انٹر ٹینمنٹ

ٹرمینیٹر ڈارک فیٹ پاکستان میں بھی نمائش کیلیے پیش

کراچی: مشہورِ زمانہ ہالی ووڈ سائنس فکشن اینڈ ایکشن سیریز ’ٹرمینیٹر‘ کے سلسلے کی نئی فلم ’ٹرمینیٹر ڈارک فیٹ‘ کراچی میں بھی نمائش کے لیے پیش کردی گئی۔

ٹم ملر کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم میں ایک بار پھر سے آرنلڈ شوارزنیگر طاقتور روبوٹک مشین کے کردار میں جلوہ گر ہوئے۔ فلم کے دیگر اداکاروں میں یکنزی ڈیوس، لنڈا ہملٹن، جڈیاگو بونیٹا، گیبریل لونا اور نٹالی ریس سمیت کئی فنکار شامل ہیں۔

ٹرمنیٹر ڈارک فیٹ نامی اس سیکوئل میں آرنلڈ شوارزنیگر اور لِنڈا ہیملٹن دونوں ہی شامل ہیں۔ ان کی آمد سے ٹرمنیٹر کی دو کامیاب ترین فلموں کی یاد تازہ ہوجاتی ہے۔ فلم کی کاسٹ کا کہنا ہے کہ ٹرمینیٹر فلم کی تمام سیریز اور کاسٹ کی پرفارمنس بہت دلچسپ رہی ہے یہ سیریز بھی یقینا اتنی ہی دلچسپ ہوگی۔

میرا کی فلم ’’باجی‘‘ ساؤتھ ایشین فلم فیسٹیول کی زینت بنے گی

کراچی: نامورپاکستانی اداکارہ میرا اورآمنہ الیاس کی فلم ’’باجی‘‘ نے موزیک انٹرنیشنل فلم فیسٹیول میں ایوارڈ حاصل کرنے کے بعد ایک اوراعزاز اپنے نام کرلیا۔

اداکارہ میرا، آمنہ الیاس اورعثمان خالد بٹ کی فلم ’’باجی‘‘ کو جہاں پاکستانی شائقینوں کی جانب سے اچھا ردعمل ملا، وہیں یہ فلم بین الاقوامی پلیٹ فارمزپر بھی بہت پسند کی جارہی ہے۔

دوماہ قبل فلم ’’باجی‘‘ کوموزیک انٹرنیشنل ساؤتھ ایشین فلم فیسٹیول میں نمائش کے لیے پیش کیا گیا تھا جہاں فلم دو ایوارڈز حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی تھی۔ اور اب ’’باجی‘‘ایک اور انٹرنیشنل فلم فیسٹیول میں پیش کی جائے گی۔

فلم’’باجی‘‘ کی ٹیم نے انسٹاگرام پریہ خوشخبری لوگوں کے ساتھ شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ فلم اگلے ماہ 16 نومبرکو وینکور انٹرنیشنل ساؤتھ ایشین فلم فیسٹیول میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی۔ اداکارہ میرا نے بھی یہ پوسٹ شیئر کرکے مداحوں کو بتایا کہ ان کی فلم بین الاقوامی فلم فیسٹیول میں پیش کی جائے گی۔

واضح رہے کہ ہدایت کار ثاقب ملک کی فلم ’’باجی‘‘میں اداکارہ میرا نے شمیرا کا مرکزی کردار ادا کیا تھا جب کہ ماڈل آمنہ الیاس، عثمان خالد بٹ اورعلی کاظمی نے ثانوی کردار اداکیے تھے۔

’گیم آف تھرونز‘ کی پری سیکوئل سیریز’ہاؤس آف دی ڈریگن‘

رواں برس مئی میں اپنے اختتام کو پہنچنے والے شہرہ آفاق پولیٹیکل تھرلر فنٹیسی ڈرامہ سیریز ’گیم آف تھرونز‘ کے ختم ہوئے یوں تو کئی ماہ گزر گئے، تاہم لوگ اب بھی اس ڈرامے کے سحر میں گرفتار ہے۔

گیم آف تھرونز ڈرامے کے مداحوں نے جہاں ڈرامہ بنانے والی کمپنی ’ایچ بی او‘ اور ڈرامے کی کہانی لکھنے والے جارج آر آر مارٹن سے مطالبہ کیا تھا کہ ڈرامے کو ختم کرنے کے بجائے اسے بڑھایا جائے، تاہم کمپنی اور لکھاری نے ڈرامے کو ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے اس کی پری سیکوئل سیریز بنانے کا اعلان کیا تھا۔

