صحت

ملیر کراچی میں ڈینگی سے ملتی جلتی بیماری پھیل گئی

کراچی کے علاقے ملیر میں پر اسرار بیماری پھیل گئی ہے،جس کے نتیجہ میں کم از کم 1500افراد متاثر ہوئے،جو اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔

اس اسرار بیماری کی لپیٹ میں آنے والے کو تیز بخار کے ساتھ جوڑوں اور ہڈیوں میں شدید درد بھی ہوتا ہے،اس سے شیرخوار بچوں اور خواتین سمیت ہر عمر کے افراد متاثر ہوئے ہیں۔

سینئر ڈائیریکٹر ہیلتھ ڈاکٹرعبدالواحد پنہور نے پراسرار بیماری کی خبر پر سعود آباد گورنمنٹ اسپتال کا دورہ کیا،اس موقع پر ان کا کہنا ہے کہ بیماری کے حوالے سے تحقیقات کر رہے ہیں۔

ان کا کہناتھا کہ ملیر اور کھوکھرا پار اس بیماری سے اب تک 15 سو سے زائد افراد متاثر ہوئے،اس مرض میں لوگوں کے جسم کے مختلف حصوں اور جوڑوں میں درد ہوتا ہے۔

برف سے علاج کا قدیم اورحیرت انگیز طریقہ

کراچی: چین میں گزشتہ دو ہزار سال سے مختلف بیماریوں کے علاج کے لیے ’’فینگ فو پوائنٹ‘‘ پر برف کا استعمال کیا جارہا ہے جس سے اب تک دنیا بھر کے ان گنت لوگ مستفید ہوچکے ہیں۔

علاج کا یہ طریقہ بہت آسان ہے جس میں گردن کے پچھلے حصے پر برف کا ایک ٹکڑا چند منٹوں کے لیے رکھا جاتا ہے جب کہ یہ عمل پورے دن میں ایک سے دو مرتبہ دوہرایا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ وہ جگہ جہاں ریڑھ کی ہڈی کا سب سے اوپر والا مہرہ اور کھوپڑی کا نچلا حصہ آپس میں ملتے ہیں اسے ’’فینگ فو پوائنٹ‘‘ (Feng Fu Point) کہتے ہیں اور برف کا ٹکڑا اسی حصے پر 20 منٹ تک رکھنا پڑتا ہے۔

اس طریقے پر عمل کرنے کے لیے بیٹھ کر گردن جھکالیں یا پھر سینے کے بل لیٹ جائیں۔ ہاتھ میں رومال یا کوئی موٹا کپڑا لے کر اس سے برف کا ٹکڑا پکڑ لیں تاکہ اسے دیر تک فینگ فو پوائنٹ پر رکھ سکیں۔

پہلے 30 سے 60 سیکنڈ تک برف کی ٹھنڈک سے تکلیف کا احساس ہوگا لیکن اس کے بعد حیرت انگیز طور پر آپ کو گرمی کی لہریں اپنی گردن کے پچھلے حصے میں اترتی ہوئی محسوس ہونے لگیں گی۔ 20 منٹ تک برف کا ٹکڑا اسی جگہ پر تھام کر رکھیں جسے زیادہ دبانے یا ہٹانے کی ضرورت نہیں، البتہ اتنا ضرور دھیان رہے کہ برف آپ کی گردن کے پچھلے بالائی حصے (فینگ فو پوائنٹ) سے مسلسل مس ہوتی رہے۔

اگر شروع میں پریشانی کا سامنا ہو تو برف کو کسی کپڑے میں بھی لپیٹا جاسکتا ہے تاکہ آپ اسے زیادہ دیر تک فینگ فو پوائنٹ پر برداشت کرسکیں۔

فینگ فو پوائنٹ پر روزانہ دن میں ایک سے دو مرتبہ برف رکھنے سے کئی فائدے ہوتے ہیں جن میں سر کے درد سے چھٹکارا، نزلہ زکام کی علامات کا خاتمہ، نظامِ ہاضمہ میں بہتری، اچھی نیند اور الٹی/ متلی کی کیفیات کا خاتمہ شامل ہیں۔

