Home » 2019 » November » 08

Daily Archives: November 8, 2019

محبوبہ مفتی کی بیٹی کو بھارتی جبر کے خلاف آواز اُٹھانے پر دھمکیاں

سرینگر: مقبوضہ جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا مفتی کو بھارتی جبر کے خلاف آواز اُٹھانے پر دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کی بیٹی التجا مفتی نےامریکی نشریاتی ادارے سی این این کو انٹرویو  میں کہا کہ بھارتی جبر کے خلاف آواز اُٹھانے پر دھمکیاں دی جا رہی ہیں، بھارتی حکومت بالواسطہ ذریعوں سے زیادتی کا نشانہ بنانے اور جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہی ہے۔

التجا مفتی کا کہنا تھا کہ یہ وہ ملک ہی نہیں ہے جہاں میں بڑی ہوئی ہوں، والدہ کا ٹوئٹر اکاؤنٹ استعمال کرنے پر بھی گرفتاری کی دھمکیاں دی جا رہی ہیں، آخری سانس تک دنیا کے سامنے مودی حکومت کا مکروہ چہرہ سامنے لاتی رہوں گی، مودی سرکار کے اوچھے ہتھکنڈے سچ بتانے سے نہیں روک سکتے۔

کرتار پور راہداری افتتاح؛ مودی سرکار سدھو کے دورہ پاکستان میں رکاوٹ

نئی دلی: مودی سرکار نے کرتار پور راہداری کی افتتاح تقریب میں شرکت کے لیے نوجوت سنگھ سدھو کے دورہ پاکستان میں رکاوٹ کھڑی کردی ہے۔

سابق بھارتی کرکٹر اور سیاستدان نوجوت سنگھ سدھو کا کہنا ہے کہ بھارت سرکار سے کرتار پور راہداری میں شرکت کے لیے درخواست کی تھی تاہم بار بار یاد دہانی کے باوجود میری درخواست کا کوئی جواب نہیں دیا گیا، ابھی تک کرتاپور جانے کی اجازت یا انکار نہیں کیا گیا تاہم درخواست کے جواب میں تاخیر سے میرا آئندہ کا لائحہ عمل متاثر ہو رہا ہے۔

نوجوت سنگھ سدھو نے کہا کہ اگر حکومت کو میرے پاکستان جانے سے اعتراض ہے تو انکار کر دے، حکومت اجازت نہ دے تو بطور ذمہ دار شہری پاکستان نہیں جاؤں گا۔

بھارتی اسکول میں 2 نابینا اساتذہ کی متعدد بار بصارت سے محروم طالبہ سے جنسی زیادتی

گجرات: بھارت میں 2 نابینا اساتذہ نے گھناؤنی واردات کرتے ہوئے بصارت سے محروم کم سن طالبہ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔

بھارتی ریاست گجرات کے علاقے امباجی میں انتہائی افسوس ناک واقعہ پیش آیا ہے۔ پولیس نے طالبہ سے جنسی زیادتی کے الزام میں دو نابینا اساتذہ 62 سالہ چمن ٹھاکر اور 30 سالہ جیانتی ٹھاکر کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

دونوں ملزمان نے استاد کے مقدس درجے کو داغدار کرتے ہوئے نجی ٹرسٹ کے اسکول میں چار ماہ تک 15 سالہ بچی کے ساتھ متعدد بار جنسی زیادتی کی۔

بچی چھٹیوں پر اپنی خالہ کے گھر آئی تھی اور نابینا بچوں کے اسکول واپس جانے سے انکار کردیا۔ جب اس سے وجہ پوچھی تو اس نے زیادتی کے بارے میں بتایا جس پر پولیس نے مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردیں۔ دونوں ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ہیں اور ان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

بچی نے 8 سال تک اپنے گاؤں کے اسکول میں پڑھا اور پھر موسیقی سیکھنے باہر کے اسکول گئی تھی جہاں وہ ہاسٹل میں رہتی تھی۔ اس کے ساتھ موسیقی کی کلاس میں ہی زیادتی کی گئی۔ اسکول انتظامیہ نے دونوں ٹیچرز کو نوکری سے برطرف کردیا ہے۔

