Home » 2019 » November » 02

Daily Archives: November 2, 2019

فوج غیرجانب دار ادارہ ہے سڑکوں پر آکر الزام تراشی درست عمل نہیں، ترجمان پاک فوج

ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ اپوزیشن جان لے فوج غیر جانب دار ادارہ ہے سڑکوں پر آکر اس طرح الزام تراشی کرنا اچھا فعل نہیں، امن و امان کا مسئلہ ہوا تو حکومتی فیصلے پر قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔

ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن جان لے فوج غیر جانب دار ادارہ ہے، پاک فوج کسی جماعت کے بجائے جمہوری طور پر منتخب حکومت کے ساتھ ہے اور حکومت کو آئین کی حدود میں رہ کر سپورٹ کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فوج نے الیکشن میں آئینی اور قانون ذمہ داری پوری کی اور ہمارا تعاون جمہوری طور پر منتخب حکومت کے ساتھ ہوتا ہے، فضل الرحمن واضح کریں ان کا اشارہ کس طرف ہے؟ فضل الرحمن کا ریفرنس عدالتوںِ، فوج یا الیکشن کمیشن کی جانب ہے؟ فوج نے الیکشن میں اپنی آئینی اور قانونی ذمہ داری پوری کی، اگر کسی کو شکایت ہے تو وہ فوج پر الزام تراشی کے بجائے متعلقہ اداروں کے پاس جائے یوں سڑکوں پر آکر الزام تراشی کرنا اچھا فعل نہیں، ملک کسی انتشار کا شکار ہوا تو یقیناً ملک کے مفاد میں نہیں ہوگا۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمان سینئر سیاست دان ہیں، انہیں پتا ہے کہ پاکستان نے پچھلے 20 سال میں بہت مشکل وقت گزارا ہے، اس وقت بھی لائن آف کنٹرول پر کشیدگی جاری ہے، ایل او سی پر اس وقت بھی جوان اور شہری شہید ہورہے ہیں، بھارت نے جارحیت کی تو اس کو منہ توڑجواب دیا گیا، ردالفساد آپریشن بھی مکمل طور پر جاری ہے، خیبر پختون خوا اور قبائل علاقوں میں بحالی کا عمل جاری ہے جب کہ فوج قیام امن کے لیے ملک بھر میں انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز کر رہی ہے۔

دھرنے میں نقص امن سے متعلق صورتحال کے سوال پر آصف غفور نے کہا کہ اب تک کی معلومات کے مطابق حکومت اور اپوزیشن کی جانب سے کمیٹیاں بنی ہوئی ہیں جو بہتر کوآرڈی نیشن کے ساتھ چل رہی ہیں، جلسہ بھی ہوا اور لوگ پہنچے ہمیں امید ہے معاملات بہتری کی جانب جائیں گے تاہم دھرنے میں بعد میں کیا صورتحال ہوگی اس حوالے سے جو بھی فیصلہ حکومت کرے گی اس پر قانون کے مطابق کارروائی ہوگی کیوں کہ ملک کے استحکام کو کسی بھی صورت نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

مولانا فضل الرحمان کی وزیراعظم کو مستعفی ہونے کے لیے 2 دن کی مہلت

اسلام آباد: جمعیت علماء اسلام (جے یو آئی ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے دھرنا دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کو مستعفی ہونے اور اداروں کو حکومت کی پشت پناہی ختم کرنے کیلئے صرف 2 دن کی مہلت ہے۔

اسلام آباد کے سیکٹر ایچ 9 کے میٹرو گراؤنڈ میں مولانا فضل الرحمان کی قیادت میں جے یو آئی کا آزادی مارچ اور احتجاجی جلسہ ہوا۔ مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف، پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری، اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی خان، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے چیئرمین محمود خان اچکزئی اور دیگر سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے جلسے میں شرکت کی۔

