Home » Author Archives: Admin (page 3574)

Author Archives: Admin

الیکشن کمیشن آف پاکستان،27 افسران کی تبدیلی کا نوٹیفیکیشن جاری

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان کے میں بڑے پیمانے پرتبادلوں سے عملے میں تشویش کی لہردوڑگئی، 27 افسران کی تبدیلی کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے 27 افسران کے تبادلے دوردرازعلاقوں میں کردیے گئے ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن میں افسران کے تبادلے میڈیا کے ساتھ تعاون کی بناء پر کیے گئے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے ایک سرکلر کے زریعے افسران کو منع کیا ہے کہ میڈیا کو کوئی اطلاع نہ دی جائے اور خلاف ورزی کرنے والے افسران کے خلاف کاروائی کے لئے بھی کہا گیا

الیکشن کمیشن میں ہونے والی حالیہ تبادلوں سے عملے میں بے چینی کی لہردوڑ گئی ہے۔ اس سے قبل الیکشن کمیشن کے55 افسران کا تبادلہ کیا گیا تھا۔ان کو افسران کو دو دراز اضلاع میں بھجوایا گیا۔

خواتین کا عالمی دن آج منایا جا رہا ہے

کراچی:خواتین کے حقوق، مسائل اور صلاحیتیں اجاگر کرنے کے لیے عالمی دن آج منایا جا رہا ہے۔ پاکستانی خواتین بھی زندگی کے ہر شعبے میں صلاحیتوں کا لوہا منوا رہی ہیں

ماں، بہن، بیٹی، بیوی، غرض ہر روپ میں عورت قابل احترام ہے۔اسی احترام کا احساس اجاگر کرنے کے لیے 8 مارچ کو خواتین کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔

سن 1977 میں اقوام متحدہ نے دنیا کی نصف سے زائد آبادی کوحقوق دلانے، مسائل حل کرنے اور صلاحیتوں کو پروان چڑھانے کا نعرہ لگایا۔اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے خواتین کا عالمی دن منانے کی منظوری دی۔

آج دنیا بھر میں خواتین ہر شعبے میں صلاحیتوں کا مظاہرہ کر رہی ہیں۔پاکستانی خواتین بھی کسی سے پیچھے نہیں۔

علم کا اجالا ملالہ یوسف زئی ہوں،آئن اسٹائن کے فلکیاتی نظریے کی توثیق کرنے والےعالمی گروپ کی رکن نرگس ماوال والا۔پہاڑ سر کرنے والی ثمینہ بیگ یادو بار آسکر جیتنے والی شرمین عبید ہوں یا پھر قومی کرکٹ ٹیم کی قائد ثنا میر،ہر شعبے میں باصلاحیت خواتین مردانہ وار مشکلات جھیل کرملک کا نام روشن کر رہی ہیں۔

پاکستان کی خواتین نے ہمیشہ ثابت کیا کہ وہ کسی بھی شعبے میں مردوں سے کم نہیں۔ان کی صلاحیتوں اور کامیابیوں کی طویل داستان مملکت خداداد کا سرمایہ ہے۔

آئین شکنی کیس، پرویز مشرف کو عدالت میں حاضر ہونے کا حکم

آئین شکنی کے مقدمے کی سماعت کرنے والی خصوصی عدالت نے سابق فوجی صدر پرویز مشرف کو 31 مارچ کو عدالت میں حاضر ہونے کا حکم دیا ہے۔

جسٹس مظہر عالم کاکا خیل کی سربراہی میں تین رکنی بینچ کی جانب سے یہ حکم منگل کو مقدمے کی سماعت کے دوران دیا گیا۔

حکم میں پرویز مشرف سے کہا گیا ہے کہ وہ آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں عدالت میں پیش ہوں اور خود پر عائد کی گئی فردِ جرم میں لگائے گئے الزامات کا جواب دیں تاہم اس موقع پر ان پر وکلائے استغاثہ جرح نہیں کر سکیں گے۔

منگل کو سماعت کے موقع پر پرویز مشرف کے وکیل فیصل چوہدری نے عدالت کو بتایا کہ ان کے موکل کی طبعیت ناساز ہے اور وہ ہسپتال میں داخل ہیں۔

اس پر عدالت نے انھیں کہا کہ اگر یہ صورتحال تھی اور اس سلسلے میں سماعت سے قبل درخواست دی جانی چاہیے تھی۔

جج صاحبان نے یہ بھی استفسار کیا کہ آیا پرویز مشرف کو حاضری سے استثنیٰ حاصل ہے یا نہیں جس پر عدالت کو بتایا گیا کہ ایسا کوئی استثنیٰ سابق صدر کو نہیں دیا گیا ہے۔

