Home » 2019 » February » 10

Daily Archives: February 10, 2019

لٹیروں کواین آراو دینے کا مطلب ملک سے غداری ہوگا، وزیراعظم

بلوکی: وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ہم کسی کو بھی نہیں چھوڑیں گے جس نے اس ملک کا دیوالیہ نکالا جب کہ لٹیروں کواین آراو دینے کا مطلب ملک سے غداری کرنا ہوگا۔

وزیراعظم عمران خان نے بلوکی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں دو این آراو نے ملک کومقروض کیا، ان آراو کی وجہ سے طاقت ور لوگوں نے سوچا کہ چوری کی کوئی سزا نہیں ہوتی، پرویز مشرف نے اقتدار بچانے کیلئے نوازشریف کو جانے دیا، کسی کو خوف نہیں تھا کیونکہ یہاں کوئی پوچھنے والا نہیں تھا، قرضوں کی قیمت عوام مہنگائی کی شکل میں ادا کرتی ہے، دس سال ملک کو تباہ کیا گیا اور اب کہتے ہیں کہ چھ ماہ میں پی ٹی آئی نے کچھ نہیں کیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ این آراوسے کرپٹ لوگوں کوحوصلہ ملا، نوازشریف اورزرداری نے 5،5 سال حکومت کی اورپھر پچھلے دس سال میں پاکستان کا قرضہ 30 ہزارارب تک پہنچ گیا، آج روپیہ گرنے کی وجہ بھی یہی ہے جس کے باعث مشکلات بڑھ رہی ہیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ہم کسی کو بھی نہیں چھوڑیں گے جس نے اس ملک کا دیوالیہ نکالا جب کہ لٹیروں کواین آراو دینے کا مطلب ملک سے غداری کرنا ہوگا۔

وزیراعظم نے کہا سب کہتے ہیں تبدیلی کیا ہے، تبدیلی یہ ہے کہ 5 ماہ میں تین وزرا نے استعفے دیے، لیکن یہ لوگ جنہوں نے  اربوں روپے کی کرپشن کی، جعلی اکاؤنٹس بنائے، ان میں سے کوئی ایک استعفی کا نہیں سوچتا، احتساب کسی میں امتیاز نہیں کرتا، یہ ہے وہ حکومت جو صحیح معنوں میں احتساب کرے گی۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اسمبلی چلانے کی جتنی کوشش کرنی تھی کرلی، جمہوریت کی تاریخ میں ایسا کبھی ہوا ہی نہیں کہ ایک جیل سے آدمی اٹھ کرآئے اور پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا چیئرمین بن جائے اورپھراسی نیب کو طلب کرلے، کسی بھی جمہوریت میں ایسا کوئی تصور نہیں۔

وزیراعظم نے بلوکی ریزورٹ پارک کو بابا گرونانک کے نام پررکھنے اورگرونانک یونیورسٹی بنانے کا بھی اعلان کیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ طاقت ورلوگ جو زمینوں پرقبضہ کر کے بیٹھے ہوئے ہمیں وہاں زیادہ سے زیادہ درخت لگانے اورجنگل بنانے ہیں ، پاکستان دنیا میں آٹھویں نمبرپرہے جو ماحول کے حساب سے خطرے میں ہیں، جنگلات کی کمی ہمارے لیے زندگی اور موت کا سوال ہوگیا ہے۔ آگے حالات برے نظر آرہے ہیں، خشک سالی آجائے گی، شہروں میں آلودگی بڑھتی جائے گی اور بارشیں کم ہوجائیں گی۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمارے ملک میں سب سے کم جنگلات ہیں، جو بڑے بڑے جنگلات تھے  وہ سب تباہ ہوگئے، پچھلے دس سالوں میں شہروں میں درخت کاٹے گئے جس کے باعث آلودگی بڑھی، ہمیں جنگلات کی کٹائی آنے والی نسل کی بہتری کے لیے روکنی ہے جب کہ ہمیں اپنے شہروں سے بھی پارکوں پر جو قبضے کیے جارہے ہیں انہیں بچانا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں اگلے 5 سال دس ارب درخت لگانے ہیں، کے پی کے میں شجر کاری کی مثال سب کے سامنے ہے جس کی تعریف دنیا میں کی گئی۔