2 روز کی مہلت

مولانا فضل الرحمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اداروں سے تصادم نہیں بلکہ ان کا استحکام چاہتے ہیں، لیکن اس کے ساتھ ساتھ ہم اداروں کو غیر جانبدار بھی دیکھنا چاہتے ہیں، اگر ہم محسوس کریں کہ ناجائز حکومت کی پشت پر ادارے ہیں اور اس کا تحفظ کررہے ہیں، تو پھر 2 دن کی مہلت ہے، پھر ہمیں نہ روکا جائے کہ اداروں کے بارے میں کیا رائے قائم کرتے ہیں، وزیراعظم عمران خان کے پاس مستعفی ہونے کےلیے 2 دن کی مہلت ہے، وگرنہ عوام کا سمندر طاقت رکھتا ہے کہ وزیراعظم کے گھر جاکر انہیں گرفتار کرلے۔

حکومت کو مزید مہلت نہیں دے سکتے

فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ یہ کسی ایک جماعت کا نہیں بلکہ پوری قوم کا عوامی اجتماع ہے، تمام سیاسی جماعتوں کا یکجہتی کا فیصلہ دراصل قومی مطالبہ ہے، سب کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ 25 جولائی کے الیکشن فراڈ تھے اور دھاندلی کا شکار تھے، حکومت کو بہت مہلت دے دی، مزید مہلت دینے کے روادار نہیں، ہم مزیدصبروتحمل کا مظاہرہ نہیں کر سکتے، اب ایک ہی فیصلہ کرنا ہے اس حکومت کو جانا ہے، قوم ان سے آزادی چاہتی ہے۔

پاکستانی گورباچوف ناکامی کا اعتراف کرکے مستعفی ہوجائے

جے یو آئی کے رہنما نے کہا کہ حکومت نے 50لاکھ گھر بنانے کے بجائے50لاکھ گھر گرا دیے، ایک کروڑ نوکریاں دینے کے بجائے25لاکھ لوگوں کو بیروزگار کر دیا، عوام کو ان نااہل حکمرانوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑ سکتے، حکومت کی نااہلی کے نتیجے میں ملکی معیشت تباہ ہوگئی، معیشت ختم ہوجائے تو ملک اپنا وجود برقرار نہیں رکھ سکتا، پاکستان کےگورباچوف کو اپنی ناکامی کا اعتراف کرکے مستعفی ہوجانا چاہیے۔

شرکا دھرنے میں موجود رہیں

مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ عوام کا فیصلہ آچکا ہے اور حکومت کو جانا ہی جانا ہے، میری بات نواز شریف، آصف زرداری نے بھی سن لی اور جنہیں ہم سنانا چاہ رہے ہیں انہوں نے بھی سن لی، تحمل کے ساتھ دھرنے میں موجود رہیں، اپوزیشن جماعتیں باہمی رابطے میں ہیں، جو بھی فیصلہ ہوگا اس سے شرکاء کو آگاہ کیا جائےگا۔

کرپشن میں اضافہ ہوگیا ہے

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکومت کہتی ہے کہ بھارت سےکشیدگی ہے،دوسری طرف دوستی کاہاتھ بڑھاتی ہے، کرتارپور راہداری کھولنے کیلئے ہندوستان کے ساتھ دوستی کی پینگیں بڑھائی جا رہی ہیں، کشمیر کو انہوں نے مودی کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے، کہتےتھےباہرسےلوگ نوکری کےلیےآئیں گے، باہر سے کوئی نہیں آیا صرف آئی ایم ایف کے2بندےضرور پاکستان آئےہیں، پرانی کریشن تودورکی بات نئی کرپشن میں تین فیصد اضافہ ہوگیا ہے، دوسروں کو آئینہ دکھانےوالےوزیراعظم اپنے شکل بھی آئینےمیں دیکھ لو، فارن فنڈنگ کیس میں ساری پی ٹی آئی اور ساراٹبر ہی چورہے۔

سانحہ تیزگام میں دہشتگردی کی تحقیقات کا مطالبہ

مولانا فضل الرحمان نے سانحہ تیزگام ایکسپریس کے متاثرین کےلیے دعا کرتے ہوئے واقعے کی دہشت گردی کے پہلو سے بھی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا۔

نماز جمعہ

آزادی مارچ کے شرکاء نے مولانا عبد الغفور حیدری کی امامت میں جلسہ گاہ میں نماز جمعہ ادا کی۔

