صحت

ملتان و فیصل آباد میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال ،مریض پریشان

سینٹرل انڈکشن پالیسی کےخلاف ملتان اور فیصل آباد کے سرکاری اسپتالوں کے آؤٹ ڈور میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے ،جس کے باعث دور دراز سے آنے والے مریضوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے ۔

فیصل آباد اور ملتان میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال چھٹے روز میں داخل ہوگئی ہے ،ہڑتال کی وجہ سے سرکاری اسپتالوں کی او پی ڈی میں کام بری طرح متاثر ہے ۔

فیصل آباد کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال سے قریبی شہروں اور دیہی علاقوں سے آنے والے مریض رل گئے ہیں ۔

مریضوں کا کہنا ہے کہ دور دراز سے آتے ہیں ،سفری اخراجات اٹھاتے ہیں ،یہاں آکر پتہ چلتا ہے کہ ڈاکٹرز ہڑتال پر ہیں ۔

ملتان کے نشتر اسپتال میں بھی ینگ ڈاکٹرز کی ہڑتال جاری ہے جس کے بعد او پی ڈی میں سینئر ڈاکٹرز مریضوں کو دیکھ رہے ہیں ۔

وسیم اختر کی جانب سے عباسی شہید اسپتال کو ڈائلیسز مشینوں کا عطیہ

کراچی : مئیر کراچی وسیم اختر نے عباسی شہید اسپتال کا دورہ کیا جہاں اسپتال کو دس اضافی ڈائلیسز مشینیں عطیہ کی گئیں۔

کراچی کے مئیر وسیم اختر عباسی شہید اسپتال پہنچے جہاں کئی عرصے سے مشینریز سے محروم عباسی شہید اسپتال کو بلدیہ عظمیٰ کے محکمہ صحت کی جانب سے 10 ڈائلیسز کی مشینریز عطیہ کی گئیں۔

مئیر کراچی نے اسپتال کے ٹراما سینٹر کا دورہ کیا اور وہاں کے انتظامات کا جائزہ لیا جہاں اسپتال انتظامیہ نے وسیم اختر کو دیگر وارڈز کا بھی معائنہ کروایا، اس موقع پر مئیر کراچی کے ہمراہ ضلع وسطی کے چیئرمین ریحان ہاشمی، وائس چیئرمین شاکر علی، میونسپل کمشنر ڈاکٹر بدر جمیل، سینئر ڈائریکٹر میڈیکل سروسز ڈاکٹر محمد علی عباسی سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے۔

مئیر کراچی نے انتظامیہ کو یقین دہانی کروائی کہ عباسی شہید اسپتال سمیت دیگر اسپتالوں کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جائے گا۔

سردیوں میں روز نہانے سے گریز کریں، ماہرین

صحت مند اور توانا رہنے کے لیے صفائی ستھرائی کا خیال رکھنا اورغسل کرنا انتہائی ضروری ہے، لیکن بعض لوگوں کے لیے سردیوں میں نہاناایک مشکل کام ہے ،تاہم اب طبی ماہرین نے بھی سردیوں میں روز نہانے کو جلد کے لیے نقصان دہ قرار دے دیا ہے۔

طبی ماہرین کے مطابق سردیوں میں روزانہ غسل کرنا جلد کے لیے انتہائی نقصان دہ ہے، لہٰذا موسم سرما میں روزانہ نہانے گریز کرنے کی کوشش کی جائے۔

ماہرین نے کہنا ہے کہ تحقیق سے یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ ہماری جلد میں خود کار نظام موجود ہوتا ہے، جو جلد کو خود بخود صاف کرتا ہے ،روز سردیوں میں نہانے سے جلد نہ صرف خشک ہوجاتی ہے بلکہ اس کی تہہ میں موجود ان مادوں کو بھی ختم کردیتا ہے جو جلد کو موئسچرائزر اور تحفظ دینے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ سردیوں میں روز نہانے سے جلد پر موجود اس بیکٹیریا کا بھی خاتمہ ہوجاتا ہے جو زہریلے مادوں سے جلد کو بچاتا ہے۔

