Home » 2019 » May » 14 (page 4)

Daily Archives: May 14, 2019

امریکا کی خلیجی ممالک میں موجودگی ’خطرہ‘ نہیں ’ہدف‘ ہے، ایرانی کمانڈر

تہران: پاسداران انقلاب کے کمانڈر نے کہا ہے کہ امریکی افواج کی خلیجی ملک میں موجودگی ہمارے لیے دھمکی یا خطرہ نہیں بلکہ ہمارا ہدف ہے جسے ہم آسانی سے نشانہ بناسکتے ہیں۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق پاسداران انقلاب کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ قطر میں امریکی بحری بیڑے اور جیٹ فائٹر بی-52 طیاروں کی موجودگی ایران کے لیے خطرہ نہیں بلکہ ہدف ہے جسے ہم آسانی سے نشانہ بناسکتے ہیں۔

پاسداران انقلاب کی جانب سے بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب امریکا نے اپنے جیٹ فائٹرز طیارے بی-52 قطر میں اپنے فوجی کیمپ منتقل کیے اور طیارے بردار ایک بحری بیڑا بھی قطر کے لیے روانہ کیا ہے۔ امریکا نے یہ اقدامات ایران کی جانب سے عالمی جوہری معاہدے کی بعض شقوں سے دستبرادی کے بعد اُٹھائے۔

ایران اور امریکا کے درمیان تناؤ سے خلیجی ممالک میں کشیدگی کی صورت حال پیدا ہوگئی ہے اور گزشتہ روز آبنائے ہرمز کے نزدیک متحدہ عرب امارات کی بندرگاہ الفجیرہ پر دو تیل بردار سعودی بحری جہازوں پر حملہ کیا گیا، تاہم حملہ آوروں کا معلوم نہیں ہوسکا ہے۔ ایران کئی بار آبنائے ہرمز کو بند کرنے کی دھمکی دے چکا ہے۔

ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان، انسداد منی لانڈرنگ کیلیے ڈائریکٹریٹ قائم کرنے کے احکام جاری

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان پر عملدرآمد کے تحت کرنسی کی اسمگلنگ روکنے کے لیے ڈائریکٹوریٹ آف کراس بارڈر کرنسی موومنٹ(ڈی سی بی سی ایم) قائم کرنے کے احکامات جاری کردیے ہیں۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو( ایف بی آر) نے ڈائریکٹوریٹ آف کراس بارڈر کرنسی موومنٹ قائم کرنے کے لیے  4 صفحات پرمشتمل آرڈر جاری کردیا ہے۔

ایکسپریس کو دستیاب نوٹیفکیشن کی کاپی کے مطابق کراس بارڈر کرنسی کی نقل و حمل کی مانیٹرنگ و روک تھام  کے لیے قائم کیے جانے والے اس ڈائریکٹوریٹ کا سربراہ گریڈ20 کا ڈائریکٹر ہوگا اور اس کے ماتحت متعدد ایڈیشنل ڈائریکٹرز، اسسٹنٹ ڈائریکٹرز و ڈپٹی ڈائریکٹرز کے علاوہ ضروری سٹاف ہوگا،  ڈائریکٹوریٹ فنانشل مانیٹرنگ یونٹ اور ایف بی آر کو ماہانہ بنیادوں پر رپورٹ کیا کرے گا۔

ڈائریکٹوریٹ میں قائم کیا جانے والا خصوصی سیل درآمدی و برآمدی ڈیٹا کا جائزہ لیا کرے گا اور جو لوگ تجارت کی آڑ میں منی لانڈرنگ میں ملوث پائے جائیں گے ان کے خلاف کارروائی کرے گا، منی لانڈرنگ کے کیسوں میں عمومی طور پر اور کرنسی کی صورت میں بالخصوص تحقیقات کرتے وقت انویسٹی گیشن آفیسر اگر کسی بھی منی لانڈرنگ و ٹیررازم فنانسنگ کے کیس میں نیکٹا کی لسٹ میں شامل اقوام متحدہ کی جانب سے کالعدم قرار دی جانے والی تنظیموں و افراد سے تعلق پائے تو اس کیس کی تمام تر تفصیلات فور طور پر ڈائریکٹوریٹ کراس بارڈر منی لانڈرنگ کو رپورٹ کرے گا۔

