انٹر ٹینمنٹ

دلیپ کمار طبیعت ناساز ہونے پر ہسپتال منتقل

ممبئی۔ بالی وڈ کے معروف اداکار دلیپ کمار کی طبیعت ناساز ہونے پر انہیںہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق دلیپ کمار اور ان کی اہلیہ سائرہ بانو کے مینجر مرشد نے بتایا کہ دلیپ کمارکو ممبئی کے لیلاوتی ہسپتال لے جایا گیا ہے۔مینجر مرشد کے مطابق دلیپ کمار کو ہلکا بخار ہے اور سانس لینے میں دقت ہو رہی تھی۔ دلیپ کمار ابھی دو تین دن کے لیے ہسپتال میں رہیں گے اور وہ عام وارڈ میں داخل ہیں۔واضح رہے کہ 93 سالہ دلیپ کمار نے 1944ءمیں فلم ’جوار بھاٹا‘ سے اپنے کریئر کا آغاز کیا تھا۔ ان کا فلمی کریئر چھ دہائیوں سے زیادہ عرصے پر محیط ہے ۔گذشتہ سال بھارتی حکومت نے انھیں دوسرے سب سے بڑے شہری اعزاز ’پدم وبھوشن‘ سے نوازا تھا۔

فلمسٹار نور کی دبئی میں ایوارڈ شو میں شرکت

لاہور فلمسٹار نور کی دبئی میں ایوارڈ شو میں شرکت،تفصیلات کے مطابق اداکارہ نور نے نجی ٹی وی چینل کے دبئی میں ہونےوالے سولہویں ایوارڈ شو میں شرکت کی جہاں ریڈ کارپٹ پر میڈیا سے گفتگو رتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی فلم انڈسٹری کو دوبارہ سے ترقی کرتا دیکھ کر دل خوش ہوجاتا ہے۔ پاکستان میں اب بہت اچھی فلمیں بن رہی ہیں اور نیا ٹیلنٹ نئی ٹیکنالوجی کے ساتھ فلمیں بنا رہا ہے جو کہ خوش آئند ہے۔نور کا کہنا تھا کہ میری فلم”عشق پوزیٹو“بھی مکمل ہو چکہ ہے جس کی ریلیز کرنے کی حتمی تاریخ کا اعلان بہت جلد کردونگی اور امید ہے کہ فلم بینوں کو ہماری یہ کاوش ضرور پسند آئے گی۔

شاہ رخ خان پر چوری کا سنگین الزام

شا ہ رخ خان کی فلم ”فین“ 15 اپریل کو ریلیز کی جانی ہے شاہ رخ کی اس فلم کی کہانی چوری کرنے کا الزام عائد کر دیاگیا ہے جبکہ شارخ خان نے اپنی فلم ’فین‘ کی کہانی پر چوری کے الزام کے حوالے سے کہا ہے کہ یہ فلم ایک عام کہانی پر مبنی ہے۔شاہ رخ نے کا کہنا ہے کہ فلم کی کہانی ایک عام سوچ کی عکاسی کر تی ہے، یہ ایک اداکار اور اس کے فین کی کہانی ہے، اس کے بہت سے پہلو ہو سکتے ہیں۔ یہ ممکن ہے کہ کوئی پہلو کسی کی کہانی سے ملتا ہو۔اس ساری بحث کے دوران کچھ ڈائریکٹر اور سکرپٹ رائٹر فلم میں اپنے کریڈٹ اور معاوضے کی مانگ کو لے کر ہائی کورٹ پہنچ گئے ہیں۔ 2014 میں ریلیز ہونے والی ایک فلم کے ڈائریکٹر مہیش ویجناتھ ڈویجوڑے کا الزام ہے کہ ’فین ‘ کی کہانی ان کی لکھی کہانی’ ’اداکار“ کی کاپی ہے۔مہیش کا دعوی ہے کہ ’اداکار‘ کی کہانی انھوں نے 1994 میں لکھی تھی اور 1997 میں رجسٹر کروائی تھی۔مہیش کے بقول ’میں نے شاہ رخ کو ذہن میں رکھ کر یہ کہانی لکھی تھی، 1997 میں ’دل تو پاگل ہے‘ کی شوٹنگ کے وقت میں نے یہ کہانی یش چوپڑا کو سنائی تھی اور انھوں نے کہانی کو سن کر میری حوصلہ افزائی کی تھی۔وہ کہتے ہیں کہ1998 میں نے شاہ رخ کو بھی یہ کہانی سنائی تھی اور انھیں بھی یہ پسند آئی تھی۔ اس کے بعد یش راج فلمز کے چکر کاٹتا رہا تاکہ فلم بن جائے۔مہیش نے بتایا کہ پیر کو ممبئی ہائی کورٹ میں اس کی سماعت ہے اور اگر ان کے حق میں فیصلہ نہ آیا تو وہ سپریم کورٹ تک جا سکتے ہیں۔مہیش نے کہا کہ سال 2005 میں یش چوپڑا کے ساتھ دو گھنٹے کی میٹنگ کے آڈیو ویڈیو ریکارڈ بھی ان کے پاس ہیں۔فلم ’فین‘ کے ڈائریکٹر منیش پر بھی مہیش نے الزام لگایا کہ انھوں نے سال 2006 میں یہ کہانی منیش کو سنائی تھی۔فلم کی پروموشن میں مصروف شاہ رخ خان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ’ مجھے اس کیس کے بارے میں ابھی کوئی معلومات نہیں ہیں، کاپی کرنے کا الزام بے بنیاد ہے۔شاہ رخ نے بتایا کہ ان کی فلم ’راون‘ پر بھی ایسے الزام لگے تھے۔شاہ رخ یہ بھی کہتے ہیں کہ فلم بن گئی ہے اور چوری کا الزام لگانے والوں کی فلموں کا اب تک کوئی وجود بھی نہیں ہے۔مہیش کے علاوہ موہن کمار نامی سکرپٹ رائٹر نے بھی سکرپٹ چوری کا الزام لگایا ہے۔ موہن کا دعوی ہے کہ انھوں نے 2009 میں یہ کہانی لکھی تھی اور فلم رائٹرز ایسوسی ایشن میں رجسٹر بھی کرائی تھی۔موہن کا دعوی ہے کہ ان کی کہانی پر ’ڈمی‘ نام کی فلم بھی بن چکی ہے۔ موہن نے سماجی رابطوں کی سائٹ فیس بک پر ایک پیغام میں اپنا کیس ہائی کورٹ لے جانے کی بات بھی کی ہے

