Home » Author Archives: Admin

Author Archives: Admin

تاجروں کونیب سمیت کوئی ادارہ بلاجواز ہراساں نہیں کرے گا، وزیراعظم کی یقین دہانی

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے تاجروں کو یقین دہانی کرائی ہے کہ نیب اور ایف آئی اے سمیت کوئی ادارہ انہیں بلاجواز ہراساں نہیں کرے گا۔

وزیراعظم عمران خان سے فیڈریشن آف پاکستان چیمبرس آف کامرس اینڈ انڈسٹریز (ایف پی سی سی آئی) کے وفد نے ملاقات کی،اس موقع پر وزیرخزانہ اسد عمر بھی موجود تھے۔

وفد نے وزیراعظم کے سامنے شکایات کے انبار لگاتے ہوئے کہا کہ ایف آئی اے  ٹیکس گوشواروں میں ڈکلئیر شُدہ غیر ملکی اثاثوں کے بارے میں بھی  نوٹس دے رہا ہے جب کہ نیب اور دیگر اداروں کی جانب سے بھی تاجروں،صنعت کاروں اور کاروباری حضرات کو ہراساں کیا جارہا ہے۔

وزیراعظم نے وفد کی شکایات سننے کے بعد انہیں یقین دہانی کرائی ہے کہ  نیب اور ایف آئی اے سمیت کوئی ادارہ تاجروں و صنعتکاروں کو بلاجواز ہراساں نہیں کرے گا جب کہ ڈکلئیر کردہ غیر ملکی اثاثہ جات رکھنے والے پاکستانیوں کو ایف آئی اے تنگ نہیں کرے گا، وزیراعظم نے کہا کہ قومی احتساب بیورو کے لیے قانون سازی کی جارہی ہے۔

پاکستان کی مدد کے بغیر القاعدہ کو شکست نہیں ہوسکتی تھی، ترجمان پاک فوج

لندن: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ دنیا پاکستان کا شکریہ ادا کرے کیوں کہ القاعدہ کو کبھی بھی پاکستان کی مدد کے بغیر شکست نہیں ہوسکتی تھی۔

لندن میں واقع وارک یونیورسٹی میں خطاب کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ پاک فوج کے آپریشن سے دہشت گردوں کی کارروائیاں بہت کم ہوگئیں، دہشت گردی کے خاتمے کے لیے دنیا کو پاکستان کا شکریہ ادا کرنا چاہیے کیوں کہ دنیا میں القاعدہ کو کبھی بھی پاکستان کی مدد کے بغیر شکست نہیں ہوسکتی تھی۔

میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ پاکستان نے خطے میں امن کے لیے بہت قربانیاں دیں، پاکستان اور خطے میں دیرپا امن کے لیے افغانستان میں امن ہونا بہت ضروری ہے اور پاکستان کی خواہش ہے کہ امریکا افغانستان میں مکمل امن آنے تک موجود رہے۔

مسلم لیگ (ن) کے بنائے گئے تمام پاور پلانٹس کا آڈٹ کرائیں گے، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ (ن) لیگ کے لگائے گئے پلانٹس مہنگی بجلی پیدا کررہے ہیں اس لئے تمام پاور پلانٹس کے آڈٹ کا فیصلہ کیا گیا ہے جن میں سے 2 پر کام شروع ہوچکا ہے۔ 

