قومی

خیبر پختونخواہ کے ہر پرائمری اسکول میں 6 کمرے لازمی قرار.

پشاور: خیبر پختونخواہ میں واقعہ تبدیلی آ گئی ہے . تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخواہ کے ہر پرائمری اسکول میں 6 کمرے لازمی قرار دے دئے گئے ہیں. جس کے تحت ہر نئے بننے والے پرائمری اسکول میں 6 کمرے 6 جماعتوں کے لیے جبکہ ایک کمرہ 6 اساتذہ پر مشتمل اسٹاف اورہیڈ ماسٹر کے لیے بھی بنایا جائے گا. اس سے قبل ہر پرائمری اسکول 6 جماعتوں کے لیے دو کمروں پر مشتمل ہوتا تھا. جس میں دو اساتذہ جبکہ ہیڈ ماسٹر کا کوئی وجود نہیں ہوتا تھا . تاہم اب صوبائی حکومت نے اس حوالےسے احکامات جاری کرتےے ہوئے 6 کمرے لازمی قرار دے دئے ہیں. صوبائی حکومت کے اس اقدام کے بعد تعلیمی اداروں نے تعلیم کے معیار کو مزید مؤثر اور بہتر بنانے میں مدد ملے گی

بھار ت کا مکرو چہرہ ایک بار پھر کھل کر سامنے آگیا.

ممبئی : پاکستانی ہونا گناہ بن گیا ،بھارتی انتہا پسندوں نے مقدس مقامات کی زیارت کیلئے بھارت جانے والے مسلمان پاکستانی خاندان کو ممبئی کے ہوٹلوں میں ٹھہرانے سے انکار کردیا اس اقدام کے بعد تین خواتین سمیت چارارکان پر مشتمل خاندان کو سخت سردی میں رات کھلے آسمان تلے فٹ پاتھ پر گزارنا پڑی ۔بھارتی میڈیا کے مطابق کراچی سے تعلق رکھنے والا خاندان حاجی علی درگاہ کی زیارت کرنے کی غرض سے بھارت پہنچا تھا جس نے جودھپور میں اپنے رشتہ داروں کے ہاں رہائش اختیار کی ۔بعد ازاں پاکستانی خاندان جس میں تین خواتین اور ایک لڑکا شامل تھاکے افراد درگاہ کی زیارت کرنے ممبئی آگئے جہاں سے واپسی پر جب انھوں نے ممبئی شہر کے ہوٹل میں رات گزارنا چاہی تو کسی بھی ہوٹل نے انھیں پاکستانی شناخت کرکے ٹھہرانے کی جگہ نہیں دی جس پر سخت سردی میں پاکستانی فیملی کو رات فٹ پاتھ کر گزرنا پڑی ۔خاندان کی رکن نور بانو کا کہنا ہے کہ درگاہ حاجی علی کی زیارت کے بعد انھوں نے کسی بھی ہوٹل میں رہائش نہ ملنے کے بعد واپس جودھپور جانے کی کوشش بھی کی تاہم وہ اس میں ناکام رہے ،ریلوے اسٹیشن پر آر پی ایف اہلکاروں نے ہمیں روک کربتایا کہ انتی رات گئے کوئی بھی ٹرین جودھپور نہیں جائے گی آپ لوگ کل آئیں۔نور بانو نے بتایا کہ جب کوئی دوسری صورت نہ بچی تو ہم لوگوں نے سخت سردی میں رات فٹ پاتھ پر ہی گزاری ہمارا بھارت آنے کا یہ تجربہ انتہائی تلخ رہا ۔بھارتیوں کے اس رویے سے بہت مایوسی ہوئی ۔انکا کہنا تھاکہ ہمیں یہ لمحات ہمیشہ یاد رہیں گے ۔واضح رہے کہ انتہا پسند بھارت میں مسلمانوں اور پاکستانیوں کے ساتھ جانوروں جیسا سلوک کیا جارہا ہے ۔چند روز قبل ہندو انتہا پسند تنظیم شیو سینا نے پاکستانی گلوکار غلام علی کو ممبئی میں شو کرنے سے روک دیا تھا اور سابق پاکستانی وزیر خارجہ خورشید محمود قصوری کی کتاب کے منتظم کو تشد د کا نشانہ بنایا اور انکے چہرے پر سیاہی پھینک دی ۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے پرویز رشید کیخلاف دائر درخواست خارج کر دی۔

