قومی

نازیبا تصاویر انٹرنیٹ پر اپلوڈ کرنے پر ڈی آئی جی گلگت کی گرفتاری کا حکم

لاہور: سپریم کورٹ نے سابقہ بیوی کی نازیبا تصاویر انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کر نے کے الزام میں ڈی آئی جی گلگت کی گرفتاری کا حکم جاری کردیا۔

چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے سابقہ اہلیہ کی نازیبا تصاویر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنے والے ڈی آئی جی گلگت بلتستان جنید ارشد کے خلاف کیس کی سماعت کی۔ چیف جسٹس پاکستان نے ڈی آئی جی جنید ارشد کو فوری گرفتار کرکے اس کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم دے دیا۔

جنید ارشد کی سابق اہلیہ عائشہ سبحانی نے چیف جسٹس کو درخواست دی تھی کہ سابق شوہر نے ان کی نازیبا تصویریں سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کی تھیں، ٹرائل کورٹ سے ضمانت خارج ہونے کے باوجود جنید ارشد کو تاحال گرفتار نہیں کیا گیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کیا پولیس افسر اپنے آپ کو قانون سے بالاتر سمجھتے ہیں، کل تک ملزم کو گرفتار کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔

ایف آئی اے سائبر کرائم سیل نے ڈی آئی جی گلگت بلتستان سید جنید ارشد کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ بااثر ملزم پر الزام عائد کیا گیا کہ اس نے اپنے دوست دانش کے ساتھ مل کر اپنی سابقہ بیوی کو بلیک میل کیا اور اس کی نازیبا تصاویر فیس بک پر اپ لوڈ کیں۔

قرضوں کے بوجھ سے نکلنے کے لیے خود کو بدلنا ہوگا، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ قیام پاکستان سے لے کر ہمارے حکمران طبقے نے غریب کے پیسے پر عیاشی کی لیکن اب ہمیں قرضوں کے بوجھ سے نکلنے کے لیے خود کو بدلنا ہوگا۔

اسلام آباد میں میانوالی ریل کار کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہوتا رہا ہے، حکمرانوں نے صرف اپنا اور خاندان کے بارے میں سوچا، عام آدمی کے لیےسفری سہولیات کو بہتر نہیں کیا گیا، ریلوےغریبوں کی سواری ہے، ٹرین پر عام آدمی سفر کرتا ہے، انگریز جو ٹریک چھوڑ گیا، وہی پرانا سسٹم آج بھی موجود ہے،پاکستان نے 70سال میں صرف 600 کلومیٹر کا ٹریک بچھایا، کئی جگہوں پر ہم نے پٹڑیاں ختم کر دیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ساری سہولتیں امیروں کے لیے ہوتی ہیں لیکن اب ایسا نہیں ہوگا، حکومت عام آدمی کی بہتری کے لیے اقدامات کرے گی، 65 سال سے زائد کے عمر کے افراد کیلیے کرایہ آدھا کر دیا گیا ہے۔  کراچی میں ریلوے کی زمین بیچ کر قرضہ ختم کیا جا سکتا ہے۔