گیم آف تھرونز کی مجموعی طور پر 8 سیریز پیش کی گئیں جن میں تقریبا 80 قسطیں پیش کی گئیں اور اس ڈرامے نے متعدد ایوارڈ جیتے اور دنیا بھر کے کروڑوں افراد کی دلوں پر راج کیا۔

گیم آف تھرونز تیار کرنے والی کمپنی اور لکھاری جارج آر آر مارٹن نے ڈرامے کے اختتام سے قبل ہی اس بات کی تصدیق کی تھی کہ ڈرامے کی پری سیکوئل سیریز بنائی جائیں گی اور اب پری سیکوئل کی پہلی سیریز کی پہلی جھلک بھی جاری کردی گئی۔

ایچ بی او کی جانب سے پری سیکوئل سیریز کی جھلک جاری کرتے ہوئے تصدیق کی گئی کہ ڈرامے کی سیریز کا نام ’ہاؤس آف ڈریگن‘ ہوگا اور سیریز کے پہلے سیزن کی 10 قسطیں نشر کی جائیں گی۔

کمپنی نے ’ہاؤس آف ڈریگن‘ کی تصویر شیئر کرتے ہوئے مزید بتایا کہ پری سیکوئل سیریز کے پہلے سیزن کی کہانی بھی جارج آر آر ماٹن نے لکھی ہے اور اس سیریز کی کہانی ’گیم آف تھرونز‘ ڈرامے کی کہانی سے 300 سال قبل شروع ہوتی ہے۔

پری سیکوئل سیریز کی کہانی جارج آر آر مارٹن کے ناول ’فائر اینڈ بلڈ‘ سے لی گئی ہے جو گیم آف تھرونز کے ناول ‘اے سانگ آف آئس اینڈ فائر’ کا پری سیکوئل ہے۔

کمپنی نے ’ہاؤس آف ڈریگن‘ کو ریلیز کرنے کا اعلان نہیں کیا، نہ ہی اس کی کاسٹ کا اعلان کیا گیا، تاہم خیال کیا جا رہا ہے کہ پری سیکوئل سیریز کو آئندہ برس کے وسط تک ریلیز کردیا جائے گا اور اس کی کاسٹ کے حوالے سے آئندہ برس کے آغاز تک اعلان سامنے آنے کا امکان ہے۔

گیم آف تھرونز کے آخری سیزن کی آخری قسط مئی 2019 میں جاری کی گئی تھی—اسکرین شاٹ
گیم آف تھرونز کے آخری سیزن کی آخری قسط مئی 2019 میں جاری کی گئی تھی—اسکرین شاٹ

خیال رہے کہ پری سیکوئل سیریز یا ’اسپن آف‘ سیریز میں ڈرامے یا فلم کی کہانی کا آغاز دکھایا جاتا ہے۔

پری سیکوئل میں شائقین کو دکھایا جاتا ہے کہ اب تک جو انہوں نے ڈرامہ یا فلم دیکھی وہ دراصل مکمل کہانی نہیں تھی بلکہ اس ڈرامے یا فلم کی اصل کہانی کا آغاز یہاں سے ہوا تھا۔

گیم آف تھرونز کے شائقین اگرچہ ڈرامے کے کرداروں کا مستقبل دیکھنے کے خواہش مند ہوتے ہیں اور انہیں یہ پریشانی لگی رہتی ہے کہ ڈرامے کا اختتام کیسے ہوا۔

اور اب ڈرامے کی ٹیم شائقین کو گیم آف تھرونز کا اختتام دکھانے کے بعد اس ڈرامے کے کراروں کے آغاز کی کہانی دکھائےگی اور بتائی گی کہ کس کردار کی کہانی کی شروعات کہاں سے اور کیوں ہوئی تھی۔

اس شہرہ آفاق ڈرامہ سیریل کا آغاز 2011 میں ہوا تھا، رواں برس مئی میں اس کا آٹھواں اور آخری سیزن ریلیز کیا گیا جو 6 قسطوں پر مبنی تھا۔

8 سال تک چلنے والے ڈرامے نے کروڑوں مداحوں کے دلوں پر راج کیا—اسکرین شاٹ
8 سال تک چلنے والے ڈرامے نے کروڑوں مداحوں کے دلوں پر راج کیا—اسکرین شاٹ

محب مرزا نے آمنہ شیخ سے علیحدگی کی تصدیق کردی

اداکار و فلم ساز محب مرزا اور ان کی اہلیہ سپر ماڈل و اداکارہ آمنہ شیخ کے درمیان گزشتہ کچھ عرصے سے علیحدگی کی چہ مگوئیاں تھیں۔