گرم پانی سے نہانے میں بھی ناخنوں کو نقصان پہنچتا ہے لہٰذا سردیوں میں روز نہانے کی عادت کو ختم کردینا چاہیے۔

کراچی میں ڈینگی وائرس کے مزید32 کیسز رپورٹ

رپورٹ کے مطابق رواں سال اب تک صوبے میں ڈینگی سے3 ہلاکتیں ہوئی ہے اور2329 کیسز رپورٹ ہوئے جن میں سے1890کیسز کراچی کےہیں ۔

یہ وہ کیسز ہیں جو رپورٹ ہوئے ہیں رپورٹ نہ ہونے والے کیسز کی تعداد ہزاروں میں ہے ۔ ذرائع کے مطابق رواں سال صوبے میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 4ہزار سے تجاوز کر چکی ہےجبکہ درجنوں ہلاکتیں بھی ہو چکی ہیں جو رپورٹ نہیں ہوئیں ۔

پنجاب میں ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج، مختلف اسپتالوں کی او پی ڈی بند

پنجاب میں سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج جاری ہے، لاہور کے مختلف اسپتالوں کی اوپی ڈی بند ہونے سے مریضوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔

ادھر ملتان میں ینگ ڈاکٹرز نے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف نشتر اسپتال اور انسٹی ٹیو یٹ آف کارڈیالوجی میں ہڑتال کر دی ہے۔

ملتان میں ینگ ڈاکٹرز کی جانب سے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف ہڑتال کرتے ہوئے ینگ ڈاکٹر نے ایم ۔ ایس نشتر اسپتال ڈاکٹر عاشق ملک کی موجودگی میں او – پی ۔ ڈی کو خالی کرا لیا ۔

ایم ۔ ایس نے اس واقعے کے بعد نشتر اسپتال میں پولیس کو طلب کر لیا ہے ۔

دوسری جانب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں بھی ینگ ڈاکٹرز نے ہڑتال کر دی ہے ۔ ملتان میں ینگ ڈاکٹرز چند روز سے سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ دو روز قبل ہونے والے احتجاج میں ینگ ڈاکٹرز نشتر اسپتال کے ایم ۔ ایس ڈاکٹر عاشق ملک کے کمرے میں زبردستی داخل ہو گئے تھے اور سینٹرل انڈکشن پالیسی کے خاتمہ کا مطالبہ کیا تھا جس پر انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے بات کر کے ڈاکٹرز کو تعاون کی یقین دہانی کرائی تھی ۔

دو روز کی مہلت گزرنے کے بعد ان کے مطالبات منظور نہ ہوئے جس پر آج انہوں نے او ۔ پی ۔ ڈی میں ہڑتال کر دی ۔

دسمبر میں کسی عالمی بلیک آؤٹ کی پیش گوئی نہیں کی، ناسا

دسمبر میں کوئی عالمی تبدیلی نہیں ہونے جارہی، نہ ہی تین دن کا بلیک آئوٹ ہونے والا ہے، ناسا کے دو ٹوک بیان سے افواہوں نے دم توڑ دیا۔

گزشتہ کئی سال سے بہت سی افواہیں بار بار گردش کرتی رہی ہیں، مثلاً ایک دعویٰ کیا گیا کہ مریخ چاند جتنا بڑا دکھائی دینے لگے گا۔

اسی طرح سننے میں آیا کہ دسمبر2016ء میں زمین اپنا محور بدلے گی، اس دوران تین دن تک اندھیرا چھاجائے گا اور پھر ایک بالکل نئی زمین سامنے آئے گی، لیکن ناسا حکام نے واضح کردیا ہے کہ یہ سب افواہ ہے اور ناسا نے کبھی ایسا کوئی دعویٰ نہیں کیا۔