دستاویز میں مزید بتایا گیا ہے کہ ڈی سی بی سی ایم ملک بھر میں منجمد کی جانے والی کرنسی کا ڈیٹا مرتب کرے گا اور اس بارے ماہانہ بنیادوں پر فنانشل مانیٹرنگ یونٹ اور ایف بی آر کو رپورٹ پیش کیا کرے گا، دستاویز کے مطابق ڈائریکٹوریٹ ملک میں ضبط و منجمد کی جانے والی غیر قانونی و اسمگل شدہ کرنسی کا ڈیٹا بیس قائم کرے گا اور مجوزہ فارمیٹ کے مطابق اس ڈیٹا بیس کو میٹیین کرکے اپ ڈیٹ کیا جائے گا۔

ملک میں قائم تمام ماڈل کسٹمز کلکٹریٹس( ایم سی سیز) اور علاقائی ڈائریکٹوریٹ آف کسٹمز انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن اپنی اپنی حدود میں پکڑی جانے والی اسمگل شدہ و غیر قانونی کرنسی کا مجوزہ فارمیٹ کے مطابق ڈیٹا مرتب کرکے سافٹ کاپی اور ہارڈ کاپی کی صورت میں ہر 15 روز کے  بعدڈائریکٹوریٹ آف کراس بارڈر کرنسی کو بھجوائیں گے اور ڈائریکٹوریٹ کراس بارڈر کرنسی یہ ڈیٹا ہر ماہ فنانشل مانیٹرنگ یونٹ اور ایف بی آر سے شیئر کیا کرے گا۔

دستاویز کے مطابق ڈائریکٹوریٹ کراس بارڈر کرنسی موومنٹ ملک دیگر لاء انفورسمنٹ ایجنسیوں اور اداروں کے ساتھ رئیل ٹائم بنیادوں پر اور معمول کے مطابق معلومات کے تبادیہ کا نظام بھی وضع کرے گا اور باہمی مفاد کے شعبوں میں دوسری لاء انفورسمنٹ ایجنسیوں و اداروں کے ساتھ تعاون کرے گا اس کے علاوہ اس ڈائریکٹریٹ میں بے نامی اکاونٹس، بے نامی ٹرانزکشنز،بینکنگ ٹرانزیکشنز، کرنسی ڈکلیئریشنز اور منجمد کی جانے والی کرنسی کے ڈیٹا کے اینالسز اور رسک اینالسزکے لیے بھی خصوصی سیل قائم کیا جائے گاْ

نامزد کردہ افسران اور انویسٹی گیشن افسران مشکوک ٹرانزیکشنز اور منجمدہ شدہ کرنسی سے نکالے جانے والے منی لانڈرنگ کے کیسوں میں  مجاز عدالتوں میں  سے انسداد منی لانڈرنگ ایکٹ 2010 کے تحت تعینات کردہ پبلک پراسیکیوٹرز کے ذریعے شکایات ودرخواستیں دائر کریں گے، تاہم ڈائریکٹر سے پیشگی منظوری لیے بغیر کوئی شکایت رجسٹرڈ نہیں کی جائے گی اور نہ ہی مجاز عدالت میں درخواست دائر کی جائے گی جبکہ منی لانڈرنگ کے کیسوں کی تحقیقات اور پراسیکیوشن منی لانڈرنگ ایکٹ 2010 اور کسٹمز ایکٹ 1969 و سی آر پی سی1898 میں وضع کردہ طریقہ کار کے مطابق ہوں گی۔

