Home » Author Archives: Admin (page 3030)

Author Archives: Admin

بابر اعظم لیجنڈ بیٹسمین,اہم اعزاز اپنے نام کرلیا۔

پاکستانی بیٹسمین بابر اعظم نے ویسٹ انڈیز کے خلاف مسلسل تیسری سنچری بنا کر  لیجنڈ بیٹسمین ظہیر عباس اور سعید انور کے بعد اہم اعزاز اپنے نام کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق ابوظہبی میں پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے مابین تین ایک روزہ میچوں کی سیزیز کے آخری میچ میں بابر اعظم نے مسلسل تیسری سنچری اسکور کرکے لیجنڈ بیٹسمین ظہیرعباس اور سعید انور کے بعد ایک روزہ میچ میں سنچری بنا کر تیسرے پاکستانی بیٹسمن ہونے کا اعزاز اپنے نام کیا۔

سیریز کے آخری میچ میں پاکستان نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو کپتان اظہر علی اور ساتھ آئے بیٹسمن شرجیل خان نے جارحانہ انداز میں کھیل پیش کرتے کیا تاہم 85 رنز کے مجموعی اسکور پر شرجیل خان 38 کے اسکور پر پویلین روانہ ہوگئے۔

 بابر اعظم کپتان کا ساتھ دینے آئے تو اظہر علی نے جارحانہ انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے سنچری اسکور کی تاہم بابر اعظم کا بلا بھی بہترین طریقے سے چلتا رہا اور ٹیم کے مجموعی اسکور میں اضافے کا سبب بنا۔ دو میچوں میں سنچری اسکور کرنے کے بعد کالی آندھی کے خلاف تیسرے میچ میں بھی بابر اعظم نے عمدہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے سنچری اسکور کی جس کے بعد وہ ایک روزہ میچ میں تین سنچریاں کرنے والے دنیائے کرکٹ کے آٹھویں اور پاکستان کے تیسرے بیٹسمن بن گئے۔

علاوہ ازیں بابر اعظم 3 میچوں میں لگاتار سنچریاں بنانے والے دنیا کے دوسرے بیٹسمین بھی بن گئے، قبل ازیں یہ ریکارڈ جنوبی افریقہ کے بلے باز کوئینٹن ڈی کوک کے پاس تھا جنہوں نے بھارت کے خلاف یہ ریکادڑ بنایا تھا۔

پاکستانی بلے باز نے ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلے میچ میں 120، دوسرے میں 123 اور تیسرے میچ میں 117 رنز کی کامیاب اننگز کھیلی

ٹی ٹوئنٹی کے بعد ون ڈے سیریز میں کلین سویپ,مزیدجانئیے

پاکستان نے ٹی ٹوئنٹی کے بعد ون ڈے سیریز میں بھی ویسٹ انڈیز کے خلاف تین صفر سے فتح کے نتیجے میں آئی سی سی کی عالمی درجہ بندی میں آٹھویں پوزیشن بھی حاصل کر لی ہے۔

بدھ کو ابوظہبی میں کھیلے گئے تیسرے اور آخری ون ڈے انٹرنیشنل میں پاکستان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف 136 رنز سے کامیابی حاصل کی۔

 

اظہرعلی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو ان کی اور بابراعظم کی سنچریوں کی بدولت پاکستان نے 50 اوورز کا اختتام 308 رنز چھ کھلاڑی آؤٹ پر کیا۔

آخری چار میچوں میں یہ تیسرا موقع ہے کہ پاکستان نے تین سو یا زائد رنز سکور کیے ہیں۔

ویسٹ انڈیز کی ٹیم سیریز میں مسلسل تیسری مرتبہ دوسری بیٹنگ کرتے ہوئے ہدف تک پہنچنے میں ناکام رہی۔ اس مرتبہ اس کی ہمت 44 اوورز میں صرف 172رنز پر آکر ٹوٹ گئی جو اس سیریز میں اس کا سب سے کم سکور بھی ہے۔

پاکستان کی اننگز میں شرجیل خان اور اظہرعلی نے ٹیم کو 85 رنز کا آغاز فراہم کیا۔

یہ پاکستان کی 15 اننگز میں پہلی نصف سنچری اوپننگ شراکت تھی لیکن شرجیل خان ایک بار پھر اپنی اننگز کو بڑے سکور میں تبدیل کرنے سے پہلے ہی 38 رنز بناکر آؤٹ ہوگئے۔

اظہرعلی نے گذشتہ دو ناکام اننگز کا غصہ ویسٹ انڈین بولنگ پر اتارتے ہوئے تیسری ون ڈے سنچری سکور کر ڈالی۔