سماعت کے دوران سرکاری وکیل اکرم شیخ نے عدالت سے مقدمے کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کرنے کی درخواست کی تاہم عدالت نے فوری طور پر اس معاملے پر فیصلہ نہیں دیا۔

خیال رہے کہ پرویز مشرف آئین شکنی کے مقدمے میں ماضی میں ایک مرتبہ عدالت میں پیش ہو چکے ہیں اور اس وقت ان پر فردِ جرم عائد کی گئی تھی۔

حال ہی میں سپریم کورٹ نے اس مقدمے میں ملک کےسابق وزیراعظم شوکت عزیز، سابق چیف جسٹس عبدالحمید ڈوگر اور سابق وزیر قانون زاہد حامد کو شریک ملزم قرار دینے کے اعلیٰ عدالتوں کے فیصلوں کو کالعدم قرار دیا ہے۔

سنجے دت نے جیل میں زندگی کے تجربات کو کاغذ پر اتار دیا

ممبئی : حال ہی میں رہا ہونے والے بولی وڈ اسٹار سنجے دت نے جیل میں قید کے دوران اپنے زندگی کے تجربات کو قلم کے ذریعے کاغذ پر اتارا ہے، جسے اب ایک کتاب کی شکل میں پیش کیا جائے گا۔1993 ممبئی بم دھماکوں میں سزا پوری کرنے والے 56 سالہ اداکار نے جیل میں دو قیدیوں ذیشان قریشی اور سمیر ہنگل کے ساتھ 500 سے زائد اشعار لکھے ہیں جنہیں اب’ ’سلاخیں“ نام کے مجموعے سے شائع کیا جائے گا۔سنجے نے بتایا کہ میں نے ہندی میں کچھ لکھا ہے اور اسے میں کتابی شکل میں پیش کروں گا۔ میں اسے کچھ پبلشرز کو دکھاو¿ں گا۔لگے رہو منا بھائی‘ اسٹار نے بتایا کہ 500 اشعار میں سے تقریباً 100 ان کے ہیں۔’کئی دفعہ مجھے خود حیرت ہوئی کہ میں نے یہ لکھے۔مجھے یاد ہے جب میری بیوی مجھ سے ایک بار ملنے آئی۔ انہیں بخار تھا لیکن وہ پھر بھی یہاں آئیں۔ وہ میرے اصرار پر آئی تھیں لیکن ان کی حالت دیکھ کر مجھے بہت افسوس ہوا۔آنکھوں میں نمی تھی بدن تپ رہا تھا پھر بھی ہونٹوں پر ہنسی تھی اور باتوں میں پیار تھا آپ کو دیکھ کر دکھ ہوا پر خوشی بھی ہوئی اسی خوشی کے ساتھ پیغام بھی تھا کہ آپ مجھ سے محبت کرتے ہو۔تاہم سنجے مستقبل میں مزید لکھنے کی خواہش نہیں رکھتے ۔ وہ دوبارہ فلمی دنیا میں لوٹنے کیلئے بے تاب ہیں۔ میں فی الوقت اپنے اہل خانہ کے ساتھ وقت گزارنا چاہتا ہوں۔ مجھے اپنا کام بہت یاد آ رہا ہے۔ مجھے لائٹ، ساو¿نڈ، کیمرہ اینڈ ایکشن کی دنیا میں جانا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ وہ ہدایت کار سدھارتھ آنند کی ایکشن -ڈراما میں کام کرنے جا رہے ہیں۔ اس فلم کی شوٹنگ گرمیوں میں شروع ہو گی۔اس کے علاوہ وہ ہدایت کار راج کمار ہیرانی کی منا بھائی سیریز کی تیسری فلم بھی کریں گے۔ سنجے کے قریبی دوست ہیرانی ان کی زندگی پر ایک فلم بھی بنا رہے ہیں ۔