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پرویز رشید کیخلاف دائر درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کر دی۔جمعرات کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس نور الحق قریشی نے چوہدری محمد اکرم ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر درخواست پر رجسٹرار آفس کے اعتراضات کی سماعت کی۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ وزیراطلاعات سینیٹر پرویز رشید نے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کو چور اور غدار کہاہے، ان سے پوچھا جائے کہ انہوں نے کن ثبوتوں کی بنا پر الزامات عائد کیے ہیں۔اسٹینڈنگ کونسل راجہ خالد محمود نے کہا متاثرہ فریق اس بیان کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ اور ہرجانے کا دعویٰ دائر کر سکتا ہے، درخواست گزار متاثرہ فریق نہیں لہٰذہ درخواست بھاری جرمانے کے ساتھ خارج کی جائے۔ جس پر عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دیکر خارج کردی ۔

یار محمد رند نے تحریک انصاف میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا

اسلام آباد : مسلم لیگ(ق) کے رہنماء اور سابق وفاقی وزیر سردار یار محمد رند نے تحریک انصاف میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا،باقاعدہ اعلان (آج) کریں گے۔تفصیلات کے مطابق نواب آف کالا باغ کی پوتی عائلہ ملک کے سابق شوہرسردار یار محمد رند نے تحریک انصاف میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا،یار محمد رند پچھلے کئی سالوں سے مسلم لیگ(ق) میں خدمات سرانجام دے رہے تھے اور یار محمد رند سابق صدر پرویز مشرف کے دور حکومت میں وفاقی وزیر بھی رہے اور وہ پچھے کچھ ماہ سے تحریک انصاف میں شمولیت کرنا چاہ رہے تھے تاہم اب انہوں نے تحریک انصاف میں شمولیت کا فیصلہ کرلیا ہے جس کا باقاعدہ اعلان وہ (آج) جمعہ کو کریں گے۔

فیصل آباد مسلم لیگیوں کا شہر ہے کسی کے باپ کی جاگیر نہیں. رانا ثنا اللہ

لاہور: چودھری شیر علی کی جانب سے صوبائی وزیر قانون رانا ثنا اللہ پر عائد الزامات اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف پر اندھا دھند تنقید کے ردٍ عمل میں وزیر قانون پنجاب رانا ثنا اللہ کا کہنا ہے کہ چود ھری شیر علی کی ذہنی حالت درست نہیں اسی لیے وہ بے لگام ہوتے جا رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ چودھری شیر علی اپنے بیٹے کو فیصل آباد کا مئیر بنانے کے لیے مجھے اور وزیر اعلیٰ پنجاب کو بلیک میل کر رہے ہیں، لیکن فیصل آباد مسلم لیگیوں کا شہر ہے کسی کے باپ کی جاگیر نہیں اور جہاں تک مئیر بننے کا تعلق ہے تو فیصل آباد کے مئیر کا فیصلہ الیکشن کے بعد پارٹی لیڈر شپ کرے گی

