Home » Author Archives: Admin (page 7)

Author Archives: Admin

ملک کے مختلف علاقوں میں ڈینگی کی صورتحال تشویشناک

ملک کے مختلف علاقوں میں مون سون سیزن کے اختتام کے ساتھ ساتھ مچھر کے کاٹنے سے ہونے والے ڈینگی بخار نے وبا کی صورت اختیار کرلی جس کے باعث روزانہ کی بنیاد پر سیکڑوں مریض ہسپتال پہنچ رہے ہیں۔

راولپنڈی میں ڈینگی کی صورتحال خطرناک صورت اختیار کرچکی ہے اراولپنڈی کے 3 سرکاری ہسپتالوں میں اتوار کے روز 195 مریض لائے گئے جس سے متاثرہ افراد کی تعداد 543 تک جاپہنچی۔

ایک رپورٹ کے مطابق سرگودھا میں 50 سے زائد مقامات پر ڈینگی لاروا کی نشاندہی کی گئی جس کے باعث ڈسٹرک ہیڈکوارٹر ٹیچنگ ہسپتال میں 8 افراد داخل کیے گئے۔

 

میونسپل کارپوریشن کے عملے کے مطابق فنڈز کی کمی کے باعث ڈینگی لاروا کا پھیلاؤ روکنا ممکن نہیں، ایک ملازم نے بتایا کہ سیاسی بنیادوں پر بھرتیوں کے باعث ادارہ دیوالیہ ہوچکا ہے۔

تاہم بہاولپور میں اتوار کے روز ڈینگی مریضوں کے لیے قائم خصوصی وارڈز سے 28 افراد کو طبیعت بہتر ہونے پر ڈسچارج کردیا گیا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل اسپیشل برانچ پنجاب نے صوبے کے 6 اضلاع کو ڈینگی کے حوالے سے خطرناک قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ محکمہ صحت کے حکام نے ڈینگی پھیلنے کے خطرے کے پیشِ نظر بروقت اقدامات نہیں کیے۔

 

رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ راولپنڈی میں مذکورہ بیماری کی روک تھام نہ کیے جانے کے سبب لاہور، گوجرانوالہ، شیخوپورہ، فیصل آباد اور ملتان میں بھی یہ وبا پھوٹ سکتی ہے۔

لاہور میں انسداد ڈینگی مہم کا آغاز

ڈینگی کے بڑھتے ہوئے کیسز کے باعث ضلعی انتظامیہ نے پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں انسداد ڈینگی مہم کا آغاز کر دیا۔

اس مہم کے دوران عوام الناس کو انسداد ڈینگی سے متعلق بھر پور آگاہی دی جائے گی اور اس دوران ڈینگی سے بچاو کے پیغامات والے فلوٹس لاہور کی سٹرکوں پر موجود ہوں گے۔

ڈپٹی کمشنر لاہور صالحہ سعید نے بتایا کہ ایجوکیشن اتھارٹی سرکاری و پرائیویٹ اسکولوں میں 18 لاکھ بچوں کو آگاہی مہم میں شامل کرے گی اس دوران یونیورسٹیز، کالجز اور اسکولز کے بچوں کو ڈینگی سے بچاؤ کا سفیر بنایا جائے گا۔

انہوں نے عوام کو ہدایت کی کہ اپنے اردگرد کا ماحول صاف رکھیں اور کسی جگہ پانی کو کھڑا نہ ہونے دیں جبکہ دیگر افراد کو بھی ڈینگی کے حوالے سے آگاہی فراہم کریں۔

دوسری جانب خیبرپختنوخوا کے ضلع مانسہرہ میں 89 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوگئی جس کے باعث محکمہ صحت کے حکام، لیڈی ہیلتھ ورکرز کی مدد سے آگاہی مہم کا آغاز کرنے پر مجبور ہیں۔

اس ضمن میں ڈپٹی ڈسٹرک ہیلتھ افسر ڈاکٹر ناصر شاہ نے بتایا کہ ’شہری علاقوں میں 17 کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 13 کیسز دیہی یونین کونسلز میں سامنے آئے‘۔

سعودی عرب میں تیل تنصیبات پر حملے کے بعد عالمی منڈی میں تیل مہنگا

نیویارک: سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر حملوں کے بعد عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا۔