منی لانڈرنگ کے کیسوں میں عمومی طور پر اور کرنسی کی صورت میں بالخصوص تحقیقات کرتے وقت انویسٹی گیشن آفیسرکو منی لانڈرنگ و کرنسی کی اسمگلنگ و غیر قانونی نقل و حمل کے کیس کی تحقیقات کرتے ہوئے ملزم و گرفتار شخص اور اس کی فیملی کی کسی بھی مذہبی ، سیاسی و سماجی ادارے و تنظیم اور گروپ کے ساتھ تعلق و ایسوسی ایشن اس کا ماضی کا کریمنل ریکارڈ ، پیشہ وارانہ ہسٹری  سے متعلق ضرور انویسٹی گیشن کرنے پر فوکس کرنا ہوگا اور منی لانڈرنگ کے کیسوں میں تحقیقات کرتے وقت ہر کرنسی اسمگلنگ کے کیس میں کرنسی اسمگل کرنے کے مقاصد اور اسے جڑے دیگر پہلو، منی لانڈرنگ، کیپیٹل فلائیٹ ، ہنڈی، حوالہ وغیر کو بھی منظر رکھا جائے اور ان پہلووں سے بھی تحقیقات کی جائیں۔

دستاویزات کے مطابق ڈائریکٹوریٹ کراس بارڈر کرنسی موومنٹ بیرون ممالک سے موصول ہونے والی باہمی تعاون کی درخواستوں کو بھی پراسیس کرے گا، ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے بین الاقوامی تعاون کیلیے کی جانے والی کسی بھی درخواست کو چیف انٹرنیشنل کسٹمز ایف بی آر کو بھجوایا جائے گا تاکہ متعلقہ ملک کو بھجوائی جاسکے۔

علاوہ ازیں ڈائریکٹوریٹ کراس بارڈر کرنسی موومنٹ اینالسز، اور متعلقہ ڈیٹاحاصل کرنے کیلیے ریکارڈ کی اسٹوریج کا خودکار نظام وضع کرے گا تاکہ بوقت ضرورت ڈیٹا اس خودکارنظام کے ذریعے حاصل کیا جاسکے۔

ٹائم میگزین کا سچ،کرتار پور راہداری اور گوادر حملہ

معروف امریکی جریدے ’ٹائم‘ نے اپنے حالیہ شمارے کے سرورق پر بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی تصویر ;73;ndia;39;s ;68;ivider in chief’’انڈیا کو تقسیم کرنے والا‘‘ کے عنوان کے ساتھ شاءع کر کے بلاشبہ ایک بڑی حقیقت کا اظہار کیا ہے کہ موصوف جب سے اقتدار میں ;200;ئے ہیں بھارت میں مذہبی،قوم پرستی اور لسانی تقسیم میں نمایاں اضافہ دیکھا جا رہا ہے ۔ ٹائم میگزین کا مئی کا یہ شمارہ ابھی اس کی ویب سائیٹ پر موجود ہے جو 20مئی کو چھپ کر مارکیٹ میں دستیاب ہو گا ۔ مذکورہ عنوان جریدے میں موجود ایک مضمون سے متعلق ہے، جس میں تجزیہ نگار نے بھارتی سیاست پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے سوال پوچھا ہے کہ کیا دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت مزید پانچ سال مودی حکومت کو برداشت کرے گی ۔ مضمون نگار نے لکھا کہ 2014 میں نریندر مودی کا اقتدار میں ;200;نا یہ ظاہر کرتا ہے کہ’اصل میں ملک کی اشرافیہ جس بات پر یقین رکھتی ہے وہ ;200;زاد خیال مگر ہم ;200;ہنگ ثقافت ہے جبکہ بھارت واقعی مذہبی قوم پرستی، مسلم مخالف جذبات اور گہرے نسلی تعصب کی ایک دیگ ہے ۔ مودی نے بھارت میں زہریلی مذہبی قوم پرستی کے اتنے بیج بوئے ہیں اور اب اس حد تک بگاڑ ;200;چکا ہے کہ وہ اندرونی کشیدگی کو مزید قابو نہیں کر سکتے ۔