اس سے قبل سرکاری ملازمین سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمیں خود کو بدلنا ہے، اگر ہم نے خود کو تبدیل نہ کیا تو اللہ ہمارے حالات کو تبدیل نہیں کرے گا، قیام پاکستان سے لے کر آج تک غلامی کی سوچ سے نہیں نکل سکے، ہم نے آج تک پاکستان میں انگریزوں کے نظام کو ہی تبدیل نہیں کیا، گورے نے ہندوستان کے پیسوں سے شاہانہ طرز زندگی اپنایا تھا اور ہمارے حکمران طبقے نے بھی گوروں کی روایات کو اپناتے ہوئے غریب کے پیسے پرعیاشی کی۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں جس طرح حکمران طبقہ قومی دولت خرچ کررہا ہے دنیا میں کہیں اور نہیں ہوتا،  ہم نے ایسے ایسے منصوبے شروع کررکھے ہیں جن کے لئے قرضے لینے پڑے، اورنج اور میٹرو ٹرین منصوبوں پر قرضے لے کر اس پر سود بھی دے رہے ہیں، پاکستان پر 30 ہزار ارب کا قرضہ ہے اور ہم قرضوں کی مد میں  ہر روز 6 ارب روپے سود ادا کر رہے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کو کبھی اتنے چیلنجز نہیں تھے جو آج ہیں، لیکن میرا ایمان ہے کہ دنیا میں کوئی چیز ناممکن نہیں، ناممکن کو ممکن بنانے کے لیے انسان کو خود کو بدلنا پڑتا ہے، ہمیں انگریز کے دور کی سوچ کو تبدیل کرنا ہے، سیاستدانوں،عوام اور بیوروکریسی نے خود کو بدلنا ہے، ہمیں قرضوں کے بوجھ سے نکلنے کے لیے خود کو بدلنا ہوگا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ سارا مسئلہ کرپشن کا ہے، اداروں میں بڑی سطح کی کرپشن ہے، پیسے چوری کرنےکے لیے ادارے تباہ کر دیےگئے، تیسری دنیا کے ممالک اس لیے غریب ہیں کیوں کہ وہاں کرپشن ہے، گورننس کی وجہ سے یہاں سرمایہ کاری نہیں آتی، اگر ہم نے گورننس اسٹرکچر ٹھیک کر لیا تو قوم بہت اوپر جائے گی۔

وزیراعظم  نے کہا کہ آپ کی کسی بھی سیاست جماعت سے وابستگی ہو مجھے کوئی لینا دینا نہیں، مجھے صرف کام سے غرض ہے، کچھ لوگ گھبرائے ہوئے ہیں، لیکن گھبرانے کی کوئی ضرورت نہیں، میں آپ کو یقین دلاتا ہوں آپ ایک موقع لیں میں آپ کے ساتھ کھڑا ہوں، ہم بیوروکریسی کو تحفظ فراہم کریں گے اور سیاسی مداخلت سے بچائیں گے، غلطیوں سے کوئی شخص پاک نہیں، مجھ  سے بھی غلطیاں ہوئیں، بیورو کریٹس سے بھی ہوسکتی ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ  بیوروکریٹ جب تک کام نہیں کریں گے ہمارا ریفارم پروگرام رہ جائے گا، جب تک سرکاری افسران پالیسی پرعملدرآمد نہیں کرائیں گے ہم کامیاب نہیں ہوسکتے۔ تھوڑا سا مشکل وقت برداشت کریں، مشکل وقت زیادہ دیر تک نہیں ہوتا، 2 سال بعد تنخواہ دار طبقے کو بڑی بڑی تنخواہیں دیں گے۔

وزیراعظم کی زیرصدارت اعلیٰ سطح اجلاس، آرمی چیف کی بھی شرکت

 اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے بھی شرکت کی۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹننٹ جنرل نوید مختار سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی، اجلاس میں خطے کی سلامتی کی صورت حال اور دوست ممالک کے ساتھ دو طرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیراعظم کو افغانستان اور سعودی عرب سے تعلقات، افغان مصالحتی عمل سمیت پاک افغان سرحدی امور پر بریفنگ دی گئی۔

اجلاس میں وزیرخارجہ کے  دورہ افغانستان اور اس حوالے سے حکمت عملی پر بھی مشاورت کی گئی جب کہ افغان حکومت کی جانب سے عدم تعاون کا معاملہ بھی زیر غورآیا۔

بیگم کلثوم نواز کو سپرد خاک کردیا گیا

لاہور: شریف میڈیکل سٹی جاتی امرا میں بیگم کلثوم نواز کی نماز جنازہ ادا کی گئی جس کے بعد انہیں نواز شریف کے والد میاں محمد شریف کے پہلو میں سپرد خاک کردیا گیا۔ 

سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز کی نماز جنازہ شریف میڈیکل سٹی جاتی امرا میں ادا کی گئی، ممتاز عالم دین مولانا طارق جمیل نے ان کی نماز جنازہ پڑھائی، انہیں نواز شریف کے والد میاں محمد شریف کے پہلو میں سپرد خاک کردیا گیا جب کہ نوازشریف کے دونوں صاحبزادے حسن نواز اورحسین نواز نیب ریفرنس میں مطلوب ہونے کی وجہ سے پاکستان نہیں آئے۔

