قومی

ڈالر تاریخ کی نئی بلند ترین سطح 164.50 روپے تک پہنچ گیا

کراچی: اوپن مارکیٹ اور انٹر بینک میں ڈالر کی اڑان جاری ہے جس کے نتیجے میں امریکی کرنسی کی قدر میں تقریبا 2.34 روپے کا اضافہ ہوگیا۔

ملک میں مسلسل روپے کی بے قدری کا سلسلہ جاری ہے اور ڈالر تیزی کے ساتھ مہنگا ہوتا جارہا ہے جس کے نتیجے میں مہنگائی میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔ انٹر بینک میں ڈالر کی قدر میں 2 روپے 34 پیسے کا اضافہ ہوگیا جس کے نتیجے میں ڈالر کی قدر 164 روپے 50 پیسے ہوگئی۔

انٹر بینک میں اضافے کے بعد اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر تگڑا ہوگیا۔ اوپن مارکیٹ میں ڈالر 1 روپے مہنگا ہوا اور اس کی قیمت 164 روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

گزشتہ روز ڈالر کی قیمت میں ایک دم 6 روپے 10 پیسہ کا اضافہ ہوا تھا اور دن بھر اتار چڑھاؤ کے بعد ڈالر کی خرید و فروخت 163 روپے کی سطح پر بند ہوئی تھی۔ دو روز کے دوران امریکی کرنسی کی قدر میں ساڑھے 7 روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

سیکریٹری جنرل ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن ظفر پراچہ کا کہنا ہے کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالرکی ڈیمانڈ نہ ہونے برابر ہے اور انٹربینک میں اس کی قدر میں اضافہ ہورہا ہے۔ انٹربینک ریٹ بڑھنے کےاثرات اوپن مارکیٹ پربھی مرتب ہورہے ہیں۔

واضح رہے کہ رواں ماہ اب تک ڈالر 14 روپے 24 پیسے مہنگا ہوچکا ہے جس سے ملکی و بیرونی قرضوں میں 1490 ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔

ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں کی؛ وزیراعظم کا الیکشن کمیشن میں جواب

اسلام آباد: تحریک انصاف کے رہنما بابر اعوان نے سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب فتح محمد سے ملاقات کی اور وزیراعظم عمران خان کیخلاف انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی الیکشن کمیشن میں جواب داخل کرادیا۔

تحریری جواب میں کہا گیا ہے کہ این اے 205 کے الیکشن کمشنر نے 19 جون کو وزیر اعظم کو اظہار وجوہ کا نوٹس بھجوایا، جس میں وزیراعظم سے دورہ گھوٹکی پر وضاحت مانگی گئی ہے۔

ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ تحریک انصاف قانون کے مکمل احترام پر یقین رکھتی ہے، وزیراعظم نے ضابطہ اخلاق کی کسی بھی شق کی کوئی خلاف ورزی نہیں کی، وزیراعظم کی کابینہ کے رکن علی محمد مہر دارِ فانی سے کوچ کرگئے، وزیراعظم ان کے اہل خانہ سے تعزیت کیلئے گھوٹکی گئے، انہوں نے گھوٹکی میں سیاسی سرگرمی میں حصہ لیا نہ ہی میڈیا سے مخاطب ہوئے۔ ضابطہ اخلاق کی شق 17 بی صدر اور وزیراعظم کی انتخابی سرگرمیوں میں شمولیت پر قدغن عائد کرتی ہے، مذکورہ شق کسی طور بھی تعزیت سے نہیں روکتی۔

بابر اعوان نے اپنے جواب میں کہا کہ وزیر اعظم کے خلاف من گھڑت درخواست داخل کرکے سنسنی پھیلانے کی ناکام کوشش کی گئی، وزیراعظم کے خلاف جھوٹا بیان داخل کرنے پر مذکورہ شخص کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا اختیار رکھتے ہیں، الیکشن کمیشن 19 جون کا نوٹس واپس لے اور درخواست و بیان حلفی کی نقول فراہم کرے۔

