Home » Author Archives: Admin (page 2)

Author Archives: Admin

ایران تیل بردار بحری جہاز چھوڑ دے ورنہ سنگین نتائج کے لیے تیار رہے، برطانیہ

لندن: برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ کا کہنا ہے کہ ایران آبنائے ہرمز سے ’غیر قانونی‘ طور پر قبضے میں لیے گئے برطانوی تیل بردار بحری جہاز چھوڑ دے ورنہ سنگین نتائج بھگتنے کے لیے تیار ہوجائے۔

ایران کی جانب سے برطانوی آئل ٹینکر قبضے میں لینے کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی بڑھتی جارہی ہے۔ برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ نے ایران کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ایران نے آئل ٹینکر کو نہ چھوڑا تو اس کے سنگین نتائج بھگتنا ہوں گے، برطانوی حکومت اپنے بحری جہاز کا تحفظ ہر صورت میں یقینی بنائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم سفارتکاری کے ذریعے صورتحال پر قابو پانے کی کوشش کررہے ہیں تاہم ایک چیز واضح ہے کہ یہ معاملہ لازمی حل ہونا چاہیے۔

جمعے کو برطانیہ نے آبنائے ہرمز میں اپنے 2 بحری جہازوں کو ایران کی جانب سے قبضے میں لیے جانے کا دعویٰ کیا تھا تاہم ایران نے صرف ایک برطانوی بحری جہاز کو تحویل میں لینے کی تصدیق کی۔ ایران کا کہنا ہے جمعے کو آبنائے ہرمز میں قبضے میں لیا جانے والا برطانوی آئل ٹینکر بین الاقوامی بحری ضوابط کی خلاف ورزی کر رہا تھا۔

واضح رہے کہ چند روز پہلے برطانیہ نے بھی جبرالٹر میں ایک ایرانی تیل بردار جہاز کو اپنی تحویل میں لے لیا تھا جس کے بعد ایران نے اس کا بحری جہاز رہا نہ کرنے کی صورت میں برطانوی بحری جہاز کو روکنے کی دھمکی دی تھی۔

امریکا میں گرمی کی شدید لہر سے 6 افراد ہلاک، ہیٹ ایمرجنسی کا اعلان

 واشنگٹن: امریکا میں ریکارڈ توڑ گرمی کی شدید لہر میں 6 افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد نیویارک میں ہیٹ ایمرجنسی نافذ کردی گئی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا کے مشرقی اور وسطی علاقوں میں گرمی کی شدید لہر نے لوگوں کو بے حال کر دیا، ساحل سمندر اور سوئمنگ پول پر لوگوں کا جمع غفیر جمع ہوگیا۔ نیو یارک، فلاڈیلفیا اور واشنگٹن میں بھی درجہ حرارت 38 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ چکا۔

Heat Wave America 2

اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے، نیویارک میں 2 درجن سے زائد افراد کو اسپتال لایا گیا ہے، ہیٹ ویو کا شکار ہو کر مجموعی طور پر 6 افراد اپنی جانوں سے گئے جس پر نیویارک کے میئر نے ہیٹ ایمرجنسی نافذ کردی۔

Heat Wave America 6

امریکی محکمہ موسمیات نے گرمی کی اس لہر کو خطرناک قرار دیتے ہوئے متاثرہ علاقوں کے شہریوں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے اور لوگوں کو بلا ضرورت گھر سے باہر نکلنے سے منع کیا ہے۔

Heat Wave America 4

شاہراہوں اور پارکوں میں پائپ کے ذریعے شہریوں پر پانی برسایا جا رہا ہے جب کہ ٹریفک پولیس نے سر ڈھانپے بغیر سفر نہ کرنے کی ہدایت کی ہے ساتھ ہی ہیٹ ویو سے آگاہی کے لیے پمفلٹ بھی تقسیم کیے۔

Heat Wave America 5

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ تپتی دھوپ اور بڑھتا ہوا درجہ حرارت مزید دو دن جاری رہیں گے۔ تمام بڑے شہروں کے میونسپل اداروں کو اس حوالے سے الرٹ جاری کردیا گیا ہے۔

Heat Wave America 3

دہی کھانے کے شوقین افراد اس کے یہ فوائد جانتے ہیں؟

دہی دنیا بھر میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والی مقبول ترین غذاﺅں میں سے ایک ہے۔

بیشتر افراد اسے اصل شکل یعنی کچھ تیکھے ذائقے کے ساتھ استعمال کرتے ہیں، جبکہ یہ فروٹ فلیورز کی شکل میں میٹھا بھی دستیاب ہوتا ہے۔

دہی کو میٹھی یا نمکین لسی کی شکل میں بھی استعمال کیا جاتا ہے جو کہ بہت مقبول، صحت مند اور جسم ٹھنڈا کرنے والا مشروب ہے، اسی طرح کھانوں کے ساتھ رائتے کی شکل میں بھی کھایا جاتا ہے۔