اسلام آباد میں میڈیا بریفنگ کے دوران وزیر اطلاعات نے کہا کہ گزشتہ 2 سال میں بجلی کی پیداواری قیمت بڑھ کر 15 روپے 53 پیسے فی یونٹ ہوئی جو 11 روپے 71 پیسے فی یونٹ میں فروخت کی جارہی ہے۔ اس طرح حکومت بجلی کی مد میں سردیوں میں ایک ارب دو کروڑ جب کہ گرمیوں میں ایک ارب 80 کروڑ روپے یومیہ نقصان برداشت کررہی ہے۔ بجلی کی قیمت نیپرا طے کرتا ہے، اس ادارے کو ہم نے نہیں گزشتہ حکومتوں نے بنایا ہے، نیپرا نے کہا کہ بجلی کی قیمت میں اضافہ کریں ورنہ روز نقصان ہوگا، اس نقصان کی وجہ سے گردشی قرضے میں ہر سال 34 ارب روپے اضافہ ہوا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ چیزوں کو بہتر اور ٹھیک کریں، ہم نے کوشش کی کہ بجلی کی قیمت بڑھانے سے غریبوں پر اثر نہ پڑے۔ مسلم لیگ (ن)نے جس طرح اداروں سے کھلواڑ کیا اس کو بھی سامنے لانا ہے۔ (ن) لیگ کے لگائے گئے پلانٹس مہنگی بجلی پیدا کررہے ہیں، قائد اعظم سولر پلانٹ دنیا کا مہنگا ترین پاور پلانٹ ہے، اس پلانٹ سے پیدا ہونے والی بجلی کی فی یونٹ قیمت اس وقت 17 روپے سے زائد پڑ رہی ہے۔ تمام پاور پلانٹس کے آڈٹ کا فیصلہ کیا گیا ہے جن میں سے دو پر کام شروع ہوچکا ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ لوگوں کو پتا ہی نہیں اور ان کے اکاؤنٹس میں اربوں روپے نکل رہے ہیں، ڈاکوؤں کو پکڑنے کیلئے کوشش کر رہے ہیں، جب احتساب کا کہا جاتا ہے وہاں پر جمہوریت خطرے میں پڑ جاتی ہے۔ جب ہم کہتے ہیں کہ احتساب ہونا چاہیے تو کچھ دوست کہتے ہیں اپوزیشن سے بنا کر رکھنی چاہیے، جب سب کچھ اس طرح چلنا ہے تو پھرپی ٹی آئی کو حکومت میں آنے کی کیا ضرورت تھی۔

ضمنی انتخابات کے نتائج کے حوالے سے فواد چوہدری نے کہا کہ ضمنی انتخابات میں تحریک انصاف کو سب سے زیادہ ووٹ ملے۔ پی ٹی آئی کیخلاف تمام جماعتیں اکٹھی تھی پھر بھی پی ٹی آئی کا مقابلہ نہ کرسکیں۔ تحریک انصاف نے نئی مثال قائم کی کہ کسی وزیر نے ضمنی انتخاب والے حلقے کا دورہ نہیں کیا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ پاکستان کو سعودی عرب ، یو اے ای چین اور دیگر ممالک کی حمایت حاصل ہے، وزیر اعظم عمران خان تمام معاملات پر جلد قوم کو اعتماد میں لیں گے۔