وہ ون ڈے انٹرنیشنل میں تین سنچریاں بنانے والے پہلے پاکستانی کپتان بنے ہیں۔ ان سے قبل شاہد آفریدی اور انضمام الحق نے کپتان کی حیثیت سے دو دو سنچریاں بنائی تھیں۔

اظہرعلی آٹھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 101 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

بابراعظم نے اپنی زبردست فارم کو برقرار رکھتے ہوئے سیریز میں تیسری سنچری سکور کی۔ وہ ظہیرعباس اور سعید انور کے بعد تیسرے پاکستانی بیٹسمین بن گئے ہیں جنھوں نے ون ڈے انٹرنیشنل میں تین لگاتار اننگز میں سنچریاں سکور کی ہیں۔

بابراعظم آٹھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے117 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

انھوں نے اس سیریز میں 360 رنز بنائے ہیں جو تین میچوں کی دو طرفہ سیریز میں دنیا کے کسی بھی بیٹسمین کے سب سے زیادہ رنز ہیں۔

ٹوائلٹ میں جانے پر کھلاڑی کو معطل, مزیدجانئیے

نیوزی لینڈ کی رگبی ٹیم ‘آل بلیک’ نے ضابطوں کی پاسداری نہ کرنے پر بطور سزا اپنے معروف سکرم ہاف کھلاڑی ارون سمتھ کو ایک میچ کے لیے معطل کر دیاا ہے۔

ارون کو کرائسٹ چرچ کے ایئرپورٹ پر ایک خاتون کے ہمراہ ٹوائلٹ کیوبکل میں جاتے دیکھا گیا تھا جس کے بعد انھیں معطل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

وہ جنوبی افریقہ کے ساتھ ڈربن میں ہونے والے اگلے میں میں حصہ نہیں لے سکیں گے۔

آل بلیک کے ہیڈ کوچ سٹیو ہینسن کا کہنا تھا کہ سمتھ خود بھی نادم ہیں اور انھیں بری طرح مایوسی ہوئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ 27 سالہ سکرم ہاف کھلاڑی کو اپنی حرکت پر ایسا لگ رہا ہے جیسے انھوں نے اپنی ٹیم، خاندان اور ساتھی کا سر جھکا کر دیا ہو۔

ہینسن نے کہا: ‘ انھوں نے اس واقعے کے بعد ذاتی معاملات کے حل کے لیے گھر جانے کے لیے کہا تھا اور ہمیں اس بارے میں ان کی حمایت کرنے میں خوشی ہورہی ہے۔’

ہیڈ کوچ کا کہنا تھا کہ ٹیم کے سینیئر کھلاڑیوں نے متفقہ طور انھیں یہ سزا دینے کا فیصلہ کیا تھا۔

ارون سمتھ نے سنہ 2012 میں اپنے کریئر کے آغاز سے لے کر اب تک نیوزی لینڈ کے لیے 54 ٹیسٹ میچ کھیلے ہیں۔ اس سے قبل بھی ایک بار ضابطے کی خلاف ورزی کرنے پر انھیں کھیل سے باہر کر دیا گیا تھا۔

سنہ 2014 میں سمتھ نے اپنی ایک برہنہ تصویر سنیپ چیٹ پر پوسٹ کر دی تھی جسے صارفین نے پھر انٹرنیٹ پر خوب پھیلایا تھا۔

پارلیمانی رہنماؤں کی کانفرنس وزیراعلیٰ پنجابشہبازشریف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی نوک جھونک ,مزیدجانئیے