عمران خان کی آمرانہ سوچ کھل کر سامنے آ گئی ہے، مریم اورنگزیب

اسلام آباد: ترجمان مسلم لیگ (ن) اورنگزیب کا کہنا ہے کہ ملک میں اس وقت ڈکٹیٹر طرز کی حکومت مسلط ہے اور عمران خان کی آمرانہ سوچ کھل کر سامنے آ گئی ہے۔

عمران خان کی تقریر پر ردِعمل کا اظہار کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ پورے پاکستان کو معلوم ہے کہ عمران خان سلیکٹڈ وزیراعظم ہیں، ان کے پاس نہ ہی اختیار ہے اور نہ ہی ان کی عزت ہے، آج ان کی تقریر ڈی چوک تقریر سے مختلف نہیں تھی، اس وقت ہم نے عمران خان کو ڈی چوک پر ڈیل اور ڈھیل دی تھی۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ آج عمران خان نے اپوزیشن کو دھمکیاں دیں، ان کی آمرانہ و فاشسٹ سوچ کھل کر سامنے آگئی ہے، اس وقت ملک پر ایک ڈکٹیٹر طرز کی حکومت مسلط ہے، عمران خان اپوزیشن کو دھمکیاں دینا بند کریں اور کان کھول کر سن لیں کہ اپوزیشن آپ سے ڈرنے والی نہیں ہے، عمران خان سجھتے ہیں کہ پارلیمنٹ ان کی جوابدہ ہے، انہیں چاہئے کہ وہ آئین پاکستان کا مطالعہ کریں، پارلیمان وزیر اعظم کو جوابدہ نہیں ہوتی۔

ترجمان نے کہا کہ عمران خان اپنی کارکردگی پر پردہ ڈالنے کے لیے این آر او کا شور مچا رہے ہیں، لیکن اپوزیشن ان کی کارکردگی پر نہ این آر او نہ ڈیل اور نہ ڈھیل دے گی، اور حکومت کے رویے بارے میں حکمت عملی طے کرے گی، سلیکٹڈ وزیر اعظم سے کوئی ڈیل اور ڈھیل نہیں مانگتا، ڈیل اور ڈھیل لینے والے اپنی اہلیہ کو بستر مرگ پر چھوڑ کر جیل پیش نہیں ہوتے، یہ عمران خان اور ان کی ٹیم کی پست سوچ کی عکاسی ہے کہ وہ نواز شہباز کی صحت پر سیاست کرتے ہیں۔

مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ  ڈیل اور این آر او کی باتیں کرنے والے علیمہ خان کو ڈیل دے چکے ہیں، نیب عمران خان جہانگیر ترین اور علیمہ خان کی گرفتاری کیوں نہیں کرتی، عمران خان کو بنی گالہ اراضی، ہیلی کاپٹر، علیمہ کے بانامی ہونے پر جواب دہ ہونا پڑے گا۔

اب کوئی نیا بنگلہ دیش بننے نہیں دیں گے، آصف زرداری

ٹنڈو آدم: سابق آصف زرداری کا کہنا ہے کہ پہلے بھی ہم ان کے ہاتھوں میں کھیل گئے اس لئے بنگلا دیش بن گیا لیکن اب ہم کوئی بنگلا دیش نہیں بننے دیں گے اور اپنے حق کے لئے لڑیں گے۔

ٹنڈوآدم  میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کا کہنا تھا کہ میں نے انتخابات کے دوران کا کہا تھا کہ ان کا جو ڈھونگ نظر آرہا ہے وہ 18 ویں ترمیم پر ڈاکہ ہے، پہلے یہ لوگ ہماری یونیورسٹیاں لے گئے، اب سول ایوی ایشن کو بھی اسلام آباد میں لےکرجارہے ہیں، اور جو لوگ سندھ میں رہتے ہیں ان کی نوکریاں بھی چلی جائیں گی۔

آصف زرداری کا کہنا تھا کہ پہلے بھی ہم ان کے ہاتھوں میں کھیل گئے اس لئے بنگلا دیش بن گیا، لیکن اب ہم کوئی بنگلا دیش نہیں بننے دیں گے اور اپنے حق کے لئے لڑیں گے، ہمیں کوئی نہیں روک سکتا، یہ جنگ سندھ کے وسائل کی نہیں بلکہ پورے ملک کی ہے اور اس جنگ میں ہمارے ساتھ پشتون، بلوچی اورساؤتھ پنجاب  ہے، ڈرنے کی کوئی بات نہیں، یہ لوگ بے وقوف ہیں، ان کی ٹانگیں ڈگمگا جاتی ہیں۔