یہ ایک حقیقت ہے کہ مودی کی تمام الیکشن مہم مذہبی اور قوم پرستانہ جذبات کو دو;200;تشہ کرنے کا سبب بنی ہے ،اگر مودی اگلے پانچ سال کےلvے دوبارہ منتخب ہو گئے تو اسکے پورے ریجن پر گہرے منفی اثرات مرتب ہونگے ۔ پاکستان اور چین سے بھارت اعلانیہ کشیدگی کی حالت میں ہے جبکہ سری لنکا نیپال اور دیگر پڑوسی ممالک بھی مودی کی جارحانہ پالیسیوں کا شکار ہیں جبکہ دوسری طرف داخلی طور بھارت کو قوم پرستی اور مذہبی تقسیم کا سامنا ہے ۔ علیحدگی پسند سکھ کمیونٹی خالصتان کےلئے برسوں سے کوشاں ہے اور 2020 ء کو ریفرنڈم کے سال کے طور پر منا رہے ہیں ۔ سکھ برادری بھارت کی مضبوط اقلیت ہے جودل و جان سے اپنا الگ وطن چاہتی ہے ۔ اگلے پانچ سال بھی اگر مودی کو بھارت پر مسلط کردیا گیا تو پھر خالصتان تحریک کا کام مزید ;200;سان ہو جائے ۔ کشمیر بھی بھارتی اسٹیبلشمنٹ کےلئے گلے کا پھانس بنا ہوا ہے ۔ ان دونوں ایشوز کی بنا پر بھارت پاکستان کو مورد الزام ٹھہراتا ہے اور کشیدگی کو ہوا دیتاہے حالانکہ علیحدگی کی یہ دونوں تحریکیں مکمل طور پر indegenouseیعنی مقامی اور عوامی ہیں ۔ پاکستان صرف انکے بنیادی حق کی بات کرتا ہے ۔ مودی سرکار کے زیر سایہ یہ دونوں اقلیتیں مذہبی ;200;زادی سے محروم ہو چکی ہیں ۔ بین الاقوامی قوانین کے تحت کسی بھی ملک کو یہ حق حاصل نہیں کہ وہ اپنی اقلیتوں کو ان کے بنیادی حقوق سے جان بوجھ کے محروم رکھے جبکہ بھارت ایسا کھلے عام کررہا ہے ۔ اسی بنا پر پاکستان سکھ برادری کو اپنی مذہبی رسومات کی ادائیگی کا ;200;زادانہ حق دیتا ہے ۔ سکھ مذہب کے دنیا بھر میں پھیلے پیروکار ہرسال ہزاروں کی تعداد میں حسن ابدال بابا گرونانک کی سالانہ تقریبات میں بھرپور حصہ لیتے ہیں اور پاکستان کو دعائیں دیتے ہوئے جاتے ہیں ۔ باباگرونانک کی حسن ابدال کے علاوہ ایک بڑی زیارت پاکستان کے علاقے ناروال کرتارپور میں بھی موجود ہے جو بھارتی سرحد سے متصل ہے ۔ سکھ مذہب کے بانی بابا گورونانک نے اپنی زندگی کے ;200;خری ایام کرتارپور میں گزارے تھے چنانچہ ہر سکھ کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ زندگی میں کم ازکم ایک بار ضرور کرتار پور کادرشن کرے ۔ بھارت میں لگ بھگ دو کروڑ سکھ بستے ہیں جنہیں بھارتی حکام کی منفی سوچ اور روش کے باعث پاکستان ;200;نے اور کرتارپور جانے میں زبردست مشکلات کا سامنا رہتاہے ۔ چنانچہ بھارت میں ;200;باد سکھوں کی سہولت کےلئے گزشتہ سال پاکستان نے بھارت کو راہداری بنانے کی پیش کش کی جس پر بھارت جز بز تو بہت ہوا مگر ناچار اسے یہ پیشکش قبول کرنا پڑی ۔ پاکستان نے اس راہداری کورواں سال نومبر میں گرو نانک کے 550ویں جنم دن کے موقع پر فعال کرنے کا منصوبہ بنایا ہے ۔ اس اہم منصوبے پر کام شروع ہو چکا ہے اور امید ہے کہ پاکستان اپنی سائیڈ کام رواں برس جون کے ;200;خر تک مکمل کر لے گا ۔ یہاں بدقسمتی یہ ہے کہ بھارت بظاہر سکھوں کو راضی رکھنے کے لیے راہداری کی تکمیل بھی چاہتا ہے لیکن وہ اس منصوبے کو تعطل کا شکار بھی رکھے ہوئے ہے ۔ ایک لابی ذراءع ابلاغ کے ذریعے اس سے کیڑے نکالنے میں لگی ہے ۔ بلاشبہ منصوبے کے اعلان نے سکھوں کے دل و دماغ جیت لیے اور پاکستان کے واری واری جا رہے ہیں ۔ دوسرے ممالک میں بھارتی سکھوں کی ایک بڑی تعداد بے چین ہے کہ وہ کب اس درگاہ کا درشن کریں گے ۔ وہ چاہتے ہیں کہ جلد از جلد یہ منصوبہ پایا تکمیل کو پہنچے ۔ یہ بات بی جے پی اور ’ہندوتوا‘ مائنڈ سیٹ کو ہضم نہیں ہوئی اور رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں ۔ یہی وجہ ہے گزشتہ ماہ دو اپریل کو ایک اہم اجلاس ہونا تھا جو بھارت کے انکار کے بعد نہ ہو سکا ۔ تاہم پاکستان نے راہداری معاہدے پر بات جیت کی بحالی کی امید کا اظہار کیاہے کہ نئی دہلی راہداری پر مذاکرات جلد بحال کرے گا تاکہ جتنا جلدی ہوسکے دونوں ممالک کے درمیان ایک معاہدے کو حتمی شکل دی جائے ۔ پاکستان اس منصوبے کےلئے ہمہ وقت تیاریوں میں مصروف ہے،اویکیوٹرسٹ پراپرٹی بورڈ (;69848066;) اور سکھ گردوارہ پربندھک کمیٹی (;8083718067;) مل کر پاکستان میں سکھ کمیونٹی ویلفیئر اور دیگر امور کی نگرانی کر رہی ہیں ۔ اس راہداری کےخلاف جاری پروپیگنڈہ کے توڑ کےلئے ضروری ہے کہ کمیٹیاں اپنے امور کی کڑی نگرانی کریں اور اس منصوبے کی تکمیل میں حائل ہر رکاوٹ کو دور کریں ۔ حکومت پاکستان سفارتی سطح پر کوشش جاری رکھے کہ بھارت لغو پروپیگنڈے کے زور پر معاملے سے پیچھے نہ ہٹے ۔