سیاسی قائدین کی شرکت

نماز جنازہ میں تحریک انصاف، پیپلز پارٹی، مسلم لیگ (ق)، ایم کیو ایم پاکستان اور جماعت اسلامی کے قائدین کے علاوہ سیاسی رہنماؤں اور دیگر اہم شخصیات کے علاوہ دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد بھی بڑی تعداد میں شریک تھے۔ اس موقع پر کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے۔

بیگم کلثوم نواز کا جسد خاکی جمعے کی صبح پی آئی اے کی پرواز پی کے 758 کے ذریعے لندن سے لاہور لایا گیا، میت کے ہمراہ شہباز شریف، اسما نواز، داماد عثمان ڈار اور حسین نواز کے دو بیٹوں سمیت خاندان کے 14 افراد بھی تھے۔

لاہورایئرپورٹ پر پہلے سے موجود حمزہ شہباز، سلمان شہباز اورجنید صفدر نے بیگم کلثوم نواز کی میت وصول کی جس کے بعد میت کو سخت سیکیورٹی حصارمیں شریف میڈیکل سٹی جاتی امرا پہنچایا گیا۔

لندن میں نماز جنازہ

گزشتہ روز سابق خاتون اول کلثوم نواز کی اسلامک کلچرل سینٹر ریجنٹ پارک مسجد لندن میں بھی نماز جنازہ ادا کی جا چکی ہے جس میں شہباز شریف، حسن نواز، حسین نواز، چودھری نثار اوراسحاق ڈار کے علاوہ برطانیہ میں مقیم پاکستانیوں کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی، نماز جنازہ امام شیخ خلیفہ عزت نے پڑھائی۔

واضح رہے کہ بیگم کلثوم نوازگزشتہ برس سے کینسر کے موذی مرض میں مبتلا تھیں اور لندن میں ان کا علاج جاری تھا۔ وہ 11 ستمبر کو خالق حقیقی سے جاملی تھیں جب کہ پنجاب حکومت نے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو 17 ستمبر تک پرول پر رہا کررکھا ہے۔

آرمی چیف سے ترک وزیرخارجہ کی ملاقات؛ باہمی تعلقات اور علاقائی امور پر تبادلہ خیال

اسلام آباد: ترک وزیرخارجہ یولوت چاوش اولو نے آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ سے ملاقات کی ہے جس میں باہمی تعلقات کے فروغ اور علاقائی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان کے مطابق آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ سے ترک وزیرخارجہ میولوت چاوش اولو کی ملاقات ہوئی جس میں پاک ترک تعلقات، علاقائی سلامتی کی صورتحال اور پاک ترک دفاعی و سکیورٹی تعاون سے متعلق امور سمیت مشرق وسطیٰ کی بدلتی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات میں ترک وزیر خارجہ نے خطے میں تنازعات کے حل میں پاکستانی کوششوں کوسراہا جب کہ دونوں برادرممالک میں بہتر تعلقات کے لئے کام کرنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔

اس سے قبل پاکستانی وزیر خارجہ کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران ترک وزیر خارجہ نے کہا کہ نئی حکومت کے قیام کے بعد پاکستان آمد باعث فخر ہے، حکومتیں آتی رہتی ہیں تاہم اصل دوستی عوام کے درمیان ہوتی ہے اوردونوں ممالک کے عوام کے درمیان دوستی قائم و دائم رہنی چاہیے۔

ترکی اورپاکستان کا تعلق حکومتوں تک محدود نہیں، شاہ محمود قریشی

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ ترکی اورپاکستان کا تعلق حکومتوں تک محدود نہیں بلکہ ترکی کے ساتھ دیرینہ، برادرانہ اورمثالی تعلقات ہیں۔