 

وزیراعلی سندھ نے جعلی اکاؤنٹس کیس کے فیصلے کو چیلنج کردیا

کراچی: وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کو چیلنج کردیا۔

سپریم کورٹ نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں مراد علی شاہ اور بلاول بھٹو زرداری کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے ساتھ کیس کو نیب کے حوالے کرنے کا حکم بھی دیا تھا جس کے خلاف وزیراعلیٰ سندھ نے درخواست دائر کردی ہے۔

مراد علی شاہ نے سپریم کورٹ میں نظرثانی اپیل دائر کی جس میں وفاق، نیب اور جے آئی ٹی کو فریق بنایا گیا، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ جے آئی ٹی نے جعلی اکاؤنٹس معاملہ کی تحقیقات کرنا تھی لیکن جے آئی ٹی میرے خلاف جعلی اکاؤنٹس ٹرانزیکشنز میں ملوث ہونے کا ثبوت نہ لاسکی۔

درخواست میں کہا گیا کہ سندھ اسمبلی نے شوگر ملز کو سبسڈی کی منظوری دی اور سبسڈی دینے کی قرار داد پی ٹی آئی کے خرم شیر زمان کی جانب سے پیش کی گئی، مقدمہ کو کراچی سے اسلام آباد منتقل کرنے کا کوئی جواز نہیں ہے جب کہ تحریری فیصلہ میں جے آئی ٹی رپورٹ سے نام نکالنے کے زبانی حکم کو شامل نہیں کیا گیا، معاملہ پر عمل در آمد بینچ تشکیل دینے کا بھی جواز نہ تھا لہذا سپریم کورٹ فیصلہ پر نظر ثانی کرے۔

دوسری جانب سابق صدر آصف زرداری نے سپریم کورٹ میں نظر ثانی کیس کی جلد سماعت کی درخواست دائر کردی         ، جلد سماعت کی درخواست ایڈووکیٹ لطیف کھوسہ اور شہباز کھوسہ کی جانب سے دائر کی گئی جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ انصاف کے تقاضوں کے پیش نظر نظر ثانی کو 12 فروری کو سماعت کے لیے مقرر کیا جائے، نظر ثانی درخواست پر 12 فروری کو سماعت کی جائے۔

واضح رہے سپریم کورٹ نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں حکم دیا تھا جے آئی ٹی نامکمل معاملات کی تحقیقات جاری رکھے گی اور جے آئی ٹی کے تمام ممبران نیب کو مزید تحقیقات میں معاونت کریں گے۔

عرب انٹرنیشنل فیسٹیول میں ماہرہ خان کیلئے ایوارڈ

پاکستان کی سپر اسٹار ماہرہ خان کو فلم نگری میں پہچان بنانے پر عرب انٹرنیشنل فیسٹیول میں ایوارڈ سے نوازا گیا۔

ڈِسٹِنکٹو انٹرنیشنل عرب فیسٹیول ایوارڈ کا تیسرا ایڈیشن جمعے کے روز دبئی میں منعقد کیا گیا جس میں دنیا بھر کی نامور شخصیات سمیت شوبز ستاروں نے بھی شرکت کی۔

اس موقع پر ماہرہ خان کو فلم نگری میں پہچان بنانے پر قابل ستائش قرار دیتے ہوئے ایوارڈ سے نوازا گیا۔

خوبرو اداکارہ نے ایوارڈ تقریب میں کویت کی مشہور برانڈ لیبرجوزی کا ہلکے آسمانی رنگ کا جھل مل کرتا ہوا لباس زیب تن کیا اور سب کی توجہ اپنی جانب مبذول کروالی۔

یاد رہے کہ ماہرہ خان کو سال 2017 میں لبنان کے 8ویں بیروت انٹرنیشنل ایوارڈ فیسٹیول کی تقریب میں بھی خصوصی طور پر مدعو کیا گیا تھا جہاں بین الاقوامی سطح پر شہرت پانے اور ان کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئے انہیں ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔

وزیراعظم کااین آراو کے حوالے سے دوٹوک پیغام

adaria

وزیراعظم عمران خان نے دوٹوک الفاظ میں کہہ دیاہے کہ کوئی بھی کسی قسم کے این آراو کی امیدنہ رکھے،پاکستان پیپلزپارٹی یا مسلم لیگ نون سے کوئی ڈیل نہیں ہورہی ،ہماری حکومت کابنیادی مقصد بیورو کریسی کو سیاست سے دور رکھنا ہے ۔ سول سروس کو سیاسی مداخلت سے بچانے کے لیے سیاستدانوں کی ٹریننگ ضروری ہے، ہر تقرری صرف میرٹ کی بنیاد پر کی جائے، اصلاحات کے بعد بیورو کریٹ بلا خوف و خطر اپنی ذمہ داریاں انجام دے سکیں گے، معاشی و سماجی تنزلی سے پہلے اخلاقی تباہی واقع ہوتی ہے، کرپشن اخلاقی تباہی کا مظہر ہے،ہماری حکومت نیک نیتی کے ساتھ اصلاحات کا ایجنڈا لے کر آئی ہے، عوامی فلاح و بہود کی خاطر نظام میں بہتری کی خواہش ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔جہاں تک بیورو کریسی کو سیاست سے دوررکھنے کاتعلق ہے تو یہی بنیادی نقطہ ہے کیونکہ جب تک بیورو کریسی سے سیاست نہیں نکلے گی کرپشن کاختم ہونا ناممکن ہے کیونکہ سیاسی دباؤ ہی کی وجہ سے تمام برائیاں پیدا ہوتی ہیں ان برائیوں کو دوررکھنے کے لئے حکومت کوشاں ہے ۔اس وقت جوایک عجیب شوروغوغا اٹھا ہوا ہے کہ کوئی ڈیل ہورہی ہے ،کوئی ڈھیل ہورہی ہے ایسا کچھ ہوتاہوا نظرنہیں آرہا۔ اب کراس دابارڈرحکومت احتساب کررہی ہے ۔علیم خان کی گرفتاری اوراس کے بعد پاکستان مسلم لیگ نون کے سابق وزیرکامران مائیکل کی گرفتاری اس بات کاثبوت ہے کہ جس نے بھی کرپشن کی ہے اس کو سزا ہرصورت ملے گی۔ اپوزیشن کی جانب سے یہ واویلا کہ علیم خان کی گرفتاری ایک ڈرامہ ہے اس غبارے سے بھی ہوانکلتی نظرآرہی ہے ۔محسوس یہ ہورہا ہے کہ ابھی اوربھی مزید گرفتاریاں ہوں گی ۔ظاہرہے کہ جس نے بھی کرپشن کی ہے اس کے پیٹ میں تو لازمی درد ہوناہے وہ پریشان بھی ہوگا کیونکہ سامنے جیل نظرآرہی ہے سزا بھی بھگتنا ہوگی رقم بھی واپس کرنا پڑے گی۔ اب کم ازکم اپوزیشن کو چاہیے کہ وہ اس قسم کے لاحاصل پروپیگنڈے سے پرہیزکرے کیونکہ یہ پہلے شورمچا تھا کہ عمران خان نے اگراحتساب کرنا ہے کرپشن کاخاتمہ کرناہے تو اپنی صفوں سے آغاز کرے ۔اب یہ آغاز ہوچکا ہے لہٰذا کوئی بچتاہوا نظرنہیں آرہا۔ سیاستدانوں کے ساتھ ساتھ اہم عہدوں پرفائز رہنے والے بڑے بڑے افسران کے گرد بھی گھیراتنگ کیاجائے گا اسی وجہ سے وزیراعظم نے واضح کردیاہے کہ وہ بیورو کریسی کو سیاست سے دوررکھناچاہتے ہیں ہم تو یہاں حکومت سے یہ کہیں گے کہ صرف بیورو کریسی ہی نہیں ،سپاہی سے لیکرآئی جی تک، کلرک سے لیکرسیکرٹری تک، غرض کہ ہرسرکاری ملازم سیاست سے پاک ہوناچاہیے ۔ حکومت اپناکام کرے ادارے اپنا کام کریں ،نظام بھی درست ہوگا کرپشن بھی ختم ہوگی ۔وزیراطلاعات فواد چودھری نے بھی اس جانب اشارہ کیاہے کہ پہلے پاکستان تحریک انصاف نے حکومت بدلی اب وہ نظام بدلے گی۔ ظاہرہے ان امورکوپایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے وقت تودرکار ہوگا تاہم ایک بات ضرور ہے کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ اگرنظام کو بدلناچاہتی ہے تو اپنے سیاسی وزراء کی بیان بازیوں پر غورکرے کیونکہ آئے دن کوئی نہ کوئی ایسا حکومتی بیان سامنے آجاتاہے جوکہ باقاعدہ اپوزیشن کا کردار ادا کرتاہے۔ایسے میں اپوزیشن کرنے کی ضرورت نہیں جب اندر ہی سے چیزیں اپوز ہونا شروع ہوجائیں تو پھر باہر سے کیاضرورت ہے ۔این آراو ،کرپشن ختم کرنا ،بیوروکریسی کوسیاست سے دوررکھنا یہ تو حکومتی امور ہیں ۔اب دیکھنایہ ہے کہ حکومت عوام کیلئے کیا کررہی ہے اس جانب بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے ۔مندرجہ بالابیان کی گئی چیزوں سے عوام کو کوئی سروکارنہیں حکومت عوامی مفادات کے تحت بھی اقداماتاٹھائے مہنگائی کو کنٹرول کرنا ترجیحی بنیادوں پرشامل ہوناچاہیے ،گیس کی قیمتوں میں اضافہ بھی عوام کیلئے ایک دردسرہے ۔اسی طرح اوربہت سے مسائل ہیں جوکہ توجہ طلب ہیں جب تک حکومت تیزی سے فیصلہ سازی کرنے کانظام نہیں لاتی اس وقت تک اسی طرح مسائل کے گرداب میں پھسی رہے گی۔

