Home » Author Archives: Admin (page 6)

Author Archives: Admin

ہانگ کانگ میں پولیس کا يونيورسٹی پر دھاوا، طلبہ سے زبردست جھڑپیں

ہانگ کانگ میں چینی حکومت کے خلاف جاری احتجاج کو ختم کرانےکے لیے پولیس نے پولی ٹيکنک يونيورسٹی پر دھاوا بول دیا۔

پولی ٹيکنک يونيورسٹی کے کیمپس میں دو روز سے طلبہ محصور ہیں جو چین کی پالیسیوں کے خلاف شدید احتجاج کررہے ہیں جبکہ پولیس نے چاروں طرف سے یونی ورسٹی کا محاصرہ کیا ہوا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ہانگ کانگ یونی ورسٹی میں پولیس اور طلبہ کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں اور کیمپس میدان جنگ بن گیا ہے۔ سیکیورٹی اہلکاروں نے کارروائی کرتے ہوئے متعدد طلبہ کو گرفتار بھی کرلیا ہے۔

پوليس نے مظاہرين کو منتشر کرنے کے ليے آنسو گيس کی شیلنگ اور تیز دھار مائع استعمال کیا ہے ۔ دوسری جانب مظاہرين چھتوں سے سکیورٹی اہلکاروں پر پٹرول بم پھینک رہے اور تیر برسا رہے ہیں۔ پولیس نے مظاہرین کو خبردار کیا ہے کہ اب ان پر براہ راست فائرنگ کی جائے گی۔ چینی فوج پیپلز لبریشن آرمی کے دستے بھی ہانگ کانگ کی سڑکوں پر گشت کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ امن و امان کو یقینی بنانا چاہتے ہیں۔

ہانگ کانگ میں جون میں حکومت نے ایک قانون متعارف کرایا تھا جس کے تحت ہانگ کانگ کے قیدیوں کے مقدمات کو چین منتقل کردیا جاتا اور کسی بھی مشتبہ شخص کی چین کو حوالگی کی راہ ہموار کی جاتی۔

اس قانون اور چین کے بڑھتے اثر و رسوخ کے خلاف یہ مظاہرے شروع ہوئے جو جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئے۔ ان مظاہروں میں بہت سے لوگ ہلاک اور زخمی ہوئے۔ حکومت نے اس قانون کو واپس لے لیا ہے لیکن مظاہرین پولیس تشدد میں ہلاک و زخمی افراد کے لیے انصاف کا مطالبہ کررہے ہیں۔

‘ایف اے ٹی ایف کی 5 شرائط پر مکمل عملدرآمد کرلیا، اب مضبوط کیس پیش کریں گے’

ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) فنانشل مانیٹرنگ یونٹ (ایف ایم یو) نے کہا ہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی 5 شرائط پر مکمل عملدرآمد کرلیا، اب مضبوط کیس پیش کریں گے۔

فاروق نائیک کی زیرِ صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) فنانشل مانیٹرنگ یونٹ (ایف ایم یو) نے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) ایکشن پلان پر بریفنگ دی۔

ڈی جی ایف ایم یو منصور صدیقی نے بریفنگ میں کہا کہ ایف اے ٹی ایف کی 5 شرائط پر مکمل درآمد کرلیا، فنانشل ایکشن ٹاسک فورس میں مضبوط کیس پیش کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ایف اے ٹی ایف نے جون 2018 میں پاکستان کو 27 نکاتی ایکشن پلان دیا تھا جو انٹرنیشنل کو آپریشن ریویو گروپ (آئی سی آر جی)کے تحت دیا گیا تھا۔

ڈی جی ایف ایم یو نے کہا کہ پاکستان نے اکتوبر 2019 میں ایکشن پلان مکمل کرنا تھا اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیے رسک پروفائیلنگ کرنا تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ رواں برس اکتوبر تک 17 سفارشات پر جزوی عمل درآمد کرلیا گیا اور اس دوران ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان کے تحت 41 افراد کو گرفتار کیا گیا۔

منصور صدیقی نے کہا کہ اگست 2019 میں 73 کروڑ 70 لاکھ روپے جرمانے عائد کیے گئے اور 40 غیر منافع بخش اداروں کو دہشت گردوں کی مالی معاونت سے متعلق خطرناک قرار دیا گیا۔

