قومی

جعلی حکومت نے نواز شریف کے گھر کے کھانے پر پابندی عائد کردی، مریم نواز

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ جعلی حکومت نے نواز شریف صاحب کے گھر کے کھانے پر پابندی عائد کر دی ہے، مجھے ان پر بھروسہ نہیں یہ نوازشریف کے کھانے میں کچھ بھی ملا سکتے ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹویٹ میں مسلم لیگ (ن) کی رہنما اور نوازشریف کی صاحبزادی مریم نواز کا کہنا تھا کہ جعلی حکومت نے نواز شریف کے گھر کے کھانے پر پابندی عائد کر دی ہے،  کھانا لے جانے والا اسٹاف پچھلے 5 گھنٹے سے جیل کے باہر کھڑا ہے، اور نوازشریف نے جیل کا کھانا کھانے سے انکار کر دیا ہے، ان ظالموں پر مجھے بھروسہ نہیں  یہ نوازشریف  کے کھانے میں کچھ بھی ملا سکتے ہیں۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ اگر  اگلے 24 گھنٹے میں یہ پابندی واپس نہ لی گئی تو میں عدالت سے رجوع کروں گی، عدالت سے بھی مدد نہ ملی تو میں کوٹ لکھپت جیل کے باہر جاکر بیٹھوں گی، بھوک ہڑتال بھی کرنا پڑی تو کروں گی، اس بات کو دھمکی نہ سمجھا جائے کیونکہ میں یہ کر گزروں گی۔

دوسری جانب ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گل کا کہنا ہے کہ نوازشریف عدالت سے سزایافتہ قیدی ہیں، جیل مینؤل کے مطابق سلوک ہو گا اور جیل مینؤل میں گھر سے کھانا منگوانے کی اجازت نہیں ہے، بیگم صفدر شوق سے عدالت جائیں اور بھوک ہرٹال بھی کریں، خلافِ قانون کچھ نہیں ہوسکتا اور تحریک انصاف کی حکومت بھوک ہڑتالوں اور دھرنوں کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتی۔

شہباز گل کا کہنا تھا کہ جاتی عمرہ سے نوازشریف کیلئے مضر صحت کھانا آ رہا تھا دل کے مریض کو روزانہ مضرصحت گوشت اور انڈے دیے جارہے تھے، حکومت نے نواز شریف کو صحت افزاء غذا فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور ان کو صحت افزا کھانا دینے کیلئے ماہرین کا بورڈ تشکیل دیا گیا ہے، نوازشریف پاکستان میں واحد شخص ہیں جن کیلئے 21 کاڈیالوجسٹ ڈیوٹی پر معمور ہیں۔

ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ بیگم صفدر نواز شریف کی صحت پر پراپیگنڈا کے زریعے اپنی سیاست چمکانا چاہتی ہیں، وہ خود فریب دہی پر عدالت سے سزایافتہ ہیں؛ جھوٹ ان کی عادت ہے، کیلبری کوئین کا ویڈیو ڈرامہ فلاپ ہوا تو نیا ڈرامہ رچانا چاہتی ہیں۔

 

وزیراعظم کا آصف زرداری اور نواز شریف کو رعایت نہ دینے کا فیصلہ

لاہور: وزیراعظم عمران خان نے آصف زرداری اور نواز شریف کو کوئی رعایت نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

حکومتی ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری اور مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف کو کسی قسم کی رعایت نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے اور دونوں رہنماؤں کے بطور صدر اور وزیراعظم غیر ملکی دوروں کی تفصیلات طلب کر لیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے وزارت خارجہ سے 2008 سے اب تک آصف زرداری اور نواز شریف کے علاج پر اٹھنے والے اخراجات بھی طلب کرلیے اس کے علاوہ کابینہ ڈویژن سے کیمپ آفس کے اخراجات اور سیکیورٹی پر اخراجات کی تفصیلات طلب کی گئی ہیں۔

ذرائع کے مطابق دونوں ادوار میں اراکین پارلیمنٹ کے دوروں اور بیرون ملک علاج کی تفصیلات بھی طلب کی ہیں جب کہ وزیراعظم عمران خان نے اخراجات کی تفصیلات کو منظر عام پر لانے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔

نواز شریف کیس کا فیصلہ خدا کو حاضر ناظر جان کر اور شواہد کی بنیاد پر دیا، جج ارشد ملک

اسلام آباد: احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کیس کا فیصلہ میں نے خدا کو حاضر ناظر جان کر اور قانون و شواہد کی بنیاد پر دیا۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی مبینہ ویڈیو سامنے آنے کے حوالے سے رجسٹرار احتساب کورٹ نے جج ارشد ملک کا بیان جاری کیا ہے جس میں ان کا کہنا ہے کہ مجھ پر بالواسطہ یا بلا واسطہ کوئی دباؤ نہیں تھا، کوئی لالچ بھی پیش نظر نہیں تھی جب کہ میں نے یہ فیصلے خدا کو حاضر ناظر جان کر قانون و شواہد کی بنیاد پر دیا۔