پیر کے روز ہونے والی پارلیمانی رہنماؤں کی کانفرنس کے دوران خفیہ میٹنگ میں وزیراعلیٰ پنجابشہبازشریف اور ڈی جی آئی ایس آئی کی نوک جھونک کے بعد حکومت نے انتہائی محتاط اور غیر روایتی انداز میں عسکری قیادت پرپاکستان کی عالمی سطح پر بڑھتی ہوئی تنہائی واضح کرتے ہوئے کئی اہم ترین معاملات پر کارروائیوں کے لئے زور دیا ہے۔ انگریزی روزنامے کے مطابق پیر کے روز ہونے والی پارلیمانی رہنماؤں کی کانفرنس کے علاوہ ایک خفیہ میٹنگ بھی ہوئی جس میں کم از کم دو امور پر اتفاق کیا گیا۔نمبر ایک، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی ناصر جنجوعہ کے ساتھ چاروں صوبوں کا دورہ کریں اور ایپکس کمیٹیوں اور انٹر سروسز انٹیلی جنس کے سیکٹر کمانڈرو کو پیغام پہنچائیں کہ فوج کے زیر کنٹرول کام کرنے والی خفیہ ایجنسیاں کالعدم تنظیموں کے خلاف قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارروائیوں میں مداخلت نہ کریں، ڈی جی آئی ایس آئی اپنے اس دورے کا آغاز لاہور سے کریں۔جس دوسرے نکتے پر اتفا ق ہوا وہ یہ تھا کہ وزیراعظم نوازشریف پٹھان کوٹ حملے کی تحقیقات کو حتمی نتیجے تک پہنچانے کیلئے اقدامات کا حکم دیں اور ممبئی حملہ کیس سے متعلق انسداد دہشتگردی راولپنڈی کی عدالت میں دوبارہ کارروائی شروع کی جائے۔
نجی اخبار نے اہم ترین اجلاس میں شریک رہنماؤں کی گفتگو کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں بڑے فیصلے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور ڈی جی آئی ایس آئی کے درمیان زبردست بحث کے بعد کئے گئے اور یہ مسلم لیگ ن کی حکومت کی نئی حکمت عملی کے بھی مظہر ہیں۔اخبار کے مطابق اسی روز سیکریٹری خارجہ اعزاز چودھری نے وزیراعظم ہاوس میں سول اور عسکری حکام کو الگ الگ بریفنگز بھی دیں۔وزیراعظم کی زیر صدارتاجلاس میں کابینہ ارکان، صوبائی حکام بھی شریک تھے جبکہ عسکری نمائندوں کی قیادت ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹننٹ جنرل رضوان اختر نے کی۔سیکریٹری خارجہ نے پاکستان کی جانب سے حالیہ سفارتی کوششوں کے نتائج سے مختصر طورپر آگاہ کیا ، انہوں نے بتایا کہ پاکستان کو عالمی سطح پر سفارتی تنہائی کا سامنا ہے اور حکومت پاکستان کے موقف پر دنیا کے بڑے ملکوں نے بے اعتنانی کا اظہار کیا ہے امریکہ کے ساتھ تعلقات میں بھی قدرے خرابی آئی ہے اور یہ مزید بڑھنے کا امکان بھی ہے کیونکہ امریکہ پاکستان سے حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کررہا ہے۔بھارت کی جانب سے بھی پٹھان کوٹ حملے کی تحقیقات اور کالعدم جیش محمد کے خلاف کارروائیوں کے مطالبات آرہے ہیں۔
چین نے پاکستان کے ساتھ تعاون جاری رکھنے کا اعادہ کیا تاہم پاکستان کی ترجیحات میں تبدیلی کا اشارہ بھی دیا۔انہوں نے بتایا کہ خاص طور پر جب چینی حکام نے جیش محمد کے رہنما مسعود اظہر پر اقوام متحدہ کی پابندی کے خلاف تکنیکی اعتراض برقرار رکھنے پر آمادگی ظاہر کی تو ساتھ ہی انہوں نے یہ سوال بھی کیا کہ بار بار ایسا کرنے کی منطق کیا ہے؟’’ڈان‘‘ کے مطابق اس بریفنگ کے بعد ڈی جی آئی ایس آئی اور سول حکام کے درمیان غیرمعمولی تبادلہ خیال ہوا۔ڈی جی آئی ایس آئی نے سوال اٹھایا کہ پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا ئی سے بچانے کے لیے کیا اقدامات کیے جاسکتے ہیں؟جس پر اعزاز چوہدری نے جواب دیا کہ عالمی برادری کا سب سے اہم مطالبہ یہ ہے کہ جیش محمد، مسعود اظہر، حافظ سعید ,لشکر طیبہ اور حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائی کی جائے۔اس جواب پر ڈی جی آئی ایس آئی نے کہاکہ حکومت جسے ضروری سمجھتی ہے اسے گرفتار کرے۔تاہم یہ واضح نہیں کہ انہوں نے یہ بات مذکورہ افراد اور تنظیموں کے حوالے سے کہی یا پھر عمومی طور پر کالعدم تنظیموں کے ارکان سے متعلق بات کی تاہم اس بات کے دوران وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کی جانب سے غیرمتوقع طور پر مداخلت ہوئی اور انہوں نے ڈی جی آئی ایس آئی سے کہا کہ جب بھی سول حکام ان گروپوں کے خلاف کارروائی کرتے ہیں، سیکیورٹی اسٹیبلشمنٹ پس پردہ ان کی رہائی کی کوششیں شروع کردیتی ہے۔شہباز شریف کی اس بات نے شرکا کو حیران کردیا ،کشیدگی کم کرنے کے لئے وزیراعظم نوازشریف نے مداخلت کی اور ڈی جی آئی ایس آئی کو مخاطب کرتے ہوئے بولے کہ ماضی میں جو کچھ ہوتا رہا وہ ریاستی پالیسیاں تھیں اور ڈی جی آئی ایس آئی کوموجودہ صورتحال کا ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جارہا۔ میٹنگ میں شریک شخصیات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کی یہ مداخلت انتہائی غیرمتوقع تھی جس کے بعد ہی دونوں اہم فیصلے بھی ہوئے ۔