ضمنی انتخابات کے نتائج اوروزیراعظم کی وضاحت

adaria

تحریک انصاف کی حکومت کی مصروفیات اور ضمنی انتخابات کے نتائج کے حوالے سے وزیراعظم نے توجیح بیان کرتے ہوئے کہاکہ ضمنی انتخابات میں شکست کااندازہ تھا حکومتی امور میں مصروفیات کی وجہ سے عوام سے رابطے میں خلاء آیا جسے اپوزیشن نے پرکیا حکومت نے کسی بھی سطح پر ضمنی انتخابات میں مداخلت نہیں کی اس لئے پہلی مرتبہ شفاف انتخابات منعقد ہوئے ہیں۔وزیراعظم کا یہ بیان کسی حد تک درست ہے کیونکہ جس دن سے تحریک انصاف عنان اقتدا ر میں آئی ہے روز کوئی نہ کوئی ایک نیاایشو کھڑا ہوتا ہے جس کو نمٹانے کے لئے وزیراعظم سمیت تمام کابینہ مصروف ہوجاتی ہے ۔عوام سے رابطہ تو درکنارابھی مسائل حل ہونے کی بھی باری نہیں آئی ہے کیونکہ حکومت نے سودن مانگ رکھے ہیں اور ان میں سے تقریباً آدھے سے زیادہ دن گزرچکے ہیں بات توساری حکومت کے سربراہ کی ہوتی ہے وہ اگر مصروف رہے تو کوئی نہ کوئی ایسی منصوبہ بندی ضرور ہونی چاہیے تھی جس سے انتخابات میں سرخروئی حاصل ہوتی یہ نتائج صرف یہاں تک ہی نہیں ٹھہریں گے حکومت کو یہ سوچناچاہیے کہ ان کااثرآگے بلدیاتی انتخابات پرپڑے گا ویسے ہی نوازشریف نے کہاہے کہ یہ نتائج آنے والے وقت کاپیغام ہے اگر حکومت اپنی پالیسیوں کوپایہ تکمیل تک پہنچانے میں ناکام رہی تو اس کو بہت زیادہ مسائل کاسامنا کرناپڑسکتاہے۔اب وزیراعظم کہہ رہے ہیں کہ وزراء اور پارٹی رہنما اپنی توجہ عوام کو فراہم کرنے پرمرکوز رکھیں جبکہ ساتھ ساتھ حکومتی صفوں میں سے یہ آوازیں بھی آرہی ہیں کہ مسائل کو حل کرنے کے لئے چھ سے آٹھ ماہ درکار ہوں گے ہم تو حکومت سے یہ کہتے ہیں کہ چھ سے آٹھ ماہ بھی کم ہیں پہلا حکومتی سال اسی مسائل کے بھنور میں گزرجائے گا اس کے بعد شاید حالات کسی مثبت انداز میں آگے بڑھیں۔ ضمنی الیکشن میں بعض نشستوں پر تحریک انصاف کی شکست کی وجہ پارٹی کے اندرونی اختلافات تھے۔ حکومت نے ضمنی الیکشن میں کسی سطح پر مداخلت نہیں کی، سب سیاسی جماعتوں کیلئے الیکشن لڑنے کے یکساں مواقع موجود تھے۔ مشکل معاشی صورتحال کے باوجود عام عوام کے زندگیوں میں آسانی پیدا کرنا تحریک انصاف کامنشور ہے۔انتخابات کے نتائج کے بعد حکومت کو مزید محنت کرناپڑے گی گوکہ عوام نے مینڈیٹ دے دیا ہے اب اس کوپورا کرناپاکستان تحریک انصاف کے ہاتھ میں ہے ایوان میں ابھی نمبرگیم کے اعتبارسے پاکستان تحریک انصاف کو واضح برتری حاصل ہے مگر اصل میدان بلدیاتی انتخابات میں سجے گا اور ان کے نتائج میں ہی پتہ چلے گاکہ عوام کیا حقیقت میں تبدیلی چاہتے ہیںیا واپس پرانے پاکستان میں جاناچاہتے ہیں۔بنیادی طورپرضرورت اس امرکی ہے کہ حکمران مہنگائی کوکنٹرول کریں جو کہ ابھی تک نظرنہیں آرہا کیونکہ ڈالر کے مہنگا ہونے کی وجہ سے ہرچیز آسمان پرجاپہنچی ہے بجلی کے معاملات بھی اوپر جانے کیلئے پرتول رہے ہیں آخرعوام کہاں تک برداشت کر ے گی جب ہرچیز مہنگی ہوگی تو پھریقینی طورپراپوزیشن کے لئے میدان میں مقابلہ کرناآسان ہوتاجائے گاکیونکہ حکومت سے باہررہ کرباتیں کرنا اورالزامات عائد کرنا بہت آسان ہوتا ہے جب اقتدار میں آجائیں تو اس وقت ملک کوچلاناکوئی خالہ جی کاگھرنہیں ہوتا۔ابھی تک یہی ہورہاہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت کو جوخزانہ ملا ہے وہ اسے سابقہ دور کے خالی خزانے کی مثالیں دے کرکہہ رہی ہے کہ ہم کیاکریں خزانہ ہی خالی ملاتھا۔اس روایت کو ختم کرنا ہوگا ماضی میں اگر کسی نے غلط کیا ہے تو اسے قرارواقعی سزادیں دیکھیں گے کہ اب آپ کیاکررہے ہیں مثبت انداز میں مسائل کو حل کیاجائے الزام تراشیوں سے مایوسی کے علاوہ کچھ حاصل نہ ہوسکے گا۔