یہ چہ مگوئیاں اس وقت شروع ہوئیں جب جوڑے کے ہاں شادی کے 10 سال بعد پہلے بچے کی پیدائش کے بعد جوڑے کو ایک ساتھ نہیں دیکھا گیا۔

محب مرزا اور آمنہ شیخ کے ہاں اگست 2015 میں پہلی بیٹی کی پیدائش ہوئی تھی، دونوں نے 2005 میں شادی کی تھی۔

جوڑے کے ہاں اگست 2015 میں پہلی بچی کی پیدائش ہوئی تھی—فوٹو: آمنہ شیخ فیس بک
جوڑے کے ہاں اگست 2015 میں پہلی بچی کی پیدائش ہوئی تھی—فوٹو: آمنہ شیخ فیس بک

شادی کے بعد دونوں نے متعدد ڈراموں اور دیگر شوبز منصوبوں میں ایک ساتھ کام بھی کیا اور دونوں کی جوڑی کو خوب سراہا جاتا رہا۔

محب مرزا اور آمنہ شیخ کی جوڑی کا شمار طویل عرصے تک ایک ساتھ رہنے والی جوڑیوں میں ہوتا تھا، تاہم گزشتہ کچھ عرصے سے دونوں کو ایک ساتھ نہ دیکھے جانے کی وجہ سے یہ چہ مگوئیاں ہونے لگی تھیں کہ دونوں میں علیحدگی ہوگئی ہے۔

آمنہ شیخ نے تاحال اس حوالے سے کوئی بات نہیں کی—فوٹو: آمنہ شیخ انسٹاگرام
آمنہ شیخ نے تاحال اس حوالے سے کوئی بات نہیں کی—فوٹو: آمنہ شیخ انسٹاگرام

اور اب اداکار محب مرزا نے اپنی اہلیہ سے علیحدگی کی تصدیق کردی۔

نجی ٹی وی ’بول‘ کے پروگرام ’بول نائٹ ود احسن خان‘ میں محب مرزا نے میزبان کی جانب سے پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے تٓصدیق کی کہ وہ اپنی اہلیہ سے الگ ہوگئے ہیں۔

محب مرزا نے مختصر کہا کہ انہیں اور آمنہ شیخ کو ایک ہی بچی ہے، تاہم اب وہ ایک ساتھ نہیں رہتے اور دونوں کے درمیان علیحدگی ہو چکی ہے۔

محب مرزا نے علیحدگی کی وجہ نہیں بتائی—فوٹو: محب مرزا انسٹاگرام
محب مرزا نے علیحدگی کی وجہ نہیں بتائی—فوٹو: محب مرزا انسٹاگرام

محب مرزا نے یہ نہیں بتایا کہ ان کے اور آمنہ شیخ کے درمیان کب سے اور کس وجہ سے علیحدگی ہوئی اور نہ ہی انہوں نے اس بات کی وضاحت کی کہ ان کے درمیان طلاق ہوئی یا نہیں، تاہم انہوں نے کہا کہ اب وہ اور آمنہ شیخ ساتھ نہیں رہتے۔

پروگرام کے میزبان نے محب مرزا کو بتایا کہ شوبز انڈسٹری میں ان دونوں کی علیحدگی کے حوالے سے کچھ وقت سے چہ مگوئیاں چل رہی تھیں اور انہوں نے ان ہی چہ مگوئیوں کی وجہ سے ان سے ذاتی سوال پوچھا۔

آمنہ اور محب نے 2005 میں شادی کی تھی—فوٹو: آمنہ شیخ انسٹاگرام
آمنہ اور محب نے 2005 میں شادی کی تھی—فوٹو: آمنہ شیخ انسٹاگرام

ساتھ ہی احسن خان نے محب مرزا کو بتایا کہ چوں کہ وہ اور آمنہ شیخ میزبان کے اچھے دوست ہیں، اس لیے انہوں نے یہی مناسب سمجھا کہ ان سے چہ مگوئیوں کی تصدیق کی جائے۔

خیال رہے کہ آمنہ شیخ کو پاکستان کی سپر ماڈل اور زیادہ معاوضہ لینے اور کمائی کرنے والی اداکاراؤں میں شمار کیا جاتا ہے، ساتھ ہی محب مرزا کا شمار بھی معروف اداکاروں و فلم سازوں میں ہوتا ہے۔