ادھر کالعدم بلوچ لیبریشن ;200;رمی نے گوادر ہوٹل پردہشت گرد حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی ایل اے کے مجیدبریگیڈکے فدائیوں نے ہوٹل میں گھس کر کارروائی کی ۔ حملے میں مری قبیلے کے حمال فتح بلوچ المعروف حبیب ، منصیب بلوچ عرف کریم بلوچ اور کچکول بلوچ عرف کمانڈو شامل تھے ۔ بی ایل اے کی ویب ساءٹ بلوچ ورنا نیوز پر مسنگ پرسنز کی فہرست میں گوادرحملے میں شامل حمال فتح بلوچ کا نام بھی شامل ہے ۔ بی ایل اے کی جانب سے ہمیشہ یہ الزام عائد کیا جاتا رہا ہے کہ حمال فتح بلوچ پاکستان کی سیکورٹی فورسز کی حراست میں ہے مگر گزشتہ روز کے واقع میں مارے جانےوالے دہشت گردوں میں سے ایک کی شناخت حمال فتح عرف حبیب ولد قادر خان مری کے نام سے ہونے کے بعد بھانڈہ پھوٹ گیا اور سیکورٹی اداروں کا یہ موقف بھی سچ ثابت ہوگیا ہے ۔ پر مسنگ پرسنز کی بازیابی کےلئے قائم کمیشن کے روبرو بھی بلوچ رہنمابضدتھے کہ حمال بلوچ سیکورٹی اداروں کے قبضہ میں ہے، اسطرح کالعدم بلوچ تنظیموں کی جاری کردہ مسنگ پرسنز کی فہرست بھی غلط ثابت ہوگئی ہے ۔ دراصل مسنگ پرسنز کی فہرست میں زیادہ تر ایسے نوجوانوں کا نام شامل کیا گیا ہے جوکہ بھارت کی سرپرستی میں قائم کالعدم بی ایل اے کے کیمپوں میں تربیت حاصل کررہے ہیں ۔ گزشتہ روز کا حملہ ایک پلان تھا جو ناکام ہوا ۔ پاک فوج کے سخت ترین سیکورٹی اقدامات کی وجہ سے حملہ ;200;ور گوادر میں مقیم چینی انجینئرز اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کو نشانہ بنانےکی اپنی شیطانی منصوبہ بندی میں فعل ہوئے ۔ بی ایل اے کی جانب سے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بعد حکومت پاکستان کا یہ موقف عالمی سطح پر بھی درست ثابت ہوگیا ہے کہ بھارت اور بعض دوسرے ممالک کی خفیہ ایجنسیاں پاک چائنہ راہداری اور گوادر پورٹ کے عظیم منصوبوں کو ناکام بنانے کےلئے دہشت گردی سمیت اپنے تمام تر شیطانی حربے استعمال کررہی ہیں ۔