کارکنوں کی بڑی تعداد میں شرکت

کشمیر ہائی وے پر سجے پنڈال میں کارکنوں کی بڑی تعداد موجود ہے اور پارٹی ترانوں سے ان کے حوصلوں کو گرمایا گیا۔ کارکنوں کے لیے واش رومز،وضواور پینے کے لیے پانی کی وافر مقدار موجود ہے۔  جلسہ گاہ سے ملحقہ سڑکیں کنٹیرز لگا کر بند کر دی گئی ہیں۔

شہباز شریف

شہباز شریف نے آزادی مارچ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تبدیلی پہلے نہیں آئی تھی بلکہ اب آئی ہے، عمران خان کی کنٹینر کی سیاست آج یہاں دفن ہورہی ہے، عوام کا ٹھاٹھیں مارتا سمندر عمران خان کی سلیکٹڈ حکومت کو خس و خاشاک کی طرح بہا لے جائے گا، اب عمران خان کی چیخیں نکالنے کا وقت آگیا۔

شہباز شریف نے کہا کہ جب تک ملک کی عمران خان سے جان نہیں چھوٹتی ہم اس کی جان نہیں چھوڑیں گے، عمران خان کا دماغ خالی ہے،جادو ٹونے سے حکومت چل رہی ہے اور پھونکیں مار کر تعیناتیاں ہورہی ہیں، اقتدار میں آکر ملک کو ترقی دیں گے، نہ کر سکے تو میرا نام عمران نیازی رکھ دینا۔

بلاول بھٹو زرداری

پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ سلیکٹڈ وزیراعظم کو گھر بھیجیں گے، 70 سال میں ہم صاف وشفاف الیکشن نہیں کراسکے، یہ کیسی آزادی ہے جہاں نہ سیاست آزاد ہے اور نہ صحافت، عوام کٹھ پتلی اور سلیکٹڈ حکومت کو نہیں مانتے بلکہ صرف جمہوریت مانگتے ہیں، ہم سلیکٹڈ وزیراعظم کو گھربھجوا کر چھوڑیں گے۔

خواتین کو پنڈال میں داخلے سے روکا گیا

جلسہ گاہ میں خواتین رپورٹرز اور اینکرز کو پنڈال میں داخلے سے روک دیا گیا۔ رضاکار فورس کے اہلکاروں نے خواتین صحافیوں کوجی نائن سگنل پرروکتے ہوئے کہا کہ پنڈال سے باہر رہ کر کوریج کریں۔

کارکنان خواتین کا احترام کریں

مولانا عبد الغفور حیدری نے جلسہ گاہ میں اعلان کیا کہ آزادی مارچ میں لاکھوں لوگ شریک ہیں اور خواتین سے بدتمیزی کی شکایات ملی ہیں، کارکنان خواتین کا احترام کریں اورانہیں راستہ دیں۔ مولانا عبد الغفور حیدری کی ہدایت کے بعد رضاکار اہلکاروں نے خواتین صحافیوں کو پنڈال میں اسٹیج کے قریب پہنچنے کی اجازت دی۔

حکومت کا سخت ردعمل

دوسری جانب پی ٹی آئی رہنماء بابراعوان نے اس اقدام کو آئین کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ خواتین کو سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے سے روکنا آئین کے آرٹیکل 25 کی خلاف ورزی ہے۔

فردوس عاشق اعوان نے بھی ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت کا لبادہ اوڑھے انتہا پسندانہ ذہنیت نے خواتین پر مشتمل پاکستان کی نصف سے زائد آبادی کے حقوق پر کاری ضرب لگا دی، مارچ انتظامیہ نے خواتین اینکرز اور رپورٹرز کو کوریج کی اجازت نہ دےکر پتھر کے زمانے کی یاد تازہ کر دی۔