سٹاک ایکسچینج پھرمندی کاشکار
پاکستان میں کاروبارآئے روز مندی کاشکارہوتاجارہاہے اور اس کی وجہ ہوشربامہنگائی اورروپے کی بے قدری ہے آئی ایم ایف کے وفد کے دورے کے بعد سے یہ مسائل درپیش ہیں۔ پاکستان سٹاک ایکسچینج میں مندی کا رجحان برقرار رہا۔ کے ایس ای 100انڈیکس 750.36پوائنٹس کی کمی سے 3676.57پوائنٹس پر بند ہوا، مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے ایک کھرب 27ارب 54کروڑ 89لاکھ 16ہزار 121روپے ڈوب گئے تاہم تجارتی حجم میں 62کروڑ 19لاکھ 26ہزار 640روپے کی تیزی ریکارڈ کی گئی جبکہ خرید و فروخت میں 3کروڑ ایک لاکھ 60حصص کا اضافہ ہوا۔ چیئرمین ایف بی آر نے وزیر خزانہ کو نئے اصلاحاتی ایجنڈے کے تحت ٹیکس نیٹ بڑھانے پر بریفنگ دی۔ ٹیکس نیٹ بڑھانے کیلئے مزید اقدامات کی ضرورت ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے بجلی کی قیمتیں بڑھاتے وقت کم آمدنی والے افراد کا خیال رکھنے کی ہدایت کی ہے۔ ابھی بھی ڈالر کوقابونہ کیاگیا تو روزانہ جو سٹاک ایکسچینج میں سرمایہ کاروں کے اربوں روپے ڈوب رہے ہیں اس سے بددلی پھیلے گی کاروبارتباہ ہوگا معیشت کابیڑاغرق ہوگااور ملکی ترقی کاپہیہ بھی جام ہوجائے گا۔ قرضوں کاتویہ ایک ایساتحفہ ہے جو روزانہ کی بنیاد پرہرپاکستانی کے قرض میں خاطرخواہ اضافہ کرتارہتا ہے ایک قرضہ اتارنے کے لئے دوسراقرضہ لینا پڑتاہے اور دوسرے کو اتارنے کیلئے تیسرا۔ وزیراعظم نے کہاتھا کہ مدینہ جیسی ریاست قائم کرناچاہتے ہیں تو انہیں چاہیے کہ وہ سب سے پہلے اس ملک سے سودی نظام کاخاتمہ کریں کیونکہ مدینہ پاک میں اس طرح کاکوئی نظام موجودنہیں تھا سود کی وجہ سے مال ودولت میں کوئی برکت نہیں رہتی نہ ہی معیشت ترقی کرسکتی ہے ۔اس جانب بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔
ایس کے نیازی کی’’ پروگرام سچی بات‘‘ میں حقائق پرمبنی گفتگو
ایس کے نیازی نے سچی بات کے پروگرام میں ضمنی انتخابات، تعلیم،پانی ،نظام ،حکومتی اقدامات اورمسلم لیگ نون کو آکسیجن کے حوالے سے جو سیرحاصل گفتگو کی وہ بالکل حقیقت پرمبنی ہے کیونکہ ضمنی انتخابات کے جو بھی نتائج ہیں وہ تمام ترپی ٹی آئی کی پالیسیوں کے مرہون منت ہیں۔تعلیم کے حوالے سے بھی انہوں نے کہاکہ یکساں تعلیمی نظام ہوناچاہیے یہ بات بھی بالکل درست ہے اوراب نون لیگ کو جو آکسیجن ملی ہے اس سے وہ اب مزید آگے بڑھے گی۔ پاکستان گروپ آف نیوز پیپرز کے چیف ایڈیٹر اور روز نیوز کے چیئرمین ایس کے نیازی نے اپنے پروگرام’’سچی بات‘‘میں مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کوئی الیکشن جیت جائے تو شفاف الیکشن کہا جاتا ہے،اگر کوئی الیکشن ہار جائے تو دھاندلی کا کہا جاتا ہے، ضمنی الیکشن میں نشستیں جیتنا(ن)لیگ کی فتح ہے،ن لیگ نے ضمنی الیکشن میں دھاندلی کا ذکر نہیں کیا،وزیراعظم حقیقت قوم کے سامنے رکھنا چاہتے ہیں،بجلی،گیس اور ڈالر مہنگے ہونے کو عوام اچھا نہیں سمجھتی،وزیراعظم عمران خان سارا گند صاف کرنا چاہتے ہیں،پی ٹی آئی کو تھوڑی جلدی ہے اور ٹیم کا فقدان بھی ہے،خواجہ سعد رفیق الیکشن جیت گئے مگر کیسز تو چلیں گے،خواجہ سعد رفیق کی ضمانت از گرفتاری بھی ہوگئی ہے،حکومت کیساتھ’’سر منڈواتے ہی اولے پڑے‘‘والا حال ہوا ہے،وزیراعظم عمران خان تعلیم،صحت پر کام کریں گے،حکومت کی کلین اینڈ گرین پاکستان مہم اچھی چل رہی ہے،چیف جسٹس کی وجہ سے پانی کے حوالے سے آگاہی پیدا ہوئی،ملک میں پانی کے حوالے سے بھرپور کام کیا جارہا ہے،اسکولز و کالجز میں ایک نصاب،ایک تعلیم ہونی چاہیے،بچوں کا اسلامی تعلیمات سے مکمل آگاہ ہونا ضروری ہے،وزیراعظم نمبر ون ٹیم بنا کر اکانومی پر توجہ دیں۔