قومی ٹیم سینئر وجونیئر کھلاڑیوں کے کمبی نیشن پر مشتمل ہے ،چیف سلیکٹر

لاہور:  پاکستان کرکٹ بورڈ نے ورلڈ ٹی 20 کےلئے قومی ٹیم میں شامل 15 حتمی کھلاڑیوں کے نام آئی سی سی کو بھجواد دیئے۔ پی سی بی نے خرم منظور کی جگہ احمد شہزاد کا نام شامل کیا ہے۔ خرم منظور کو ایشیا کپ میں خراب کارکردگی کے باعث ٹیم سے ڈراپ کیا گیا ہے۔ ورلڈ ٹی 20 کے حتمی 15 رکنی سکواڈ میں شاہد آفریدی (کپتان )، سرفراز احمد (نائب کپتان )، احمد شہزاد، شرجیل خان، محمد نواز، شعیب ملک، محمد حفیظ، عمر اکمل، عماد وسیم، انور علی، محمد عرفان، محمد عامر، وہاب ریاض ،محمد سمیع اور خالد لطیف شامل ہیں ۔ ٹیم مینجمنٹ میں انتخاب عالم ( مینجر)،وقار یونس ( ہیڈ کوچ )،اظہرمحمود ( بولنگ کوچ )،گرانٹ ولیم فلاور ( بیٹنگ کوچ )،گرانٹ لوڈن (فیلڈنگ کوچ)،کرنل (ر) اعظم خان ( سیکورٹی مینجر )،آغا اکبر (میڈیا مینجر )،طلحہ اعجاز اینالسٹ شامل ہیں۔ چیف سلیکٹر ہارون الرشید کا کہنا ہے کہ قومی ٹیم سینئر اور جونیئر کھلاڑیوں کے کمبی نیشن پر مشتمل ہے کپتان اور ہیڈکوچ کے مشورے کے بعد بھارت کی کنڈیشنز کو مدنظر رکھ کر ٹیم کا انتخاب کیا گیا ہے ۔ سیکورٹی کلیئرنس ملنے کے بعد قومی ٹیم 9مارچ کو بھارت روانہ ہوگی۔ ایشیا کپ میں خرم منظور کی شمولیت کی ذمہ داری قبول کرتا ہوں ا س مےں ہمارا تجربہ ناکام ہوا ۔

امریکہ نے چین کا راستہ روکنے کیلئے کارروائیاں شروع کر دیں

بیجنگ: چین کی قومی سلامتی کو اس سال اہم چیلنجز درپیش ہیں ، غیر مستحکم کرنے والے عناصر نے چین کی قومی سلامتی کے معاملات پر دباﺅ بڑھانا شروع کر دیا ہے ، ان میں کوریا کے جزائر میں ایٹمی مسئلہ اور جنوبی چینی سمندروں میں کشیدگی کو ہوا دی جارہی ہے ،چین کے عالمی سطح پر بڑھتے ہوئے اثرورسوخ کو روکنے کے لئے امریکہ نے بالواسطہ اور براہ راست کارروائیاں شروع کر دی ہیں ۔سینئر سفارتکاروں اور پالیسی پر گہری نظر رکھنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ چین کے لئے سب سے بڑا مسئلہ رواں سال یہ ہو گا کہ وہ اپنے پڑوسیوں کے ساتھ تعلقات میں استحکام پیدا کرے ۔ماہرین کا کہنا ہے کہ وہ چین کے ان منصوبوں پر بھی نظر رکھے ہوئے ہیں جو وہ عالمی سطح پر مکمل کرنا چاہتا ہے ، ان میں جی20رہنماﺅں کی ستمبر میں ہونے والی کانفرنس بھی شامل ہے ۔چین کے جاپان میں سفیر اور سیاسی مشیر چینگ یانگ ہو نے کہا کہ جہاں تک ہمسایوں کے ساتھ سلامتی اور استحکام پر نظر رکھنے کا سوال ہے ،میرا خیال ہے کہ ہمیں اپنے ملک کے ارد گرد حالات کو مستحکم رکھنے اور محفوظ رہنے کے لئے مزید کوششوں کی ضرورت ہے ۔انہو ں نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ ہمیں چین کی اندرون ملک ترقی اور تعمیر کے عمل کو بھی پروگرام کے مطابق یقینی بنانا چاہئے ۔ایک اور سینئر مشیر ژانگ ین لنگ نے کہا ہے کہ چین کے مغرب اور شمال میں علاقے اس سال پر سکون رہیں گے تا ہم چین کو کوریائی جزائر اور جنوبی چینی سمندر میں چیلنجز کا سامنا کرنا پڑے گا ۔انہوں نے مزید کہا کہ چینی جزائر میں تعمیراتی کام اور جنوبی چینی سمندر میں دفاعی سہولتوں کی فراہمی امریکہ کی طرف سے تنقید اور فوجی اشتعال کا باعث بن رہی ہے ، امریکہ چین کو جنوبی چینی سمندروں میں قانونی طورپر کام کرنے سے روکنے کے لئے مظاہروں اور اشتعال سے کام لے رہا ہے ، چین کے لئے اس سال سب سے بڑا چیلنج امریکی دھمکیوں کے باوجود صورتحال کو قابو میں رکھنا ہو گا ۔ژانگ نے تجویز پیش کی ہے کہ چین کو جنوب مشرقی ایشیائی ممالک کے ساتھ اپنے اتحاد کو زیادہ فعال بنانا چاہئے کیونکہ وہ قابل اعتماد ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ ان معاملات سے متعلقہ چین کی پالیسی واضح ہونی چاہئے ۔ کوریا ئی جزائر کا حوالے دیتے ہوئے ژانگ نے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی پابندیوں سے متعلق قرارداد جس کی چین نے بھی حمایت کی ہے بہتر نتائج دے گی اور اس سے ایٹمی پروگرام کو محدود کرنے میں مدد ملے گی اور توقع ہے کہ جزائر میں موجود بڑے تنازعات سے بچا جا سکے گا ، چین کو ان تمام فریقوں کے ساتھ رابطہ بڑھانا چاہئے جو اس قرارداد پر کام کرتے رہے ہیں تا ہم اس کے باوجود ایک اور بحران بھی نظر آرہا ہے اس کے لئے ابھی سے ایک موثر منصوبہ تشکیل دینا چاہئے ۔ایک روسی سیاسی ماہرنے کہا ہے کہ چین کو جو بھی چیلنج درپیش ہیں جن میں جزائر اور سمندری معاملات شامل ہیں ان کو ہوا دینے میں براہ راست یا بالواسطہ امریکہ شامل ہے کیونکہ ایشیا اس کی پالیسی کا بنیادی محور ہے ،امریکہ یہ سمجھتا ہے کہ یہ اس کی طویل المیعاد منصوبہ بندی ہے خواہ الیکشن کوئی بھی جیت جائے وہ چین کے بارے میں اس پالیسی سے پیچھے نہیں ہٹے گا تا ہم بد قسمتی سے ہمیں مستقبل میں چین اور امریکہ کے درمیان یہ تنازعہ بڑھتا ہوا دکھائی دے رہا ہے.