مسلم لیگ ن کی سیٹ خاندانی سیاست اور تضادات کی نذر

لاہور : پی پی 147 میں پاکستان مسلم لیگ ن کی سیٹ خاندانی سیاست اور خاندان میں پائے جانے والے تضادات کی نذر ہو گئی۔ پاکستان کے مشہور کالم نگار جاوید چوہدری نے حال ہی میں لکھے اپنے ایک کالم میں شریف برداران اور ان کی خاندانی سیاست کے پیش نظر ہونے والے تضادات کا انکشاف کیا ہے. اپنے کالم میں انہوں نے پی پی 147 سے امیدوار محسن لطیف کی ناکامی نے شریف برادران کے اختلافات کو کھول کر رکھ دیا ہے۔ محسن لطیف میاں نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کے بھائی میاں لطیف کے صاحبزادے ہیں، میاں لطیف کی بیگم اور محسن لطیف کی والدہ میاں برداران کے تایا میاں عبد العزیز کی صاحبزادی ہیں۔میاں عبدالعزیز، شریف برادران کے والد میاں شریف کے بھائی اور اتفاق گروپ کے پارٹنر بھی تھے۔ 12 اکتوبر 1999ء میں شریف برادران کی گرفتاری پر نواز شریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز نے جنرل پرویز مشرف کے خلاف تحریک کا آغاز کیا تو پورے خاندان میں محسن لطیف اور پوری مسلم لیگ ن میں جاوید ہاشمی، یہ دونوں ہی تھے جنہوں نے کھُل کر ان کا ساتھ دیا۔ محسن لطیف اس پورے عرصے میں اپنی پھوپھی کے ہمراہ رہے جس کے باعث میاں محمد نواز شریف اور ان کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز کو آج بھی محسن لطیف کے ساتھ اور قربانی کا احساس ہے، محسن لطیف کو آج بھی نواز شریف اور ان کی اہلیہ کی قربت حاصل ہے۔محسن لطیف پی پی 147 سے دو مرتبہ ایم پی اے منتخب ہو چُکے ہیں لیکن ضمنی الیکشن میں انہیں ہار کا سامنا رہا جس کی وجہ خاندانی سیاست اور میاں بردران کے سیاست کو لے کر اندرونی اختلافات ہیں۔میاں یوسف عزیز ، محسن لطیف کے سگے ماموں ہیں، میاں یوسف لطیف نواز شریف اور شہباز شریف کے بہنوئی بھی ہیں۔محسن لطیف کی والدہ شہناز لطیف کا اپنے بھائی یوسف عزیز اورمیاں برداران کا ان کے بہنوئی میاں یوسف عزیز کے ساتھ جائیداد کا تنازعہ چل رہا ہے، جس کے بعد معاملہ عدالتو ں تک جا پہنچا۔ بعد ازاں اس معاملے سے خاندان دو دھڑوں میں منقسم ہو گیا۔میاں نواز شریف اور بیگم کلثوم نواز کا جھکاؤ محسن لطیف، شہناز لطیف اور میاں لطیف کی جانب ہے جبکہ میاں شہباز شریف صاحبزادے میاں یوسف عزیز کے ساتھ ہیں کیونکہ میاں شہباز شریف کے خاندان کا میاں یوسف عزیز کے ساتھ ایک دوسرا تعلق بھی ہے جو کہ پہلے تعلق کو مزید مضبوط بناتا ہے۔ حمزہ شہباز پنجاب میں حلقوں کی سیاست کے انچارج ہیں، یہ خاندان میں محسن لطیف کے مخالف دھڑے کے ساتھ ہیں جس کے سبب خاندانی لڑائی کا نقصان محسن لطیف کے حلقے کے لوگوں کو پہنچنا شروع ہو گیا۔جس کے بعد اڑھائی برسوں میں پی پی 147 میں کوئی ترقیاتی کام نہ ہو سکا، محسن لطیف کو اسٹریٹ لائٹس اور خراب بلب سے لے کر ہر چھوٹی چیز کے لیے حمزہ شہباز سے رابطہ کرنا پڑتا تھا۔ لیکن رابطے کے باوجود کوئی کام نہ ہوتا تھا۔ محسن لطیف حلقے کے کوئی بھی کام لے کر جاتے تو وہ نہیں ہو پاتا تھا جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ محسن لطیف نے حلقے کی عوام سے چھُپنا شروع کر دیا۔الیکشن ٹربیونل کے فیصلے کے بعد مسلم لیگ ن نے این اے 122اور پی پی 147 کا انتخاب لڑنے کا ارادہ کیا تو حمزہ شہباز محسن لطف کی بجائے یہ ٹکٹ حافظ نعمان کو دینے کے خواہاں تھے جو کہ پی پی 148میں مسلم لیگ ن کے تگڑے امیدوار ہیں۔2013ء میں ن لیگ نے ان کی جگہ اختر رسول کو ٹکٹ دے دیا تھا۔ حمزہ شہباز اس بار انہیں پی پی 147 سے الیکشن لڑوانا چاہتے تھے لیکن میاں نواز شریف نے آمادگی ظاہر نہ کی۔ ن لیگ کے لاہوری گروپ نے سردار ایاز صادق کو یہ حلقہ اپنے صاحبزادے کے حوالے کرنے کا بھی مشورہ دیا لیکن یہ مشورہ بھی نہ مانا گیا اور مجبوری کے عالم میں ٹکٹ محسن لطیف ہی کو مل گیا۔لیکن محسن لطیف کا ہارنا تو طے تھا، اور ہارنے کے بعد شاید وہ کبھی اب سیاست میں دوبارہ قدم نہیں رکھیں گے۔اس کی وجہ 2018ء کے انتخابات میں حمزہ شہباز کی جڑیں مزید مضبوط ہو جانا ہے۔جس کے بعد یہ ٹکٹ سردار ایاز صادق کے صاحبزادے کو سونپ دیا جائے گا۔ حمزہ شہباز اپنے خاندانی حریف پر کبھی بھی مہربان نہیں ہوں گے۔لہٰذا اگر ایاز صادق کی این اے 122 میں کارکردگی اورپی پی147 میں خاندانی سیاست کا تجزیہ کیا جائے تو دونوں جگہوں پر ہر کوئی افسوس کرنے پر مجبور ہو جائے گا