جمال خاشقجی کے معاملے پر امریکی وزیر خارجہ کی سعودی فرمانروا سے ملاقات

ریاض: امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے سعودی فرمانروا شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کی ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو ترکی میں سعودی قونصل خانے سے سعودی صحافی جمال خاشقجی کی پراسرار گمشدگی کے حوالے سے کشیدہ صورتحال پر ہنگامی دورے پر سعودی عرب پہنچے۔

امریکی وزیر خارجہ نے دورے کے دوران سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے شاہی محل میں ملاقات کی جس میں سعودی امریکی تعلقات، جمال خاشقجی کی گمشدگی اور خطے کی موجودہ صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں سعودی وزیرخارجہ عادل الجبیر اور وزیر داخلہ شہزادہ عبدالعزیز بن سعود بھی موجود تھے۔

— فوٹو: بشکریہ امریکی سفارتخانہ 

بعد ازاں امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے بھی ملاقات کی جس میں خطے کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں ملاقات میں وزیرخارجہ عادل الجبیر اور امریکا میں تعینات سعودی سفیر شہزادہ خالد بن سلمان بھی موجود تھے۔

اس موقع پر سعودی ولی عہد کا کہنا تھا کہ سعودی عرب اور امریکا کے درمیان مضبوط تعلقات ہیں اور دونوں ممالک دیرنیہ اور طاقتور حلیف ہیں۔

یاد رہے کہ سعودی شہری اور واشنگٹن پوسٹ کے کالم نگار جمال خاشقجی کو آخری مرتبہ 2 اکتوبر کو سعودی قونصل خانے میں داخل ہوتے دیکھا گیا تھا جس کے بعد سے وہ لاپتہ ہیں تاہم سعودی حکام کا کہنا تھا کہ صحافی اسی روز واپس روانہ ہوگئے تھے تاہم اس حوالے سے کوئی ثبوت فراہم نہیں کیے گئے۔

جمال خاشقجی اپنی ترک منگیتر ہیٹس سنگز سے شادی کے خواہاں تھے اور دستاویزات کے حصول کے سلسلے میں قونصل خانے گئے تھے اور اس موقع پر ان کی منگیتر قونصل خانے کے باہر ان کا انتظار کرتی رہیں۔

خدشہ ظاہر کیا گیا تھا کہ صحافی کو قونصل خانے میں ہی قتل کردیا گیا جب کہ گزشتہ روز ترک پولیس نے سعودی قونصل خانے کی تلاشی بھی لی اور شواہد اکٹھے کیے۔

جمال خاشقجی کی گمشدگی کے معاملے پر ترکی اور سعودی عرب کے درمیان تعلقات کشیدہ ہیں اور اب اس معاملے میں امریکا بھی کود پڑا ہے۔

 گزشتہ دنوں اپنے انٹرویو میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کی گمشدگی میں سعودی عرب کا ہاتھ ہوا تو سزا ناگزیر ہوگی۔

آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم کیس میں شہباز شریف کے جسمانی ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

لاہور: احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم میں شہباز شریف کو مزید 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

لاہور میں نیب نے شہباز شریف کو احتساب عدالت کے جج نجم الحسن کے روبرو پیش کیا، اس موقع پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

