قومی

ملک کو مسائل سے نکالنے کے لئے کفایت شعاری کو اپنانا ہوگا، فردوس عاشق اعوان

سیالکوٹ: معاون خصوصی اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ ملک کو مسائل سے نکالنے کے لئے کفایت شعاری کو اپنانا ہوگا جب کہ طعنے دینے والوں نے اس معیشت کو زہر کا ٹیکا لگایا ہے۔

سیالکوٹ میں پریس کانفرنس کے دوران معاون خصوصی اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ سمندری حدود کو ناقابل تسخیر بنانے والےقوم کے ہیرو اورسپوتوں کو سلام پیش کرتی ہوں، پاک بحریہ کے شہیدوں نے اپنے خون سے جغرافیائی حدوں کی حفاظت کی ہے، پاکستان میں بسنے والے ہر طبقہ فکر کو آئینی اور مذہبی تحفظ فراہم کیا جائے گا۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ صنعتوں میں کام کرنے والے مزدوروں کے حقوق کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے وزیر اعظم نے اقدامات اٹھائے ہیں، مزدورں کے حقوق کا تحفظ فراہم کرنے کے ادارے ای او آئی بی میں63 ہزار 5 سو یونٹ رجسٹرڈ ہے، پاکستان میں موجود اداروں میں باہمی روابط نہ ہونے سے فوائد کس نے اٹھائے، مزدوروں کے حقوق پر کسی قسم کا سمجھوتا نہیں ہوگا۔

فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ ملک کو مسائل سے نکالنے کے لئے کفایت شعاری کو اپنانا ہوگا، ملک میں ایک مخصوص ٹولہ پراپیگنڈا کر رہا ہے کہ حکومت نے زیادہ قرضے لیے ہیں، ہمیں لڑکھڑاتی معیشت کے ساتھ حکومت ملی تھی، حکومت نے کوئی ایسا قرضے نہیں لیا، روپے پر دباؤ آنے کے بعد اس سال 5 ہزار ارب سے تجاوز کیا، طعنے دینے والوں نے اس معیشت کو زہر کا ٹیکا لگایا، سابق وزیر خزانہ لندن میں مقیم ہیں جنہیں لانے کے لئے حکومت قانونی راستہ اختیار کرے گی۔

معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ احساس پروگرام کے ذریعے ہیلتھ کارڈ، سوشل سکیورٹی، آسان قرضے اور زراعت سے جڑے افراد کے لیے سہولیات کا آغاز کیا گیا ہے، وزیر اعظم کا ترقی کا خواب عوام کے ساتھ ملکر پورا ہوگا۔

پاکستان نے بھارتی صدرکوفضائی حدود استعمال کرنے سے روک دیا

اسلام آباد: پاکستان نے بھارت کے صدررام ناتھ کووند کو اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا۔

بھارتی صدر رام ناتھ کووند کو 8 ستمبر کو آئس لینڈ جانا تھا۔ بھارت نے صدرکے لیے پاکستان سے فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت مانگی تھی تاہم پاکستان نے اپنی فضائی حدود استعمال کرنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا اور بھارتی صدر کے طیارے کے لئے کلیرنس نہیں دی۔

اس حوالے سے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارتی صدر کو پاکستانی فضائی حدود کے استعمال کی اجازت نہیں دی جارہی، بھارتی جنونیت کو مد نظر رکھتے ہوئے پاکستان نے یہ فیصلہ کیا، بھارت نے گزشتہ 34 روز سے کشمیریوں کو بنیادی سہولتوں سے محروم کررکھا ہے، ہم نے صبر و تحمل کا مظاہرہ کیا اور نہایت محتاط طریقے سے مسئلے کو اٹھایا لیکن بھارتی حکومت ٹس سے مس نہیں ہو رہی،

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا طیارہ پاکستانی فضائی حدود استعمال کرتے ہوئے فرانس پہنچا تھا جس کی اجازت پاکستان کی جانب سے باقائدہ دی گئی تھی۔