پلیئرز کا فائٹ بیک کرنا خوش آئند ہے، انضمام الحق

لاہور:  چیف سلیکٹر انضمام الحق کا کہنا ہے کہ ٹیم کا فائٹ بیک کرنا خوش آئند ہے، اسپنر شاداب خان کی رپورٹس مثبت آئی ہیں، امید ہے ورلڈ کپ سے قبل فٹ ہوجائیں گے، محمد حفیظ بھی فٹ ہیں اور  جلد ایکشن میں دکھائی دیں گے۔

لاہور پریس کلب میں پولیو کے خلاف جنگ کے حوالے سے سیمینار میں شرکت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے انضمام الحق نے کہا کہ ہم میچ تو نہیں جیت سکے لیکن 373 رنز بننے کے باوجود گرین شرٹس نے جس عمدگی کے ساتھ کم بیک کیا ہے، یہ بڑی خوش آئند بات ہے، پلیئرزنے زبردست فائٹ کی ہے، عممومی طورپراتنے بڑے ہدف پر ٹیم کا مورال گرجاتا ہے لیکن پاکستانی ٹیم نے شاندار مقابلہ کیا ،یہ اچھی علامت ہے، چیف سلیکٹر نے امید ظاہر کی کہ جس طرح پاکستانی ٹیم نے دوسرے میچ میں عمدہ کھیل پیش کیا، اس کے بعد گرین شرٹس کو سیریز کا تیسرے میچ جیتنا چاہیے، دوسروں کی طرح میری بھی خواہش ہے کہ پاکستان جیت کر ورلڈ کپ کا حصہ بنے۔