افریقی ملک برقینو فاسو میں بس پر فائرنگ سے 37 افراد ہلاک، 60 زخمی

اوگاڈوگو: افریقی ملک برقینو فاسو میں نامعلوم افراد نے بس پر فائرنگ کرکے 37 افراد کو ہلاک کردیا جب کہ واقعہ میں 60 افراد زخمی بھی ہوئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افریقی ملک برقینو فاسو میں نامعلوم افراد نے کینیڈین گولڈ مائن کمپنی کی بس پر اندھادھند فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 37 افراد کو ہلاک جب کہ 60 زخمی ہوگئے، سیکیورٹی ذرائع کے مطابق پہلے ملازمین کی بس کے آگے موجود سیکیورٹی فورسز کی گاڑی کو دھماکے سے اڑایا گیا جس کے بعد ملازمین کی بس پر فائرنگ کی گئی۔

کینیڈین گولڈ مائن کمپنی کے ساتھ کام کرنے والے آسٹریلین کنٹریکٹر کا کہنا ہے کہ حملے میں کسی آسٹریلوی باشندے کی ہلاکت سامنے نہیں آئی تاہم افریقی مائننگ کمپنی کے کئی افراد حملے میں ہلاک ہوئے، واقعے کے بعد زخمیوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے تاہم مزید افراد کی ہلاکت کا خدشہ ہے۔

برقینو فاسو کے سیکیورٹی حکام کے مطابق کسی بھی تنظیم کی جانب سے ابھی تک حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے تاہم فائرنگ کے واقعے کی مزید تفتیش کی جارہی ہے۔

جون ایلیا کو ہم سے بچھڑے 17 برس بیت گئے

کراچی: معروف شاعر جون ایلیا کو ہم سے بچھڑے 17 برس بیت گئے۔

منفرد اسلوب اور دھیمے لب و لہجے کا تعارف رکھنے والے جون ایلیا نے اردو ادب کو ایک نئی جہت سے روشناس کروایا۔ 14 دسمبر سن 1931ء کو بھارتی شہر امروہہ میں پید ا ہونے والے جون ایلیا کو، انگریزی،عربی اور فارسی پر بھی مکمل عبور حاصل تھا۔

ان کا پہلا شاعری مجموعہ شائد، 1991ء میں شائع ہوا۔ اردو ادب میں جون ایلیا کے نثر اور اداریے کو باکمال تصور کیا جاتا ہے۔ جون ایلیا کے شعری مجموعوں میں، یعنی، گمان، لیکن، گویا اور امور شامل ہیں۔

جون ایلیا کی بیشتر تصانیف کو عوامی پذیرائی ملی جس میں فمود کے نام سے مضامین کی تصنیف بھی قابل ذکر ہے۔ الگ تھلگ نقطہ نظر اور غیر معمولی عملی قابلیت کی بناء پر جون ایلیا ادبی حلقوں میں ایک علیحدہ مقام رکھتے تھے۔ ادبی حلقوں میں جون ایلیا اپنی نوعیت کے منفرد شاعر تھے۔

ادب سے جڑے شعراء کا ماننا ہے کہ جون اپنی منفرد شاعری میں اکیلے تھے، انھوں نے انگاروں پر چل کر شاعری کی، شعراء کے مطابق جون ایلیا ان نمایاں افراد میں شامل تھے جنھوں نے قیام پاکستان کے بعد جدید غزل کو فروغ دیا، شعرا کرام جون ایلیا کو میر اور مصحفی کے قبیل کا آدمی قراردیتے ہیں۔

john elia ki qaber

جون ایلیا کی شاعری کو معاشرے اور روایات سے کھلی بغاوت سے بھی عبارت کیا جاتا ہے، اسی وجہ سے ان کی شاعری دیگر شعراء سے مختلف دکھائی دیتی ہے۔

انھیں معاشرے سے ہمیشہ یہ شکایت رہی کہ شاعر کو وہ عزت و توقیر نہیں دی جاتی جس کا وہ حق دار ہے۔ اردو ادب کی دنیا میں الگ شناخت رکھنے والے جون ایلیا 8 نومبر سن 2002ء کو انتقال کرگئے تھے۔