موجودہ دور میں فروزن دہی بھی کافی پسند کیا جارہا ہے۔

اگر آپ جسمانی طور پر پتلے اور اسمارٹ رہنا چاہتے ہیں اور جِم جانے کے لیے وقت نکالنا مشکل لگتا ہے یا کسی مخصوص غذا تک محدود رہنا چاہتے ہیں تو دہی کو کھانا معمول بنالینے سے مقصد حاصل کیا جاسکتا ہے۔

یہ وٹامنز، پروٹین، کیلشیئم، پوٹاشیم، فاسفورس اور زنک سے بھرپور ہوتا ہے۔

مگر بہت کم افراد کو ہی دہی کے متعدد چھپے ہوئے فوائد کا علم ہوتا ہے، درحقیقت یہ ایسی چیز ہے جو ہماری غذا کا لازمی حصہ ہونا چاہئے۔

تو اس کے فوائد کیا ہیں؟

بلڈ پریشر کو مستحکم رکھے

کیا آپ بلڈ پریشر کے اوپر نیچے جانے سے فکر مند ہیں جو صحت مند زندگی کو متاثر کررہا ہے؟ اگر ہاں تو ڈاکٹروں اور محققین کا آزمودہ نسخہ دہی بلڈ پریشر کو مستحکم رکھنے میں مدد دے سکتا ہے۔

نمک کا زیادہ استعمال اکثر اوقات ہمارے جسم کو امراض قلب، گردوں کے مسائل یا فشار خون کے لیے آسان شکار بنا دیتا ہے۔ جسم میں موجود اضافی نمک میں کمی لانے کے لیے مناسب مقدار میں پوٹاشیم کی ضرورت ہوتی ہے۔ 8 اونس دہی میں لگ بھگ 600 ملی گرام پوٹاشیم موجود ہوتا ہے جو ہمارے جسم کے لیے مختلف امراض کے خطرے کو کم کرتا ہے۔

ہڈیاں مضوط بنائے

وقت گزرنے کے ساتھ ہمارے جسم کو متعدد اجزاء کی کمی کا سامنا ہوتا ہے، ان سب میں کمزور ہڈیاں تمام درمیانی عمر کے مردوں اور خواتین کے لیے خطرہ ثابت ہوتی ہیں۔ اس سنگین عارضے کی روک تھام اور اپنی بڑھتی عمر میں بھی چاق و چوبند رہنے کے لیے دہی زبردست کام کرتا ہے جس کی وجہ اس میں شامل وٹامن ڈی اور کیلشیئم ہے۔ نیویارک کے ہیلن ہیز ہاسٹل کے ڈائریکٹر جیری نیویز کے مطابق اگر آپ کو جوڑوں میں درد یا اکڑن کا سامنا ہو تو دہی کو اپنی روزمرہ کی غذا کا حصہ بنانے کی کوشش کریں، آپ خود ہی فرق محسوس کریں گے۔

نظام ہاضمہ کے مسائل دور کرے

دہی کا ایک اور فائدہ نظام ہاضمہ کو بہتر بنانا ہے۔ دہی میں ایک خاص جز ‘پروبائیوٹک’ شامل ہوتا ہے جس کے بارے میں ہوسکتا ہے آپ نے کسی نیوٹریشن سے سنا بھی ہو۔ ایک نیوٹریشن ایکسپرٹ روبن پلاٹکن کے مطابق دہی میں شامل یہ جز غذا کو زیادہ بہتر طریقے سے ہضم ہونے میں مدد دیتا ہے اور ہم صحت مند رہتے ہیں۔

جلد صاف کرے

ہموار جلد کے لیے مختلف کریموں اور لوشن استعمال کرکے بیزار ہوچکے ہیں؟ تو آپ کو حیرت ہوگی کہ دہی بھی شفاف اور ہموار جلد کے لیے زبردست نسخہ ثابت ہوسکتا ہے اور مہنگی کاسمیٹکس سے آپ کی جان بھی چھوٹ جائے گی۔

آپ کو چار چمچ دہی کی ضرورت ہوگی جس میں دو سے تین قطرے بادام یا زیتون کے تیل اور ایک چائے کے چمچ شہد کو شامل کرنا ہوگا۔ ان چیزوں کو اچھی طرح ملائیں اور چہرے پر پندرہ منٹ کے لیے لگارہنے دیں۔ اپنے چہرے کو دھونے کے بعد آپ خود شفاف جلد کو محسوس کریں گے جو جھریوں اور تیل سے پاک ہوگی۔