اسلام آباد میں ترک وزیر خارجہ  میولوت چاوش اولو کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ترکی اور پاکستان کا تعلق حکومتوں تک محدود نہیں بلکہ ترکی کے ساتھ دیرینہ، برادرانہ اور مثالی تعلقات ہیں، ترکی نے ہمیشہ مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیا، مختلف فورمز پرترکی کا ساتھ دینے پرشکریہ ادا کرتے ہیں اورترکی کے ساتھ ورکنگ گروپ کا مشترکہ اجلاس جلد بلایا جائے گا۔

وزیرخارجہ نے کہا کہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالی ہورہی ہے، مسئلہ کشمیرپربہتر حل چاہتے ہیں اور اس متعلق اقوام متحدہ بھی بول پڑا ہے۔

دوسری جانب ترک وزیرخارجہ میولوت چاوش اولو نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ نئی حکومت کے قیام پرشاہ محمود قریشی کو مبارک باد دیتا ہوں، نئی حکومت کے قیام کے بعد پاکستان آمد باعث فخر ہے، حکومتیں آتی رہتی ہیں تاہم اصل دوستی عوام کے درمیان ہوتی ہے اوردونوں ممالک کے عوام کے درمیان دوستی قائم و دائم رہنی چاہیے۔

ترک وزیر خارجہ نے کہا کہ آج کے مذاکرات میں دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے کردار پربھی بات ہوئی، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے بہت قربانیاں دی ہیں اوردہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کیساتھ تعاون برقرار رہے گا۔

اس سے قبل ترک وزیرخارجہ وفد کے ہمراہ دفترخارجہ پہنچے جہاں دونوں ممالک کے درمیان وفود کی سطح پرمذاکرات ہوئے اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اورترک وزیرخارجہ کی ون آن ون ملاقات ہوئی۔

ہمارا مقصد ہے کہ انصاف کا نظام بہتر اور تیز ہوجائے، چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ مقدمات میں 26 سال بعد ریلیف ملنا کوئی ریلیف نہیں لہذا ہمارا مقصد ہے کہ انصاف کا نظام بہتر اور تیز ہوجائے۔

سپریم کورٹ میں نظام انصاف میں بہتری کے کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ہمارا مقصد ہے کہ انصاف کا نظام بہتر اور تیز ہوجائے، مقدمات میں 26 سال بعد ریلیف ملنا کوئی ریلیف نہیں، ایک نجی ادارے کا وراثتی سرٹیفکیٹ 16 سال سے عدالت میں زیرالتوا ہے، بتادیں کہ نظام انصاف میں بہتری کے لیےعدالت کیا حکم جاری کرے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ میرے پاس ٹائم کم ہونا شروع ہوگیا ہے، چیف جسٹس کو باقی کام بھی کرنا ہوتے ہیں، نظام انصاف میں بہتری کے لیے سب اپنی تجاویز دیں اور آئندہ سماعت پر وفاقی اور صوبائی وزراء قانون عدالت تشریف لائیں۔

پشین میں اسسٹنٹ کمشنر کی گاڑی کے قریب دھماکا، 3 لیویز اہلکار شہید

کوئٹہ: پشین بائی پاس پر اسسٹنٹ کمشنر کی گاڑی کے قریب دھماکے میں 3 لیویز اہلکار شہید جبکہ 4 افراد زخمی ہوگئے۔

بلوچستان کے ضلع پشین میں بائی پاس کے قریب ہونے والے دھماکے میں 3 لیویز اہلکار شہید ہوگئے جبکہ 4 افراد زخمی بھی ہوئے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ دھماکا سرکاری گاڑی کے قریب ہوا تاہم اسسٹنٹ کمشنر گاڑی میں موجود نہیں تھے، دھماکا خیز مواد موٹرسائیکل میں نصب کیا گیا تھا، دھماکے سے گاڑی کو نقصان پہنچا، زخمیوں میں  3 افراد کی حالت انتہائی تشویشناک ہے جنہیں کوئٹہ منتقل کردیا گیا ہے۔

دھماکے کے بعد بائی پاس کو ہرطرح کی آمدورفت کے لئے بند کردیا گیا ہے جب کہ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

 

Google Analytics Alternative