اوپیوآئڈ ماضی کے مقابلے میں کئی گنا استعمال کی جانے لگی، اقوام متحدہ

اقوام متحدہ کی حالیہ رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں اوپیوآئڈ (افیون کے ست یا کوکین کے خواص سے مشابہت رکھنے والا مرکب) کا استعمال اور پھیلاؤں گزشتہ برسوں کے مقابلے میں کئی گنا بڑھ گیا اور تقریباً 3 کروڑ 50 لاکھ افراد اوپیوآئڈ کے متاثرین ریکارڈ کیے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ دنیا بھر میں اوپیوآئڈ کی گولیاں قانونی طور پر درد سے نجات والی ادویات میں استعمال کی جاتی ہیں۔

عالمی ادارے کی جانب سے ورلڈ ڈرگ ڈے کے موقع پر شائع رپورٹ کے مطابق سال 2017 میں تقریباً 5 کروڑ 34 لاکھ افراد نے اوپیوآئڈ استعمال کیں جوکہ سال 2016 کے مقابلے میں تقریباً 56 فیصد زائد ہے۔

علاوہ ازیں رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ تقریباً 2 کروڑ 92 لاکھ افراد نے اوپیوآئڈ کو بطور افیون اور کوکین استعمال کیا جبکہ سال 2016 میں ایسے افراد کی تعداد ایک کروڑ 94 لاکھ تھی۔

رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا کہ مشرق وسطیٰ اور جنوبی مغربی حصوں میں مجموعی عوام کے 1.6 فیصد حصے میں اوپیوآئڈ کا استعمال عام ہے۔

عالمی ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا کہ ’دنیا بھر میں 3 کروڑ 50 لاکھ افراد اوپیوآیڈ استعمال کرنے والوں میں سے نصف آبادی جنوبی ایشیا میں آباد ہے‘۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ تازہ ترین معلومات کی رو سے بھارت اور نائیجریا میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 15 فیصد یعنی اوپیوآیڈ کے متاثرین کی تعداد 3 کروڑ 53 لاکھ کے لگ بھگ پہنچ چکی ہے۔

رپورٹ میں اوپیوآیڈ استعمال کرنے والوں کی عمر سے متعلق بتایا گیا کہ سال 2017 میں 27 کروڑ 10 لاکھ افراد کی عمریں 15 سے 64 سال ہے۔ .

رپورٹ میں بتایا گیا کہ سال 2017 میں ایک ہزار 976 ٹن کوکین تیار کی گئی جو سال 2016 کے مقابلے میں 25 فیصد زیادہ ہے۔

علاوہ ازیں سال 2017 میں سیکیورٹی اداروں نے تقریباً ایک ہزار 275 ٹن کوکین اپنے قبضے میں لی جو اب تک قبضے میں لی جانے والی کوکین کے مقابلے میں سب سے زیادہ ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ اوپیوآئڈ سمیت دیگر منشیات کا استعمال کرنے والے قیدی ایڈز، ہیپاٹائٹس سی اور دمہ سمیت دیگر جان لیوا امراض میں مبتلا ہورہے ہیں۔

میانمار اور میکسیکو کے مقابلے میں تاحال افغانستان میں سب سے زیادہ افیون کی کاشت ریکارڈ کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق افغانستان میں سال 2018 میں 2 لاکھ 63 ہزار ایکڑزمین پر افیون کی کاشت ہورہی ہے۔

یوٹیلیٹی اسٹورز پر چینی سمیت 50 سے زائد اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ

کراچی: ملک بھر کے یوٹیلٹی اسٹورز پر چینی سمیت 50 سے زائد برانڈڈ اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔

نئے بجٹ کی منظوری سے قبل ہی ملک بھر کے یوٹیلیٹی اسٹورز پر چینی سمیت عام استعمال کی 50 سے زائد اشیا کی قیمتوں میں 20 روپے تک کا اضافہ کردیا گیا ہے۔ اسٹورز پر دستیاب چینی کی قیمت 3 روپے فی کلو تک بڑھا دی گئی ہے، جس کے بعد چینی 69 روپے کلو گرام سے بڑھا کر72روپے فی کلو گرام کردی گئی ہے۔

