Home » 2019 » February » 07

Daily Archives: February 7, 2019

مہنگاحج اورحکومتی مؤقف!

حج کے اخراجات 280000 سے بڑھاکر 456000 کردیے گئے ہیں۔صرف اتنا ہی نہیں ہے بلکہ حکومت کی طرف سے ہر حاجی کو یہ ہدایت بھی کی گئی ہے کہ وہ 2000 ریال بھی ساتھ لے کر جائے۔اس طرح حج کا کل حکومتی پیکج تقریباً 530000 تک پہنچ جائے گا۔حکومتی ترجمان فوادچوہدری کا کہنا ہے ’’ حکومت حج کے ضمن میں ایک روپیہ بھی نہیں کما رہی ‘‘۔ان کا مزید کہنا تھا ’’حج اورزکوۃ دوایسی عبادات ہیں جو صرف صاحب استطاعت لوگوں پر فرض ہوتی ہیں ‘‘۔ وفاقی وزیر برائے مذہبی امور مولانا نورالحق قادری نے کہا ’’ریاست مدینہ کا یہ مطلب ہر گزنہیں ہے کہ حکومت لوگوں کو مفت حج کرائے‘‘۔ فواد چوہدری ایک دور کی کوڑی لائے اورفرمایا’’پچھلی حکومت میں حج اس لیے سستا تھا کیونکہ لوگوں کو سبسڈی دی جارہی تھی۔موجودہ حکومت سبسڈی ہرگزنہیں دے گی کیونکہ یہ انصاف نہیں ہے کہ غریب لوگوں سے ٹیکس کی مد میں اکٹھاکیاگیا پیسہ حج کرنے والوں پر خرچ کیاجائے‘‘۔حج کے معاملے پر حکومت کا مؤقف ہے کہ اپوزیشن سیاست کررہی ہے جبکہ اپوزیشن کہہ رہی ہے کہ حکومت ظلم کررہی ہے۔جہاں تک اپوزیشن کی سیاست کا سوال ہے تو شاید درست ہی ہوگا لیکن ہم اسے نہیں مان نہیں سکتے کیونکہ ہم عوام میں رہتے ہیں اورعوام اس معاملے میں کیا کہہ رہی ہے اورکیا سوچ رہی ہے وہ کسی سے ڈھکاچھپا نہیں ہے۔یہی وجہ ہے کہ نورالحق قادری نے خود اس بات سے اختلاف کیااور میٹنگ بھی ادھوری چھوڑ دی بلکہ احتجاجاً وہ پریس کانفرنس میں بھی شریک نہیں ہوئے۔میرے ایک دوست کی ٹریول ایجنسی ہے وہ لوگوں کو عمرہ بھی کراتے ہیں۔مکہ المکرمہ اور مدینہ منورہ میں لوگوں کو حرم کی سب سے قریبی ہوٹل میں ٹھہراتے ہیں۔یہاں یہ بات قابل فہم ہے کہ جو ہوٹل حرم سے جتنا زیادہ قریب ہو گا اس کا کرایہ بھی اتنا ہی زیادہ ہوگا۔وہ دوست 21 دن کاپیکج 95000میں دیتے ہیں جس میں ہوٹل کی اکیس دن کی رہائش ، آنے جانے کا ٹکٹ اور مکہ ومدینہ کی تمام زیارات بھی شامل ہیں۔ اکیس دن میں حاجی کو صرف کھاناپینا اپنا کرنا پڑتا ہے ۔واپسی پر عمرہ زائرین کچھ چیزیں اپنے ساتھ لاتے ہیں جیساکہ آب زم زم ، جائے نمازیں ، تسبیح جات اورکھجوریں وغیرہ تاکہ مبارکباد دینے والوں کی خاطر تواضع اورتحفہ داری کی جا سکے۔یہ تمام چیزیں لاکر بھی ایک آدمی کا عمرے کا زیادہ سے زیادہ خرچا 120000 بنتا ہے۔اس طرح ایک دن کاخرچہ تقریباً5800 بنتا ہے۔حج کا زیادہ سے زیادہ سٹے چالیس دن کا ہوتا ہے۔یوں اگر مزید انیس دن کا خرچہ جمع کیا جائے تو حج کے چالیس دنوں کا خرچہ 228572 روپے بنتا ہے۔اس میں یہ بات بھی یاد رکھنی چاہیے کہ حکومت حاجیوں کو رہائش گاہیں بہت دور دیتی ہے جن کا کرایہ کم ہوتا ہے جبکہ مذکورہ حساب قریب کی رہائش گاہوں کے حساب سے ہے۔سمجھ نہیں آتی کہ مزید پیسہ کس مد میں لیاجاتا ہے ؟آئیے فوادچوہدری کی اس بات کا جائزہ لیتے ہیں کہ پچھلی حکومت سبسڈی دے رہی تھی ۔ان کی یہ بات فقط گونگلوؤں سے مٹی جھاڑنے کے مترادف ہے۔اس کی ایک وجہ تو یہ ہے کہ پچھلی حکومت کا حج پیکج 280000تھاجس میں سبسڈی 40000 تھی۔اگرموجودہ حکومت صرف وہ سبسڈی ہی ختم کی ہوتی تو حج کا پیکج 320000 بنناتھا۔اس سے معلوم ہوتا ہے کہ حکومت نے صرف سبسڈی ہی ختم نہیں کی بلکہ کچھ کمایا بھی ہے۔دوسری وجہ یہ ہے کہ پچھلی حکومت نے خودذاتی دلچسپی لے کر سعودی حکومت سے بہت سی مراعات لی تھیں اور رہائشگاہوں کی مد میں خرچہ3800ریال سے کم کراکر1700 ریال کرالیا ۔مزید تفصیل پیر محمدامین الحسنات شاہ سے پوچھی جاسکتی ہیں جوپچھلے دور میں وزیرمملکت برائے مذہبی امور تھے۔کیا موجودہ حکومت یہ بھاگ ڈور نہیں کرسکتی تھی ؟ اس حکومت کاتو یہ دعویٰ بھی ہے کہ عمران خان کی وجہ سے پاک سعودیہ تعلقات تاریخ سب سے اعلیٰ سطح پر ہیں۔اس مباحثے کا تیسرا پہلو یہ ہے کہ کیا حج پرسبسڈی دی جاسکتی یا نہیں ؟ حکومت نے حج مہنگا کرنے سے پہلے یہ سوال اسلامی نظریاتی کونسل سے سامنے رکھا تھا۔ اسلامی نظریاتی کونسل نے حکومت کو بتایا کہ وہ اسلامی تعلیمات کے مطابق ہر حاجی کو سبسڈی دے سکتی ہے۔ البتہ زکوٰۃ فنڈ سے سبسڈی نہیں دی جا سکتی۔ اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین قبلہ ایاز کے دلائل اورگفتگواس ضمن میں پڑھنے سے تعلق رکھتی ہے۔انہوں نے حج کے عمل کو آسان بنانے کیلئے ایک تجویزیہ بھی دی کہ حکومت پی آئی اے کے کرایوں میں خاصر خواہ کمی کر دے مگر یہاں توگنگا ہی الٹی چل رہی ہے۔ پی آئی اے کا خسارہ بھی عوام سے پوراکرنے کے مشن کو حج کے دنوں میں پوراکرنے کی ناکام کوشش کی جاتی ہے۔عام دنوں میں پی آئی اے کا ٹکٹ 60000 اور70000 کے درمیان ہوتاہے جبکہ حج کے دنوں میں یہی ٹکٹ 100000 تک چلاجاتا ہے جو اس سال تبدیلی کی برکت سے تقریباً 120000 کے لگ بھگ پڑے گا۔یہ بات بھی قابل افسوس ہے کہ ہمارے پڑوس کی غیرمسلم انڈین ایئرلائن کے کرائے میں ہر حاجی کو اچھی خاصی سبسڈی دیتی ہے۔کیایہ مذاق نہیں ہے کہ حکومتی عہدیداران تو پی آئی اے کو مفت استعمال کریں اوران کے دوروں کاخرچہ حاجیوں کی جیب سے نکالا جائے؟ حکومت کامؤقف ہے کہ مہنگائی بڑھی ہے اور ڈالر کا ریٹ اوپرچلاگیا جس کی وجہ سے حج مہنگاکرنا پڑا۔ہم پوچھتے ہیں کہ کیاڈالر کاریٹ اورمہنگائی عوام کی وجہ سے بڑھی ہے؟اس کامطلب تو یہ ہوا کہ کرے حکومت اوربھرے عوام۔اگرحکومت کامؤقف تسلیم کربھی لیاجائے تو ڈالراورمہنگائی کی شرح کے حساب سے حج کے اخراجات 3 لاکھ40 ہزار ہونے چاہئیں۔اب یہ فوادچوہدری صاحب کی ذمہ داری ہے کہ وضاحت فرمائیں کہ حکومت نے ساڑھے چار لاکھ کا فیصلہ کیسے کر لیا؟اس بات کا ایک اورپہلو بھی قابل توجہ ہے کہ حکومت حاجیوں کے پیسوں سے مال کماناتو پسند کرتی ہے لیکن انہیں اپنے ہی ادارے اسلامی نظریاتی کونسل کی سفارشات کے مطابق آسانیاں نہیں دے سکتی ۔اس بات کی وضاحت اس طرح کی جاسکتی ہے کہ حاجیوں سے پیسے درخواستوں کے ساتھ ہی وصول کئے جاتے ہیں۔چونکہ درخواستیں دینے والوں کی تعدادبہت زیادہ ہوتی ہے اس لیے قرعہ اندازی بعد میں کی جاتی ہے۔ بارہا یہ تجویز دی گئی کہ لوگوں سے ساری رقم وصول نہ کی جائے بلکہ کچھ رقم لی جائے اور باقی رقم اس وقت لی جائے جب ان کا نام قرعہ اندازی میں نکل آئے لیکن وزارت مذہبی امور اس بات کو ماننے سے کنی کتراتی آئی ہے۔

*****

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کا مایا علی کو برانڈ ایمبیسڈر برقرار رکھنے کا اعلان

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے اداکارہ مایا علی کو برانڈ ایمبیسڈر برقرار رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

پاکستان سپر لیگ کی ٹیم کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے چوتھے ایڈیشن کے لیے بھی دور حاضر کی سپر اسٹار اداکارہ مایا علی کو پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چوتھے ایڈیشن کے لئے مسلسل دوسری دفعہ ٹیم کا برانڈ ایمبیسڈر رکھا ہے جس کا اعلان کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے اونر ندیم عمر نے کیا ہے خوبرو مایا علی کو کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے دوسری بار جوش و جذبہ کے ساتھ خوش آمدید کہا  ہے مایا علی تمام تر مصروفیات کو ترک کرکے پی ایس ایل کی افتتاحی تقریب اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے میچز میں شرکت کرینگی۔

Google Analytics Alternative