ڈی جی ایف ایم یو نے کہا کہ ایکشن پلان 8 کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائی کے اردگرد گھوم رہا ہے اس حوالے سے نیکٹا کے کردار کو بڑھایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں 64 ہزار فلاحی تنظیمیں رجسٹرڈ تھیں جن میں سے 30 ہزار غیر فعال فلاحی تنظیموں کی رجسٹریشن منسوخ کی گئی۔

ڈی جی ایف ایم یو نے کہا کہ 140 غیر سرکاری تنظیموں سے مشکوک ٹرانزیکشن کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔

منصور صدیقی نے کہا کہ کالعدم تنظیمیں اب قربانی کی کھالیں بھی جمع نہیں کرسکتیں، ملک میں ایسا نظام بنایا ہے کہ غیر رجسٹرڈ فلاحی تنظیمیں کھالیں جمع نہ کرسکیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ایف اے ٹی ایف اب پاکستان کی کارکردگی کا جائزہ آئندہ برس فروری کے وسط میں لے گا، اس حوالے سے نیکٹا کی کارکردگی بہت بہتر ہے اور ادارہ ایف اے ٹی ایف کے اہداف کے حصول میں فعال ہے۔

ٹیکس وصولیوں میں 16 فیصد اضافہ ہوا، چیئرمین ایف بی آر

قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کے اجلاس میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) شبر زیدی نے بھی کمیٹی کو بریفنگ دی۔

شبر زیدی نے بتایا کہ رواں مالی سال کے 4 ماہ میں ٹیکس وصولیوں میں 16 فیصد اضافہ ہوا اور جولائی تا اکتوبر ایک ہزار 281 ارب روپے ٹیکس اکٹھا کیا گیا جبکہ ایف بی آر کا ٹیکس شارٹ فال 166 ارب روپے رہا۔

چئیرمین ایف بی آر نے کہا کہ جولائی تا اکتوبر درآمدات میں کمی کے باعث 224 ارب روپے کم ٹیکس اکٹھا ہوا جبکہ گزشتہ برس جولائی تا اکتوبر کے دوران ایک ہزار 101 ارب روپے کا ٹیکس اکٹھا کیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ انکم ٹیکس ریٹرنز میں 80 فیصد اضافہ ہوا، ٹیکس سال 2018 میں فائلرز کی تعداد 26 لاکھ 81 ہزار تک پہنچ گئی۔

شبر زیدی نے کہا کہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم 2019 میں ایک لاکھ 24 ہزار افراد نے فائدہ اٹھایا جبکہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم 2018 میں 80 ہزار افراد نے فائدہ اٹھایا تھا۔

تسلیم کرتے ہیں اسمگلنگ روک نہیں پارہے، ممبر کسٹمز

اجلاس میں ممبر کسٹمز جواد آغا نے کمیٹی کو انسداد اسمگلنگ اقدامات پر بریفنگ دی انہوں نے کہا کہ رواں برس میں اب تک 2 کروڑ 90 لاکھ روپے مالیت کی 637 ایل ای ڈی ٹی ویز کو ضبط کیا گیا جبکہ گزشتہ برس میں 1550 ایل ای ڈی ٹی ویز کو ضبط کیا گیا تھا۔

ممبر کسٹمز نے کہا کہ رواں مالی سال کے چار ماہ میں 11 ارب روپے مالیت کی اشیاء کو ضبط کیا گیا جبکہ گزشتہ سال اسی عرصے میں 6 ارب 30 کروڑ روپے مالیت کی اشیاء ضبط کی گئیں تھیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سالانہ 20 سے 25 ارب روپے مالیت کی اسمگل شدہ اشیا پکڑی جاتی ہیں ہم تسلیم کرتے ہیں کہ اسمگلنگ مکمل طور پر نہیں روک پارہے۔

اس دوران چیئرمین قائمہ کمیٹی نے کہا کہ ایف بی آر اسمگلنگ روکنے میں ناکام ہوگیا، ساتھ ہی کمیٹی کے رکن میاں عتیق نے کہا کہ باڑہ مارکیٹ میں اسمگل شدہ مال بکتا ہے اور درآمدی مال مقامی مال سے سستا بکتا ہے۔