ایک اور بھارتی جھوٹ بے نقاب؛ 2 دہشتگرد پکڑنے کا دعویٰ جھوٹا نکلا، آئی ایس پی آر

 راولپنڈی: بھارت کی جانب سے خطے میں کشیدگی بڑھانے اور اپنے عوام کو جنگی جنون میں مبتلا کرنے کی ایک اور جھوٹی کہانی بے نقاب ہوگئی ہے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق بھارتی فوج اور میڈیا نے ایل او سی پر 21 اگست کو 2 دہشت گرد پکڑنے کا جھوٹا دعویٰ کیا۔ درحقیقت 21 اگست کو ایل او سی کے حاجی پیر سیکٹر میں محمد ناظم اور خلیل احمد نامی 2 کسانوں نے غلطی سے لائن آف کنٹرول کراس کی۔
واقعہ پر فوجی حکام نے 27 اگست کو ہاٹ لائن پر رابطہ کیا، 3 ستمبر کو پاکستانی حکام نے اس معاملے پر بھارتی حکام سے ہاٹ لائن پر بات کی، بھارتی حکام نے دونوں پاکستانی شہریوں کی موجودگی کااعتراف کیا۔ بھارتی حکام نے پاکستانی حکام کے مطالبے کی توثیق اور ضابطے پر عمل کا وعدہ کیا۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا تھا کہ واقعہ پر فوجی حکام نے 27 اگست کو ہاٹ لائن پر رابطہ کیا، 3 ستمبر کو پاکستانی حکام نے اس معاملے پر بھارتی حکام سے ہاٹ لائن پر بات کی، بھارتی حکام نے پاکستانی حکام کے مطالبے کی توثیق اور ضابطے پر عمل کا وعدہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی طرف سے جھوٹے آپریشن کے لیے راہ ہموار کی جارہی ہے، بھارتی میڈیا 2 پاکستانیوں کو دہشت گرد قرار دے کر حقائق مسخ کررہا ہے.

مودی سرکار نے چاند پر غریب بھارتیوں کے 2,000 کروڑ روپے غرق کردیئے

نئی دہلی: خلائی تحقیق کے بھارتی ادارے ’’اِسرو‘‘ (ISRO) کی جانب سے چاند کے مخالف حصے کی طرف بھیجے گئے مشن ’’چندریان 2‘‘ کا زمینی اسٹیشن سے رابطہ منقطہ ہوگیا ہے۔ خیال کیا جارہا ہے کہ یہ مشن ناکام ہوچکا ہے۔ اس مشن پر 978 کروڑ بھارتی روپے لاگت آئی جو 2130 پاکستانی روپیوں کے برابر بنتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق، چندریان 2 مشن اپنے پورے سفر میں ٹھیک کام کرتا رہا لیکن جب اس کی چاند گاڑی (مون لینڈر) ’’وکرم‘‘ نے چاند کی سطح پر اترنا شروع کیا تو صرف 2100 میٹر کی اونچائی رہ جانے پر اچانک ہی اس کا رابطہ زمینی مرکز سے منقطع ہوگیا۔ اس کے بعد سے اب تک چندریان 2 کا رابطہ منقطع ہے۔ اس بارے میں اندازہ یہی ہے کہ چندریان 2 مشن ناکام ہوچکا ہے۔

اِسرو کے زمینی مرکز میں موجود نریندر مودی سے یہ ناکامی برداشت نہ ہوئی اور وہ کسی سے بات کیے بغیر فوراً ہی وہاں سے چلے آئے۔ ذرا ذرا سی بات پر ٹویٹ کرنے والے مودی جی کا ٹوئٹر اکاؤنٹ اس سانحے کے بعد سے اب تک بالکل خاموش ہے۔

واضح رہے کہ زمین کے گرد چاند اس انداز سے گردش کرتا ہے کہ ہمیشہ اس کا صرف ایک رُخ ہماری طرف رہتا ہے جبکہ دوسرا رُخ ہماری نظروں سے اوجھل رہتا ہے۔ اس کیفیت کو سائنسی اصطلاح میں ’’ٹائیڈل لاک‘‘ کہا جاتا ہے۔

چندریان 2 مشن کا مقصد، چاند کے اس حصے پر اُتر کر وہاں کا جائزہ لینا تھا جو زمین سے مخالف سمت میں ہے اور ہمیں دکھائی نہیں دیتا۔ یہی وجہ ہے کہ اس خلائی مشن کی ناکامی کے بارے میں کچھ بھی کہنا مشکل ہوگا۔

22 جولائی 2019 کو روانہ ہونے والا ’’چندریان 2‘‘ اسپیس مشن 20 اگست 2019 کو چاند کے گرد اپنے مقرر کردہ مدار میں داخل ہوا۔ بھارتی وقت کے مطابق اس کے مون لینڈر ’’وکرم‘‘ کو رات ڈیڑھ بجے سے ڈھائی بجے کے درمیان چاند کے جنوبی قطب پر اُترنا تھا۔

