عام آدمی کی مرضی سے اس کے علاقے میں لگیں۔

اپنی بات کو واضح کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پیسے کو عوام تک منتقل کرنے کا طریقہ کار صرف مضبوط بلدیاتی نظام ہے۔

جمال خاشقجی کی موت سے متعلق مکمل رپورٹ ایک دو روز میں آجائے گی: ٹرمپ

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل سے متعلق رپورٹ ایک دو روز میں آجائے جس میں پتہ چل جائے گا کہ یہ اقدام کس نے کیا۔

امریکی سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی (سی آئی اے) اپنی تحقیقات کے بعد اس نتیجے پر پہنچی ہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے ترکی میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کا حکم دیا تھا۔

جب اس حوالے سے صحافیوں نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے سوال کیا جن کا کہنا تھا کہ ایک دو روز میں تفصیلی رپورٹ آجائے گی جس میں بتایا جائے گا کہ جمال خاشقجی کے قتل کے پیچھے کون تھا۔

انہوں نے کہا کہ ان کی انتظامیہ کی جانب سے آئندہ دو روز میں جمال خاشقجی کے قتل پر مفصل رپورٹ جاری کی جائے گی۔

دوسری جانب امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان ہیتھر نورٹ کا کہنا ہے کہ حکومت اب تک اس نتیجے پر نہیں پہنچی کہ جمال خاشقجی کے قتل کا ذمہ دار کون ہے جب کہ اس حوالے سے پوچھے گئے کئی سوالات کے انہوں نے کوئی جواب نہیں دیا۔

ادھر سعودی عرب نے جمال خاشقجی کے قتل میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ملوث ہونے کی سختی سے تردید کی ہے۔

سعودی عرب کی جانب سے صحافی جمال خاشقجی کے قتل پر متضاد بیانات نے معاملے کو مزید گھمبیر کردیا اور اس پر مزید یہ کہ سعودی پراسیکیوٹر نے صحافی کے قتل کے الزام پر 11 افراد پر فرد جرم عائد کی جس میں سے 5 کو سزائے موت دینے کی تجویز کی۔

یاد رہے کہ 2 اکتوبر کو سعودی صحافی جمال خاشقجی کو استنبول میں سعودی قونصلیٹ میں قتل کردیا گیا تھا، جہاں وہ شادی کے سلسلے میں کچھ ضروری دستاویزات کے حصول کے لیے گئے تھے۔