400 ملی لیٹر شیمپو کی قیمت میں 20 روپے تک اضافہ کردیا ہے جس کی قیمت 374 روپے سے بڑھا کر 394 روپے کردی ہے۔ مختلف برانڈز کے صابن کی قیمت میں بھی ایک سے 2 روپے تک اضافہ کردیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ چہرے پر لگانے والی کریم کے 70 ملی لیٹر جار پر 10 روپے تک کا اضافہ کیا گیا ہے۔

اپوزیشن کی اے پی سی؛ مشترکہ اعلامیے میں ملک کو دشمن قوتوں سے بچانے کا عزم

 اسلام آباد: اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) کے مشترکہ اعلامیے میں معیشت، ملکی سلامتی اور سی پیک جیسے منصوبوں کو دشمن قوتوں سے بچانے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

اسلام آباد میں جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی سربراہی میں اپوزیشن کی آل پارٹیز میں جماعت اسلامی کے سوا تقریباً تمام اپوزیشن جماعتوں کے قائدین نے شرکت کی۔

اجلاس میں سیاسی جماعتوں میں اسمبلیوں سے استعفوں پر اتفاق نہیں ہوسکا، جمیعت علمائے اسلام (ف)، عوامی نیشنل پارٹی ( اے این پی) اور پختونخوا میپ نے استعفوں کی حمایت کی جب کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) کا موقف ہے کہ ہمیں اتنی جلدی حکومت کو مظلوم نہیں بننے دینا چاہیے۔

حکمرانوں کا ایجنڈا گھناؤنی سازش کا حصہ، اعلامیہ

آل پارٹیز کانفرنس کے مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا کہ اے پی سی میں شامل سیاسی جماعتیں ملک کی ڈگمگاتی معیشت کو بچانے، ملکی سلامتی، اسٹریٹجک اثاثے اور سی پیک جیسے منصوبوں کو دشمن قوتوں سے بچانے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ بیرونی ادائیگیوں کا دباؤ ملکی سلامتی کے لیے بڑا چیلنج ہے۔ حکومت 11 ماہ میں کارکردگی کے اعتبار سے اپنی نااہلی پر مہر ثبت کر چکی ہے۔ پاکستان میں عوام کے نمائندہ حکمران موجود نہیں، نام نہاد حکمرانوں کا ٹولہ 25 جولائی 2018 کے انتخابات میں بدترین دھاندلی کے بعد مسلط ہوا، ان انتخابات کو ملک کی تمام سیاسی جماعتیں مسترد کرچکی ہیں۔ حکمرانوں کا ایجنڈا ملکی مفادات کی بجائے کسی گھناؤنی سازش کا حصہ ہے۔ ملکی حالات بہت بڑا سکیورٹی رسک ہیں، حکومت کے فیصلے ملکی سلامتی، خود مختاری اور بقا کے لیے خطرہ بن چکے ہیں۔ اس سے قبل کہ ملک کسی سانحہ کا شکار ہو، ہمیں متفقہ بیانیہ پر متحد ہونا ہوگا۔

مولانا فضل الرحمان 

اے پی سی میں خطاب کے دوران فضل الرحمان نے کہا کہ دھاندلی کے ذریعے آنے والی حکومت کے باقی رہنے کا کوئی جواز نہیں،
مہنگائی اورعوامی مسائل میں بے تحاشہ اضافہ ہوا ہے، حکومت کے خلاف اپوزیشن کو ایک پلیٹ فارم پرہونا چاہیے جب کہ 25 جولائی 2018 کوہونے والے عام انتخابات میں بدترین دھاندلی ہوئی جسے یوم سیاہ کے طور پر منانا چاہیے۔