ایان علی کو بیرون ملک جانے کی اجازت مل گئی

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے ماڈل ایان علی کو بیرون ملک جانے کی اجازت دیتے ہوئے متعلقہ حکام کو ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ سے خارج کرنے کا حکم دے دیا ۔ سندھ ہائی کورٹ میں ایان علی کی جانب سے بیرون ملک جانے کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ ایان علی نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ ان کی والدہ دبئی میں بیمار ہیں اور وہ ان کی تیمارداری کے لئے دبئی جانا چاہتی ہیں لیکن ایف آئی اے نے ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کررکھا ہے جس کی وجہ سے وہ بیرون ملک نہیں جاسکتیں۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد ایان علی کو بیرون ملک جانے کی اجازت دیتے ہوئے متعلقہ حکام کو ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ سے خارج کرنے کا حکم دے دیا۔فیصلہ سنائے جانے کے فوری بعد ڈپٹی اٹارنی جنرل نے ایان علی کے ای سی ایل سے متعلق فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست کردی جس میں عدالت عالیہ سے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کے لئے وقت مانگا گیا جس پر عدالت نے فیصلے پر اطلاق 10 روز کے لئے موخر کردیا۔

صدر مملکت نے OIC اجلاس میں اردو میں خطاب کرتے ہوئے نئی تاریخ رقم کی

جکارتہ :  صدر مملکت ممنون حسین نے اسلامی کانفرنس تنظیم (OIC) کے 5 ویں غیر معمولی اجلاس میں اردو میں خطاب کرتے ہوئے نئی تاریخ رقم کی اور اس طرح وہ دنیا کے سب سے بڑے مسلم فورم پر قومی زبان میں تقریر کرنے والے پہلے پاکستانی رہنما بن گئے۔ او آئی سی سیکرٹریٹ نے سربراہ اجلاس میں شریک 49 ممالک کے رہنماﺅں کی سہولت کےلئے صدر کے خطاب کے انگریزی، عربی اور انڈونیشیائی زبانوں سمیت کثیر السانی ترجمہ کےلئے خصوصی انتظامات کئے تھے۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ یہ دوسرا موقع ہے کہ جب صدر مملکت ممنون حسین نے کسی بین الاقوامی فورم پر اردو زبان میں خطاب کیا۔ اس سے قبل انہوں نے گزشتہ سال دسمبر میں چین کے شہر ووژن میں انٹرنیٹ کانفرنس سے قومی زبان میں خطاب کیا تھا۔ صدر مملکت کی قومی زبان اردو میں تقاریر پاکستان کے لئے ایک باعث افتخار قدم ہونے کے ساتھ ساتھ عالمی تقریبات میں مادر وطن کے مرتبے کو بلند کرنے کی بھی آئینہ دار ہیں۔

Google Analytics Alternative