ہمایوں سعید کے کچھ سین نے مجھے بھی رلا دیا تھا، عدنان صدیقی

کراچی: ڈرامہ ’میرے پاس تم ‘ میں شہوار کا کردار ادا کرنے والے عدنان صدیقی کا کہنا ہے کہ ڈرامہ میں ہمایوں سعید کے کچھ سین نے مجھے بھی رلا دیا تھا۔

عدنان صدیقی نے ایک ویب سائٹ کو انٹرویو  میں ڈرامے سے متعلق خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بالکل بھی اندازہ نہیں تھا کہ اس ڈرامے کو اس طرح  پزیرائی ملے گی۔ لیکن جو میں کچھ بھی کر رہا ہوں میں اس کی ذمہ داری بھی لے رہا ہوں۔ میں یہ نہیں کہہ رہا کہ لوگ گالیاں دے رہے ہیں۔ لوگ تو شہوار ،دانش اور مہوش کو بھی بُرا کہہ رہے ہیں اس کا مطلب ہم کردار صحیح طرح سے ادا کر رہے ہیں کیوں کہ ہر کردار اپنے سانچے میں جا کر بیٹھ گیا ہے۔

اداکار نے کہا کہ ایسا وقت آتا ہے کہ جب آپ کی زندگی میں ایسا ڈرامہ آجاتا ہے کہ ہر جانب لوگ آپ کی باتیں کرنا شروع ہو جاتے ہیں۔ مجھے بتایا گیا کہ 55 فیصد مرد حضرات یہ ڈرامہ سیریل دیکھ رہے ہیں لیکن یہ کوئی عام بات نہیں بلکہ ہمارے لئے بڑی کامیابی ہے۔

عدنان صدیقی نے یہ بھی کہا کہ مجھے یہ ڈرامہ کرنے میں بہت مشکلات پیش آرہی ہیں۔ ہر صبح مجھے یہ لگتا تھا کہ جیسے میں کوئی امتحان دینے جا رہا ہوں کیوں کہ مجھے ڈرامہ کے ڈائیلاگ یاد نہیں ہو رہے تھے، ڈائیلاگ مشکل نہیں ہیں لیکن جس انداز سے کہنا ہے وہ عمل کافی مشکل ترین ہوتا ہے اور اگر میں نے اس انداز سے ادا نہیں کیا تو شہوار کے کردار سے نا انصافی ہوگی۔

عدنان صدیقی کا کہنا ہے کہ اس ڈرامے میں ہر کردار اہمیت کا حامل ہے لیکن ہمایوں نے کچھ ایسے بھی سین کئے ہیں جس پر میں بھی رو گیا تھا بالخصوص جب دانش اپنے والد کی بات کرتا ہے اس دوران مجھے اپنے آنسو روکنا بھی مشکل ہو گیا تھا۔ کیوں کہ جس انداز سے اس نے کہا جس انداز سے اس نے اپنے والد کا ذکر کیا مجھے یقین ہے کہ اس وقت اس کے ذہن میں اس کے والد صاحب ہوں گے اور میرے ذہن میں بھی میرے والد آگئے۔اور اس دوران ایسی  فضا قائم ہو گئی تھی کہ میرے آنکھیں نم ہو گئی تھیں۔ جس پر میں ہمایوں کی اداکاری پر انہیں سلام پیش کرتا ہوں۔

عدنان صدیقی نے اپنا پسندیدہ ڈائیلاگ بتاتے ہوئے کہا کہ ’ جب مہوش پوچھتی ہے کہ میں آفس میں کیا کروں گی جس پر میں کہتا ہوں کہ کام تو سب ہی لوگ کرتے ہیں اور آپ کا کام یہ ہے کہ آپ کو کوئی کام نہیں کرنا ہے بس میرے سامنے بیٹھے رہنا ہے۔ اور مجھے چائے اور کافی کا پوچھو ،اور جب میں سگریٹ نوشی کروں تو مجھے منع کرو۔ اور حقیقتاً میرے ساتھ حال ہی میں ایئرپورٹ سے واپسی پر یہی ہوا کہ میں سگریٹ پی رہا تھا تو ایک خاتون نے مجھے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ شہوار سگریٹ نہیں پینا ہے۔