جس پر جواد آغا نے کہا کہ وزیر اعظم نے اینٹی اسمگلنگ اسٹریٹجی کمیٹی قائم کی ہے جس کے سربراہ وزیر داخلہ ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسمگلنگ کی روک تھام کے لیے ڈرون اینڈ سیٹلائٹ ٹیکنالوجی متعارف کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ممبر کسٹمز نے کہا کہ سرحدوں پر اسکینرز لگائے جارہے ہیں، کسٹمز اہلکار مخصوص روٹس پر تعینات کیے جاتے ہیں اور 3 ماہ سے اسمگلنگ کے خلاف بھر پور کارروائی کی جارہی ہے۔

ممبر کسٹمز نے کہا کہ حکومت نے اس سال 1650 ٹیرف لائنز پر ڈیوٹی زیرو کردی ہے جس کا مقصد مقامی انڈسٹری کو فروغ دینا ہے۔

سیکریٹری خزانہ نوید کامران بلوچ نے کہا کہ 2009 سے کسٹمز میں بھرتیاں نہیں ہوئیں جبکہ موجودہ حکومت نے کسٹمز میں بھرتیوں کی اجازت دے دی ہے۔

سینیٹر محسن عزیز نے کہا کہ گزشتہ ایک ڈیڑھ برس میں اسمگلنگ میں کئی گنا اضافہ ہوا، پورے ملک میں اسمگل شدہ اشیاء فروخت ہورہی ہیں۔

اجلاس کے دوران ممبر کسٹمز نے کہا کہ کسٹمز کے اختیارات کو دو سال تک کسی اور ادارے کو منتقل نہیں کیا جائے گا جس پر چیئرمین ایف بی آر نے کہا کہ جن افسران کو اختیارات منتقل کیے گئے انہوں نے لوگوں کو تنگ کیا۔

اس پر سینیٹ کی قائمہ کمیٹی نے سفارش کی ‏کہ کسٹمز کے اختیارات کسی ادارے کو منتقل نہ کیے جائیں۔

بینکوں کے غیر فعال قرضوں میں 124 ارب کا اضافہ ہوا، ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک

اجلاس کے دوران ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ ستمبر 2019 تک بینکوں کے غیر فعال قرضے 758 ارب روپے ہوچکے ہیں، ایک سال میں غیر فعال قرضوں میں 124 ارب کا اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ انرجی سیکٹر کے قرضے 36 ارب روپے سے بڑھ کر 86 ارب روپے ہوگئے، شوگر انڈسٹری کے قرضے 16 ارب روپے سے بڑھ کر 44 ارب روپے ہوگئے۔

ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر کے قرضے 186 ارب روپے سے کم ہوکر 182 ارب روپے ہوچکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شوگر اور انرجی سیکٹر کے غیر فعال قرضوں بڑھ رہے ہیں، قرض ڈیفالٹرز کے 49 ہزار کیسز بینکنگ کورٹس میں زیر التوا ہیں۔

بغیر کھڑکی والے طیارے اسکرین پر باہر کا پورا منظر دکھائیں گے

لندن: فضائی سفر کے دوران اکثر و بیشتر مسافروں کے درمیان کھڑکی والی نشست حاصل کرنے پر جھگڑا رہتا ہے اور زیادہ تر مسافر بورڈنگ کے وقت خصوصی طور پر کھڑکی والی نشست کی خواہش کرتے ہیں تاکہ وہ فضائی سفر میں اونچائی سے باہر کے مناظر سے لطف اندوز ہوسکیں۔

مسافروں کی شدید خواہش کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک برطانوی ٹیکنالوجی فرم نے جدت لاتے ہوئے مستقبل میں طیاروں کو اس طرح ڈیزائن کرنے کا پروگرام بنایا ہے جس میں پورا طیارہ آسمان کے پینورامک ویو (چاروں طرف پھیلے ہوئے منظر) میں تبدیل ہوجائے گا۔

اس نئی ٹیکنالوجی کے ذریعے مستقبل میں طیاروں کی کھڑکیاں ختم کردی جائیں گی اور  پورا طیارہ ’او ایل ای ڈی‘ ٹچ اسکرین سے ڈھک دیا جائے گا جس سے ہر نشست ایک قسم کی ’ونڈو سیٹ‘ بن جائے گی۔