ٹوٹکوں کی ملکہ زبیدہ آپا ڈینگی کا شکا ر ہوگئی

کراچی: گھریلو ٹوٹکوں سے شہرت پانے والی زبیدہ آپاکو ڈینگی ہو گیاہے ۔خاندانی ذرائع کا کہنا ہے کہ زبیدہ آپا خیریت سے ہیں اور انہیں چند روز ہسپتال میں گزارنے کے بعدگھرمنتقل کردیا گیا ہے جہاں ان کی حالت بتدریج سنبھل رہی ہے۔ڈینگی کے باعث ان کے کئی ٹی وی پروگراموں کی ریکارڈنگ تعطل کا شکار ہوگئی ہے۔ واضح رہے کہ 70 سالہ زبیدہ طارق عرف زبیدہ آپا معروف ادیب انور مقصود کی بہن ہیں اور انتہائی آسان گھریلوٹوٹکوں اور کھانے پکانے میں مہارت رکھنے پر خواتین میں کافی پسند کی جاتی ہیں ۔ زبیدہ آپا بیک وقت کئی ٹی وی چینلز پر کھانے پکانے اور ٹوٹکوں کے پروگرام کرتی ہیں اس کے علاوہ انہوں نے کھانے پکانے پر کئی کتابیں بھی لکھی ہیں۔ زبیدہ آپا خود ڈینگی کا شکار ہوں گئی ہیں اور یہاں اگریہ کہا جائے کہ زبیدہ آپا کا مچھر سے بچاو کا نسخہ ناکام ہو گیاہے تو یہ بے جا نہ ہو گا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے کسان پیکج بحال کر دیا.

اسلا آباد :  اسلام آباد ہائی کورٹ نے کسان پیکج بحال کر دیا. تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس نورالحق قریشی اور جسٹس عامر فاروق نے وفاق کی اپیل پر سماعت کی ، جس کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ نے کسان پیکج پر الیکشن کمیشن کی جانب سے عائد پابندی کو کالعدم قرار دیتے ہوئے ، کسان پیکج بحال کردیا. اپنی اپیل میں وفاق نے موقف اختیار کیا کہ کسان پیکج کا اعلان کسانوں کو ریلیف دینے کے لیے کیا گیا ، کسان پیکج کسی بھی سیاسی مفاد سے بالاتر ہے لہذٰ ا بحال کیا جائے. واضح رہے کہ وزیر اعظم نواز شریف نے 341 ارب روپے کے کسان پیکج کا اعلان کیا تھا جس پر الیکشن کمیشن نے ضمنی انتخابات میں ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے پابندی عائد کر دی تھی

Google Analytics Alternative