ہالی ووڈ اداکارہ ایما واٹسن کو ذاتی زندگی کے حوالے سے معاشرتی دباؤ کا سامنا

لندن: ہیری پوٹر سیریز سے شہرت حاصل کرنے والی معروف ہالی ووڈ اداکارہ ایماواٹسن کاکہنا ہے کہ 30 سال کی ہونے پر ضروری نہیں کہ آپ شادی شدہ یا مالی طور پرمستحکم ہوں۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق ہالی ووڈ اداکارہ ایماواٹسن نے کہا ہے کہ انہیں اپنی 30 ویں سالگرہ سے پہلے ذاتی زندگی کے حوالے سے دباؤ کے باعث پریشانی اوربے چینی کا سامنا کرنا پڑرہاہے۔

ایماواٹسن فی الحال 29 برس کی ہیں اور اگلے سال اپریل میں 30 برس کی ہوجائیں گی۔ ایما نے کہا 30 برس کی ہونے سے قبل میرے ذہن میں کئی خدشات ہیں اور وہ خود سے پوچھتی ہیں کہ آپ کو اس عمر تک کیا کچھ حاصل کرلینا چاہئیے تھا۔

ایک انٹرویو کے دوران ایمانے کہا اگر 30 برس کی عمر تک  آپ کی شادی نہیں ہوئی تو آپ کے بچے نہیں  ہوں گے اور یہ سوچ کر  ناقابل یقین حد تک اضطراب اور بے چینی بڑھ جاتی ہے۔ تاہم ایما نے کہا کہ وہ اپنی زندگی میں اکیلی ہی خوش ہیں اور اپنی پارٹنر خود ہی ہیں۔

ایما نے اپنی زندگی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا وہ ماضی میں کبھی اس بات پر یقین نہیں کرتی تھیں کہ زندگی میں آپ اکیلے خوش رہ سکتے ہیں۔ میں اکثر سوچتی تھی کہ ہر کوئی 30 ویں سالگرہ پر اتنا شور کیوں مچاتا ہے یہ کوئی اتنی بڑی بات تو نہیں۔ لیکن اگر آپ 30 برس کے قریب ہیں اور آپ نے گھر نہیں بنایا، آپ کا شوہر نہیں ہے، اولاد نہیں اور مالی طور پر مستحکم بھی نہیں ہیں تو یہ سوچ کر ہی بے چینی بڑھ جاتی ہے۔ لیکن مجھے لگتا ہے کہ اب میں  تنہا  ہی خوش ہوں۔

واضح رہے کہ ایماواٹسن اقوام متحدہ کی خواتین کے لیے خیرسگالی کی سفیر ہیں اور ’’ہی فارشی‘‘نامی مہم کا حصہ بھی رہ چکی ہیں جس میں عالمی صنفی مساوات کے لیے آواز اٹھائی گئی تھی

مومنہ مستحسن، عزیر جسوال کا گانا ‘ہمیشہ’ ریلیز

گلوکارہ مومنہ مستحسن نے اپنا نیا گانا ریلیز کردیا جس میں ان کے ہمراہ گلوکار عزیر جسوال نے پرفام کیا ہے۔

‘ہمیشہ’ نامی اس گانے کی ویڈیو میں بھی مومنہ مستحسن اور عزیر جسوال ایک دوسرے کو پسند کرتے نظر آئے۔

ویڈیو میں دکھایا گیا کہ عزیر اور مومنہ ایک ریسٹورنٹ میں کام کرتے ہیں لیکن وہاں نظر آنے والے باقی کردار بھی ان ہی کی شکل کے ہیں۔

اس گانے کی موسیقی کو سرمد غفور نے پروڈیوس کیا جبکہ اس کی ہدایات رضا شاہ نے دی ہیں۔

گزشتہ سال مومنہ مستحسن کا ایک اور گانا ریلیز ہوا تھا جس میں انہوں نے بھارتی گلوکار ارجن کننگو نے پرفارم کیا۔

خیال رہے کہ مومنہ مستحسن کو مقبولیت کوک اسٹوڈیو کے گانے ’آفریں آفریں‘ سے ملی۔

وہ بولی وڈ فلم ’ایک ولن‘ کے لیے بھی گانا گا چکی ہیں۔

Google Analytics Alternative