بڑھتی بھوک پر قابو پانے میں مدد

واشنگٹن یونیورسٹی کی ایک تحقیق کے مطابق دہی ہمارے اندر زیادہ کھانے کی خواہش کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے، جبکہ یہ ہمارے اندر توانائی کا احساس بھی بڑھاتا ہے۔

جسمانی دفاعی نظام بہتر بنائے

ویانا یونیورسٹی کی ایک تحقیق میں یہ بات ثابت ہوئی کہ دہی ہمارے جسمانی دفاعی نظام کے افعال کو بہتر بنانے کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔ یہ خواتین کے ٹی سیلز کو مضبوط بناتا ہے، ٹی سیلز خون کے سفید خلیات کا حصہ ہوتے ہیں اور انفیکشن یا امراض کے خلاف دفاع کرتے ہیں۔

نرم بال

بالوں کی نگہداشت کے لیے دہی زبردست ہے، یہ خشکی، سر کی خارش وغیرہ کا خاتمہ کرتا ہے، اس کے نتیجے میں بال نرم اور چمکدار ہوجاتے ہیں۔ دہی کا بہترین ماسکے بنانے کے لیے آپ کو چار چمچ دہی، ایک چائے کا چمچ مسٹرڈ یا ناریل کا تیل اور آدھے انڈے کی ضرورت ہوتی ہے۔ ان سب چیزوں کو ملائیں اور بالوں پر لگائیں۔ اس مکسچر کو بالوں پر 30 منٹ تک کے لیے لگا رہنے دیں اور پھر دھو لیں۔ آپ کے بال نرم اور چمکدار ہوجائیں گے۔