ہراسانی کے شکار مرد ’جامی‘ کی طرح اپنی کہانیاں سامنے لائیں، عثمان خالد بٹ

فلم ساز جمشید محمود المعروف جامی نے رواں ماہ 21 اکتوبر کو ٹوئٹ کے ذریعے انکشاف کیا تھا کہ انہیں 13 برس قبل میڈیا کی ایک بااثر شخصیت کی جانب سے ’ریپ‘ کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

جامی کی جانب سے ٹوئٹ کیے جانے پر سوشل میڈیا پر بہت سارے لوگوں نے ان کی حمایت کی، یہاں تک کے بعض اداکاراؤں و گلوکاراؤں نے بھی جامی کی حمایت کی۔

جامی وہ پہلے پاکستانی مرد تھے جنہوں نے ’می ٹو مہم‘ کے تحت اپنے ساتھ ہونے والی ناانصافی پر کھل کر بات کی تھی اور اب اداکار عثمان خالد بٹ نے کبھی نہ کبھی ہراسانی کا شکار رہنے والے ملک کے تمام مرد حضرات کو تجویز دی ہے کہ وہ اپنے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں کو سامنے لائیں۔

عثمان خالد بٹ نے اپنی طویل ترین ٹوئٹ پوسٹ میں کبھی نہ کبھی ہراسانی کا شکار رہنے والے مرد حضرات کو مشورہ دیا کہ وہ اب خاموش رہنے کے بجائے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی کو سامنے لائیں اور اپنے ساتھ انصاف کے لیے قانونی جنگ لڑیں۔

اپنی پوسٹ میں عثمان خالد بٹ نے فلم ساز جامی کی جانب سے ’ریپ‘ پر کھل کر بات کرنے کی تعریف کی اور کہا کہ ان کا یہ قدم دیگر مرد حضرات کے لیے ہمت اور آواز کا سبب بنے گا۔

اداکار نے اپنی پوسٹ میں لکھا کہ ایک کھانے کی دعوت پر بیٹھے تمام مرد حضرات نے جامی کے معاملے پر بات کرتے ہوئے تسلیم کیا کہ وہ بھی کبھی نہ کبھی زندگی میں ہراسانی کا شکار رہے ہیں۔

عثمان خالد بٹ نے وضاحت کی کہ ہم میں سے بہت سارے مرد حضرات کبھی بچپن میں انتہائی قریبی مردوں، کبھی کسی اسکول کی کلاس میں تو کبھی کسی پبلک ٹرانسپورٹ میں ہراسانی کا شکار ہوئے ہیں۔

عثمان خالد بٹ نے ’می ٹو مہم‘ پر بات کرتے ہوئے لکھا کہ عام طور پر مرد حضرات اپنے ساتھ ہونے والی ہراسانی پر بات کرتے ہوئے شرماتے ہیں، تاہم انہیں فلم ساز جامی کے معاملے سے ہمت لینی چاہیے اور وہ سب اپنے معاملات سامنے لائیں۔

ساتھ ہی اداکار نے کہا کہ اپنے ساتھ ہونے والی ہراسانی اور ’ریپ‘ کے معاملات سامنے لانے کے لیے سوشل میڈیا درست پلیٹ فارم نہیں ہے، اس لیے متاثرہ حضرات کو قانونی چارہ جوئی کرنے سمیت حکومتی پلیٹ فارم استعمال کرنے چاہیے۔

اداکارہ نے یہ بھی کہا کہ تاہم سوشل میڈیا کے پلیٹ فارم کو اپنی آواز کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے، چوں کہ یہ ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جہاں ہر کسی کی آواز کو دوسرے لوگ سنتے ہیں۔

عثمان خالد بٹ نے اپنی طویل پوسٹ میں اپنے ساتھ ہونے والا ہراسانی کا کوئی تجربہ شیئر نہیں کیا، تاہم انہوں نے کہا کہ ہر مرد کبھی بچپن، کبھی لڑکپن تو کبھی نوجوانی میں ہراسانی کا شکار ہوا ہوتا ہے اور ایسے افراد کو اپنی کہانیاں سامنے لانی چاہیے۔

مہوش اورہمایوں’’لندن نہیں جاؤں گا‘‘ میں بھی ایک ساتھ

کراچی:  اداکارہ مہوش حیات نے ’پنجاب نہیں جاؤں گی ‘ کے بعد ’لندن نہیں جاؤں گا ‘ میں بھی ہمایوں سعید کے ہمراہ نظر آئیں گی۔

ہمایوں سعید اور مہوش حیات کی جوڑی ایک بار پھر سلور اسکرین پر جلوہ بکھیرتی نظر آئیں گی اور اس حوالے سے اداکار اور ہدایتکار ندیم بیگ نے ایک ویب سائیٹ کو دیئے گئے انٹرویو میں تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ 2020 میں ریلیز ہونے والی فلم ’لندن نہیں جاؤں گا‘ میں ہمایوں سعید کے ہمراہ مہوش حیات بھی مرکزی کردار ادا کریں گی۔

