صحت

سونے سے قبل جرابیں پہننے کا یہ فائدہ جانتے ہیں؟

کیا سونے سے قبل جرابیں پہننی چاہئیں؟ تو اس کا جواب ہے ہاں، خاص طور پر اگر آپ کو بے خوابی کی شکایت ہے۔

ہیلتھ ویب سائٹ سلیپ ڈاٹ او آر جی کے مطابق اگر پیروں کو جرابوں کے ذریعے گرم کیا جائے تو اس سے خون کی شریانوں کو سکون ملتا ہے اور دماغ کو لگتا ہے کہ یہ سونے کا وقت ہے، اس طرح یہ حرارت جسم کو سونے کے لیے تیار کرتی ہے۔

آسان الفاظ میں پیروں کو گرم رکھنا بے خوابی کی شکایت دور کرتا ہے جبکہ نیند بھی بہت جلد آتی ہے۔

وہ غذائیں جو ایک ساتھ نہیں کھانی چاہئیں

ویسے تو دنیا بھر میں ہر کوئی اپنے کھانے کو مزید لذیذ بنانے کے لیے ایک کے ساتھ دوسری غذا ملاتا ہے، جس سے کچھ نئے انداز کی ڈش سامنے آجاتی ہے۔

لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ ایسی بہت سی غذائیں ہیں جنہیں ایک ساتھ ملا کر کھانا یا آگے پیچھے کھانا خطرناک تصور کیا جاتا ہے؟

اور اگر انہیں ایک ساتھ کھانے سے کوئی نقصان نہ بھی ہو، تب بھی لوگ انہیں ساتھ استعمال کرنے میں کافی احتیاط کرتے ہیں۔

ایسی ہی چند غذاؤں کے بارے میں یہاں بتایا جارہا ہے، جنہیں کسی ڈاکٹر کے مشورے کے بغیر ایک ساتھ نہ کھانا ہی بہتر ہے۔

گھر کو مکڑیوں سے کیسے پاک کریں؟

آپ کو مکڑیاں دیکھ کر ڈر لگتا ہو یا نہ ہو مگر آٹھ ٹانگوں والی یہ مخلوق گھروں میں دندناتی پھرتی ہے، چھتوں پر جالے بناتی ہے اور اکثر انہیں دیکھنا کوئی خوشگوار تجربہ تو نہیں ہوتا۔

عام طور پر یہ مکڑیاں غذا یا گرم جگہ کی تلاش میں خزاں کے دوران گھروں کا رخ کرتی ہیں جبکہ گرمیوں میں کھلی کھڑکیاں انہیں راستہ دکھاتی ہیں۔

مگر گھروں کو مکڑیوں سے صاف کرنا، وہ بھی زیادہ محنت کیے بغیر کتنا ممکن ہے ؟ تو اس کا جواب ہے کہ یہ کچھ زیادہ مشکل بھی نہیں۔

موٹاپے کو دور بھگانے کا مزیدار نسخہ

کیا بڑھتے ہوئے جسمانی وزن میں نمایاں کمی لانا چاہتے ہیں ؟ تو خشک میوہ جات یعنی گریاں جیسے بادام، پستے، اخروٹ اور مونگ پھلیوں کو اپنی روزمرہ کی غذا کا حصہ بنالیں۔

یہ دعویٰ امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

لوما لنڈا یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ یہ مزیدار گریاں جسمانی وزن میں کمی لانے میں مدد دینے کے ساتھ ساتھ درمیانی عمر میں موٹاپے یا حد سے زیادہ جسمانی وزن کا خطرہ بھی کم کرتی ہیں۔

جلد بوڑھا بنا دینے والی یہ چیز آپ کے ہاتھ میں تو نہیں؟

اسمارٹ فون تو اب لگتا ہے کہ ہر ایک کے پاس موجود ہے، خاص طور پر نوجوانوں میں ان ڈیوائسز کا استعمال بہت زیادہ ہوتا ہے، مگر اس کا عادی ہونا آپ کو جلد بوڑھا بنانے کا باعث بھی بن سکتا ہے۔

یہ بات ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔

تحقیق کے مطابق اسمارٹ فونز سے سورج کی طرح کی نیلی روشنی خارج ہوتی ہے جو کہ الٹرا وائلٹ شعاعوں کی طرح جلد پر اثرات مرتب کرتی ہے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ درحقیقت اسمارٹ فون سے خارج ہونے والی روشنی سورج کی روشنی جیسی ہوتی ہے اور یہ جلد میں موجود اہم پروٹین کولیگن کو آکسی ڈیٹیو اسٹریس کے ذریعے نقصان پہنچا سکتی ہے۔