جنرل راحیل شریف ,عالمی برادری کو اس کا نوٹس لینا چاہیے

پاکستان کی بّری فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ انڈیا اپنے زیر انتظام کشمیر اور لائن آف کنٹرول پر حقائق کو مسخ کر رہا ہے اور عالمی برادری کو اس کی مذمت کرنی چاہیے۔

انھوں نے یہ بات جمعرات کو رسالپور میں پاکستانی فضائیہ کے کیڈٹس کی پاسنگ آؤٹ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

جنرل راحیل نے کہا کہ ‘حال ہی میں ہم نے دیکھا کہ انڈیا کی جانب سے اس کے زیر انتظام کشمیر کے اندر اور لائن آف کنٹرول کے اطراف جعلسازی اور حقائق کو مسخ کیا جا رہا ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ عالمی برادری پاکستان کے خلاف انڈیا کی ان کوششوں کی مذمت کرے، جس کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شراکت بے مثال ہے۔’

انھوں نے مزید کہا کہ انڈیا کے اس کھیل کا مقصد دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار کو مسخ کرنا ہے۔

انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں حالیہ کشیدگی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے آرمی چیف نے کہا کہ بھارت نے اپنے زیر انتظام کشمیر میں بربریت کی انتہا کر دی ہے اور عالمی برادری کو اس کا نوٹس لینا چاہیے۔

پاک فوج کی صلاحیتوں کا اعتراف کرتے ہوئے جنرل راحیل شریف نے کہا کہ مسلح افواج اندرونی اوربیرونی چیلنجز کا منہ توڑ جواب دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں۔ ‘مادر وطن کے دفاع کو ہر قیمت پر یقینی بنائیں گے اور دشمنوں کے ناپاک عزائم کو کسی قیمت پر کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔’

سانحہ سول اسپتال کی تحقیقات ,ایک رکنی جوڈیشل کمیشن تشکیل دے دیا

سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹر ی نے سانحہ سول اسپتال کی تحقیقات کے لیے ایک رکنی جوڈیشل کمیشن تشکیل دے دیا۔

تفصیلات کےمطابق صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں سپریم کورٹ رجسٹر ی میں سانحہ سول اسپتال کوئٹہ از خود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔

سماعت کے دوران وکلا نے استدعا کی کہ ایک ایسا آزادانہ تحقیاتی کمیشن تشکیل دیا جائے جو سپریم کور ٹ کے جج پر مشتمل ہوکمیشن واقعہ کے محرکات تفتیش کے عمل میں تاخیراور غیرذمہ داروں کی تحقیقات کرے۔

سپر یم کورٹ نے وکلا کی استدعاپرایک رکنی جوڈیشل کمیشن تشکیل دے دیا۔جوڈیشل کمیشن سپر یم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ پر مشتمل ہوگاجو تیس دن میں رپورٹ عدالت میں پیش کرےگا۔

سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں چیف جسٹس نے چیف سیکر یٹر ی بلوچستان سے استفسار کیا کہ سانحہ سول اسپتال کے زخمیوں اور شہدا کے ورثا کو مالی معاونت کی فراہمی سے متعلق آگاہ کریں۔

چیف سیکر یٹر ی بلوچستان نے بتایا کہ فنڈ زمختص ہے جو آج یاکل تک ٹرانسفر ہوجائیں گے۔چیف جسٹس انور ظہیر جمالی نے حکم دیا کہ تمام زخمی و جاں بحق افراد کے لواحقین کی مالی معاو نت کی جائے۔

واضح رہے کہ سانحہ کوئٹہ ازخود نوٹس کیس کی سماعت کمیشن کی رپورٹ آنے تک ملتوی کردی گئی

بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز میں دہشت گرد حملہ,مزیدجانئیے

بیلجیئم  کے دارالحکومت برسلز میں ایک ممکنہ دہشت گرد حملے میں دو پولیس اہلکاروں کو چاقو مار کر زخمی کر دیا گیا ہے۔