ندیم بیگ نے یہ بھی تردید کرتے ہوئے کہا کہ فلم ’لندن نہیں جاؤں گا‘ 2017 میں ریلیز ہونے والی فلم ’پنجاب نہیں جاؤں گی ‘ کا سیکوئل نہیں ہے کیوں کہ اس فلم کی کہانی مکمل طور پر مختلف ہے جسے خلیل الرحمان قمر نے لکھا ہے۔

ہدایتکار نے کہا کہ 2020 میں فلم ’لندن نہیں جاؤں گا‘ کے ساتھ ہمایوں سعید کے ساتھ ایک اور فلم بنائی جا رہی ہے لیکن اب تک یہ فیصلہ نہیں ہو سکا ہے کہ کس فلم کی شوٹنگ پہلے شروع کی جائے گی کیوں کہ یہ اسکرپٹ پر انحصار کرتا ہے کہ کون سا اسکرپٹ پہلے تیار ہو کر آتا ہے۔

یاسر حسین اقرا عزیز کی غلامی کیلئے تیار

کراچی: اداکار یاسر حسین نے سوشل میڈیا پر اپنی اور اقرا عزیز کی تصاویر شیئر کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اقرا کی زندگی میں بادشاہ نہیں بلکہ غلام ہیں۔

اداکارہ اقرا عزیز نے چند روز قبل اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ پر ایک ویڈیو شیئر کی تھی جس میں وہ دلہن اوریاسر حسین دلہا بنے ہوئے نظر آرہے تھے۔ تاہم یہ ان کی حقیقی شادی کی ویڈیو نہیں تھی بلکہ ایک برائیڈل شوٹ کے لیے کیا گیا فوٹو شوٹ تھا اوراب یاسر حسین نے اسی فوٹو شوٹ کی کچھ تصاویر اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر شیئر کی ہیں۔

تصاویر کے ساتھ یاسر حسین نےنہایت دلچسپ تبصرہ کرتے ہوئے اقراعزیز کو ملکہ اور خود کو ان کا غلام قرار دیا۔ یاسر حسین نے لکھا ’’ایک ملکہ کی کہانی میں بادشاہ، بادشاہ نہیں غلام نہیں ہوتا ہے اور غلام حاضر ہے اقرا عزیز۔‘‘

دلچسپ بات تو یہ ہے کہ اقراعزیز نے یاسر حسین کے تبصرے پر نہایت محبت بھرا جواب دیتے ہوئے لکھا ’’کاش میں لفظوں میں آپ سے جیت سکتی‘‘۔

واضح رہے کہ چند روز قبل اقرا عزیز نے سوشل میڈیا پر اپنی اوریاسر کی ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا تھا کہ وہ یاسر کے ساتھ شادی کرنے کے لیے دن گن رہی ہیں۔

شہریار منور نے اپنی منگنی ٹوٹنے کی تصدیق کردی

کراچی: فلم و ڈرامہ انڈسٹری کے معروف اداکار شہریار منور نے اپنی منگنی ٹوٹنے کی تصدیق کردی ہے۔

لاکھوں دلوں پر راج کرنے والے شہریار منور نے رواں سال کی ابتدا میں ہالہ سومرو  نامی دوشیزہ سے اچانک منگنی کرکے سب کو حیران کردیا تھا۔ منگنی کی تقریب بھی کراچی میں سادگی سے کی گئی  جس میں عزیز و اقارب اور قریبی دوستوں کو مدعو کیا گیا تھا۔

شہریار منور نے حال ہی میں منگنی ٹوٹنے کی تصدیق اپنے انٹرویو میں کی جب ایک ویب سائٹ کو دیئے گئے انٹرویو میں میز بان کی جانب سے شہریار منور سے سوال پوچھا گیا کہ  کوئی ایسا جرات مندانہ کام جو آپ نے کیا ہو۔

جس کا جواب دیتے ہوئے شہریار منور نے کہا کہ اپنی زندگی میں کیا گیا ایک ہی جرات مندانہ  کام یہ ہے جب میں نے اپنی والدہ سے کہا کہ ایک بار آپ کے کہنے پر منگنی کرلی اور پھر آپ ہی نے یہ منگنی ختم کی لیکن اس بار جس لڑکی سے میں شادی کرنا چاہوں گا اس کا انتخاب میں خود کروں گا۔

Google Analytics Alternative