یہ ٹچ اسکرینز طیارے کے باہر لگے کیمروں سے منسلک ہوں گی جو باہر کا حقیقی منظر ہر نشست پر پیش کریں گی جب کہ مسافر اپنی مرضی سے ’او ایل ای ڈی‘ پر مناظر  کے بجائے اینٹرٹینمنٹ سسٹم کے ذریعے دیگر پروگرام دیکھ سکیں گے۔

اگر آپ ’’او ایل ای ڈی‘‘ کے بارے میں نہیں جانتے تو بتاتے چلیں کہ یہ ’’آرگینک لائٹ ایمٹنگ ڈایوڈ‘‘ کا مخفف ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اس میں نامیاتی مرکبات (آرگینک کمپاؤنڈز) پر مشتمل ایک ایسی پتلی فلم ہوتی ہے جس میں سے بجلی گزاری جاتی ہے تو وہ روشنی خارج کرتی ہے۔

یہ ٹیکنالوجی ٹیلی ویژن، ٹیبلٹ کمپیوٹرز، موبائل فونز اور کمپیوٹر مانیٹرز میں استعمال ہورہی ہے۔ جب تک یہ طیارے حقیقت میں تیار کیے جائیں گے، امید ہے کہ تب تک اس سے کہیں زیادہ جدید اور بہتر او ایل ای ڈی ڈسپلے مارکیٹ میں آچکے ہوں گے۔

ملک بھر میں ڈینگی کے کیسز کی تعداد 50 ہزار کے قریب پہنچ گئی

اسلام آباد: ملک بھر میں ڈینگی کے پھیلاؤ نے ایک مرتبہ بھر نیا ریکارڈ قائم کردیا اور رواں برس کے دوران اب تک 49 ہزار 5 سو 87 افراد اس سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ دو ہفتے سے بھی کم وقت میں 5 ہزار سے زائد کیسز سامنے آئے ہیں۔

اس سے قبل ملک میں ڈینگی کے سب سے زیادہ کیسز 8 برس قبل رپورٹ کیے گئے تھے اور 2011 میں 27 ہزار افراد ڈینگی سے متاثر ہوئے تھے۔

تاہم اُس وقت ڈینگی کے نتیجے میں 370 افراد جان کی بازی ہار گئے تھے، یہ تعداد رواں برس ہونے والی 79 اموات سے 4 گنا زیادہ تھیں۔

ڈینگی کے کیسز میں اضافے کی بڑی وجوہات بتاتے ہوئے وزارت صحت کے ترجمان ساجد شاہ نے بتایا کہ ‘رواں برس دنیا بھر میں ڈینگی کے کیسز کی غیر معمولی تعداد رپورٹ ہوئی ہے’۔

انہوں نے کہا کہ ‘ملک بھر میں ڈینگی کے کیسز ریکارڈ کرنے کے طریقہ کار میں بہتری آئی ہے’۔

بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے دعویٰ کیا کہ دنیا بھر میں ڈینگی کی غیر معمولی تعداد کے مقابلے میں پاکستان کی کارکردگی دیگر ممالک سے بہتر ہے۔

دوسری جانب ڈان کے پاس موجود دستاویز کے مطابق رواں سال کے دوران ملک بھر میں ڈینگی کے 49 ہزار 5 سو 87 کیسز کی تصدیق ہوئی، جس میں سب سے زیادہ 13 ہزار ایک سو 79 کیسز وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں رپورٹ ہوئے۔

سندھ میں ڈینگی کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 13 ہزار 2 سو 51، پنجاب میں 9 ہزار 8 سو 55، خیبرپختونخوا میں 7 ہزار 7 سو 76 اور بلوچستان میں 3 ہزار 2 سو 17ہے۔

علاوہ آزاد کشمیر سے ایک ہزار 6 سو 90 کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 6 سو 25 کیسز کو ‘دیگر’ کیٹیگری میں رکھا گیا ہے۔

‘دیگر’ کیٹیگری ان کیسز کی نشاندہی کرتی ہے جن کا اصل مقام معلوم نہیں ہوسکا۔

اسی طرح ڈینگی سے خیبرپختونخوا اور گلگت بلتستان میں کوئی اموات رپورٹ نہیں ہوئیں جبکہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 22 افراد جاں بحق ہوئے۔