بتاتے چلیں کہ چندریان 2 سے پہلے چاند کی طرف بھیجے گئے درجنوں مشن ناکام ہوچکے ہیں جن میں سے 16 ایسے تھے جو اپنے آخری مراحل پر ناکامی کا شکار ہوئے۔

آئی ایس آئی یا کشمیر؛ بھارت خلائی مشن کی ناکامی کا ذمہ دارکسے ٹہرائے گا؟ ترجمان پاک فوج

راولپنڈی: ترجمان پاک فوج نے بھارتی خلائی مشن چندریان کی ناکامی پرکہا ہے کہ اب بھارت خلائی مشن کی ناکامی کا ملبہ پھرسے آئی ایس آئی یا معصوم کشمیریوں پرڈالے گا۔

پاک فوج کے ترجمان میجرجنرل آصف غفورنے بھارتی خلائی مشن چندریان کی ناکامی پرٹویٹ میں آئی ایس آراو(انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائزیشن) کوتنقیدی  شاباشی دیتے ہوئے کہا کہ چندریان کی ناکامی کا الزام اب بھارت کس کودے گا، کیا ناکامی کی وجہ مقبوضہ کشمیرکے معصوم عوام ہیں۔

پاک فوج کے ترجمان نے کہا کہ کیا چندریان مشن کی ناکامی کے پیچھے مسلمانوں یاکسی اوراقلیت کا ہاتھ ہے یا بھارتی سیٹلائٹ کی درست سمت میں لینڈنگ نہ کرنے کی ذمہ دارآئی ایس آئی ہے۔ چاند کو چھوڑیں ہندوتوا کہیں بھی نہیں لے کر جاسکتی، کیا ہندوتوا کےخلاف بلندآوازوں نےمشن چندریان کوچکناچورکردیا۔

بھارت کا پہلا مشن ‘چندریان ون’ سنہ 2008 میں چاند کی سطح پر اترنے میں ناکام رہا تھا۔

واضح رہے کہ چاند کے مخالف حصے کی طرف بھیجے گئے مشن ’’چندریان 2‘‘ کا زمینی اسٹیشن سے رابطہ منقطہ ہوگیا ہے۔ خیال کیا جارہا ہے کہ یہ مشن ناکام ہوچکا ہے۔ اس مشن پر 978 کروڑ بھارتی روپے لاگت آئی جو 2130 پاکستانی روپیوں کے برابر بنتی ہے۔

کشمیر بھارت کا ایک اور چندریان ہوگا جس کی قیمت کئی گنا زیادہ ہوگی، فواد چوہدری

اسلام آباد: بھارت کے چاند مشن ’’چندریان2‘‘ کی ناکامی پر وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ کشمیر بھارت کا ایک اور چندریان ہوگا جس کی قیمت اس منصوبے سے کئی گنا زیادہ ہوگی۔

بھارت کے چاند پر اترنے کے دوسرے مشن کی ناکامی پر بھارتی اس حد تک مایوس ہوگئے ہیں کہ وزیرسائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کو اس خلائی مشن کی ناکامی کا ذمہ دار قراردے رہے ہیں۔ فواد چوہدری بھی کسی سے کم نہیں انہوں نے بھارتیوں کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا ہے کہ خلائی مشن کی ناکامی پر بھارتیوں کے ردعمل سے حیران ہوں جو مجھے اس مشن کی ناکامی کا ذمہ دار قراردے رہے ہیں۔ بھائی ہم نے کہاتھا 900 کروڑ لگاؤ ان نالائقوں پر؟ اب صبر کرو اور سونے کی کوشش کرو۔

ایک اور ٹوئٹ میں فواد چوہدری نے چاند پر اترنے کے مشن میں فیل بھارتی سائنسدانوں کو پچکارتے ہوئے کہا ’’جو کام آتا نہیں پنگا نہیں لیتےنا، ڈیئر اینڈیا‘‘۔ فواد چوہدری نے بھارتیوں کے ناکام مشن پر دلچسپ انداز اپناتے ہوئے انڈیا کو ’’اینڈیا‘‘ لکھا جس کے اردو میں معنی اختتام کے ہیں۔

ایک بھارتی سوشل میڈیا صارف نے چندریان2 کے حوالے سے ٹوئٹ کیا کہ وہ بے چینی سے اسرو کے اعلان کا منتظر ہے جس پر فواد چوہدری نے ناکام مشن پر طنز کرتے ہوئے کہا ’’سوجا بھائی چاند کی بجائے ممبئی میں اترگیا کھلونا‘‘۔