ان کے علاوہ فینگ فو پوائنٹ پر برف رکھنے سے سر چکرانے کا احساس ختم ہوجاتا ہے، یرقان کی ظاہری علامات میں کمی آتی ہے، دل اور دورانِ خون کا نظام بہتر ہوتا ہے، دمے کی علامات کم ہوتی ہیں اور تھائیرائیڈ گلینڈز سے متعلق صحت کے درجنوں مسائل بھی قابو میں رہتے ہیں۔

ملتان و فیصل آباد میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال ،مریض پریشان

سینٹرل انڈکشن پالیسی کےخلاف ملتان اور فیصل آباد کے سرکاری اسپتالوں کے آؤٹ ڈور میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے ،جس کے باعث دور دراز سے آنے والے مریضوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے ۔

فیصل آباد اور ملتان میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال چھٹے روز میں داخل ہوگئی ہے ،ہڑتال کی وجہ سے سرکاری اسپتالوں کی او پی ڈی میں کام بری طرح متاثر ہے ۔

فیصل آباد کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال سے قریبی شہروں اور دیہی علاقوں سے آنے والے مریض رل گئے ہیں ۔

مریضوں کا کہنا ہے کہ دور دراز سے آتے ہیں ،سفری اخراجات اٹھاتے ہیں ،یہاں آکر پتہ چلتا ہے کہ ڈاکٹرز ہڑتال پر ہیں ۔

ملتان کے نشتر اسپتال میں بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے جس کے بعد او پی ڈی میں سینئر ڈاکٹرز مریضوں کو دیکھ رہے ہیں ۔

وسیم اختر کی جانب سے عباسی شہید اسپتال کو ڈائلیسز مشینوں کا عطیہ

کراچی : مئیر کراچی وسیم اختر نے عباسی شہید اسپتال کا دورہ کیا جہاں اسپتال کو دس اضافی ڈائلیسز مشینیں عطیہ کی گئیں۔

کراچی کے مئیر وسیم اختر عباسی شہید اسپتال پہنچے جہاں کئی عرصے سے مشینریز سے محروم عباسی شہید اسپتال کو بلدیہ عظمیٰ کے محکمہ صحت کی جانب سے 10 ڈائلیسز کی مشینریز عطیہ کی گئیں۔

مئیر کراچی نے اسپتال کے ٹراما سینٹر کا دورہ کیا اور وہاں کے انتظامات کا جائزہ لیا جہاں اسپتال انتظامیہ نے وسیم اختر کو دیگر وارڈز کا بھی معائنہ کروایا، اس موقع پر مئیر کراچی کے ہمراہ ضلع وسطی کے چیئرمین ریحان ہاشمی، وائس چیئرمین شاکر علی، میونسپل کمشنر ڈاکٹر بدر جمیل، سینئر ڈائریکٹر میڈیکل سروسز ڈاکٹر محمد علی عباسی سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے۔

مئیر کراچی نے انتظامیہ کو یقین دہانی کروائی کہ عباسی شہید اسپتال سمیت دیگر اسپتالوں کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا۔

سردیوں میں روز نہانے سے گریز کریں، ماہرین

صحت مند اور توانا رہنے کے لیے صفائی ستھرائی کا خیال رکھنا اورغسل کرنا انتہائی ضروری ہے، لیکن بعض لوگوں کے لیے سردیوں میں نہاناایک مشکل کام ہے ،تاہم اب طبی ماہرین نے بھی سردیوں میں روز نہانے کو جلد کے لیے نقصان دہ قرار دے دیا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق سردیوں میں روزانہ غسل کرنا جلد کے لیے انتہائی نقصان دہ ہے، لہٰذا موسم سرما میں روزانہ نہانے گریز کرنے کی کوشش کی جائے۔