جج ارشد ملک نے اپنے بیان میں کہا کہ پریس کانفرنس کے ذریعے مجھ پر سنگین الزامات لگا کر میرے خلاف ساز ش کی گئی، الزامات لگا کر میرے ادارے، میری ذات اور میرے خاندان کی ساکھ کو متاثر کرنے کی سازش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز صاحبہ کی پریس کانفرنس میں دکھائی جانے والی ویڈیوز حقائق کے برعکس ہیں، ویڈیوز میں مختلف مواقع اور موضوعات پر کی جانے والی گفتگو کو توڑ مروڑ کر سیاق وسباق سے ہٹا کر پیش کرنے کی مذموم کوشش کی گئی ہے۔

احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کا کہنا ہے کہ میں راولپنڈی کارہائشی ہوں جہاں میں جج بننے سے پہلے وکالت کرتارہاہوں، ویڈیوز میں دکھائے گئے کردار ناصر بٹ کاتعلق بھی اسی شہر سے ہے، میر ی ناصر بٹ سے پرانی شناسائی ہے، ناصر بٹ اور اس کا بھائی عبداللہ بٹ عرصہ دراز سے مختلف اوقات میں مجھ سے بے شمار دفعہ مل چکے ہیں، مریم نواز کی پریس کانفرنس کے بعد یہ ضروری ہے کہ سچ منظر عام پر لایاجائے۔

جج ارشد ملک نے بیان میں کہا کہ نوازشریف صاحب اور ان کے خاندان کے خلاف مقدمات کی سماعت دوران مجھے ان کے نمائندوں کی طرف سے رشوت کی پیش کش کی گئی، مجھے تعاون نہ کرنے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دی گئیں، دھمکیوں کو میں نے سختی سے ردکرتے ہوئے حق پر قائم رہنے کاعزم کیا۔

احتساب عدالت کے جج کا کہنا تھا کہ میں نے اپنے جان ومال کو اللہ کے سپرد کردیا ، میں نے اگر دباؤ یارشوت کے لالچ میں فیصلہ سنانا ہوتا تو ایک مقدمہ میں سزا اور دوسرے میں بری نہ کرتا، میں نے انصاف کرتے ہوئے شواہد کی بنا پر نوازشریف صاحب کو العزیزیہ کیس میں سزا سنائی اور فلیگ شپ کیس میں بری کیا، یہ پریس کانفرنس محض میرے فیصلوں کو متنازع بنانے اور سیاسی فوائد حاصل کرنے کے لیے کی گئی لہذا اس میں ملوث افراد کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جانی چاہیے۔

جج صاحب نے ویڈیو کا انکار نا کر کے تصدیق کر دی، مریم نواز

 لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ جج صاحب نے ویڈیو کاانکار نا کر کے تصدیق کر دی۔

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے ٹوئٹر پر فاضل جج صاحب کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ میں سمجھ سکتی ہوں کہ آج بھی فیصلے کی طرح تیار شدہ پریس ریلیز پر آپ نے مجبوری میں دستخط کیے ہوں گے، بہت شکریہ کہ آپ نے ویڈیو کا انکار نا کر کے تصدیق کر دی۔

اپنی ایک اور ٹوئٹ میں شاعرانہ انداز اپناتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ مانگے تانگے کی کرسی پر مرتے کیوں ہو؟، عمل نہیں تو جھوٹی باتیں کرتے کیوں ہو؟، کہتے تھے آؤ میں کنٹینر دوں گا، میں جو نکلی ہوں تو ڈرتے کیوں ہو ؟۔

ایک اور ٹوئٹ میں مریم نواز نے کہا کہ خوف انسان کو نا چین سے حکومت کرنے دیتا ہے نا چین سے جینے دیتا ہے ۔

وزیراعظم کا پاکستان کی موجودہ صورتحال پر معروف مصنفہ اینی رینڈ کی تحریر کا حوالہ

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے پاکستان کی موجودہ صورتحال پر معروف مصنفہ اینی رینڈ کی تحریر کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا ہے کہ اینی رینڈ نے 60 برس قبل جو لکھا وہ آج کے حالات پر پورا اترتاہے۔

وزیراعظم نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر معروف روسی مصنفہ اینی رینڈ کی تحریر شیئرکرتے ہوئے لکھا کہ اینی رینڈ نے 60 برس قبل جو لکھا وہ آج کے حالات پر پورا اترتاہے، ایسے ہی وقت میں تحریک انصاف کو حکومت کی باگ ڈور سنبھالنا پڑی۔