سعودی عرب میں تیل کے کنوؤں اور پلانٹس پر حملوں کے نتیجے میں تیل کی عالمی رسد میں پانچ فیصد کمی ہوگئی ہے جس کے باعث عالمی منڈی میں تیل کی قیمتیں چار ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکی خام تیل کی قیمت میں 10.68 فیصداضافہ ہوگیا اور یورپی آئل مارکیٹوں میں برینٹ خام تیل 11.77فیصدمہنگا ہوگیا۔ تیل کی عالمی منڈی میں امریکی خام تیل ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ کی قیمت 60.71 ڈالر اور برینٹ کروڈ کے دام 67.31ڈالر فی بیرل ہوگئے ہیں۔

ایک موقع پر خام تیل کے بیرل کی قیمت میں اس سے بھی زیادہ اضافہ ہوا تاہم پھر صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکی تیل ذخائر جاری کرنے کی منظوری دی جس کے نتیجے میں تیل کی عالمی قیمت میں کچھ کمی آئی۔

سعودی عرب کا کہنا ہے کہ تنصیبات سے تیل کی رسد مکمل طور پر بحال ہونے میں کئی ہفتے لگ سکتے ہیں جس کے باعث اتنے ہی عرصے تک قیمتوں میں اضافہ برقرار رہنے کا خدشہ ہے۔

ہفتے کے روز سعودی عرب میں تیل کی دو بڑی اور اہم تنصیبات پر ڈرون حملے ہوئے تھے جس کے نتیجے میں ان مقامات پر آگ لگ گئی اور کافی مالی نقصان ہوا۔ امریکا نے الزام لگایا ہے کہ ان حملوں میں ایران کا ہاتھ ہے تاہم ایرانی حکومت نے یہ الزام مسترد کردیا ہے۔

واضح رہے کہ یمن سے ایرانی حمایت حوثی باغی متعدد بار سعودی عرب پر میزائل حملے کرچکے ہیں۔

‘آئرن مین’ کے مداحوں کے لیے بڑی خبر سامنے آگئی

رواں سال ریلیز ہوئی مارول کی کامیاب سپر ہیرو فلم ‘ایوینجرز اینڈ گیم’ میں مشہور زمانہ آئرن مین کے کردار کو مار دیا گیا تھا، جس پر مداحوں نے بےحد مایوسی کا اظہار کیا۔

متعدد سپرہیروز کو ایک پروجیکٹ میں جمع کرکے ایوینجرز سیریز بنائی گئی، جس کے آخری حصے میں سپر ہیرو آئرن مین نے ولن کو مارنے کے لیے اپنی جان بھی گوا دی تھی۔

آئرن مین کے اس کامیاب کردار کو روبرٹ ڈاؤنی جونیئر نے نبھایا اور اب مداحوں کے لیے خوشی کی خبر یہ ہے کہ شاید ان کا یہ پسندیدہ کردار واپسی کرنے جارہا ہے۔

ڈیڈلائن نامی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق روبرٹ اپنے اس کردار کے ساتھ جلد ریلیز ہونے والی ہولی وڈ فلم ‘بلیک وڈو’ میں واپسی کریں گے۔

فلم بلیک وڈو میں ہولی وڈ اداکارہ اسکارلٹ جونسن نے نتاشا رومن آف کا مرکزی کردار نبھایا اور ان کا یہ سپر ہیرو کردار ایوینجرز کا بھی حصہ رہا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ اس فلم میں روبرٹ ایک مختصر کردار کے لیے جلوہ گر ہونے جارہے ہیں۔

جبکہ اس فلم میں آئرن مین کے ساتھ ساتھ ایوینجرز کے اور بھی سپر ہیروز نظر آئیں گے۔

فلم ‘بلیک وڈو’ اگلے سال یکم مئی کو سینما گھروں میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی۔

پاکستان اور ایران کے درمیان گیس پائپ لائن منصوبے کا ترمیمی معاہدہ طے پاگیا

اسلام آباد: پاکستان اور ایران کے درمیان گیس پائپ لائن منصوبے کے ترمیمی معاہدے پر دستخط ہوگئے ہیں۔  

