قومی

لاہور: ٹی وی اینکر کے گھر سے ’قید کی گئی‘ ملازمہ بازیاب

پنجاب پولیس نے سیشن کورٹ کے حکم پر ٹی وی اینکر غریدہ فاروقی کے لاہور کے گھر سے مبینہ طور پر ملازمت کرنے والی کم عمر لڑکی کو بازیاب کرا لیا۔

لڑکی کے والد محمد منیر نے اپنی بیٹی کی بازیابی کے لیے عدالت سے رجوع کیا تھا اور الزام لگایا تھا کہ لڑکی کو اس کی اور اس کے اہلخانہ کی مرضی کے بغیر وہاں قید رکھا گیا ہے۔

لڑکی کی بازیابی سے قبل مبینہ طور پر غریدہ فاروقی اور شازیہ نامی خاتون کے درمیان تین فون کالز کی ساؤنڈ ریکارڈنگز سوشل میڈیا پر گردش کرتی ہی۔

ریکارڈنگ میں شازیہ نے غریدہ فاروقی پر لڑکی پر تشدد کرنے اور اسے اس کے والدین سے ملاقات سے زبردستی روکنے کا الزام لگایا۔

تاہم غریدہ فاروقی کے نام سے ریکارڈنگ میں پہچانے جانے والی دوسری خاتون نے ان الزامات کی سختی سے تردید کرتے ہوئے پہلی خاتون سے کہا کہ اگر انہوں نے کچھ غلط کیا ہے تو وہ اپنے الزامات کے ثبوت پیش کریں۔

آصف زرداری کے لاپتہ ساتھی نواب لغاری واپس گھر پہنچ گئے

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے لاپتہ قریبی ساتھی نواب لغاری گھر واپس پہنچ گئے۔ ذرائع نے 

بتایا کہ نامعلوم افراد گاڑی میں نواب لغاری کو سواں کے علاقے میں چھوڑگئے۔

نواب لغاری کی بازیابی کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ  میں کیس زیرسماعت ہے جبکہ ان کو کو چار اپریل کو نامعلوم افراد نے اٹھایا تھا۔

اس سے قبل رواں سال مئی میں زرداری کے قریبی ساتھیوں غلام قادر مری اور اشفاق لغاری کو بلوچستان سے بازیاب کرایا گیا تھا۔

غلام قادر مری اور اشفاق لغاری بھی اپریل میں لاپتہ ہوگئے تھے۔غلام قادر کو جامشورو سے اور اشفاق لغاری کو کراچی سےاغوا کیا گیا تھا۔

انتخابی اصلاحات: سیاسی جماعتوں کی رجسٹریشن کیلئے کڑی شرائط تجویز

انتخابی اصلاحات کا نیا مسودہ قانون، سیاسی جماعتوں کی رجسٹریشن کے لئے کڑی شرائط تجویز، تانگہ پارٹیوں کی چھٹی، دو ہزار سے کم ممبر شپ رکھنے والی سیاسی جماعت الیکشن کمیشن میں رجسٹرڈ نہیں ہو گی، پہلے سے رجسٹرڈ سیاسی جماعتیں بھی قانون بننے کے بعد تیس دن کے اندر عمل کرنے کی پابند ہوں گی۔

انتخابی اصلاحات کے نئے مسودے میں کہا گیا ہے کہ پارٹی ارکان کے شناختی کارڈ نمبر بھی الیکشن کمیشن کو فراہم کرنا ہوں گے جبکہ سیاسی جماعت کی رجسٹریشن فیس دو لاکھ روپے مقرر کی گئی ہے۔ نئے قانون کا اطلاق الیکشن کمیشن میں موجود تمام سیاسی جماعتوں پر ہو گا۔ سیاسی جماعت کو ایک لاکھ روپے سے زائد چندہ دینے والے کی تفصیلات بھی الیکشن کمیشن کو فراہم کرنا ہوں گی۔

ظفر حجازی کی طبیعت میں بہتری، ہسپتال سے ایف آئی اے کے دفتر منتقل

چودھری شوگر ملز ریکارڈ ٹیمپرنگ کیس میں گرفتار سابق چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کو طبیعت بہتر ہونے پر ہسپتال سے ایف آئی اے کے دفتر منتقل کر دیا گیا ہے