وزیراعظم نے اینی رینڈ کی تحریر کو نشان زدہ کرتے ہوئے واضح کیا کہ ’جب کوئی شےبنانے کیلیے ان سےاجازت لینی پڑےجوخودکچھ نہ بناتے ہوں،جب بد عنوانی کو ایوارڈ اور دیانتداری ذات کی قربانی ہو،جب پیسا ان کے پاس جا رہاہوجو اشیا نہیں مفاد کیلیے کام کرتے ہوں،جب قانون بھی آپ کے خلاف انہیں تحفظ دیتا ہو۔

آڈیو ویڈیو ٹیپ بنانے اور چلانے والے دونوں کردار سند یافتہ جھوٹے ہیں، فردوس عاشق

اسلام آباد: وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ آڈیو ویڈیو ٹیپ بنانے اور چلانے والے دونوں کردار سند یافتہ جھوٹے ہیں۔

اپنے ٹوئٹر بیان میں فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ آڈیو ویڈیو ٹیپ بنانے اور چلانے والے دونوں کردار سند یافتہ جھوٹے ہیں۔ایک قاتل اور غنڈہ گینگ کا سربراہ جبکہ دوسری کیلبری فونٹ کی معروف جعلساز ہے، یہ وہ کردار ہے جو بے نامی دار ہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ سرکاری خزانے کو مال غنیمت سمجھ کر لوٹنے اور عوام کے وسائل پر ڈاکہ ڈالنے والوں سے مال مسروقہ کی برآمدگی جاری رہے گی۔ نوازشریف جیل میں ہیں تو مریم صفدر بتائیں کہ وہ کس حیثیت میں بغیر کسی استحقاق اتنا عرصہ سرکاری بلٹ پروف کار استعمال کر رہی تھیں۔

دوسری جانب پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے مریم نواز کی جانب سے جاری کی گئی ویڈیو کا فرانزک آڈٹ کرانے کا اعلان کردیا۔

لیگی قیادت کا منڈی بہاؤالدین میں جلسہ کرنے پر اصرار، انتظامیہ کا اجازت دینے سے انکار

منڈی بہاؤالدین: مسلم لیگ (ن) کی قیادت قائداعظم گراؤنڈ میں ہی جلسہ کرنے پر اصرار کررہی ہے لیکن انتظامیہ نے اجازت دینے سے انکار کردیا۔

دوسری جانب منڈی بہاؤالدین میں جلسہ گاہ کے گراؤنڈ میں ابھی تک 6 انچ سے زائد پانی بھی موجود ہے اور جلسہ گاہ میں کرسیاں، شامیانے اور دوسرا سامان بھی نہیں پہنچا جب کہ نتظامیہ نے قائداعظم گراؤنڈ کے تینوں دروازوں کو تالے لگا دیے لیکن لیگی قیادت قائداعظم گراؤنڈ میں ہی جلسہ کرنے پر اصرار کررہی ہے۔ ڈی پی او منڈی بہاءالدین کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی خدشات کےباعث ن لیگ کو جلسے کی اجازت نہیں دی۔

جلسے کی اجازت نہ ملنے پر (ن) لیگی کارکن سینما گراؤنڈ کے باہر احتجاج کررہے ہیں، لیگی کارکنوں کی حکومت کے خلاف نعرے بازی بھی کی جب کہ ان کا کہنا ہے کہ حکومت (ن) لیگ کے جلسے سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔

سلیکٹڈ کی آوازیں جلسوں کو روکنے سے بند نہیں ہوں گی، مریم اورنگزیب

لاہور: مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ عمران صاحب جلسے کی اجازت اس لیے نہیں دیتے کیوں کہ انہیں نواز شریف کے نعروں کی گونج سے ڈرلگتا ہے۔

ترجمان مسلم لیگ (ن) مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ اور پی ٹی وی پر حملہ کرنے والے ایک جلسے کی اجازت نہیں دے رہے، عمران خان ملک کو 120 دن بند کر دینے والے کو مریم نواز کے ایک جلسے سے اتنا خوف کیوں ہے، عمران صاحب مریم نواز کا اتنا خوف کہ جلسہ گاہ میں پانی چھوڑ دیا، عمران صاحب آپ نے تو کہا تھا موت بھی برداشت کر سکتے ہیں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران صاحب جلسے کی اجازت اس لیے نہیں دیتے کیوں کہ انہیں نواز شریف کے نعروں کی گونج سے ڈرلگتا ہے لیکن سلیکٹڈ اور علیمہ باجی چور ہیں کی آوازیں جلسوں کوروکنے سے بند نہیں ہوں گی، عمران صاحب جلسہ تو ہوگا ان شاءاللہ ،یہ نوازشریف کے شیر ہیں، عمران صاحب ٹی وی چلا کر رکھنا اور شیروں کا سمندر دیکھنا، مریم نوازسہ پہر 3 بجے رائیونڈ سےمنڈی بہاءالدین  جلسے کے لیے نکلیں گی۔

Google Analytics Alternative