علاوہ ازیں ڈینگی سے سب سے زیادہ اموات سندھ میں ہوئیں جن کی تعداد 33 ہے، اس کے بعد پنجاب میں 22, بلوچستان میں 3 جبکہ آزاد کشمیر میں ڈینگی کے باعث ایک شخص جاں بحق ہوا۔

بالی ووڈ اداکارہ روینا ٹنڈن پاکستانی ہیرو کی تعریف کیے بغیر رہ نہ سکیں

بالی وڈ کی اداکارہ روینا ٹنڈن بھارت سے اومان جانے والی پرواز کو حادثے سے بچانے والے پاکستانی ہیرو کے اقدام کو سراہے بغیر رہ نہ سکیں۔

اداکارہ نے مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر اس حوالے سے ایک ٹوئٹ بھی کیا۔

بالی ووڈ اداکارہ روینا ٹنڈن نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ ’جب انسانیت سیاست سے جیت جائے‘

Raveena Tandon

@TandonRaveena

When humanity wins over politics . Pakistani air traffic controller saves a Jaipur to Muscat flight from disaster https://www.livemint.com/news/world/pakistani-air-traffic-controller-saves-a-jaipur-to-muscat-flight-from-disaster-11573872117945.html 

Pakistani air traffic controller saves a Jaipur to Muscat flight from disaster

Sources in the aviation authority said that the aircraft had encountered abnormal weather conditions near the Chor area of the southern province of Sindh.Islamabad has, for more than a month,…

livemint.com

5,237 people are talking about this

روینا ٹنڈن نے اپنے ٹوئٹ میں وضاحت کرتے ہوئے لکھا کہ ’پاکستانی ائیر ٹریفک کنٹرولر نے جےپور سے مسقط جانے والی پرواز کو تباہ ہونے سے بچا لیا‘

واضح رہے کہ چند روز قبل پاکستان سول ایویشن اتھارٹی کے ایک ائیر ٹریفک کنٹرولر نے بھارت سے اومان جانے والے ایک طیارے کو حادثے سے بچا لیا تھا۔

بھارت کے شہر جے پور سے مسقط جانے والے مسافر طیارے میں 150 مسافر سوار تھے اور طیارہ کراچی ریجن کے اوپر سے گزر تے وقت خراب موسم میں پھنس گیا تھا۔ آسمانی بجلی گرنے کی وجہ سے جہاز 36 ہزار فٹ کی بلندی سے یکدم 34 ہزار کی بلندی پر آگیا اور اس دوران پائلٹ نے ایمرجنسی پروٹوکول کے تحت قریبی اسٹیشنز کو”مئےڈے” پیغام بھیج دیا۔

اس موقع پر پاکستان میں ہوا بازی کے نگران سرکاری ادارے سی اے اے کے ائیر ٹریفک کنٹرولر نے فوری طور پر مذکورہ پیغام کا جواب دیا اور جہاز کے کپتان کو پاکستانی فضاء میں موجود شدید فضائی ٹریفک سے نکلنے میں مدد فراہم کی۔

سی اے اے ذرائع کے مطابق جے پور سے مسقط جانے والے جہاز کو شدید خراب موسم کا سامنا سندھ کے علاقے چھور میں کرنا پڑا تھا۔

ہواوے کو ایک بار پھر امریکی عارضی ریلیف ملنے کا امکان

امریکا کی جانب سے پابندیوں کا سامنا کرنے والی چینی کمپنی ہواوے کو امریکی محکمہ تجارت کی جانب سے تیسری بار عارضی جنرل لائسنس دیئے جانے کا امکان ہے۔

رواں سال مئی میں ہواوے پر تجارتی پابندیوں کا نفاذ ہوا تھا مگر امریکی محکمہ تجارت کی جانب سے اس موقع پر چینی کمپنی کو پابندیوں سے 3 ماہ کا استثنیٰ عارضی لائسنس کے اجرا کے ذریعے دیا گیا، تاکہ وہ امریکی کمپنیوں سے کاروبار جاری رکھ سکے۔

امریکی بلیک لسٹ میں شامل کمپنی کے امریکی کمپنیوں سے کاروبار کے حوالے سے عارضی لائسنس کی مدت 19 اگست کو ختم ہونے پر مزید 3 ماہ کے لیے عارضی لائسنس جاری کیا گیا۔

خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق اب یہ مدت 19 نومبر کو ختم ہورہی ہے اور اس سے قبل ایک بار پھر 3 ماہ کا استثنیٰ دیئے جانے کا امکان ہے۔