کوئٹہ میں کڈنی ٹرانسپلانٹ آپریشن جلد شروع کردئیے جائیں گے

بلوچستان میں گردوں کے امراض میں مبتلا افراد اور ان کے اہل خانہ کے لئے خوشخبری ہے کہ کوئٹہ میں کڈنی ٹرانسپلانٹ آپریشن جلد شروع کردئیے جائیں گے۔

گردوں کے ٹرانسپلانٹ آپریشن کوئٹہ میں صوبائی حکومت کے تحت بلوچستان انسٹی ٹیوٹ آف نیفرویورالوجی میں کئے جائیں گے۔

ترجمان انسٹی ٹیوٹ کےمطابق مریضوں کو کڈنی ٹرانسپلانٹ آپریشن کی سہولت مفت مہیاکی جائےگی، کوئٹہ میں سہولت کےبعدٹرانسپلانٹ کےلئے مریضوں کو دیگر صوبوں کوجانےکی ضرورت نہیں رہےگی۔اس حوالے سے ضروری بندوبست کیاجارہاہے۔

یاد رہے کہ نجی شعبے میں ایک مریض کے کڈنی ٹرانسپلانٹ پر لاکھوں روپے کے اخراجات آتے ہیں اور اس کےلئے کوئٹہ اور اندرون صوبہ سے مریضوں کو کراچی یا لاہور جاناپڑتا ہے۔

ملک میں ایڈزکے سب سے زیادہ مریض کراچی میں ہونے کا انکشاف

سندھ ایڈزکنٹرول پروگرام کی جانب سے جاری کی گئی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ کراچی سمیت اندرون سندھ میں ایچ آئی وی اورایڈز سے متاثرہ مریضوں کی تعداد میں غیرمعمولی اضافہ ہوا ہے.

 معاشرے میں “ایڈز”کوعموماً ایک خوفناک بیماری سمجھا جاتا ہے جس کا عالمی دن آج منایا جارہا ہے، عالمی دن منانے کا مقصد عوام میں اس مرض سے متعلق آگاہی فراہم کرنا ہوتا ہے اورسندھ ایڈزکنٹرول پروگرام کی رپورٹ مین حیران کن انکشاف کیا گیا ہے کہ ایڈزکے پاکستان میں سب سے زیادہ ایڈز کے مریض کراچی میں ہیں۔

سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام سے وابستہ ڈاکٹرسلیمان اوڈھو کے مطابق کراچی سمیت اندرون سندھ رجسٹرڈ مریضوں کی تعداد 10 ہزارسے زائد ہے اور اس تعداد میں سے 7 ہزارسے زائد مریضوں کا تعلق کراچی جیسے بڑے شہرسے ہے جب کہ اس وقت کراچی پہلے، دوسرے نمبرپرلاڑکانہ، تیسرے نمبرپرحیدرآباد، چوتھے نمبرپردادو جب کہ جیکب آباد پانچویں نمبرپرہے۔

ڈاکٹرسلیمان اوڈھو کا کہنا تھا کہ آج سے 4 سال پہلے تک ایڈزاورایچ آئی وی پازیٹیومریضوں کی سب سے زیادہ تعداد ضلع لاڑکانہ میں تھی لیکن اب کراچی نے لاڑکانہ کو پیچھے چھوڑدیا ہے۔ سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام کی رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ کراچی میں ایچ آئی وی اور ایڈز کے مریضوں میں 150 سے زائد بچے، 704 سے زائد خواتین اور 49 خواجہ سرا شامل ہیں۔ ڈاکٹرسلیمان اوڈھو کا کہنا تھا کہ معاشرے میں اس مرض کو اس اندازمیں لیا جاتا ہے کہ جسے یہ مرض ہو جائے اسے اچھوت سمجھ کر تنہا کردیا جاتا ہے اورمعاشرے کے اس رویے کے باعث اس مرض کے متعدد کیسز رپورٹ ہونے سے رہ جاتے ہیں۔

Google Analytics Alternative