حکومت نے مشکل مگر ضروری فیصلے کیے ہیں

جن ممالک میں عوام اپنے حکمرانوں کو جوابدہی کے کٹہرے میں لانے کے خلاف سڑکوں پر نکلنے اور احتجاج کرنے کی کھلے عام باتیں کرنا شروع کردیں اور اپنی عدلیہ پر سوالیہ انگلیاں اْٹھانی شروع کردیں تو کیا ایسی قوموں کو جدید سائنسی دنیا میں مہذب اور متمدن قراردیا جاسکتا ہے اوریہی نہیں بلکہ کیا ایسی اقوام کے چند افراد یا گروہ جو بدترین کرپشنز کے الزامات میں پکڑے جانے والے اپنے پسندیدہ سیاسی قائدین کی عدالتوں میں پیشیاں بھگتنے کے شرمناک مواقعوں پراْن کے گرد جمع ہوجانے کی ذلت و خواری اور ندامت بھری ریتوں اور روایات کو بڑھوادینے کی بُری عادتیں اپنا لیں کیا وہ سیاسی اخلاقیات کے زمرے میں معتبر کہلائے جانے کے لائق ہوسکتے ہیں ;238; چند ماہ پیشتر پاکستان میں گزشتہ ستر برسوں کے بعد ہماری عمروں کے لوگوں نے پہلی بار اپنی آنکھوں سے اپنے ملک میں یہ خوش آئند نظارہ دیکھا ہے کہ جن خاندانوں نے چالیس اور بیس برسوں تک پاکستان کی مرکزی حکومت میں اور پنجاب اور سندھ کی صوبائی حکومتوں پر مسلسل حکمرانی کی آج کل وہ ملک کی عدالتوں میں مالی کرپشنز کیسوں میں تفتیشی ریمانڈ پر سلاخوں کے پیچھے ہیں کہیں اْن کو باقاعدہ مجرم تسلیم کر لیا گیا ہے اور وہ جیلوں میں بند پڑے ہیں ، گزشتہ چالیس برسوں سے ملکی قانون ساز اداروں میں یہی لوگ باربار الیکشن جیت کر آتے رہے، ملکی آئین اور قانون سے مجرمانہ کھلواڑ کرتے رہے، اعلیٰ ترین سیاسی آئینی عہدوں پر فائز رہنے والوں کے لئے قانون کے شکنجوں میں استثنائیٰ سقم کی مشگافیاں بناتے رہے یوں ملکی جیلیں بھی ان کےلئے محلات سے کم نہیں رہیں آخر عوام کب تک جمہوری سیاست کے نام پر یہ مظالم برداشت کرتے یوں عوام کے شعور نے جونہی ترقی کی تو جولائی سن دوہزار اْٹھارہ کے عام انتخابات نے لگ بھگ تین چار ادوار کے لگاتار انتخابات کا یکدم سے پانسہ ہی پلٹ دیا اور پاکستان کے نوجوانوں میں مقبولیت پانےوالے نئے ابھرتے ہوئے سیاسی قائد عمران خان کی سحر انگیز اور پُرکشش شخصیت نے اُن کی سیاسی جماعت پاکستان تحریک انصاف کو ملکی پارلیمنٹ میں عددی برتری سے جیتادیاجس کے نتیجے میں دنیا بھر کے سیاسی مبصرین اور تجزیہ نگاروں نے پاکستان کے اقتدار اعلیٰ پر ایک بالکل نئے چہرے کو پاکستان کے وزیراعظم کے عہدے پر فائز ہوتے دیکھا نئے وزیراعظم عمران خان نے اپنی بیس سالہ سیاسی جدوجہد میں اپنے عملی کردار کے ذریعے سے پہلے یہ ثابت کرکے دیکھا دیا تھاکہ وہ اپنے فیصلہ سازی میں میرٹ پر سختی سے کار بند رہنے پرکوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے اور ہمیشہ اپنے آپ کو ملکی قانون کے سامنے جوابدہ بنائیں گے ملکی خزانے کو عوام کی امانت کے حقیقی تصورکو عام کیا جائے گا،قومی خزانے کی ایک ایک پائی کا برابر حساب رکھا جائے گا اورخاص طورپر پاکستان میں جاری جمہوریت میں وراثتی اورحادثاتی لیڈر شپ کی فرسودہ روایات کو ختم کردیا جائے گا ایسے موقعوں پرایک انتہائی شرم اور ذلت کا یہ مقام بھی ہ میں اورآپ کو دیکھنا پڑرہا ہے کہ ماضی میں جن کرپٹ زورآوروں نے اپنی بدمعاش طینت ذہنیت کی فطرت پر مبنی حکمرانیوں کے دور میں جہاں بیورکریٹوں کی کھیپ کی کھیپ تیار کی تھی جو آج موجودہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کےلئے ایک بڑی چیلنج بنی ہوئی ہے وہاں فیک نیوز اور جعلی خبریں گھڑنے والے بکاو قلمکاروں کی ایک بھرمار بھی ان کے پاس بطور قلم بردار کھڑی نظرآتی ہے جو وزیراعظم عمران خان اور اْن کے حکومتی فیصلوں کو نیچا دکھانے کےلئے اپنے طور پر وپیگنڈامہم چلا ئے ہوئے ہے گزشتہ ماہ(جون) میں شاءع ہونےوالے ہفتہ وار جریدے ‘‘فرائی ڈے ٹائمز’’ نے اپنے ایڈیٹوریل میں سال دوہزار انیس ۔ بیس کے مالیاتی میزانئیے پر تبصرہ کرتے ہوئے اپنے جریدے مالک ایڈیٹر کے دل کے پھپھولوں کو پھوڑنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی ،یہ کون ہیں سب جانتے ہیں وقت آنے پر راءٹسٹ بن جاتے ہیں لبرل بن جاتے ہیں قوم پرست اور سیکولر بن جاتے ہیں جس انگریزی جریدے کی بات بیان کی گئی وہ کبھی ماضی میں ’امن کی آشا‘کے گلوکار بھی رہے وہ صاحب کیا کیا نہیں رہے ;238; آج کل وہ ایک ہفت روزہ جریدے کے ایڈیٹر ضرور ہیں ، پی سی بی کے چیئرمین اب وہ رہے نہیں اپنے تین ماہ کی عارضی وزارت اعلیٰ ‘کیئر ٹیکروزارت اعلیٰ کے دوران ‘پینتیس پنکچروں ’ کے نام سے جتنی بہت بدنامی اْنہوں نے کمانی تھی سو کمائی جس کا نقدر آور اجر بھی اْنہیں خوب ملا اور گھر میں اب صوبائی اسمبلی پنجاب کی ایک نشست بھی ہاتھ آگئی بحیثیت صحافی ہونے کے ناطے قلم اْن کا ایک آزمودہ ہتھیار تسلیم، مگر قلم کے اپنے کچھ دیانت وصداقت کے تقاضے بھی ہوتے ہیں یقینا ہر اہم قومی وبین الا اقوامی مسئلہ پراْنہیں اپنے لکھنے کی ذمہ داری ضروری پوری کرنی چاہیئے مگر سچائی کا دامن چھوڑے بغیر اْنہیں پاکستانی قوم