مئی میں ہواوے کو بلیک لسٹ کرنے کے بعد امریکی کمپنیوں کو چینی کمپنی کے ساتھ کام کرنے کے لیے حکومتی لائسنس کی ضرورت ہوتی ہے۔

رائٹرز نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی محکمہ تجارت کی جانب سے مزید 90 دن کے لیے عارضی لائسنس جاری کیا جائے گا جس کی بدولت ہواوے ٹیلی کام نیٹ ورکس کے ساتھ کام کرسکے گی جبکہ اس کے فونز کو سافٹ وئیر اپ ڈیٹس بھی ملتی جائیں گی۔

گزشتہ ہفتے امریکا کے کامرس سیکرٹری ولبر روس نے ایک انٹرویو کے دوران اعتراف کیا تھا کہ کچھ دیہی امریکی آپریٹرز تھری جی اور فور جی نیٹ ورکس چلانے کے لیے ہواوے پر منحصر ہیں۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ امریکا ہواوے کی جانب سے فائیو جی نیٹ ورکنگ آلات کی سپلائی کے حوالے سے اعتماد کرنے کے لیے تیار نہیں۔

مئی میں عارضی لائسنس کے اجرا کے موقع پر امریکی سیکرٹری آف کامرس نے اپنے بیان میں کہا تھا ‘ یہ عارضی لائسنس آپریٹرز کو متبادل انتظامات کے لیے وقت فراہم کرتا ہے جبکہ محکمے کو اس دوران یہ تعین کرنے کا موقع مل سکے گا کہ وہ طویل المعیاد بنیادوں پر امریکی اور غیر ملکی ٹیلی کمیونیکشن کمپنیاں جو اس وقت ہواوے کے آلات پر انحصار کررہے ہیں، کے لیے انتظامات کرسکے’۔

بیان میں کہا گیا کہ یہ لائسنس آپریٹز کو ہواوے موبائل فونزاور براڈ بینڈ نیٹ ورکس پر آپریشنز جاری رکھنے کی سہولت فراہم کرے گا’۔

عارضی لائسنس کے باوجود ہواوے کے لیے امریکی پابندیاں مختلف مسائل کا باعث بن رہی ہیں کیونکہ متعدد بڑی ٹیکنالوجی کمپنیوں نے چینی کمپنی سے اپنے تعلقات ختم کرلیے ہیں، جس سے اہم سافٹ وئیر اور پرزہ جات تک اس کی رسائی محدود ہوئی ہے۔

اسی طرح کمپنی کے نئے فونز گوگل ایپس اور سروسز سے محروم ہوچکے ہیں، جس سے یورپ سمیت مختلف مارکیٹوں میں کمپنی کا بزنس متاثر ہونے کا بھی امکان ہے۔

اعصام الحق کا ڈیوس کپ مقابلے پاکستان سے باہر منتقل کرنے پر ایونٹ کا بائیکاٹ

لاہور: ٹینس اسٹار اعصام الحق نے بھارتی اثرورسوخ پر انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن کی طرف سے  ڈیوس کپ مقابلے پاکستان سے باہر منتقل کرنے پر ایونٹ کا بائیکاٹ کردیا۔

پاکستان ٹینس فیڈریشن کے صدر سلیم سیف اللہ کے نام احتجاجی خط میں ستارہ امتیاز پانے والے اعصام الحق کا کہنا ہے کہ پاکستان میں سکیورٹی کو جواز بناکر ڈیوس کپ ٹائی کو کسی دوسرے ملک میں منتقل کرنا قابل افسوس ہے۔ پاکستان میں ہزار بھارتی کرتار پور راہداری اور دوسرے مختلف مقامات پر آزادانہ گھوم پھر رہے ہیں، کسی بھارتی کو سیکیورٹی کے حوالے سے کوئی مسئلہ نہیں۔

اعصام الحق نے کہا کہ سری لنکا کی کرکٹ ٹیم لاہور میں کھیل چکی ہے، بنگلا دیش کی ٹیمیں مختلف شہروں میں کھیل چکی ہیں، برطانوی شاہی جوڑا اسلام آباد اور لاہور کی سیر کرچکا ہے، ہالینڈ کی وزیر اعظم پاکستان آرہی ہیں، ایسے میں آل انڈیا ٹینس ایسوسی ایشن کے کہنے پر مقابلے بیرون ملک منتقل کردینا پاکستانی عوام سے زیادتی ہے۔