پاکستان اور ایران کے درمیان گیس پائپ لائن منصوبے پر اہم پیشرفت ہوئی ہے جس کے تحت انٹراسٹیٹ گیس سسٹم اور نیشنل ایرانین گیس کمپنی کے درمیان ترمیمی معاہدہ طے پا گیا ہے، دونوں ممالک کی گیس کمپنیوں نے ترمیمی معاہدے پر دستخط بھی کر دیے ہیں۔

سرکاری ذرائع کے مطابق ایران اب پائپ لائن تعمیر میں تاخیر پر ثالثی عدالت میں نہیں جائے گا اور نہ ہی پاکستان کو ایران کو جرمانہ ادا کرنا پڑے گا، دونوں ممالک مل کر منصوبے کی تکمیل کے لیے قابل عمل حل نکالیں گے، پاکستان 2024 تک آئی پی پائپ لائن تعمیر کر سکے گا جس کے بعد پاکستان ایران سے 750 ملین مکعب فٹ گیس یومیہ خریدے گا۔

طاقت کی زبان سمجھنے کی بھارتی روش ۔ ۔ !

17 ستمبر 1950 کو ایک صاحب اس دنیا میں وارد ہوئے جن کا نام ان کے والدین نے نریندر بھائی مودی رکھا اور موصوف اب تلک 25 ہزار 199 دن اس کائناتِ حیات میں گزار چکے ہیں ۔ یہ شخصیت چھبیس مئی 2014 کو پہلی بار ہندوستان کے وزارت عظمی کے منصب پر فائز ہوئی اور 2019 میں دوبارہ واضح اکثریت سے جیتنے کے بعد مودی اپنے دوسرے عہد اقتدار کے پہلے 100 دن بھی گزار چکے ہیں ۔ انھوں نے گویا ہمیشہ یہ تہیہ کئے رکھا کہ انھوں نے اپنے ہمسایوں کے علاوہ خود اپنے یہاں کی اقلیتوں کو چین سے نہیں رہنا دینا اور اس ضمن میں اپنی تمام تر توانائیاں صرف کر رہے ہیں ۔ اس صورتحال کا جائزہ لیتے مبصرین نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے بعض افراد اور گروہوں کی نفسیات ہی کچھ ایسی بن جاتی ہے کہ وہ محض طاقت کی زبان سمجھتے ہیں اور دلیل اور منطق کو سامنے والی کی کمزوری سے تعبیر کرتے ہیں ۔ ویسے تو یہ ایک ابدی حقیقت ہے کہ زیادہ تر لوگ قوت کو ہی سب سے بڑی دلیل قرار دیتے ہیں مگر اس ضمن میں ہندوستان کی تاریخ پر ذرا سی بھی نگاہ ڈالیں تو واضح ہو جاتا ہے کہ وہاں کے حکمران طبقات ہمیشہ ہی سے قوت کے پجاری رہے ہیں ۔ اسی وجہ سے ہر وہ شے جو نفع یا نقصان پہنچا سکتی ہے ، اس کی پوجا شروع کر دی جاتی ہے مثلا آگ ، سانپ اور مختلف درندے وغیرہ اور شاید اسی وجہ سے گذشتہ سینکڑوں برسوں میں بھارت دوسری قوموں کا غلام رہا ہے ۔ مگر اب جب کہ 72 برسوں سے اسے آزادی میسر آئی ہے تو وہ اپنے چھوٹے ہمسایوں کو ڈرا دھمکا کر ، مقبوضہ کشمیر میں بدترین ریاستی دہشت گردی کا بازار گرم کر کے اور پاکستان چین کیخلاف توسیع پسندانہ عزائم اختیار کر کے گویا اپنی صدیوں کی غلامانہ محرومیوں کی تسکین کا خواہش مند ہے ۔ مگر بھارت کے بالا دست طبقات اس تلخ حقیقت سے جانے کیوں صرف نظر کر رہے ہیں کہ اس روش کے نتاءج کبھی بھی کسی کے حق میں اچھے نہیں ہوتے ۔ اس تناظر میں موثر عالمی قوتیں بھی ، اپنی سطحی اور وقتی مصلحتوں کی بنا پر بھارت کی مجرمانہ روش سے چشم پوشی کرتے ہوئے غالبا اجتماعی انسانی کوتاہیوں کی مرتکب ہو رہی ہیں ۔ اور یہی وجہ ہے کہ مودی سرکار کے اقتدار میں آنے کے بعد خود بھارت کے اندر بھی ایک بحرانی کیفیت پیدا ہو چکی ہے اور ہمسایہ ممالک کے ساتھ بھی بھارتی تعلقات کسی طور قابلِ رشک نہیں ۔ یہ امر بھی کسی سے پوشیدہ نہیں کہ کوئی بھی حکومت اس ریاست کا حقیقی چہرہ ہوتی ہے ۔ ایسے میں مودی سرکار آئے روز اپنی مذہبی اقلیتوں کے خلاف جس طرح عدم برداشت کے ماحول کو جان بوجھ کر فروغ دے رہی ہے ، یہ اسی کا نتیجہ ہے کہ عمر عبداللہ، محبوبہ مفتی اور فاروق عبداللہ جیسی بھارت نواز شخصیات کو بھی احساس ہو رہا ہے کہ اس وقت دو قومی نظریہ کے ساتھ نہ چلنا کس قدر عاقبت نا اندیش فیصلہ تھا ۔ وہ کہہ رہے ہیں کہ جموں کشمیر کے حوالے سے دہلی سرکار اپنی پارلیمنٹ کی منظور کردہ ایک قرار داد کا ذکر تو بار بار کرتی ہے مگر شاید وہ یہ بھول چکی ہے کہ اس ضمن میں اقوام متحدہ نے بھی کتنی قرار دادیں منظور کر رکھی ہیں لہٰذا اگر واقعتا بھارت کے حکمرانوں کو امن عزیز ہے تو انھیں پاکستان اور کشمیریوں سے بات چیت کا راستہ اپنانا ہو گا وگرنہ قابض بھارتی فوج کیسے اور کب تلک مقبوضہ ریاست پر اپنا تسلط بر قرار رکھ پائے گی ۔ یہ امر اور بھی قابل ذکر ہے ایک روز قبل نریندر مودی نے بھارتی ریاست جھارکھنڈ کی راجدھانی رانچی میں اپنی حکومت کے 100 دن پورے ہونے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گوہر افشانی کی کہ 100دنوں میں تو ہم نے محض ٹریلر دکھایا ہے، پوری فلم ابھی باقی ہے ۔ ابھی تو صرف 100 دن گزرے ہیں جبکہ ہماری حکومت کے پورے پانچ سال باقی ہیں ۔ ہم نے وہ کیا ہے جو اس سے قبل کے بھارتی حکمرانوں اور دوسروں نے سوچا بھی نہیں ہو گا اور ہم آگے بھی ایسے سارے کام کریں گے ۔ اس تمام صورتحال کے باوجود دہلی کے حکمران تو ہٹ دھرمی سے جمہوریت اور سیکولر ازم کے دعوے کرتے رہتے ہیں مگر افسوس ناک پہلو یہ ہے کہ چونکہ عالمی برادری کے ایک بڑا حلقے کے ہندوستان کی بڑی آبادی سے کافی مفادات وابستہ ہیں ، اس لئے دنیا دہلی کے ان لغو دعوءوں پر یقین بھی کر لیتی ہے ۔ اور عالمی برادری ان پر یقین بھی کرے تو اس بابت کچھ نہ کہنا ہی غالبا بہتر ہو گا ۔