کو گمراہ کرنے سے اپنے قلم کی روانی کو روکنا ہوگا ہم مانتے ہیں کہ نواز عہد میں اْن کے نام سے ساتھ پینتیس پنکچروں کا بڑا شورہوا تھا اور یوں اْن کے دل میں پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کے خلاف چھپا پوا بغض وعناد اور حسد کی رقابت کی وہ آگ ابھی تک اْن کے اندریقینا سلگ رہی ہے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان الا ماشا اللہ اب ملک کے وزیراعظم کے مقتدر عہدے پر فائز ہیں اور اْن کی ٹاورنگ قائدانہ شخصیت سے حسد کرنے والوں کی ملک میں کوئی کمی بھی نہیں اْن کے حاسد آج کل اْن کے خلاف بولنے اور لکھنے پر ایکا کیئے ہوئے خاموش رہنا اْن کی فطرت نہیں ہے عمران خان کی ذات سے اندروانی بغض و حسد کا کینہ ایسوں کے دلوں میں کنڈلی مار ہمہ وقت پھنکارتا ہوا دکھائی دیتا ہے کہتے ہیں کہ حاسد اپنے محسود کو ہمیشہ اپنے زہریلے طنز کے نشانے پر لیئے رہتا ہے اب اْن کے سامنے سال دو ہزار انیس ۔ بیس کا مالی بجٹ آگیا ہے ویکلی فرائی ڈے ٹائمز کے ایڈیٹوریل کا ذکر اس لیئے ضروری سمجھیں وہ کہتے ہیں کہ موجودہ حکومت کا یہ بجٹ جمہوری تقاضوں کی عکاسی نہیں کرتا یہ بجٹ ملٹری اسٹیبلشمنٹ نے سویلین بیورکریسی کو ڈکٹیٹ کرایا ہے، جو انتہائی سخت اور عوام دشمن بجٹ ہے ‘‘خان مخالفت’’ میں اپنی آنکھیں بند رکھنے والوں کے مطابق عوام کواس بجٹ کے مندرجات کے اعداد وشمار کے چکروں میں اکسایا جارہا ہے کہ ایف بی آر نے موجودہ مالی سال کے بجٹ میں سے تقریباً چالیس فیصد جو ایک اعشاریہ پانچ کھرب روپے بنتے ہیں آئندہ بارہ ماہ میں عوام سے زبردستی ٹیکسوں کی صورت میں وصول کیئے جائیں گے یعنی گزشتہ بجٹ سے ٹیکسوں کی مد میں جانے والی مذکورہ رقم زائد ہوگی اور اسکے باوجود ہمارا جی ڈی پی تین اعشاریہ تین فیصد سے اور گھٹ جائے گا حکومت مخالفت سیاسی کرپشنز کے حمایتی کہتے ہیں کہ حکومت کا مسئلہ دوچیزوں سے ہے یعنی جن اخراجات کا تذکرہ خصوصی طور پربجٹ میں کیا گیا ہے جن میں دفاعی اخراجات اور قرضوں پر سود کی ادائیگی کی بات کی گئی ہے اس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا گیا کہ سودکی ادائیگی پر حکومت کو جو ریونیو ملے گا اْس پر تو پچاس فیصد سے زائد رقم خرچ ہوجائے گی جبکہ دفاعی اخراجات پر چونتیس فیصد خرچ آئے گا یوں یہ موجودہ حکومت عوام کا اعتماد بالکل کھو بیٹھے گی جوحکومت گزشتہ بارہ ماہ میں اپنے ٹارگٹ حاصل نہیں کرپائی اور جوحکومت آئی ایم ایف کے پروگرام کو نوماہ تک ٹالتی رہی پھر یوٹرن لیا گیا گزشتہ دس برسوں کی ماضی کی سابقہ دوادوار کی حکومتوں نے عالمی اداروں سے جو اربوں ڈالر قرضے لئے وہ ملک میں کن منصوبوں پر خرچ کیئے گئے اس کی تفتیش کےلئے سویلین اور جمہوری نمائندوں کے علاوہ ملکی افواج کے سربراہ کو شامل کرکے ایک ٹاسک فورس تشکیل دی گئی ہے فرائی ڈے ٹائمزنے اسی ٹاسک فورس کے بارے میں لکھا ہے کہ وزیراعظم پاکستان کی سربراہی میں قائم ہونے والی ٹاسک فورس میں عالمی اداروں کے نمائندے بھی شامل کیئے گئے ہیں اور یہ جھوٹ ہے اور سچ یہ ہے کہ قوم پوچھنے کا حق رکھتی ہے نیشنل مالیاتی تفتیشی ٹاسک فورس کو بتایا جائے کہ عالمی قرضوں کے اخراجات ملک میں کہاں لگائے گئے;238; عوام کی اکثریت کو قومی ٹیکس نیٹ میں لانا ایک قومی فریضہ ہے ملک میں جمہوری سسٹم رواں دواں ہے ریاستی جبرکی باتیں ،میڈیا اورعدلیہ پر دباءورکھنے جیسی احمقانہ سوچ فاشسٹ طرز کی آمرانہ افواہوں کو پھیلانے والے پاکستان کی بنیادوں کو کھوکھلی کرنے کی ناکام کوششیں کررہے ہیں ملک میں نہ تو ترکی اور مصرجیسا جبروقہر کا کوئی مالی سسٹم آرہا ہے اور نہ ہی ریاستی حساس ادارے رواں جمہوری نظام کے طے کردہ آئینی حدود وقیود کو پار کریں گے پاکستانی مسلح افواج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے چندروز پیشتر نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی میں ماہرین اقتصادیات کے معززین سے خطاب کرتے ہوئے یہ واضح کیاتھاکہ مسلح افواج نے رضاکارانہ طور پر دفاعی بجٹ میں سالانہ اضافہ لینے سے انکار کیا ’اور یہ واحد قدم نہیں جو ہم معیشت کی بہتری کےلئے اٹھا رہے ہیں جنرل قمر جاوید باجوہ کے مطابق مالیاتی بدانتظامی کے باعث پاکستان مشکل معاشی حالات کا شکار ہے انہوں نے کہا کہ پچھلی حکومتیں اس حوالے سے تامل کا شکار رہیں انہوں نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ حکومت نے دور رس فوائد کےلئے مشکل مگر ضروری فیصلے کیے ہیں اور ہم بھی اپنے عملی اقدامات کے ذریعے اپنا کردار ادا کر رہے ہیں آرمی چیف نے کہا کہ مشکل وقت میں کوئی فرد تنہا کامیاب نہیں ہوسکتا اس کیلئے قوم کا متحد ہونا ضروری ہے انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کے مشکل فیصلوں کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کےلئے پاکستانی قوم کو مل کر اپنا مثبت کردار ادا کرنا چاہیے ۔