کراچی کا امن مزید بہتر بنانے کا عزم

adaria

پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے رینجرز ہیڈ کوارٹرز سندھ کے دورے کے دوران اپنے عزم کو دوہراتے ہوئے کہا کہ کراچی پاکستان کی معیشت کا انجن ہے اس کے امن و امان کی صورتحال مزید بہتر بنائیں گے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کورکمانڈر کراچی لیفٹنٹ جنرل ہمایوں عزیز کے ہمراہ رینجر ہیڈ کوارٹر کا دورہ کیا۔اس موقع پر ڈی جی رینجرز میجر جنرل محمد سعید نے آرمی چیف کو صوبے بھرکی سکیورٹی اور کراچی میں امن و امان کی صورتحال پر بریفنگ دی، جنرل قمر جاوید باجوہ نے امن وامان کے لیے رینجرز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کاوشوں کو سراہا.سربراہ پاک فوج جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ امن و امان کی بہتری سے کراچی میں تجارتی سرگرمیاں مثبت انداز میں جاری ہیں، شہر کی سیکیورٹی کو مزید بہتر بنانے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں گے۔بلاشبہ افواج پاکستان نے ملک کے امن و امان کے لیے بے شمار قربانیاں دی ہیں،جس سے ملکی معیشت پر بہت مثبت اثرات مرتب ہوئے خصوصا کراچی کے امن کی بحالی سے معاشی سرگرمیوں میں تیزی آئی ہے۔اس وقت ملک کو جن اندرونی اور بیرونی چیلنجز کا سامنا ہے ان سے نمٹنے کے لیے افواج پاکستان ہر وقت سر بکف رہتی ہیں۔تاہم اس کے لیے ضروری ہے کہ تمام ریاستی ادارے باہم یکسو ہو کر ریاستی و حکومتی معاملات کے حوالے سے اپنی ذمہ داریاں احسن طریقے سے ادا کریں تو کسی ملک کو میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرات بھی نہ ہو ۔ بھارت جو روز اول سے ہی پاکستان کی سالمیت کے درپے ہے کو ہمارے اندرونی سیاسی و اقتصادی عدم استحکام سے سازشوں کا جال پھیلانے کا موقع ملتا جاتا ہے۔اس تناظر میں ہمیں اپنی جری افواج کے پیچھے کھڑا ہونا ہو گا۔ بطور ادارہ پاک فوج پر پوری قوم کو فخر ہے کہ جہاں وہ مکمل جانفشانی اور جاں نثاری کے ساتھ دفاع وطن کی ذمہ داریاں بخوبی نبھا رہی ہے وہاں وہ ملکی معاشی استحکام کے لیے بھی فکر مند رہتی ہے۔اسی لیے رینجرز ہیڈ کوارٹرز سندھ کے دورے کے دوران آرمی چیف نے اس عزم کا اظہار کیاکہ کراچی پاکستان کی معیشت کا انجن ہے اس کے امن و امان کی صورتحال مزید بہتر بنائیں گے۔ایک وقت تھا کہ کراچی پر دہشتگردی کا راج تھا اور بڑے بڑے سرمایہ کار کراچی چھوڑنے پر مجبور ہو رہے تھے۔کراچی کا امن مکمل طور پر سوالیہ بن چکا تھا ایسے میں پاکستان رینجرز نے کراچی کی کمان سنبھالی اور جس جانفشانی سے اس معاشی حب کو بھتہ مافیہ کے شکنجے سے نکالا وہ لائق تحسین ہے۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے بھی اپنے دورے کے دوران امن وامان کے لیے رینجرز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کاوشوں کو سراہا۔ رینجرز کے اس فریضے کی ادائیگی کے باعث ہی کراچی میں آج امن لوٹ آیا ہے اور دہشت گرد اپنے زخم چاٹ رہے ہیں۔پاک فوج کا یہی وہ کردار ہے جس پر ہر شہری بجا طور پر فخر کرتا ہے ۔عسکری قیادت کی جانب سے امن و امان کی حکمرانی یقینی بنانے کیلئے کردار ادا کرنے کا عزم بھی اسی تناظر میں کیا جاتا ہے کہ پرامن معاشرے کی بنیاد پر ہی معاشی و اقتصادی استحکام ممکن ہے ۔ اگر لاقانونیت کا دور دورہ ہو جیسا کہ آج سے دو تین سال قبل کراچی سنگین صورتحال سے دوچار تھا تو پھر ملکی معیشت کا پہیہ جام ہو کر رہ جاتا ہے۔ہمارے ازلی دشمنوں کی یہی خواہش تھی کہ پاکستان کو معاشی دہشت گردی کے ذریعے اتنا کمزور کر دیا جائے کہ اس کی سالمیت سوالیہ نشان بن جائے .یہ حقیقت ہے کہ دشمن اپنی اس چال میں کسی حد تک کامیاب ہوتا بھی دکھائی دے رہا تھا مگر خدا کا شکر ہے کہ افواج پاکستان نے اس گھناونی سازش کا بروقت قلع قمع کر کے ملک کا مستقبل محفوظ بنا دیا ہے تاہم ابھی کچھ عناصر لسانی بنیادوں پر امن دشمن سرگرمیوں میں مصروف ہیں اور ملک کے امن میں دراڑ ڈالنے کے لیے ملک دشمن طاقتوں کے سہولت کار بنے ہوئے ہیں۔ایس پی طاہر خان کے قتل اور ان کے جسد خاکی کی واپسی کے موقع پر پیدا ہونے والی صورتحال سے خطرے کی جو گھنٹی بجی ہے اس سے نمٹنا بھی ضروری ہے۔نئی حکومت کے لیے یہ ایک بڑا چیلنج ہے کہ وہ اپنے سکیورٹی اداروں کی پشت پر کھڑے ہو کر بر وقت سبیل کرے ۔ہزاروں قربانیوں کے بعد قبائیلی علاقوں پر ریاستی رٹ بحال ہوئی ہے اگر تھوڑی سی غفلت سے کام لیا گیا تو ساری محنت غارت ہو جائے گا۔

گوگل کی پاکستان کے حوالے سے حوصلہ افزا رپورٹ
معروف ٹیکنالوجی کمپنی گوگل نے پاکستان کو تیزی سے ابھرنے والا ڈیجیٹل ملک قرار دیتے ہوئے رپورٹ کیا ہے کہ متعدد برانڈز کے لیے یہاں لاتعداد مواقع موجود ہیں جہاں وہ اپنے صارفین سے براہ راست رابطہ قائم کر سکتے ہیں۔گوگل کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں چھوٹے اور محدود پیمانے پر لاتعداد کاروبار انٹرنیٹ کی بدولت پروان چڑھ رہے ہیں اور اسے بتدریج مزید تقویت مل رہی ہے، جس کی ایک بڑی وجہ انٹرنیٹ صارفین کی تعداد میں اضافہ اور بڑا سرمایہ رکھنے والی غیر ملکی کمپنیوں کی دلچسپی ہے۔ رپورٹ میں لکھا ہے کہ پاکستان کی آبادی 20 کروڑ سے تجاوز کرچکی ہے شہری علاقوں کا پھیلا تیزی سے ہورہا ہے، لوگ دیہی علاقوں سے نکل کر شہر کی زندگی اپنا رہے ہیں۔جس کا مطلب ہے کہ ہر روز انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہاہے۔پاکستان کے موجودہ فی کس جی ڈی پی جو اس وقتایک ہزار 641 ڈالر ہے کی رفتار کو حوصلہ افزا قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اگر جی ڈی پی کی یہی رفتار برقرار رہی تو 2030 میں پاکستان چوتھی بڑی ابھرتی ہوئی معاشی ریاست بن جائے گا۔پاکستان میں تقریبا 5 کروڑ 90 لاکھ اسمارٹ فون کے صارفین ہیں جس میں اندازا 83 فیصد ‘اینڈرائڈ موبائل’ استعمال کرتے ہیں، اس حقیقت کے تناظر میں آئندہ برسوں میں انٹرنیٹ صارفین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہوگا، اسی طرح پاک ۔ چین اقتصادی راہداری کو بھی اس کی ایک وجہ قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ سی پیک منصوبوں کے تحت چین 60 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کررہا ہے اور اسی منصوبے کے تحت ملک کے اندر انٹرنیٹ تک رسائی کے لیے 820 کلومیٹر لمبی فائبر اپٹک کیبل بھی ڈالی جارہی ہے، جس کے نتیجے میں انٹرنیٹ تک رسائی مزید بڑھ جائے گی۔یہ خوش آئند رپورٹ ہے جو یقیناًسرمایہ کاروں کو بھی متوجہ کرے گی جس کے ملک کی اقتصادی صورتحال پر مثبت اثرات مرتب ہونگے۔