اداکار فواد خان نے پانامہ لیکس سے لاعلمی کا اظہار کر دیا

لاہور اداکار فواد خان نے پانامہ لیکس سے لاعلمی کا اظہار کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق اداکار فواد خان نے کہا کہ پانامہ لیکس کے حوالے سے کسی بات کا کوئی علم نہیںانہوں نے بتایا کہ میرا سواشل میڈصیا پر بھی کوئی اکاﺅنٹ نہیں اور ناہی میں اخبارات پڑھتا ہوں اس لئے میں پانامہ لیکس کے بارے میں کچھ نہیں جانتا اور نا ہی جاننے کی ضرورت ہے۔ فواد خان کا کہنا تھا کہ میں ایک فنکار ہوں اور فن کو فروغ دینے کے لئے پوری ایمانداری سے کام کر رہا ہوں‘ جس طرح کے حالات میں پاکستانی فلم انڈسٹری ترقی کر رہی ہے وہ قابل تحسین ہے۔

ہمایوں سعید نے رواں برس 4نئی فلمیں ریلیز کرنے کا اعلان کر دیا

لاہور۔ اداکار ہمایوں سعید نے بھی ہدایت کار سید نور کی طرح رواں برس 4نئی فلمیں ریلیز کرنے کا اعلان کر دیا۔واضح رہے کہ ہمایوں سعید نے 2015ءمیں بھی 4فلمیں جبکہ سید نور گزشتہ 3برس سے دعوی کر تے چلے آرہے ہیں کہ وہ 4نئی فلمیں ریلیز کریں گے۔اب 2016ءمیں کس کا دعوی سچ ثابت ہوتا ہے۔فلم بینوں کو رواں برس دونوں ہنر مندوں کی 4نئی فلموں کی ریلیز کا انتظار ہے۔

ڈرامہ سیریل” تم کون پیا “کو ناظرین کی بھر پور توجہ حاصل

لاہور۔ ٹی وی کے معروف اداکاروں عمران عباس اور عائزہ خان کا نیا ڈرامہ سیریل تم کون پیا ناظرین کی بھر پور توجہ حاصل کر رہا ہے۔یہ ڈرامہ سیریل ماہا ملک کے ناول پربنا ئی گئی ہے۔ڈرامہ سیریل کے دیگر فن کاروں میں قوی خان، حنا بیات اور بہت سے اداکار شامل ہیں۔ڈرامے کے ہیرو عمران عباس قبل ازیں ڈرامہ سیریلز میری ذات ذرہ بے نشاں، پیا کے گھر جانا ہے، دل مضطر اور دیگر شامل ہیں۔تم کون پیا کی 3اقساط آن ائیر جاچکی ہیں۔ڈرامہ کی کہانی دلچسپی کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے۔

پاکستان کی نئی ایکشن فلم

اکیسویں صدی کے آغاز پر پاکستانی سینما کی مقبولیت کا دور واپس پلٹا اور ایکشن اور کامیڈی فلمیں بننے کی تعداد میں اضافہ ہوا۔ کل بروز جمعہ، ریلیز ہونے والی فلم مالک بھی ایک ایکشن فلم ہے۔ یہ ٹیلی وژن کے معروف اداکار عاشر عظیم کی پہلی فلم ہے۔ انہوں نے 22 برس پہلے پاکستان ٹیلی وژن کوئٹہ مرکز سے ڈراما سیریل دھواں سے اداکاری کی حیرت انگیز صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا تھا۔