’کلر روبوٹ قتل و غارت کے باعث بن سکتے ہیں‘

گوگل سرچ انجن سے مستعفیٰ ہونے والی سافٹ ویئر انجینئر نے خبردار کیا ہے کہ نئی ٹیکنالوجی کے حامل جدید خود کار ہتھیار (کلر روبوٹ) کی غلطی کے نتیجے میں جنگ اور جنگی جرائم کا آغاز ہوسکتا ہے۔

کلر روبوٹ کا مقصد ہدف کا تعین اور خود حملہ کرنا ہے۔

واضح رہے کہ لایورہ نولان نے گزشتہ برس گوگل سے استعفیٰ دے دیا تھا کیونکہ انہیں امریکا کی ڈرون ٹیکنالوجی میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس (اے آئی) کو مزید وسعت دینے کے منصوبے پر تعینات کیا گیا تھا۔

دی گارجین مٰیں شائع رپورٹ کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ ’امریکی ڈرون میں اے آئی ٹیکنالوجی کے استعمال سے ہدف کا تعین انسان کی دسترس میں نہیں رہے گا، جس پر پابندی عائد ہونی چاہیے‘۔

مستعفیٰ ہونے والی سافٹ انجینئر نے کہا کہ ’آرٹیفیشنل انٹیلی جنس کے حامل کلر روبوٹ کو انسان کنٹرول نہیں کر سکے گا ایسی مشینوں پر پابندی ہونی چاہیے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’عسکری ٹیم ڈرون کو ہزاروں میل کی مسافت سے کنٹرول کرتے ہیں لیکن کلر روبوٹ میں تباہ کی پوری صلاحیت ہوگی اور وہ کسی خاص پروگرام کے تحت ایسا نہیں کرے گا‘۔

لایورہ نولان کلرروبوٹ کے خلاف مہم کا حصہ بن چکی ہیں اور انہوں اقوام متحدہ کے سفیروں کو نیویارک اور جنیوا میں کلرروبوٹ کے بارے میں بریف بھی کیا تھا۔

انہوں نے کہا تھا کہ ’کلر روبوٹ کی وجہ سے بڑے پیمانے پر واقعات پیش آسکتے ہیں کیونکہ یہ مشین غیرمتوقعہ انداز میں اپنا کام کرے گی اور اسی وجہ سے جدید ہتھیار کو بامقصد بنانے کے لیے انسانی ہاتھ میں اس کا کنٹرول دیاجاتا ہے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’کلرروبوٹ پر پابندی ہونی چاہیے کیونکہ ان کے بارے میں قیاس ناکافی اور خطرناک ہے‘۔

خیال رہے کہ گوگل نے لایورہ نولان کو 2017 میں پہلی مرتبہ ’پراجیکٹ ماوین‘ میں بطور سافٹ ویئر انجینئر مقرر کیا اور محض 4 برس میں ہی وہ اعلیٰ عہدے پر فائز ہوگئی تھیں۔

انہوں نے امریکی محکمہ دفاع کے پراجیکٹ ماوین (ویڈیو ٹیکنالوجی کے ذریعے شناخت کے عمل کو مزید تیز) بنانے کے منصوبے پر کام کیا تھا۔

بعدازاں امریکی محکمہ دفاع کے ساتھ گوگل کا معاہدہ اس وقت ختم ہوگیا جب پراجیکٹ ماوین سے وابستہ کام کرنے والے 3 ہزار احتجاجاً منصوبہ کے خلاف پٹیشن دائر کی۔

لایورہ نولان نے بھی اسی متنازع منصوبہ پر استعفیٰ دیا تھا اور پیش گوئی کی تھی کہ ریموٹ کنٹرول ڈرون کے مقابلے میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس پر مشتمل ہتھیاروں سے انسانیت کو زیادہ خطرہ ہے۔

سائنس کے تصدیق شدہ قبض سے نجات میں مددگار طریقے

کیا آپ یقین کریں گے کہ امریکا میں لوگ ہر سال 25 کروڑ ڈالرز ایک ایسے عام مسئلے سے نجات پانے کے لیے ادویات پر خرچ کردیتے ہیں جو پاکستان میں بھی کافی عام ہے اور وہ ہے قبض۔

پاکستان میں اس حوالے سے کوئی باضابطہ اعدادوشمار تو موجود نہیں مگر لاتعداد افراد قبض جیسے تکلیف دہ اور جھنجھلا دینے والے عارضے کا شکار ہوتے ہیں۔

حیران کن طور پر اکثر افراد میں اس مرض کی وجہ مناسب مقدار میں فائبر والی غذاﺅں سے گریز یا پانی کی کم مقدار پینا ہوتی ہے۔

اگر آپ کو بھی اس مسئلے کا اکثر سامنا ہوتا ہے تو طبی سائنس کے ثابت شدہ ان طریقوں کو آزما کر دیکھیں جو اس مرض سے نجات دلانے میں ادویات سے زیادہ موثر ثابت ہوسکتے ہین۔

شہد اور لیموں سے بنی چائے

اس چائے کو بنانے کے لیے زیادہ محنت کی ضرورت نہیں، بس پانی میں شہد اور لیموں کے عرق کا اضافہ کرنا ہوتا ہے، شہد ہلکے جلاب جیسی خصوصیات رکھتا ہے جبکہ لیموں نظام ہاضمہ کو قدرتی طور پر متحرک کرنے کا کام کرتا ہے جبکہ جسم سے زہریلے مواد کے اخراج میں مدد دیتا ہے۔