کلبھوشن کیس،پاکستان عالمی عدالت میں ٹھوس شواہدپیش کریگا
وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے مانچسٹر میں بزنس کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی ملک کا سرمایہ ہیں، موجودہ حکومت نے اوورسیزپاکستانیوں کو ووٹ کا حق دیا،نیا پاکستان بہترین طرزحکمرانی کی مثال بنے گا،بھارتی دہشتگرد کلبھوشن نے پاکستان میں تخریب کاری کا اعتراف کیا ہے،19 فروری کو عالمی عدالت انصاف میں بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو سے متعلق مضبوط کیس پیش کریں گے،ہمارے پاس ثبوت ہیں اور ہمارا کیس مضبوط ہے، پاکستان افغانستا ن میں قیام امن میں فعال کرداراداکررہاہے ، پرامن اورمستحکم افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے، پاکستان نے برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر آواز بلند کی،برطانوی ارکان پارلیمنٹ نے بھی پاکستانی موقف کی تائیدکی ہے،ہم افغان مہاجرین کی باعزت طریقے سے واپسی چاہتے ہیں۔ پاکستان میں ہونیوالے دہشت گردی کے واقعات میں عموماً بھارت ہی ملوث ہوتاہے اور دہشت گردی کے ڈانڈے اکثر ’’را‘‘ سے ملتے ہیں چونکہ بھارت ایک مستند دہشت گرد ہے اس کی حرکات وسکنات کی وجہ سے خطے کا امن تہہ وبالا رہتاہے وہ ہمیشہ جنگی حدود میں بھی پاگل نظرآتاہے مقبوضہ کشمیر میں بھی اس نے وردی میں ملبوس کرکے ساڑھے سات لاکھ سے زائد سرکاری دہشت گردچھوڑرکھے ہیں جو مظلوم نہتے کشمیریوں پر ظلم ڈھاتے رہتے ہیں پاکستان کے بھی وہ امن وامان کے حوالے سے حالات خراب رکھتاہے اس کی واضح مثال اس کاحاضرسروس گرفتارجاسوس کلبھوشن یادیوہے جس نے پاکستان میں مختلف دھماکے کئے اس کااعتراف بھی کیا بین الاقوامی عدالت میں اس بھارتی جاسوس کاکیس چل رہاہے اور پاکستان انیس فروری کو اس کے ثبوت عدالت میں پیش کرے گا۔ امیدواثق کی جارہی ہے کہ اس کو لازمی سزاملے گی تاہم اس کے لئے حکومت پاکستان کو چاہیے کہ وہ اپنی بھرپورتیاری کرے اورسفارتی سطح پربھی اپنی سرگرمیاں مزیدموثرانداز سے چلائے ۔
86 کروڑ ڈالر ہرجانے کی سزا کا فیصلہ معطل
سرمایہ کاری سے متعلق تنازعات کے حل کے لیے بنائے گئے عالمی ٹریبونل ’آئی سی ایس آئی ڈی‘ نے پاکستان پر عائد شدہ 86 کروڑ ڈالر ہرجانے کی سزا کا اپنا ہی فیصلہ معطل کردیا، ترک کمپنی ’کارکے‘ نے پاکستان کے خلاف رینٹل پاور کیس میں مقدمہ دائر کیا تھا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق سزا معطل ہونے پر پاکستانی مذاکرات کاروں نے سکھ کا سانس لیا، 22 اگست 2017 کو ٹریبونل نے پاکستان کے خلاف کیس کا فیصلہ دیا تھا جس پر موجودہ حکومت نے نظرثانی کی اپیل دائر کی اور موقف اختیار کیا کہ وہ اس کیس میں نئے شواہد پیش کرنا چاہتی ہے۔ موجودہ حکومت نے اس کیس میں کرپشن کے تازہ شواہد اکٹھے کیے ہیں جن کی روشنی میں امید ہے کہ ٹریبونل پاکستان کے حق میں فیصلہ دیگا۔2012 میں سپریم کورٹ کے احکامات کے بعد پاکستان نے ترک کمپنی کار کے سے رینٹل پاور پروجیکٹس کا کنٹریکٹ ختم کردیا تھا جس کے بعد ترک کمپنی نے عالمی ٹربیونل میں فروری 2013 میں مقدمہ دائر کیا تھا۔ کارکے کو پاکستان میں بجلی کے بحران سے نمٹنے کیلئے 560 ملین ڈالرز کا کنٹریکٹ دیا گیا تھا۔