سونے سے قبل کھانا صحت کے لیے مضر قرار

واشنگٹن: ماہرین نے ایک بار پھر اس بات کو دہرایا ہے کہ جو ہم کھاتے ہیں اس کا اثر تو ہماری زندگی پر پڑتا ہی ہے لیکن کھانے کے اوقات اس سے ذیادہ اہمیت رکھتےہیں جب کہ ماہرین کا اصرار ہے کہ بستر پر جانے سے پہلے کچھ بھی کھانے سے گریز کیجئے کیونکہ اس سے موٹاپے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے اور خود نیند بھی متاثر ہوتی ہے۔

امریکا میں جامعات کے 110 طالب علموں پر اس کے تجربات کیے گئے۔ اس تحقیق میں سائنسداں کم روشنی میں میلاٹونن کے اخراج (ڈی ایل ایم او) کا جائزہ لینا چاہتے تھے، یہ ایک قدرتی عمل ہوتا ہے جس میں بدن نیند کے لیے تیار ہوتا ہے اور ایک طرح کا ہارمون میلاٹونن خارج ہوتا ہے جسے نیند کا ہارمون بھی کہتے ہیں، عام حالات میں اکثر افراد میں میلاٹونن کا اخراج رات کے 8 بجے شروع ہوجاتا ہے۔

ماہرین نے انکشاف کیا کہ جو لوگ رات کو دیر سے کھانا کھاتے ہیں یا پھر سوتے وقت کچھ نہ کچھ کھاتے ہیں ان میں میلاٹونن بھی متاثر ہوتا ہے اور وزن بڑھنے کا خدشہ بھی بڑھ جاتا ہے، اسی لیے ماہرین کی اکثریت زور دیتی ہے کہ کیلوریز کا ذیادہ تر حصہ آپ دن کی روشنی میں ہی کھائیں تو اس کے بہت اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ اسی طرح مرغن غذائیں رات دیر تک کھانے سے موٹاپا بڑھتا ہے۔

ادرک جوڑوں کے درد کے لیے اکسیر قرار

کراچی: ادرک کے جسمانی و طبی فوائد سے ہم سب بخوبی واقف ہیں اور اب ماہرین نے اس کے استعمال کو گٹھیا اور جوڑوں کا درد ختم کرنے میں بھی بہت مفید قرار دیا ہے۔

ایشیا اور افریقا میں کثرت سے استعمال ہونے والی ادرک کو تیل، پاؤڈر اور اصل حالت میں کھانوں اور ادویہ میں استعمال کیا جاتا ہے۔ ہاضمے کی بہتری کے لیے ادرک کا استعمال عام کیا جاتا ہے لیکن اب جوڑوں کے درد میں اس کی بھرپور افادیت سامنے آئی ہے۔

بعض سائنسی مطالعات سے عیاں ہے کہ جوڑوں کے درد میں مبتلا افراد کو جب ادرک یا اس کے اجزا کھلائے گئے تو ان کے جوڑوں میں سوزش کم ہوئی اور گٹھیا کے مرض میں افاقہ ہوا۔

فکر اور پریشانی سے نجات پانے کے تین آسان طریقے

لندن: ماہرِ نفسیات کے مطابق پریشان اور فکرمندی کی سوچ کو تین آسان طریقوں سے دور کیا جا سکتا ہے۔

پروفیسر ہانس نورڈال کے مطابق منفی سوچ کو وقت کا زیاں جان کر، حال پر توجہ دیتے ہوئے اور سوچ کو منتشر ہونے سے بچا کر آپ پریشان کن خیالات کو ذہن سے جھٹک سکتے ہیں اور یوں ایک پرسکون زندگی گزار سکتے ہیں۔

ناروے کی جامعہ برائے سائنس و ٹیکنالوجی میں رویہ جاتی ادویہ (بیہوریئل میڈیسن) کی ماہر پروفیسر ہانس کہتی ہیں کہ ہم اداسی، پریشان خیالی اور فکرمندی کو مسائل کے حل کی ایک راہ سمجھتے ہوئے بار بار ذہن میں لاتے ہیں لیکن اصل میں ہم خود پر تنقید کر کے منفی خیالات سے خود کو ہلکان کر رہے ہوتے ہیں۔

Google Analytics Alternative