ٹینس اسٹار نے خط میں کہا کہ اگر ڈیوس کپ ٹینس ٹائی نیوٹرل مقام پر کرانے کا فیصلہ واپس نہ لیا گیا تو اس ایونٹ میں شرکت نہیں کروں گا، ہمیشہ پاکستان کی عزت اور نیک نامی کے لیے کھیلا ہوں اس لیے انٹرنیشنل ٹینس فیڈریشن کے اس دہرے معیار اور بھارتی دوستی رویے پر آواز بلند کررہا ہوں۔

واضح رہے کہ ڈیوس کپ مقابلے 29 نومبر سے اسلام آباد میں ہونا تھے جس میں بھارتی ٹیم کو یہاں آکر کھیلنا تھا تاہم آل انڈیا ٹینس ایسوسی ایشن کے دباؤ پر اسے اب نیوٹرل ملک میں کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔

فیس بک میں انسٹاگرام جیسے ‘پاپولر فوٹوز’ فیچر کی آزمائش

جب آپ فیس بک ایپ پر فل اسکرین موڈ پر ایک ویڈیو دیکھتے ہیں اور اسکرول ڈاﺅن کرتے ہیں تو آپ کے سامنے سوشل میڈیا نیٹ ورک کی جانب سے مختلف ویڈیوز کے آپشن دیئے جاتے ہیں اور اب یہی فیچر تصاویر کے لیے بھی متعارف ہونے والا ہے۔

فیس بک میں ایک نئے فیچر پر کام ہورہا ہے جسے پاپولر فوٹوز کا نام دیا گیا ہے اور انسٹاگرام فیڈ سے ملتا جلتا ہے۔

اس وقت اگر آپ فیس بک ایپ پر تصویر پر کلک کرتے ہیں تو فل اسکرین موڈ میں داخل ہوجاتے ہیں جس پر سیاہ پس منظر ہوتا ہے اور جب آپ اسکرول ڈاﺅن یا سوائپ کرتے ہیں، تو واپس چلے جاتے ہیں۔

مگر پاپولر فوٹوز فیچر میں صارفین کے سامنے دوستوں اور دیگر پبلک پوسٹس کی دیگر تصاویر آجاتی ہیں جو بالکل انسٹاگرام فیڈ جیسا تجربہ فراہم کرتا ہے۔

فوٹو بشکریہ ٹیک کرنچ
فوٹو بشکریہ ٹیک کرنچ

ٹیک کرنچ کی رپورٹ کے مطابق فیس بک کے ایک ترجمان نے پاپولر فوٹوز کی اکتوبر میں آزمائش کی تصدیق کی، تاہم مزید تفصیلات یا اس کے مقصد کے بارے میں بتانے سے انکار کیا۔

فیس بک میں پہلے ہی اسٹوریز، میسجنگ، پروفائلز اور واچ ویڈیو ہب جیسے انسٹاگرام فیچرز موجود ہیں مگر اس فیچر کی بدولت یہ مکمل طور پر انسٹاگرام کلون کی شکل اختیار کرلے گی۔

فوٹو بشکریہ ٹیک کرنچ
فوٹو بشکریہ ٹیک کرنچ

اس فیچر کی بدولت صارفین کو نیوزفیڈ پر اسٹیٹس اپ ڈیٹس اور دیگر مواد دیکھنے کی ضرورت نہیں ہوگی بلکہ وہ بس ایک تصویر پر کلک کرکے دیگر تصاویر کو دیکھتے ہوئے وقت گزار سکیں گے۔

اس فیچر میں نیوز فیڈ یا کسی پروفائل پر تصویر پر جب صارفین کی جانب سے کلک کیا جائے گا تو اسکرول کرنے پر پاپولر فوٹوز ٹائٹل سے نیچے جانے پر اضافی تصاویر نظر آئیں گی اور سی مور فوٹوز لیبل مزید تصاویر کو دکھائے گا۔

پاپولر فوٹوز میں کیپشن 65 حروف پر مشتمل ہوگا جبکہ سیاہ پس منظر سنیما جیسا احساس دلائے گا۔

Google Analytics Alternative