بہت زیادہ پانی پینا عادت بنالیں

مردوں کو روزانہ کم از کم 3.7 لیٹر جبکہ خواتین کو 2.7 لیٹر پانی پینا چاہیے، اس کی وجہ یہ ہے کہ قبض میں سخت اور خشک فضلہ اس کی سب سے عام وجوہات میں سے ایک ہے، مگر مناسب مقدار میں پانی پینا جسم کو ہائیڈریٹ رکھ کر اسٹول کے اخراج کو آسان بناتا ہے۔ پانی اور فروٹ جوس قبض سے لڑنے کے لیے بہترین ہیں، خاص طور پر سیب کا جوس بھی ہلکے جلاب جیسا اثر رکھتا ہے، تو اس کا انتخاب بہتر ہوتا ہے۔ قبض کی صورت میں کیفین والے مشروبات جیسے چائے، کافی یا سافٹ ڈرنکس سے گریز کریں ، کیونکہ ان کے استعمال سے پیشاب زیادہ آتا ہے اور سیال پانی سے زیادہ خارج ہوتا ہے۔

فائبر والی غذائیں

فائبر سے بھرپور غذائیں بھی قدرتی جلاب جیسا اثر رکھتی ہیں، روزانہ 20 سے 35 گرام فائبر کو غذا میں شامل کرنا قبض کو دور رکھنے میں مدد دیتا ہے، سیب، انجیر، دالیں، گریاں، بیج اور لوبیا وغیرہ فائبر کے حصول کا اچھا ذریعہ ہیں اور اکثر افراد کو پسند بھی ہوتے ہیں۔

آلو بخاروں سے مدد لیں

آلوبخارے نہ صرف فائبر سے بھرپور ہوتے ہیں بلکہ ان میں ایسی قدرتی مٹھاس ہوتی ہے جو قبض سے نجات دلانے میں مدد دیتی ہے، سو گرام آلوبخاروں میں 14.7 فیصد یہ مٹھاس موجود ہوتی ہے، اگر آلوبخارے کا ترش ذائقہ پسند نہیں تو اس کا جوس نکال کر پی لیں مگر یہ جان لیں کہ جوس میں فائبر کی مقدار کم ہوتی ہے مگر پھر بھی قبض کے خلاف یہ کارآمد ٹرک ثابت ہوسکتی ہے۔

میتھی

میتھی کااستعمال بھی جلاب کش اثر رکھتا ہے اور اسٹول کو نرم کرتا ہے، اگر قبض کا شکار ہوں تو اسے کھانے میں شامل کرکے کھائیں اور مناسب مقدار میں پانی پی لیں۔ اس کے سپلیمنٹ کی چائے بھی مختلف مقامات پر مل جاتی ہے، اسے بھی آزما سکتے ہیں۔

دہی

قبض ہونے کی صورت میں دودھ سے بنی مصنوعات سے دور رہنا چاہیے مگر دہی ان میں شامل نہیں، دہی میں پروبائیوٹیکس موجود ہوتے ہیں جو نظام ہاضمہ سے فضلے کے اخراج میں مدد دیتے ہیں اور تکلیف بھی کم کرتے ہیں۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

پاکستان میں بہت پیار اورمحبت دینے والے لوگ بستے ہیں ، کانگریس سربراہ شردپوار

دنئی دلی: نیشنل کانگریس پارٹی کے سربراہ  شردپوار نے کہا ہے کہ پاکستانی بہت پیار اورمحبت دینے والے لوگ بستے ہیں  اور جب وہ پاکستان کے دورے پر گئے تھے تو ان کا استقبال بہت گرمجوشی سے کیا گیا تھا۔

شردپوار نے کہا کہ بھارت میں پاکستان کے متعلق جتنا بھی منفی پروپگینڈا کیا جاتا ہے اس کی پسِ پشت سیاسی مقاصد ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں پاکستان سے متعلق انتہائی غلط رائے قائم ہے حقیقت میں ایسے بیانات پاکستان کے حقیقی حالت سمجھے بغیر محض سیاسی فوائد کے لیے دئیے جارہے ہیں جب کہ پاکستانی بہت پیار اورمحبت دینے والی قوم ہے۔

Google Analytics Alternative