نیب نے عدالت سے استدعا کی کہ شہباز شریف سے مزید تفتیش کی جانی ہے اس لیے ملزم کے جسمانی ریمانڈ میں 15 روز کی توسیع کی جائے۔ شہباز شریف کے وکیل نے ریمانڈ میں توسیع کی درخواست کی استدعا کی کہ شہباز شریف پر تاحال جرم ثابت نہیں ہوسکا۔ شہباز شریف نے فاضل جج سے مکالمے کے دوران کہا کہ 3 روز تک میرے پاس تفتیش کے لیے کوئی افسر نہیں آیا۔ عدالت نے شہباز شریف کو مزید 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

نیب لاہور نے 5 اکتوبر کو شہباز شریف کو صاف پانی کیس میں طلب کیا تھا، تاہم اُن کی پیشی پر انہیں آشیانہ اقبال ہاؤسنگ کیس میں کرپشن کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا تھا۔ اگلے روز انہیں احتساب عدالت میں پیش کیا گیا، جہاں جج نجم الحسن نے شہباز شریف کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر قومی احتساب بیورو (نیب) کے حوالے کیا تھا۔

آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم میں لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے سابق ڈائریکٹر جنرل احد چیمہ اور سابق وزیراعظم نواز شریف کے قریبی ساتھی اور سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد بھی گرفتار کیے جاچکے ہیں۔

خواتین کو ہراساں کرنے والوں کو اس کی قیمت بھی چکانی پڑے گی، سیف علی خان

ممبئی: بالی ووڈ کے چھوٹے نواب سیف علی خان نے اپنی ’’می ٹو‘‘کہانی بتاتے ہوئے کہا ہے کہ جو لوگ خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرتے ہیں انہیں اس کی قیمت چکانی پڑے گی۔

سیف علی خان نے ایک انٹرویو کے دوران 25 سال قبل خود پر بیتی ہوئی دکھ بھری کہانی بتاتے ہوئے کہا ہے انہیں بھی ماضی میں ہراسانی کا نشانہ بنایا گیا تھا اس واقعے کو یاد کرکے آج بھی مجھے شدید غصہ آجاتا ہے۔ دوسروں کا درد سمجھنا بہت مشکل کام ہے لیکن میں یہ نہیں بتاؤں گا کہ مجھے کس نے ہراسانی کا نشانہ بنایا تھا  کیونکہ آج یہ اتنا اہم نہیں ہے۔

سیف علی خان نے ہراسانی کا شکار ہونے والے افراد کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ جو لوگ ہراسانی کا شکار ہوئے ہیں وہ انصاف چاہتے ہیں، چھوٹے نواب نے خواتین کو ہراساں کرنے والے افراد کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ جو لوگ خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرتے ہیں انہیں اس کی قیمت چکانی پڑے گی۔

فلم ’’ہمشکل‘‘کی شوٹنگ کے دوران بپاشاباسو اورایشاگپتا نے ہدایت کار ساجد خان پرالزام لگایا تھا کہ ساجد خان نے ان کے ساتھ نازیبا رویہ اختیار کیا تھا اس حوالے سے سیف علی خان کا کہنا تھا کہ مجھے نہیں یاد میرے سامنے ایسا کچھ ہوا ہو کیونکہ اگر میرے سامنے ایسا کچھ ہوتا تو میں اس کی اجازت کبھی نہیں دیتا۔ مجھے ایسا ماحول بالکل پسند نہیں جہاں خواتین کے ساتھ بدسلوکی کی جاتی ہو اس کے ساتھ ہی سیف علی خان نے ان تمام لوگوں کے ساتھ کام نہ کرنے فیصلہ کیا ہے جو جنسی ہراسانی کے الزام میں ملوث ہیں۔

ابوظہبی ٹیسٹ کا پہلا دن ختم، آسٹریلیا کے 2 وکٹوں پر 20 رنز

ابو ظہبی: آسٹریلیا نے ابوظہبی ٹیسٹ میں پہلی اننگز میں کھیل کے اختتام پر 2 وکٹوں کے نقصان پر 20 رنز بنا لیے جب کہ قومی ٹیم پہلی اننگز میں 282 رنز پر آؤٹ ہوگئی تھی۔

ابوظہبی کے شیخ زید اسٹیڈیم میں کھیلے جارہے دوسرے ٹیسٹ میچ میں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر آسٹریلیا کے خلاف پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو درست ثابت نہ ہوسکا اور لنچ سے پہلے ہی آدھی ٹیم صرف 57 رنزپر پویلین واپس لوٹ گئی۔