فضل الرحمان کے ہوتے ہوئے یہودیوں کو سازش کی کیا ضرورت ہے، وزیراعظم

گلگت بلتستان: وزیراعظم عمران خان نے جے یو آئی (ف) کے آزادی مارچ کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ فضل الرحمان کے ہوتے ہوئے یہودیوں کو پاکستان کے خلاف سازش کی کیا ضرورت ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے گلگت بلتستان میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد میں جے یو آئی (ف) کے آزادی مارچ میں بڑی تعداد میں لوگ جمع ہیں، وہ کس سے آزادی لینے اسلام آباد آرہے ہیں، میڈیا جاکر مظاہرین سے پوچھے وہ کس سے آزادی لینے آئے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پی پی پی والے مہنگائی کی بات کریں گے، ن لیگ والوں کو پتہ ہی نہیں ہوگا کہ وہ مارچ میں کیوں ہیں، جے یو آئی والے کہیں گے یہودی اسلام آباد پر قبضہ کر رہے ہیں، فضل الرحمان کے ہوتے ہوئے یہودیوں کو سازش کی کیا ضرورت ہے، ہندوستان سمیت ملک کے سارے دشمن فضل الرحمن کے آزادی مارچ سے خوش ہیں، ہندوستانی میڈیا آزادی مارچ دکھا رہا ہے، ایسا لگ رہا ہے جیسے فضل الرحمن بھارتی شہری ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ فضل الرحمان اسلام کے ٹھیکیدار بنے ہوئے ہیں لیکن انہیں ڈیزل کا پرمٹ دو فضل الرحمان کا اسلام مٹ جاتا ہے، یہ لوگ اسلام کو نقصان پہنچا رہے ہیں، فضل الرحمن کو دیکھ کر اسلام کی طرف کوئی نہیں آئے گا بلکہ اسلام کو چھوڑ دے گا۔ بلاول بھی لبرل کا لیبل لگا کرمارچ میں شرکت کرنےآیا ہے، بلوچستان سے اچکزئی بھی آگئے ہیں، اچکزئی توجے یوآئی کی مخالفت کرتا رہا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ آزادی مارچ میں جتنے دن مرضی بیٹھنا ہے بیٹھیں، کھانا ختم ہوجائے گا تو وہ بھی دیں گے لیکن این آر او نہیں دیں گے، باری سب کی آئے گی، دنیا ادھر ادھر ہوجائے میں انہیں جیلوں میں ڈالوں گا، ان لوگوں نے 6 ارب کا قرض 30 ارب ڈالر پرپہنچا دیا، قرض کا پیسہ ان کی جیبوں میں گیا، منی لانڈرنگ کےذریعے پیسہ باہر بھیجا گیا۔

قبل ازیں بلتستان کی یوم آزادی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کے لوگوں نے ڈوگر راج کے خلاف جنگ لڑی، گلگت بلتستان کے جوانوں کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں اور گلگلت کے عوام نے جنگ نہ لڑی ہوتی تو آج مودی کے ظلم کا شکار ہوتے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں مودی حکومت نے 3 ماہ سے کرفیو لگایا ہوا ہے، نریندر مودی 5 اگست کو اپنا آخری پتا کھیل چکا ہے، کشمیریوں کا انسانوں نہیں جانوروں کی طرح رکھا ہوا ہے، کرفیو ہٹتے ہیں انسانوں کا سمندر باہر نکلے گا، لوگ اپنی آزادی مانگیں گے اور  کشمیر کو آزاد ہونے سے کوئی نہیں روک سکتا، میں کشمیریوں کو یقین دلاتا ہوں آپ کا سفیرہوں، دنیا بھر میں کشمیریوں کا وکیل بھی بنوں گا، کشمیریوں کو پیغام دیتا ہوں ساری پاکستانی قوم آپ کے پیچھے کھڑی ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ موت کا خوف ختم ہو تو انسان بڑا انسان بن جاتا ہے، مرنے کا خوف انسان کو غلام بنا دیتا ہے، مسلمان میں موت کا خوف ختم ہو جاتا ہے، کلمہ پڑھنے والا انسان کبھی کسی کی غلامی قبول نہیں کرتا، مسلمانوں نے 10 سال میں اس وقت کی دو سپرپاور کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کر دیا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ساری دنیا دیکھی ہے لیکن گلگت بلتستان جیسی خوبصورتی کہیں نہیں دیکھی، گلگت بلتستان چین اور پاکستان کو جوڑتا ہے، ان علاقوں میں کئی گنا زیادہ سیاح آئیں گے، آپ دیکھیں گے ہماری قوم دنیا میں ایک مثال بنے گی، ہماراملک عدل و انصاف کی بنیاد پر اٹھے گا، پاکستان کو اپنے پیروں پر کھڑا کریں گے، یہ عظیم قوم بنے گی۔