اس کا شمار پی ٹی وی کی ایکشن ڈراما سیریل میں ہوتا ہے۔ اس ڈرامے کا موضوع کرپشن اور منشیات کی روک تھام تھا، جبکہ اس فلم کا موضوع کرپشن اور ناانصافی ہے۔ عاشر عظیم نے اس فلم کو بناتے ہوئے ڈراما سیریل دھواں کی مقبولیت کو ذہن میں رکھا، اس لیے ہم کہہ سکتے ہیں کہ مالک اُس ڈرامے کا فلمی ورژن ہے۔

اس فلم میں عاشر عظیم نے چار ذمہ داریاں نبھائیں۔ وہ اس میں بطور فلم ساز، ہدایت کار، اداکار اور کہانی نویس شامل ہیں۔ ان کے علاوہ دیگر نمایاں اداکاروں میں فرحان علی آغا، ساجد حسن، محمد احتشام الدین، حسن نیازی، عدنان شاہ ٹیپو، راشد فاروقی، تتمیع القلب، نوشیر سیموئل، شکیل حسین، کاشف حسین، عمران میر، بشریٰ عاشر عظیم، لبنیٰ اسلم، پاکیزہ خان، مریم انصاری، ارم اعظم اور دیگر فنکار ہیں۔ فلم میں افواجِ پاکستان کے حقیقی جوانوں نے بھی کام کیا ہے۔

فلم کے موسیقار ساحر علی بگا، گلوکار راحت فتح علی خان اور گیت نگار عمران رضا ہیں، جنہوں نے اپنے حصے کا کام بخوبی نبھایا۔ گیتوں کی دھنیں مدھر اور شاعری دلکش ہے۔ ایک دھن کی شاعری میں بابا فرید کا صوفی کلام بھی شامل کیا گیا۔

فلم کی تشکیل میں افواج پاکستان کے ادارے آئی ایس پی آر کا خصوصی تعاون حاصل رہا، جس وجہ سے عسکری مناظر میں جدید ہتھیار، گن شپ ہیلی کاپٹرز، سی ون تھرٹی جہاز، ٹینک اور فوجی جوان بالکل پیشہ ورانہ انداز میں استعمال ہوتے دکھائی دیے۔

فلم کی عکس بندی کراچی، اندرون سندھ اور بلوچستان کے مختلف علاقوں میں ہوئی۔ اس کے فارمیٹ میں ریڈ اور بلیک میجک کیمرے استعمال ہوئے۔ جدید سینما ٹیکنالوجی اور اس فارمیٹ کے ذریعے فلمی مناظر حقیقت سے قریب تر محسوس ہوتے ہیں۔ فلم کی عکس بندی میں ڈرون کیمروں کا بھی استعمال ہوا۔ ہدایت کار کے بقول اس فلم کا تمام تخلیقی اور تکنیکی کام پاکستان میں ہوا اور کسی بیرونی ذرائع سے کوئی مدد نہیں لی گئی۔

فلم کی کہانی کا ابتدائیہ بہت شاندار ہے۔ مختلف سمتوں سے تین کہانیاں ایک ساتھ آگے بڑھتی ہیں۔ پہلی کہانی میں سابق فوجی باپ بیٹا ہیں جن کی ایک سیکورٹی کمپنی ہے۔ ایک تاجر کے بیٹے کا اغواء اور پھر پیشہ ورانہ سیکورٹی کمپنی کے اہلکاروں کے ذریعے اس کی رہائی دکھائی گئی۔ بیٹے کا کردار نبھانے والے عاشر عظیم اپنے ماضی کو یاد کرتے ہیں، جب وہ فوج میں تھے، اس وقت کچھ چینی انجینئرز کو بلوچستان میں اغواء کر لیا گیا تھا اور وہ اسپیشل فورسز کی طرف سے کیے جانے والے آپریشن کی کمان سنبھالتے اور کامیابی سے پایہ تکمیل تک پہنچاتے ہیں۔

فلموں کی ہدایات دینے سے کتراتا ہوں، شاہ رخ خان

ممبئی ۔ بالی وڈ اداکار شاہ رخ خان نے کہا کہ وہ فلموں کی ہدایات دینے سے کتراتے ہیں۔بالی وڈ اداکار شاہ رخ خان نے اپنی تازہ گفتگو میں کہا کہ فلموں کی ہدایات دینا ان کے لئے چیلنجنگ ترین کام ہے جس سے وہ کتراتے ہیں،وہ سمجھتے ہیں کیرئیر کے اس دوراہے پر بھی ابھی ان کا اتنا اعتماد نہیں بڑھا کہ وہ ہدایتکاری کی بڑی ذمہ داری سنبھال سکیں،اس کے لئے ان کو آئندہ پانچ سالوں میں اپنا اعتماد دوگنا کرنا ہو گا تب ہی وہ ہدایتکاری جیسی بڑی ذمہ داری نبھانے کے قابل ہو سکیں گے،اداکار کی نئی فلم فین 15اپریل کو سینماگھروں کی زینت بنے گی۔

Google Analytics Alternative