آئی جی اور چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا کا تبادلہ کردیا گیا

پشاور: حکومت نے انسپکٹر جنرل خیبر پختونخوا پولیس اور چیف سیکرٹری کو تبدیل کردیا۔

آئی جی خیبر پختونخوا صلاح الدین خان کو آئی جی آزاد کشمیر مقرر کیا گیا ہے جب کہ آئی جی آزاد کشمیر محمد نعیم خان کو آئی جی خیبرپختونخوا تعینات کیا گیا ہے۔

چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا نوید کامران بلوچ کو اسٹیبلشمنٹ ڈویثرن رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے اور ان کی جگہ  پاکستان ایڈمنسٹریٹوسروس گریڈ 21 کے محمد سلیم کو چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا مقررکیا گیا ہے۔ محمد سلیم پہلے ہی خیبرپختونخوا میں خدمات سرانجام دے رہے تھے۔

چیف سیکرٹری آزادکشمیر خواجہ داؤد احمد کو ایڈیشنل رجسٹرار سپریم کورٹ مقرر کیا گیا ہے۔اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے تعیناتیوں کے نوٹیفکیشن جاری کردئیے ہیں۔

اعلامیہ کے مطابق آئی جی خیبر پختونخوا صلاح الدین کی خدمات آزاد کشمیر حکومت کے حوالے کی گئی ہیں جب کہ آئی جی آزاد کشمیر محمد نعیم خان کو نیا آئی جی خیبر پختونخوا پولیس تعینات کیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے بلوکی میں پودا لگا کر’پلانٹ فار پاکستان‘ مہم کا افتتاح کردیا

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے بلوکی میں پودا لگا کر’پلانٹ فار پاکستان‘ مہم کا افتتاح کردیا۔

وزیراعظم عمران خان ننکانہ صاحب کے علاقے ہیڈ بلوکی پہنچے جہاں انہیں متعلقہ حکام نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ بلوکی کے مقام پرنیا جنگل آباد کیا جائے گا۔ وزیراعظم نے 10 ارب درخت لگانے کے منصوبے کے تحت بلوکی میں پودا لگا کر’پلانٹ فارپاکستان‘ مہم کا افتتاح کردیا۔

اس سے قبل وزیراعظم عمران خان نے ’پلانٹ فارپاکستان‘ مہم سے متعلق ٹوئٹ میں کہا تھا کہ پلانٹ فارپاکستان مہم شروع کرنے جارہے ہیں، واگزاراراضی کو جنگلات اوروائلڈلائف پارکس میں تبدیل کررہے ہیں کیونکہ جنگلات آنے والی نسلوں اورماحولیاتی آلودگی خاتمے کے لئے اہم ہیں۔

Google Analytics Alternative