اس سے قبل وزیرِاعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر گلگت پہنچے جہاں وہ  آزادی پریڈ کی تقریب میں بطورمہمان خصوصی شریک ہوئے، وزیراعظم مختلف ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کریں گے، دورے کے دوران وزیرِاعظم گلگت بلتستان میں یادگارِ شہدا پر پھول چڑھائیں گے جب کہ وزیراعظم کی گورنر گلگت بلتستان، وزیرِاعلیٰ اور کابینہ ممبران سے بھی ملاقات ہوگی۔ وزیرِ اعظم گلگت بلتستان میں مختلف ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح  اور جلسہ عام سے خطاب بھی کریں گے۔

2 دن بعد حالات مولانا کے قابو میں نہ رہے تو ہمارے قابو میں بھی نہیں رہیں گے، نورالحق

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے مذہبی امور اور حکومتی مذاکراتی کمیٹی کے رکن نور الحق قادری نے کہا ہے کہ 2 دن بعد حالات اگر مولانا فضل الرحمان کے قابو میں نہ رہے تو ہمارے بھی قابو میں نہیں رہیں گے۔

حکومتی مذاکراتی کمیٹی کے رکن وفاقی وزیر نور الحق قادری کا کہنا ہے کہ وزیراعظم سے کل ملاقات ہوگی جس میں اہم فیصلے ہوں گے، رہبرکمیٹی کی وساطت سے مولانا فضل الرحمان تک رسائی حاصل کریں گے، مولانا  اور رہبر کمیٹی کو معاہدے پر قائم رہنے کے لیے قائل کریں گے، کوشش ہے ایسی صورتحال پیدا نہ ہوجو مشکلات کا باعث بنے اور پُرامید ہیں کہ اللہ تعالی بہترکرے گا۔

مولانا فضل الرحمان کے بیان پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اگر 2 دن بعد حالات مولانا فضل الرحمان کے قابو میں نہ ہوئے تو ہمارے قابو میں بھی نہیں رہیں گے، نقصان جو بھی ہوگا اس کی ذمہ داری رہبرکمیٹی پر عائد ہوگی، عوام کے دینی اور روحانی جذبات سے نہ کھیلا جائے، عمران خان پر بے ہودہ الزام لگاناعلما کرام کو زیب نہیں دیتا، عمران خان نے او آئی سی اور یو این کے پلیٹ فارم پر جس طرح اسلام کی جنگ لڑی بے مثال ہے۔

سعودی عرب میں کام کے خواہش مند پاکستانیوں کے لیے خوشخبری

ریاض: سعودی عرب میں کام کرنے کے خواہش مندوں کے لیے خوشخبری ہے کہ سعودی حکومت نے طائف شہر میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے پاکستانی مزدوروں کی تعداد بڑھانے  سے متعلق اسلام آباد کی درخواست منظور کرلی۔

عرب نیوز کو انٹرویو ڈیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے اوورسیز، انسانی وسائل و ترقی سید ذوالفقار بخاری نے کہا کہ انہوں نے سعودی وزارت لیبر سے طائف شہر میں تعمیراتی منصوبوں میں کام کے لیے افرادی قوت میں پاکستان کا کوٹا زیادہ کرنے کی درخواست کی تھی جس پر سعودی وزیر نے رضامندی کا اظہار کرتے ہوئے یقین دلایا کہ وہ پاکستانی مزدوروں کی تعداد بڑھانے کے لیے حکمت عملی ترتیب دے رہے ہیں۔

ذوالفقار بخاری نے بتایا کہ سعودی وزیرکا کہنا تھا کہ پاکستانی مزدور طائف کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کریں گے اور  ہمارے حکمرانوں نے بھی ہمیں یہی کہا ہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ سعودی عرب نئے طائف شہر میں ایئرپورٹ، رہائشی کالونیاں، یونیورسٹیز اور صنعتی زون سمیت میگا پروجکیٹس تعمیر کرے گا جس کے لیے مقامی لیبر ناکافی ہیں۔

اپوزیشن جب تک چاہے دھرنا دے حکومت رکاوٹ نہیں ڈالے گی، وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن جتنے دن دھرنا دینا چاہے دے حکومت رکاوٹ نہیں ڈالے گی لیکن اگر معاہدے کی خلاف ورزی ہوئی تو کارروائی ہوگی۔