بریسٹ کینسر کے علاج کا سب سے آسان اور سستا طریقہ دریافت

امریکی ماہرین نے بریسٹ کینسر کے علاج کے لیے ایک نیا اور سب سے آسان اور سستا طریقہ دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

امریکی یونیورسٹی ’جانز ہاپکنز‘ کے ماہرین نے بریسٹ کینسر کے علاج کے لیے کولڈ ڈرنکس سمیت دیگر مشروبات میں استعمال ہونے والے کاربن ڈائی آکسائڈ گیس کو استعمال کرکے علاج کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

سائنس جرنل ’پلوس ون‘ میں شائع رپورٹ کے مطابق جانز ہاپکنز یونیورسٹی کے ماہرین نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے ایک ایسا آلہ تیار کیا ہے جس میں کاربن ڈائی آکسائڈ کی بھاری مقدار موجود ہوتی ہے اور یہ آلہ بریسٹ کینسر کے ٹیومر کو ختم کرنے میں مدد دیتا ہے۔

ماہرین کے مطابق ان کی جانب سے تیار کیے گئے آلے سے بریسٹ کینسر کے ٹیومر ختم نہیں ہوتے بلکہ ٹیومر جم جاتے ہیں جو آہستہ آہستہ خود بخود ختم ہوجاتے ہیں۔

کاربن ڈائی آکسائڈ سے کینسر کے ٹشوز کو منجمند کرکے وائرس کو ختم کیا جا سکتا ہے، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک
کاربن ڈائی آکسائڈ سے کینسر کے ٹشوز کو منجمند کرکے وائرس کو ختم کیا جا سکتا ہے، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک

ماہرین کا کہنا تھا کہ چوں کہ کاربن ڈائی آکسائڈ دنیا بھر میں آسانی سے دستیاب ہوتی ہے اور اس گیس کو چیزوں کو گرم کرنے سمیت ٹھنڈا کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے اور اسی گیس کی بدولت انسان اور پودوں کو سانس لینے میں آسانی ملتی ہے، اس لیے اس گیس کی مدد سے بریسٹ کینسر کا علاج ممکن ہے۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ انہوں نے کاربن ڈائی آکسائڈ گیس کی بھاری مقدار کو آلے میں شامل کرکے تجربات کیے اور بریسٹ کینسر کی شکار خواتین کے ٹیومر کو منفی سینٹی گریڈ کی ٹھنڈک سے منجمد کیا گیا۔

ماہرین نے دعویٰ کیا کہ بریسٹ کینسر کے ٹیومرز کو کاربن ڈائی آکسائڈ کی مدد سے انتہائی منفی سینٹی گریڈ کی ٹھنڈک سے منجمند کرکے کینسر کے جراثیم کو کمزور کیا جا سکتا ہے جو بار بار منجمد کیے جانے کے بعد خود بخود ختم ہوجاتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا تھا کہ اس نئے طریقہ کار سے کم آمدنی اور غریب ممالک کی خواتین کو فائدہ پہنچے گا اور وہ انتہائی کم خرچ پر کینسر جیسے موضی مرض کا علاج کروا سکیں گی۔

اگرچہ ماہرین نے اس طریقے کو درست قرار دیا، تاہم انہوں نے تجویز دی کہ ابھی اس پر مزید تحقیق کرکے کام کیا جا سکتا ہے اور اس طریقے میں مزید آسانیاں پیدا کی جا سکتی ہیں۔

اس طریقے سے غریب ممالک کی خواتین کو فائدہ ہوگا، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک
اس طریقے سے غریب ممالک کی خواتین کو فائدہ ہوگا، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک

ڈی آئی خان میں پولیس چوکی پر فائرنگ اوراسپتال میں خودکش دھماکا، 6 اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید

ڈی آئی خان: دہشتگردوں کی پولیس چوکی پر فائرنگ اور ڈی ایچ کیو اسپتال میں خودکش دھماکے کے نتیجے میں 6 اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید جب کہ متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان کی ڈیرہ کوٹلہ سیدان پولیس چیک پوسٹ پر موٹر سائیکل سوار دہشت گرد فائرنگ کرکے فرار ہوگئے۔ فائرنگ کے نتیجے میں 2 اہلکار شہید ہوگئے۔ شہید اہلکاروں کی شناخت کانسٹیبل جہانگیر اور کانسٹیبل انعام کے نام سے ہوئی، جہانگیر کا اعجاز آباد مریالی جب کہ انعام کاتعلق کورائی سے ہے۔

فائرنگ کے بعد شہید پولیس اہلکاروں کی لاشیں ڈسٹرکٹ اسپتال لائی گئیں تو اسپتال کے ٹراما سینٹرکے گیٹ پردھماکا ہوگیا ۔ جس کے نتیجے میں مزید 4 اہلکار شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔ بڑی تعداد میں زخمیوں کے باعث کئی کو کمبائن ملٹری اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ سی ایم ایچ ذرائع کا کہنا ہے کہ اسپتال میں 22 زخمی اور 5 لاشیں لائی گئی ہیں۔

واقعے کے بعد اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے جب کہ پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکاروں کی بڑی تعداد علاقے میں تعینات کردی گئی ہے۔ بم ڈسپوزل اسکواڈ کے عملے نے مزید دھماکا خیز مواد کی موجودگی کے خطرے کے پیش نظر سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

پولیس کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق ٹراما سینٹر کے دروازے پر ہونے والا دھماکا خود کش ہوسکتا ہے۔ دوسری جانب ذرائع نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا ہے کہ دھماکا خودکش تھا اور حملہ آور لڑکی تھی اور اس کی عمر کم و بیش 15 سال تھی۔

قبائلی عوام نے عوامی حقوق کےنام نہاد ضامنوں کی ضمانتیں ضبط کروا دیں، فردوس عاشق

 اسلام آباد: معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ قبائلی عوام نے عوامی حقوق کے نام نہاد ضامن بننے والوں کی ضمانتیں ضبط کروا دی ہیں۔

قبائلی اضلاع کے صوبائی انتخابات میں کامیابی پر اپنی ٹوئٹ میں فردوس عاشق اعوان نے قبائلی اضلاع میں پر امن انتخابات کے انعقادپر پوری قوم کو مبارک باد دی۔ انہوں نے کہا کہ امن کی یہ جیت نئے پاکستان میں استحکام پاکستان کی جانب اہم پیشرفت ہے۔ملکی تاریخ میں پہلی بار تبدیلی کے عمل نے قبائلی علاقوں کے سنگلاخ پہاڑوں پر جمہوریت کے خوبصورت پودے کی نمو ممکن کی۔ اپنی بہادر مسلح افواج اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں جن کی لازوال قربانیوں سے ملک کا امن لوٹا۔

معاون خصوصی نے کہا کہ ایک جانب تاریخ رقم ہو رہی تھی، قبائلیوں کو ان کے صبر اور مصائب کا پھل آئینی و جمہوری حقوق کی صورت مل رہا تھا تو دوسری جانب جمہوریت اور آئینی حقوق کا رونا رونے والے اپنے ذاتی مفادات اور اثاثے بچاؤ بیٹھک لگا کر بیٹھے تھے۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ عوامی حقوق کے نام نہاد ضامن بننے والوں کی قبائلی عوام نے ضمانتیں ضبط کروا دیں۔ کل قبائلی اضلاع میں ایک تاریخ رقم ہوئی مگر ان میں سے کسی کو توفیق نہ ہوئی کہ جمہوری عمل کی کامیاب تکمیل پر دو لفظ ہی بول دیتے۔ان کی جمہوریت کا مطلب صرف اور صرف ذاتی مفادات کا تحفظ اور اپنی آئندہ نسلوں کو قوم پر مسلط کرنا ہے۔

حاملہ ہونے کے باوجود محسن عباس نے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا، اہلیہ کا الزام

کراچی: فلم ’’نامعلوم افراد‘‘ سے شہرت حاصل کرنے والے اداکار محسن عباس حیدر کی اہلیہ فاطمہ نے الزام عائد کیا ہے کہ محسن نے انہیں بدترین جسمانی اور ذہنی تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔

اداکاروگلوکار محسن عباس حیدر فلموں کے علاوہ سوشل میڈیا پر بھی کافی سرگرم رہتے ہیں اور اپنی زندگی سے جڑی خوشیاں اور غم اپنے چاہنے والوں کے ساتھ شیئر کرتے رہتے ہیں۔ کچھ عرصہ قبل انہوں نے سوشل میڈیا کا استعمال کرتے ہوئے بتایا کہ وہ ڈپریشن سے گزررہے ہیں۔ تاہم اپنی زندگی کے تمام معاملات لوگوں سے شیئر کرنے والے اداکار محسن عباس کی اہلیہ نے ان کا بالکل منفرد روپ لوگوں کو بتایا ہے جس سے آج تک کوئی واقف نہیں تھا۔

محسن عباس حیدر کی اہلیہ فاطمہ سہیل نے فیس بک پر طویل پوسٹ میں اپنے شوہر کے ظلم کی داستان بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے شوہر نے نہ صرف انہیں جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا بلکہ ذہنی ٹارچر بھی کیا اوراب وہ یہ ظلم برداشت کرتے کرتے تھک گئی ہیں۔

فاطمہ نے لکھا ’’ظلم برداشت کرنا بھی گناہ ہے‘‘، میں فاطمہ ہوں محسن عباس حیدر کی بیوی۔ 26 نومبر 2018 کو مجھے پتہ چلا کہ میرا شوہر مجھے دھوکا دے رہا ہے اور جب میں نے اس بارے میں اس سے بات کی تو بجائے شرمندہ ہونے کے اس نے مجھے مارنا شروع کردیا۔

فاطمہ نے لکھا محسن نے اس بات کا بھی احساس نہیں کیا کہ میں اس وقت حاملہ تھی اورمجھے بدترین تشدد کا نشانہ بنایا، اس نے میرے بال کھینچے، مجھے فرش پر گرادیا، مجھے لاتیں ماریں اور میرے چہرے پر گھونسے بھی مارے اس کے بعد مجھے دیوار میں دے مارا۔ تاہم میں اپنے گھر والوں کے بجائے اپنی دوست کے ساتھ اسپتال گئی کیونکہ میں بہت پریشان تھی۔

ڈاکٹر نے بھی میرا چیک اپ کرنے سے انکار کردیا کیونکہ یہ پولیس کیس تھا لیکن میں نے پولیس میں شکایت درج نہیں کرائی کیونکہ مجھے یہ سب ہضم کرنے کے لیے تھوڑا وقت چاہئیے تھا، الٹراساؤنڈ کے بعد جب مجھے پتہ چلا کہ میرا بچہ محفوظ ہے تو مجھے سکون ملا اور اپنے بچے کے لیے میں نے اس شادی کو ایک اور موقع دینے کا فیصلہ کیا۔

20 مئی 2019 کو جب میں نے بیٹے کولاہورمیں جنم دیا اس وقت میرا شوہر کراچی میں اپنی گرل فرینڈ نازش جہانگیر کے ساتھ رنگ رلیاں منارہاتھا، بچے کے دنیا میں آنے کے دو دن بعد محسن صرف تصاویر لینے کے لیے آیا تاکہ پبلسٹی حاصل کرسکے، بعد میں اس نے ڈپریشن والی پوسٹ کی تاکہ لوگوں کی توجہ حاصل کرسکے۔ یہاں تک کہ اس نے یہ بھی نہیں دیکھا کہ اس کا بیٹا کیسا ہے اور تصاویر سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنے کا ڈراما رچایا صرف پبلسٹی حاصل کرنے کے لیے۔

17 جولائی کو جب میں نے اس سے ہمارے بیٹے کی ذمہ داری لینے کے لیے کہا تو اس نے ایک بار پھر مجھے مارنا شروع کردیا لیکن اب بس! میں یہ پوسٹ کررہی ہوں ان تمام لڑکیوں کے لیے جو اس طرح کے تشدد کا نشانہ بنتی ہیں آپ کے لیے کوئی نہیں آئے گا آپ کو اپنے لیے خود آگے آنا ہوگا۔

مجھے نہیں معلوم میں اکیلے اپنے بچے کی پرورش کیسے کروں گی لیکن مجھے معلوم ہے اللہ میرے ساتھ ہے۔ میں جسمانی اور زبانی تشدد اور طلاق کی دھمکیوں سے تنگ آچکی ہوں۔ اس کے بعد فاطمہ نے محسن کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا مسٹر محسن میں تمہیں عدالت میں ملوں گی۔

واضح رہے کہ محسن عباس حیدر’’نامعلوم افراد‘‘، ’’نامعلوم افراد2‘‘،’’لوڈویڈنگ‘‘ جیسی فلموں میں کام کرچکے ہیں جب کہ ان کی حال ہی میں فلم’’باجی‘‘ریلیز ہوئی ہے۔

 

Google Analytics Alternative