علیمہ خان کو این آر آو دینے پر اپوزیشن شور مچاتی رہے گی، مریم اورنگزیب

اسلام آباد: ترجمان مسلم لیگ (ن) مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ علیمہ خان کو پچھلے دروازے سے این آر آو دینے پر اپوزیشن شور مچاتے رہے گی۔

وفاقی وزیر اطلاعات کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ فواد چوہدری کو یوٹرن وزیراعظم کے بارے میں بیان دیتے وقت شرم تو آتی ہوتی ہوگی جب کہ حکومت کی نااہلی، چوری، جھوٹ اور مہنگائی کے بم پر اپوزیشن شور مچاتی رہے گی۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ  حکومت اپنے اردگرد بیٹھے چوروں کو خاموشی سے این آراو ددینے کی کوشش کر رہی ہے، آپ علیمہ باجی کی بے نامی جائیداد پرقوم کو جواب دیں اور بتائیں کہ علیمہ خان نے جائیداد کس پیسے سے خریدی اور پیسہ پاکستان سے باہر کیسے گیا۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ فواد چوہدری جواب دیں کہ 700 ارب والے کتنے لوگ آپ کے دائیں بائیں بیٹھیں ہیں اور کس کس کو علیمہ باجی کی طرح این آر او دینے کا ارادہ ہے، اگر حکومت اپنے آس پاس بیٹھے لوگوں کو این آر او دے گی تو اپوزیشن خاموش نہیں رہے گی۔

ترجمان مسلم لیگ(ن) کا مزید کہنا تھا کہ حکومت نے غریبوں کے منہ سے نوالہ چھینا ہے اور اپوزیشن پچاس لاکھ گھروں کی تعمیر اور ایک کروڑنئی نوکریاں دینے کا سوال پوچھتی رہے گی۔

بھارت کے شہر امرتسر میں دھماکا، 3 افراد ہلاک اور متعدد زخمی

امرتسر: بھارت میں امرتسر ایئرپورٹ کے قریبی گاؤں میں اقلیتی گروہ نیرن کاری بھوان کی  تقریب کے دوران زور دار دھماکا ہوا  جس کے نتیجے میں 3 افراد ہلاک اور 10 زخمی ہوگئے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق امرتسر کے گاؤں راجا سانسی میں اقلیتی گروہ نیرن کاری بھوان کا اجتماع جاری تھا کہ  اس دوران زور دار دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 15 افراد شدید زخمی ہوگئے۔

ریسکیو اداروں نے امدادی کاموں کا آغاز کرتے ہوئے زخمیوں کو قریبی اسپتال منتقل کیا جہاں 2 زخمی راستے میں ہی دم توڑ گئے جب کہ ایک زخمی دوران علاج چل بسا، 4 زخمیوں کی حالت نازک ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔

پولیس نے اقلیتی گروہ کے اجتماع گاہ کو گھیرے میں لے لیا تاہم دھماکے کی نوعیت کا تعین نہیں کیا جا سکا اور نہ ہی کوئی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔

اجتماع کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پولیس حکام سے پیشگی اجازت لے کر اجتماع کا انعقاد کیا جا رہا تھا تاہم خطرات لاحق ہونے کے باوجود ہمیں درکار سیکیورٹی فراہم نہیں کی گئی جس کے باعث حادثہ ہوگیا۔

واضح رہے کہ نیرن کاری بھارت کا اقلیتی گروہ ہے جس کے بانی ایک سکھ تھے جنہیں قتل کردیا گیا تھا تاہم یہ گروہ خود کو نہ تو کوئی مذہب قرار دیتا ہے اور نہ ہی خود کو کسی مذہب کا فرقہ سمجھتا ہے بلکہ یہ ایک فلاحی تنظیم کی طرح انسانی بہبود کے لیے کام کرتے ہیں۔

Google Analytics Alternative