ماہرین نے کہنا ہے کہ تحقیق سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ ہماری جلد میں خود کار نظام موجود ہوتا ہے، جو جلد کو خود بخود صاف کرتا ہے ،روز سردیوں میں نہانے سے جلد نہ صرف خشک ہوجاتی ہے بلکہ اس کی تہہ میں موجود ان مادوں کو بھی ختم کردیتا ہے جو جلد کو موئسچرائزر اور تحفظ دینے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ سردیوں میں روز نہانے سے جلد پر موجود اس بیکٹیریا کا بھی خاتمہ ہوجاتا ہے جو زہریلے مادوں سے جلد کو بچاتا ہے۔

گرم پانی سے نہانے میں بھی ناخنوں کو نقصان پہنچتا ہے لہٰذا سردیوں میں روز نہانے کی عادت کو ختم کردینا چاہیے۔

کراچی میں ڈینگی وائرس کے مزید32 کیسز رپورٹ

رپورٹ کے مطابق رواں سال اب تک صوبے میں ڈینگی سے3 ہلاکتیں ہوئی ہے اور2329 کیسز رپورٹ ہوئے جن میں سے1890کیسز کراچی کےہیں ۔

یہ وہ کیسز ہیں جو رپورٹ ہوئے ہیں رپورٹ نہ ہونے والے کیسز کی تعداد ہزاروں میں ہے ۔ ذرائع کے مطابق رواں سال صوبے میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 4ہزار سے تجاوز کر چکی ہےجبکہ درجنوں ہلاکتیں بھی ہو چکی ہیں جو رپورٹ نہیں ہوئیں ۔

پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج، مختلف اسپتالوں کی او پی ڈی بند

پنجاب میں سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج جاری ہے، لاہور کے مختلف اسپتالوں کی اوپی ڈی بند ہونے سے مریضوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔

ادھر ملتان میں ینگ ڈاکٹرز نے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف نشتر اسپتال اور انسٹی ٹیو یٹ آف کارڈیالوجی میں ہڑتال کر دی ہے۔

ملتان میں ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف ہڑتال کرتے ہوئے ینگ ڈاکٹر نے ایم ۔ ایس نشتر اسپتال ڈاکٹر عاشق ملک کی موجودگی میں او – پی ۔ ڈی کو خالی کرا لیا ۔

ایم ۔ ایس نے اس واقعے کے بعد نشتر اسپتال میں پولیس کو طلب کر لیا ہے ۔

دوسری جانب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں بھی ینگ ڈاکٹرز نے ہڑتال کر دی ہے ۔ ملتان میں ینگ ڈاکٹرز چند روز سے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ دو روز قبل ہونے والے احتجاج میں ینگ ڈاکٹرز نشتر اسپتال کے ایم ۔ ایس ڈاکٹر عاشق ملک کے کمرے میں زبردستی داخل ہو گئے تھے اور سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خاتمہ کا مطالبہ کیا تھا جس پر انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے بات کر کے ڈاکٹرز کو تعاون کی یقین دہانی کرائی تھی ۔

دو روز کی مہلت گزرنے کے بعد ان کے مطالبات منظور نہ ہوئے جس پر آج انہوں نے او ۔ پی ۔ ڈی میں ہڑتال کر دی ۔

دسمبر میں کسی عالمی بلیک آؤٹ کی پیش گوئی نہیں کی، ناسا

دسمبر میں کوئی عالمی تبدیلی نہیں ہونے جارہی، نہ ہی تین دن کا بلیک آئوٹ ہونے والا ہے، ناسا کے دو ٹوک بیان سے افواہوں نے دم توڑ دیا۔

گزشتہ کئی سال سے بہت سی افواہیں بار بار گردش کرتی رہی ہیں، مثلاً ایک دعویٰ کیا گیا کہ مریخ چاند جتنا بڑا دکھائی دینے لگے گا۔

اسی طرح سننے میں آیا کہ دسمبر2016ء میں زمین اپنا محور بدلے گی، اس دوران تین دن تک اندھیرا چھاجائے گا اور پھر ایک بالکل نئی زمین سامنے آئے گی، لیکن ناسا حکام نے واضح کردیا ہے کہ یہ سب افواہ ہے اور ناسا نے کبھی ایسا کوئی دعویٰ نہیں کیا۔

Google Analytics Alternative