شہباز شریف

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ تاریخ میں موجودہ بجٹ سے زیادہ بدترین بجٹ نہیں دیکھا، حکومت کے ہاتھ روکنے کے لئے اسمبلی کے اندر اور باہر کردار ادا کرنے کو تیار ہیں دھاندلی کی تحقیقات کے لئے پارلیمانی کمیٹی کے قیام کے لئے کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔

اسفندیار ولی خان

عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے سربراہ اسفندیار ولی نے اپوزیشن کی اے پی سی میں تجویز پیش کی کی چیئرمین سینیٹ کو تبدیل کیا جانا چاہیے، اپوزیشن نے صادق سنجرانی کو ہٹانے کا اقدام نہ اٹھایا تو عوام اعتماد نہیں کرے گی۔

مریم نواز

مریم نواز کا اے پی سی میں خطاب کے دوران کہا کہ آل پارٹیز کانفرنس میں ٹھوس فیصلے ہونے چاہئیں، 70 سال میں ریکارڈ قرضہ اس حکومت نے 11 مہینوں میں لیا ہے، عوام کو اپوزیشن سے بہت توقعات ہیں، اگر قابل عمل لائحہ عمل عوام کے سامنے نہ رکھا تو مایوسی بڑھے گی، میں تجویز دیتی ہوں کہ نیب کی قید میں تمام اسیروں کو سیاسی قیدی قرار کیا جائے تحریک انصاف کے لئے انصاف کا ایک ترازو ہے اور اپوزیشن کے لئے دوسرا، ہم ایسے احتساب کے آگے کیوں جھک رہے ہیں۔ اگر مسلم لیگ (ن) پنجاب سے، پیپلزپارٹی سندھ سے، مولانافضل الرحمٰن اور اے این پی پختونخوا سے اور بلوچستان سے نیشنل پارٹی اور اچکزئی آکر اسلام آباد بند کردیتے ہیں تو اس پر بھی بات ہونی چاہیے۔

آصف زرداری نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر ضمانت کی درخواستیں واپس لے لیں

 اسلام آباد: رہنما پیپلزپارٹی اور سابق صدر آصف زرداری نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر ضمانت کی درخواستیں واپس لے لی ہیں۔

جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے 2 رکنی بنچ نے پارک لین اور بلٹ پروف گاڑیوں کے کیس میں سابق صدر آصف زرداری کی عبوری ضمانت کی درخواست کی سماعت کی، اس موقع پر آصف زرداری نے ہائیکورٹ میں دائر ضمانت کی درخواستیں واپس لے لی۔

آصف زرداری نے کمرہ عدالت میں روسٹرم پر بیان دیتے ہوئے کہا کہ تفتیش کے دوران پتہ چلا ایک عمارت کے لیے مجھ پر قرض لینے کا الزام ہے تاہم میں نے کوئی قرض نہیں لیا، تفتیشی نے مجھے کوئی ایسی دستاویز نہیں دکھائی جہاں میرے دستخط ہوں، ایسی کوئی درخواست موجود نہیں جو میں نے قرض کے لیے دی ہو تاہم کوئی قانون مجھے قرض لینے سے نہیں روکتا۔

سابق صدر نے کہا کہ جمہوریت کے لئے دوبارہ جدوجہد پر تیار ہوں کسی کو شرمندہ نہیں کرنا چاہتا، استغاثہ کہتی ہے میں نے کمپنی بنائی، کمپنی بنانے سے مجھے کوئی نہیں روک سکتا تاہم میرے قرضہ لینے کا کوئی ثبوت نہیں، میرے خلاف کیسز جعلی بنائے گئے، مجھے پہلے بھی 8 سال بعد رہا کیا گیا، بی ایم ڈبلیو کیس میرے خلاف بنایاگیا تھا،میں اونچ نیچ پہلے بھی دیکھ چکا ہوں، میں کیس واپس لیتا ہوں اور میں کسی کوشرمندہ نہیں کرنا چاہتا۔

درخواست ضمانت واپس ہونے پر نیب سابق صدر اور رہنما پیپلزپارٹی آصف زرداری کی پارک لین کیس میں بھی گرفتاری ظاہر کرسکتا ہے، نیب نے پارک لین کیس میں آصف زداری کے وارنٹ گرفتاری جاری کر رکھے ہیں۔