بیلجیئن نشریاتی ادارے وی آر ٹی کے مطابق ایک پولیس اہلکار کو گردن اور دوسرے کو پیٹ میں چاقو مارے گئے، جب کہ ایک تیسرے پولیس والے کی ناک توڑ دی گئی تھی۔

حملہ آور کی ٹانگ میں گولی مار کر اسے گرفتار کر لیا گیا۔

حکام نے کہا ہے کہ 43 سالہ حملہ آور کا نام ہشام ڈی ہے اور وہ بیلجیئم کا شہری ہے۔

بیلجیئن میڈیا کے مطابق پولیس کا پاس ہشام کا ریکارڈ موجود تھا اور خیال ہے کہ اس کا تعلق ایسے جہادیوں سے تھا جو لڑنے کے لیے شام گئے ہوئے ہیں۔

ہشام 2009 تک پولیس میں ملازم رہے ہیں۔

وفاقی استغاثہ کے ترجمان ایرک فان ڈر سیپٹ نے کہا: ‘ہمارے پاس یہ یقین کرنے کی وجہ موجود ہے کہ یہ دہشت گرد حملہ تھا۔’

حکام کے مطابق پولیس اہلکاروں کے زخم جان لیوا نہیں ہیں۔

اس حملے سے چند گھنٹے قبل برسلز کے نورڈ سٹیشن کو بم کی افواہ کی وجہ خالی کروا لیا گیا تھا۔

بیلجیئم مارچ میں برسلز میں ہونے والے حملوں کے بعد سے ہائی الرٹ پر ہے۔ ان دہشت گرد حملوں میں 35 افراد 300 سے زائد زخمی ہو گئے تھے۔

حملہ آوروں نے دعویٰ کی تھا کہ ان کا تعلق شدت پسند تنظیم دولتِ اسلامیہ سے ہے۔

اقوام متحدہ کے اگلے سیکریٹری جنرل بننے جا رہے ہیں…؟

اقوام متحدہ کے سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ پرتگال کے سابق وزیر اعظم اینتونیو گتریز اقوام متحدہ کے اگلے سیکریٹری جنرل بننے جا رہے ہیں۔

بدھ کو اقوام متحدہ میں روس کے سفیر ویتالے چوركن نے اعلان کیا کہ 66 سالہ اینتونیو گتریز اس عہدے کے لیے ’واضح طور پر پسندید‘ شخصیت ہیں۔

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں جمعرات کو امیداوار کی تصدیق کرنے کے لیے باقاعدہ ووٹنگ ہوگی۔

خیال رہے کہ اینتونیو گتریز گذشتہ دس سالوں سے اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزین کی سبراہی کر رہے ہیں۔

وہ آئندہ سال بان کی مون کی جگہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کا عہدہ سنبھالیں گے۔

اقوامِ متحدہ میں امریکہ کی مندوب سمانتھا پاور نے اس حوالے سے کہا کہ ’انتخاب کا یہ عمل غیر معمولی طور پر غیر متنازع تھا۔‘

سمانتھا پاور کا کہنا تھا کہ ’سب نے اس پر اتفاق کیا جس نے اس سارے عمل کے دوران سب کو متاثر کیا۔‘

سلامتی کونسل کے 15 ارکان نے بدھ کو دس امیدواروں کے لیے خفیہ ووٹ دیا اور کسی نے بھی اینتونیو گتریز کی مخالفت نہیں کی۔

ان ارکان سے کہا گیا تھا کہ وہ امیدواروں میں سے کسی بھی امیدوار کا انتخاب کرنے کے لیے ’حمایت کرنا‘، ’حمایت نہ کرنا‘ یا ’کوئی رائے نہیں‘ لکھیں۔ ان 15 ووٹوں میں سے اینتونیو گتریز کی حمایت میں 13 پڑیں جبکہ دو ارکان نے کسی بھی امیدوار کے حق میں ووٹ نہیں دیا۔

اینتونیو گتریز نے جن نو امیدواروں کو شکست دی ان میں بلغاریہ سے تعلق رکھنے والی یورپی یونین کی بجٹ کمشنر کرسٹالینا جارجیوا بھی شام ہیں۔

امید ظاہر کی جا رہی تھی کہ اس مرتبہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے عہدے کے لیے کسی خاتون کا انتخاب کیا جائے گا۔

آئندہ سال جنوری میں بان کی مون دس سال بعد سیکریٹری جنرل کا عہدہ چھوڑ دیں گے۔

Google Analytics Alternative