 پمز ہسپتال کے وائس چانسلر جاوید اکرم کے مطابق سابق چیئرمین ایس ای سی پی ظفر حجازی کو ڈاکٹروں نے ڈسچارج کر دیا ہے، ان کی طبیعت بہتر ہو گئی تھی اور تمام ٹیسٹ بھی نارمل تھے۔

ذرائع کے مطابق، ظفر حجازی کو ڈاکٹروں نے انجیو پلاسٹی کرانے کا مشورہ دیا تھا مگر انھوں نے انجیو پلاسٹی کرانے سے انکار کر دیا۔ ہسپتال سے ڈسچارج ہونے پر ایف آئی اے کی ٹیم ظفر حجازی کو اپنے ساتھ ایف آئی اے کے دفتر لے گئی ہے جہاں دو رکنی ٹیم ان سے مزید تفتیش کرے گی۔ ظفر حجازی ریکارڈ ٹیمپرنگ کیس میں جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کی تحویل میں ہیں۔

دریں اثناء، وزارت خزانہ نے ظفر حجازی کی معطلی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے جس میں کہا گیا کہ ظفر حجازی کے خلاف ریکارڈ ٹیمپرنگ کا کیس ہے جس کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ تحقیقات مکمل ہونے اور کیس کا فیصلہ آنے تک ظفر حجازی کو چیئرمین سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے عہدے سے معطل کر دیا گیا ہے اور ان کی جگہ ظفر عبداللہ کو قائم مقام چیئرمین ایس ای سی پی مقرر کر دیا گیا ہے جو ایس ای سی پی میں کمشنر کے طور پر کام کر رہے تھے۔

سیف سٹی پراجیکٹ کا بھانڈہ پھوٹ گیا، دھماکے کے مقام پر کوئی کیمرہ نصب نہیں

شہر میں 8 ہزار میں سے صرف 1500 کیمرےنصب ہو سکے، دھماکے کی جگہ سے چند فٹ دور پول موجود، کیمرے نہیں لگائے گئے۔ ایم ڈی سیف سٹی کا رابطے پر موقف دینے سے انکار۔

 ایشیا کے سب سے بڑے سیف سٹی پراجیکٹ کا دعویٰ ٹھس ہو گیا۔ 12 ارب سے زائد لاگت کا منصوبہ 2016ء میں مکمل ہونا تھا تاہم اب تک صرف 1500 کیمرے لگائے جا سکے۔ دھماکے سے چند فٹ دور صرف پول نصب ہے جبکہ کیمرے غائب ہیں۔ دھماکے کی تحقیقات مشکل میں پڑ گئیں کیونکہ پولیس کو سیف سٹی کیمروں کی فوٹیج دستیاب نہیں ہو گی۔ تاخیر کے باعث منصوبے کی لاگت 12 سے بڑھ کر 13 ارب روپے ہو گئی ہے۔ ایم ڈی سیف سٹی کا رابطے پر مؤقف دینے سے انکار، کہتے ہیں کہ میٹنگ میں ہوں، میٹنگ لمبی چلے گی۔

لاہور ’خودکش دھماکا‘: 9 پولیس اہلکاروں سمیت 26 افراد شہید اور 58 زخمی

لاہور میں فیروز پور روڈ پر خود کش حملے میں 9 پولیس اہلکاورں سمیت 26 افراد شہید اور 58 زخمی ہوگئے۔

دھماکا فیروز پور روڈ پر ارفع کریم ٹاور کے پاس دھماکا ہوا، دھماکے کی آواز اتنی زور دار تھی کہ دور دور تک سنی گئی جس سے علاقے میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا اور جائے وقوعہ سے دھواں اٹھتا بھی دیکھا گیا۔

دھماکے کے نتیجے میں ایک گاڑی اور 3 موٹر سائیکلیں مکمل طور پر تباہ ہوگئیں جب کہ علاقے میں شدید خوف و ہراس پھیل گیا اور افرا تفری مچ گئی۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ کے مطابق دھماکا خودکش تھا جب کہ مبینہ حملہ آور کے سر کےبال اور جلد فارنزک ٹیسٹ کے لیے لیباٹری بجھوا دیئے گئے ہیں۔

لاہور: ارفع کریم ٹاور کے قریب پراسرار دھماکا، 6 جاں بحق، متعدد زخمی

پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو مکمل طور پر سیل کر دیا۔ صورتحال کے پیش نظر ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔

 لاہور کے علاقے فیروز پور روڈ پر ارفع کریم ٹاور کے قریب پراسرار دھماکے سے 6 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔ جاں بحق ہونے والوں میں دو پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ ذرائع کے مطابق یہ دھماکا ایک گاڑی کے اندر ہوا جس سے قریب کھڑی متعدد موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں میں بھی آگ لگ گئی۔

عینی شاہدین کے مطابق ایک گاڑی ون وے ٹریفک کی خلاف ورزی کرتی ہوئی آئی اور سامنے سے آنے والی ایک موٹر سائیکل سے ٹکرا گئی۔ ٹکرانے کے فوری بعد گاڑی میں دھماکا ہو گیا جس سے موٹر سائیکل پر سوار ایک مرد، خاتون اور موقع پر موجود پولیس اہلکار جاں بحق ہو گئے۔

دھماکے کی اطلاع ملتے ہی پاک فوج، قانون نافذ کرنے والے ادارے اور ریسکیو کی ٹیمیں جائے حادثہ پہنچ گئیں اور ایمبیولینسوں کے ذریعے زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق زخمیوں میں سے بعض افراد کی حالت نازک ہے، جنھیں بھرپور طبی امداد دی جا رہی ہے۔ ضلعی انتظامیہ کے حکام کا کہنا ہے کہ صورتحال کے پیش نظر ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے۔ دھماکے کی نوعیت کا ابھی تک پتہ نہیں چل سکا ہے۔

ترجمان پنجاب حکومت کہنا تھا کہ واقعے کے بعد علاقے کو مکمل طور پر سیل کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ارفع کریم ٹاور کے قریب پرانی عمارتوں کو مسمار کرنے کا آپریشن جاری تھا۔ دھماکے کی نوعیت جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے کوٹ لکھپت دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے پولیس حکام سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے دھماکے میں شہریوں کے جاں بحق اور زخمی ہونے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ان کے لواحقین سے دلی ہمدردی اور اظہار تعزیت کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ نے سختی سے ہدایت کی ہے کہ زخمی ہونے والے افراد کو علاج معالجہ کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں اور دھماکے کی جگہ پر امدادی سرگرمیاں تیز کی جائیں۔

سندھ اسمبلی میں نیب قوانین کی منسوخی کا بل آج پیش کیا جائے گا

اجلاس کی صدارت آغا سجاد درانی کریں گے ، اپوزیشن کی مخالفت کے باعث ایوان میں ہنگامہ آرائی اور گرما گرمی کا امکان

کراچی  سندھ اسمبلی کا اجلاس سپیکر آغا سراج درانی کی زیر صدارت آج سہہ پہر ہوگا جس میں گورنر سندھ کی جانب سے اعتراضات کے بعد واپس ہونے والے نیب قوانین کی منسوخی کا احتساب آرڈی ننس بل اورنیو کیپٹو پاور پلانٹ سبسڈی ترمیمی بل دوبارہ پیش ہوں گے ۔

اپوزیشن کی مخالفت کے باعث ایوان میں گرما گرمی اور ہنگامہ آرائی کا خدشہ بھی ہے ، اجلاس میں گورنر سندھ کی جانب سے اعتراضات کے بعد واپس ہونے والے نیب قوانین کی منسوخی کا احتساب آرڈیننس بل اورنیو کیپٹو پاور پلانٹ سبسڈی ترمیمی بل گورنر کے اعتراضات کے بعد دوبارہ پیش ہوں گے ۔

سندھ کابینہ نے ان بلوں کی دوبارہ منظوری دے دی ہے جبکہ اپوزیشن نے ان بلوں کی دوبارہ مخالفت کی ہے ۔ ان بلوں کی ایوان میں اپوزیشن کی مخالفت کے باعث گرما گرمی اور ہنگامہ آرائی کا امکان ہے ۔ ایوان کثرت رائے سے گورنر کے اعتراضات کو مسترد کر دے گا اور ان بلز کی کثرت رائے سے منظوری دے دیگا ۔ قواعد و ضوابط کے مطابق بلز کی دوبارہ منظوری کے بعد یہ بلز قانون بن جائیں گے ۔

Google Analytics Alternative