ڈالر کے بعد سونے کی قیمت نے بھی نیا ریکارڈ قائم کردیا

کراچی: مقامی صرافہ مارکیٹوں میں سونے کی قیمت 500 روپے اضافے کے ساتھ 81 ہزار روپے فی تولہ کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

ملک میں روپے کی بے قدری اور ڈالر کی قیمت میں تسلسل کے ساتھ اضافہ ہورہا ہے، آج انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر مزید 7 روپے  مہنگا ہونے  کے بعد 164 روپے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا جب کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر 6 روپے 10 پیسے مہنگا ہوکر 163 روپے کا ہوگیا ہے۔

ڈالر کی قدر میں نمایاں اضافہ بدھ کوسونے کی مقامی قیمتوں پر بھی اثرانداز رہی، اور بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 25 ڈالر کی  کمی کے بعد 1404 ڈالر کی سطح پرآنے کے باوجود مقامی صرافہ مارکیٹوں میں سونے کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی اور فی تولہ اور فی دس گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 500 روپے اور 428 روپے کا مزید اضافہ ہوگیا۔

سونے کی قیمت میں اضافے کے نتیجے میں کراچی، حیدرآباد، سکھر، ملتان، لاہور، فیصل آباد، راولپنڈی، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر 81000 روپے اور دس گرام سونے کی قیمت اضافے کے بعد 69 ہزار 444 روپے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

اس کے برعکس فی تولہ چاندی کی قیمت بغیر کسی تبدیلی کے910 روپے اور دس گرام چاندی کی قیمت 780 روپے17 پیسے پر مستحکم رہی۔

جب تک یہ حکومت ہے پاکستان میں صورتحال دگرگوں رہے گی، مریم نواز

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کاکہنا ہے کہ جعلی حکومت کو قبول نہیں کرنا چاہیے کیوں کہ یہ حکومت جتنے دن رہے گی پاکستان میں صورتحال دگرگوں رہے گی۔

آل پارٹیز کانفرنس کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے (ن) لیگ کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا تھا کہ روپے کی قدر روزانہ کی بنیاد پر 5 ، 5 روپے گر رہی ہے اور  ڈالر بڑھ رہا ہے، صرف جون میں قرضوں میں 14 ارب کا اضافہ ہوا، ہر روز عوام نئے بجٹ کی وجہ سے پس رہے ہیں بجلی، گیس، آٹا مہنگا، اسپتال میں مفت ادویات بند اور دواؤں کی قیمت آسمان پر پہنچ گئیں، لوگ علاج کرائیں یا بچوں کی فیسیں دیں، کیا کریں؟ عوام کی زندگی جہنم بن گئی ہے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ میں سمجھتی ہوں اس جعلی حکومت کو قبول نہیں کرنا چاہیے، حکومت جتنے دن رہے گی پاکستان میں صورتحال بھی دگر گوں رہے گی اور خدا نخواستہ ایسا نہ ہو پاکستان پوائنٹ آف نو ریٹرن پر پہنچ جائے، ملک کے جیسے حالات ہیں یہ حکومت خود ہی گر جائے گی ہمیں تردد نہیں کرنا پڑے گا، چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے سے تمام مسائل حل تو نہیں ہوں گے لیکن جعلی مینڈیٹ والی حکومت لرز جائے گی۔

رہنما مسلم لیگ (ن) نے کہا کہ نواز شریف، شہبازشریف حمزہ اور میں ایک ہیں اور ہم میں کوئی اختلاف نہیں، پوری جماعت کو نوازشریف اور شہباز شریف پر بھرپور اعتماد ہے، ایک دوسرے کے ساتھ اختلاف تو کرسکتے ہیں لیکن فیصلہ لیڈر شپ کا ہوتا ہے جو خوش دلی سے قبول ہوتا ہے۔

 

Google Analytics Alternative