فواد چوہدری نے اس موقع پر نریندر مودی کو بھی نشانہ بنایا۔ فواد چوہدری نے کہا مودی جی نے سیٹلائٹ کمیونی کیشن میں اس طرح بھاشن دیاتھا جیسے وہ سیاستدان نہیں بلکہ ایک خلانورد ہوں۔ لوک سبھا کو اس وقت ان سے سوال پوچھنا چاہئیے کہ آخر غریب عوام کے 900 کروڑ روپے کہاں ضائع کردئیے؟

واضح رہے کہ چاند پر لینڈینگ کا منظر دیکھنے کے لیے مودی اسپیس ایجنسی کے ہیڈکوارٹر میں موجود تھے، تاہم طویل انتظار کے بعد جب چندریان 2 کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی اور سگنل منقطع ہوگیا تھا تو اس ناکامی پر مودی مایوسی سے کنٹرول روم سے چلے گئے تھے اس پر فواد چوہدری نے مزے لیتے ہوئے کہا ’’اُف میں نے یہ لمحہ مس کردیا۔‘‘

فواد چوہدری نے ایک اور ٹوئٹ میں چاند پر اترنے کے بھارتی مشن کی ناکامی اور ابھی نندن کی پاکستان میں ناکامی کو آپس میں جوڑتے ہوئے کہا ’’ہندوستان کو مشورہ ہے، بغیر سوچے سمجھے چندریان جیسے مشن بنانے یا ابھی نندن جیسوں کو لائن آف کنٹرول پار چائے پینے بھیجنے جیسے منصوبوں پر پیسہ لٹانے کی بجائے اپنے لوگوں کو غربت سے باہر نکالنے پر پیسے لگائیں، کشمیر بھارت کا ایک اور چندریان ہوگا جس کی قیمت چندریان سے کئی گنا زیادہ ہوگی۔‘‘

چینی وزیر خارجہ سہ ملکی مذاکرات میں شرکت کیلیے اسلام آباد پہنچ گئے

اسلام آباد: چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی سہ ملکی مذاکرات میں شرکت کیلئے اسلام آباد پہنچ گئے۔

اسلام آباد کے نور خان ایئربیس پہنچنے پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے چینی وزیر خارجہ وانگ ژی کا پرتپاک خیر مقدم کیا اور دونوں رہنماوٴں کے درمیان تہنیتی جملوں کا تبادلہ ہوا۔

چین، افغانستان، پاکستان سہ ملکی وزراء خارجہ مذاکرات کا تیسرا دور آج وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی زیرصدارت اسلام آباد میں منعقد ہوگا، ٓسٹیٹ قونصلر اور چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی اور افغانستان کے وزیر خارجہ صلاح الدین ربانی اپنے اپنے ممالک کے وفود کی قیادت کریں گے۔

مذاکرات کے ایجنڈے میں سیاسی تعلقات، افغان امن عمل، سیکیورٹی تعاون وانسداد دہشت گردی، ترقیاتی تعاون اور باہمی روابط کا فروغ شامل ہے۔

دوسری جانب وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ چین، افغانستان، پاکستان وزرا خارجہ مذاکرات کا مقصد باہمی مفاد کے امور بالخصوص معاشی ترقی اور امن وسلامتی پر تینوں ممالک میں تعاون کو فروغ دینا ہے جب کہ سیاسی اعتماد سازی، ترقی وتعاون اور روابط کے فروغ کے حوالے سے یہ سہ ملکی مذاکرات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں، ان مذاکرات کے نتیجے میں تینوں ممالک کے مابین، یکساں مفاد کے امورپر زیادہ بہتر ہم آہنگی سامنے آئے گی۔

واضح رہے ان مذاکرات کے پہلے دو اجلاس 2017 میں بیجنگ اور دوسرا، دسمبر 2018 میں کابل میں ہوا تھا۔

شہدا ہمارا مان اور ان کے خاندان ہماری ذمہ داری ہیں، سربراہ پاک فوج

راولپنڈی: ترجمان پاک فوج نے یوم دفاع وشہداء پر غیر معمولی کوریج پر میڈیا سے اظہار تشکر کیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹوئٹ کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ یوم دفاع اور یوم شہدا کے دن کی خصوصی کوریج پر میڈیا کے شکر گزار ہیں، خاص طور پر میڈیا کی جانب سے یوم شہداء کی تقریب دوبارہ نشر کرنے پر شکر گزار ہیں۔

ترجمان پاک فوج کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے شہدا کے اہل خانہ سے ملنے پر قوم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ شہدا ہمارا مان اور ان کے خاندان ہماری ذمہ داری ہیں۔

Google Analytics Alternative