قومی ٹیم کی جانب سے محمد حفیظ اور فخرزمان نے اننگز کا آغاز کیا لیکن حفیظ چوتھے ہی اوور میں مچل اسٹارک کا شکار بن گئے وہ صرف 4 رنز بناسکے جس کے بعد اظہر علی بیٹنگ کے لیے آئے اور فخرزمان کے ساتھ ملکر 52 رنز کی شراکت قائم کی تاہم اس کے بعد آسٹریلین اسپنر ناتھن لیون نے کسی کی چلنے نہ دی اور صرف 6 گیندوں پر 4 کھلاڑیوں کو پویلین بھیج کر پاکستانی بیٹنگ لائن کی کمر توڑ دی۔

اظہر علی 15 رنز پر ناتھن لیون کا شکار بنے جب کہ اسپنر نے حارث سہیل، اسد شفیق اور بابر اعظم کو کھاتہ کھولنے کی بھی مہلت نہ دی۔ کھانے سے وقفے سے قبل ہی آدھی ٹیم کے صرف 57 رنز پر پویلین لوٹ جانے کے بعد کپتان سرفراز خود بیٹنگ کے لیے آئے اور اوپننگ بلے باز فخرزمان کے ساتھ ملکر محتاط انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے ٹیم کا اسکور آگے بڑھایا۔

فخرزمان اور سرفراز احمد نے چھٹی وکٹ کے لیے 147 رنز کی قیمتی شراکت قائم کی اس دوران دونوں بلے بازوں نے اپنی نصف سنچریاں مکمل کیں، فخرزمان ڈیبیو ٹیسٹ میں ہی نروس نائینٹیز کا شکار ہوگئے اور صرف 6 رنز کی کمی سے سنچری مکمل نہ کرسکے جس کے بعد بلال آصف بیٹنگ کے لیے آئے اور 12 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔

بعد ازاں کپتان سرفراز احمد بھی 6 رنز کی کمی سے اپنی سنچری مکمل نہ کرسکے اور 94 رنز پر لیبسچگنی کا شکار بنے جب کہ یاسر شاہ 28 رنز بناکر پویلین واپس لوٹے۔ آسٹریلیا کی جانب سے ناتھن لیون نے 4، لیبسچگنی نے 3 ، مچل مارش اور مچل اسٹاک نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔

آسٹریلیا نے پاکستان کی پہلی اننگز کے 282 رنز کے جواب میں بیٹنگ شروع کی تو محمد عباس کی نپی تلی بالنگ کے باعث کینگروز کے 2 کھلاڑی صرف 20 کے مجموعے پر پویلین لوٹ گئے، اوپنر عثمان خواجہ 3 اور نائٹ واچ مین پیٹر سڈل 4 رنز پر چلتے بنے جس کے بعد کھیل ختم کردیا گیا۔

پاکستان کی جانب سے دو کھلاڑیوں کو ٹیسٹ کیپ دی گئی ہے، پہلے میچ میں ان فٹ ہونے والے امام الحق کی جگہ فخر زمان کو ٹیسٹ کیپ دی گئی ہے جب کہ وہاب ریاض کی جگہ میر حمزہ کو ٹیسٹ ڈیبیو کا موقع دیا گیا۔

قومی ٹیم کپتان سرفراز احمد، محمد حفیظ، اظہر علی، حارث سہیل، اسد شفیق، بابر اعظم، فخر زمان، بلال آصف، یاسر شاہ، محمد عباس اور میر حمزہ پر مشتمل ہے۔

آسٹریلین ٹیم کی قیادت ٹم پین کررہے ہیں جب کہ دیگر کھلاڑیوں میں عثمان خواجہ، ایرون فنچ، شان مارش، مچل مارش، ٹریوس ہیڈ، لیبسچگنی، مچل اسٹارک، پیٹر سڈل، ناتھن لیون اور جیمز ہولاند شامل ہیں۔

واضح رہے پہلے ٹیسٹ میں آسٹریلین بلے بازوں نے عمدہ بیٹنگ کے ذریعے میچ ڈرا کرکے پاکستان کو یقینی فتح سے محروم کردیا تھا۔

Google Analytics Alternative