چیف سلیکٹر نے کہا کہ ابھی سیریز کے تین اور میچز ہیں، ان میں دیکھیں گے کہ آگے کیا کرنا ہے، ویسے تو ورلڈ کپ کے لیے ٹیم کا اعلان کر رکھا ہے، اگر کوئی کھلاڑی اچھی کارکردگی دکھاتا ہے تو ورلڈ کپ کے حتمی اسکواڈ میںاس کے نام پر ضرور غور کریں گے لیکن کسی بھی کھلاڑی کے بارے میںا بھی کوئی رائے دینا قبل ازوقت ہوگا۔

انضمام الحق نے کہا کہ اسپنر شاداب خان کی اب تک کی رپورٹس بہت مثبت ہیں، آئندہ دو چار روز میں ان کے مزید ٹیسٹ ہو نگے، امید ہے ورلڈ کپ سے قبل شاداب خان مکمل فٹ ہو جائیں گے،ایک اور سوال پر انضمام الحق نے کہا کہ محمد حفیظ نے پاکستان میں ہی بیٹنگ اور بولنگ شروع کردی تھی، میری رپورٹس کے مطابق محمدحفیظ فٹ ہیں، وہ جلد ایکشن میں دکھائی دے گا۔

شہباز شریف وطن واپس نہ آئے تو ہم انہیں کھینچ کر لے آئیں گے، فواد چوہدری

لاہور: وفاقی وزیرفواد چوہدری کا کہنا ہے کہ شہباز شریف منتیں کرکے باہر گئے ہیں اور ان کی حرکتوں سے لگتا نہیں کہ وہ واپس آئیں گے مگر ہم انہیں کھینچ کے لائیں گے۔

لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ علیم خان سے اظہار یکجہتی کے لیے ہائی کورٹ آیا، عدالتی نظام سے پاکستان میں لوگ مطمئن نہیں، احتساب کا نظام چل رہا ہے لیکن اس میں اصلاح کی ضرورت ہے کیوں کہ لوگ احتساب کا عمل تیزی سے چلتا دیکھنا چاہتے ہیں اور تمام کیسز کا میرٹ پر فیصلہ ہونا چاہیے، امید ہے ہمارے ساتھ انصاف ہوگا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف منتیں کرکے باہر گئے ہیں اور ان کی حرکتوں سے لگتا نہیں کہ وہ واپس آئیں گے مگر ہم انہیں کھینچ کے لائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کے بیان سے واضح ہے کہ ہم پچھلی حکومتوں کے کرتوتوں کی وجہ سے یہاں تک پہنچے ہیں، باہر سے پیسے لیے تو واپس تو کرنے ہیں اور ان کا گند صاف کرنے میں کچھ وقت تو لگنا ہے جب کہ حکومت کو احساس ہے کہ عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں۔

بیچ ریسلنگ میں سلور میڈل حاصل کرنے والے انعام بٹ وطن واپس پہنچ گئے

لاہور: بیچ ریسلنگ ورلڈ سیریز میں سلور میڈل حاصل کرنے والے پاکستانی پہلوان انعام بٹ وطن واپس پہنچ گئے۔

انعام بٹ برازیل سے لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پہنچے تو ان کا شاندار استقبال کیا گیا۔

برازیل کے شہر ریو ڈی جنیرو میں منعقدہ بیچ ریسلنگ ورلڈ سیریز کے ابتدائی دو مقابلوں میں انعام بٹ نے شاندار کامیابی حاصل کی اور فائنل میں انہیں جارجیا کے ریسلر دیتو مرساگشیو نے دو صفر سے ہرایا۔

بیچ ریسلنگ ورلڈ سیریز میں سلور میڈل حاصل کرنے کے بعد انعام بٹ نے ورلڈ بیچ گیمز کے لیے بھی کوالیفائی کرلیا جو رواں سال اکتوبر میں امریکا کے شہر سین ڈیاگو میں شیڈول ہے۔

Google Analytics Alternative