مولانا فضل الرحمان کے خطاب پر حکومتی مذاکراتی کمیٹی کا اہم اجلاس ہوا۔ اجلاس کے دوران مذاکراتی کمیٹی کے سربراہ پرویز خٹک نے وزیر اعظم عمران خان سے رابطہ کرکے مولانا فضل الرحمان کے مطالبے اور موجودہ صورتحال سے آگاہ کیا۔

ذرائع کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کوئی بھی فیصلہ کرنے سے پہلے پارٹی کور کمیٹی کو اعتماد میں لینے کا فیصلہ کیا ہے، پرویز خٹک حکومتی مذاکراتی کمیٹی کی تجاویز کور کمیٹی کو پیش کریں گے۔ کور کمیٹی کے اجلاس میں موجودہ صورتحال پر مشاورت کی جائے گی، پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس بلانے اور وزیر اعظم کے قوم سے خطاب کی تجویز پر بھی مشاورت ہوگی۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن جتنے دن دھرنا دینا چاہے دے حکومت رکاوٹ نہیں ڈالے گی لیکن اگر معاہدے کی خلاف ورزی ہوئی تو قانون کے مطابق کاروائی بھی ہوگی۔

یمن میں حوثی باغیوں نے سعودی سرحد کے قریب امریکی ڈرون مار گرایا

صنعا: حوثی باغیوں نے یمن میں ایک امریکی ڈرون مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق يمن کے حوثی باغيوں نے امريکی ساختہ ’اسکين ايگل‘ نامی بغير پائلٹ والے ايک ڈرون طيارہ سعودی عرب کی سرحد کے نزدیک مار گرانے کا دعویٰ کيا ہے۔ امریکا اور سعودی عرب کی جانب سے حوثی باغیوں کے دعوے پر تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے۔

حوثی باغیوں کے ترجمان نے امریکی ڈرون کو مار گرانے کو بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ يہ ڈرون ہمارے ٹھکانوں اور اسلحے سے متعلق معلومات جمع کر رہا تھا تاکہ سعودی سربراہی میں قائم فوجی عسکری اتحاد ہمارے خلاف بآسانی کارروائی کر سکے۔

حوثی باغیوں کی جانب سے سعودی عرب کے سرحدی علاقوں میں کارروائی میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ یمن سے سعودی عرب کے ایئرپورٹ پر حملے کیے گئے جب کہ حال ہی میں حوثی باغیوں نے یمن کے وزیر دفاع پر بھی حملہ کیا تھا جس میں 2 فوجی مارے گئے تھے۔

شمالی کوریا کا ’عظیم راکٹ لانچر‘ کا کامیاب تجربہ

پیانگ یانگ: شمالی کوریا نے دشمن کے اہداف کو انتہائی سرعت اور مکمل خاموشی سے ایک سے زائد میزائل کے ساتھ نشانہ بنانے والے ’عظیم راکٹ لانچرز‘ کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔

شمالی کوریا کے سرکاری خبر رساں ادارے کورین سینٹرل نیوز ایجنسی نے انکشاف کیا ہے کہ جدید ٹیکنالوجی سے لیس راکٹ لانچرز کے تجربات کے تسلسل میں سائنس دانوں نے ایک ساتھ کئی میزائلوں کو فائر کرنے والے ’سپر لارج راکٹ لانچر‘ کا کامیاب تجربہ کیا ہے۔

یہ عظیم راکٹ لانچر بہ یک وقت کئی میزائل ہدف کی جانب پھینکنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور اس کی خاص بات ہدف کو انتہائی تیزی سے اور بغیر آواز کے نشانہ بنانا ہے اور اس طرح ہدف کو سنبھلنے کا موقع بھی نہیں ملتا۔ شمالی کوریا کے سربراہ نے اس تجربے کو بڑی کامیابی قرار دیا ہے۔

دوسری جانب پڑوسی حریف ملک جنوبی کوریا نے میڈیا کو بتایا تھا کہ شمالی کوریا کی جانب سے ہماری سرزمین پر درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے 2 میزائل داغے گئے تھے۔ جاپانی حکام کے مطابق یہ بیلسٹک میزائل تھے۔ امریکا سے مذاکرات میں تعطل کے بعد سے شمالی کوریا کی ہتھیاروں کی تیاری میں تیزی آگئی ہے۔

Google Analytics Alternative