قومی

سپریم کورٹ سے اجازت ملنے کے بعد نواز شریف، مریم نواز کا لندن جانے کا ارادہ

لندن: سابق وزیراعظم نواز شریف اور مسلم لیگ نواز کی رہنما مریم نواز نے پانچ روز کے لیے لندن جانے کا ارادہ کیا ہے۔

ذرائع شریف فیملی نے جیو نیوز کو بتایا کہ نوازشریف اور مریم نواز عید کے بعد وطن واپس چلے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف اور مریم نواز احتساب عدالت میں پیشی تک وطن پہنچ جائیں گے

ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ کلثوم نواز کا ہارلے اسٹریٹ کلینک میں باقاعدگی سے علاج جاری ہے۔

خیال رہے کہ چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے اتوار کے روز دوران سماعت نواز شریف اور مریم نواز کو بیگم کلثوم کی عیادت کے لیے لندن جانے کی اجازت دے دی تھی۔

سپریم کورٹ نے احتساب عدالت کو نوازشریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے خلاف دائر تینوں ریفرنس کا فیصلہ ایک ماہ میں سنانے کا حکم بھی دیا تھا۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے خواجہ حارث کو کہا کہ نواز شریف اور مریم نواز بیگم کلثوم کی عیادت کے لیے جانا چاہتے ہیں تو جاسکتے ہیں، مجھے بتائیں نواز شریف عیادت کے بعد کب واپس آئیں گے، آپ تشہیر کے لیے کہتے ہیں کہ ہمیں کلثوم نواز کی عیادت کے لیے اجازت نہیں دی گئی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ آپ زبانی درخواست کریں ہم اجازت دیں گے۔

مسلم لیگ(ن) کے ٹوٹنے کی باتیں کرنے والے بے نقاب اور ناکام ہو چکے، نوازشریف

لاہور: سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ نئے صوبے کے نعرہ پر سیاست کرنے والے اور مسلم لیگ(ن) کے ٹوٹنے کی باتیں کرنے والے بے نقاب اور ناکام ہو چکے ہیں۔

صدر شہباز شریف کی زیر صدارت مسلم لیگ(ن) کے پارلیمانی بورڈ کا اجلاس ہوا جس میں عام انتخابات میں ٹکٹ کے حصول کے لیے شہباز شریف خود بھی بورڈ کے سامنے پیش ہوئے۔

اس موقع پر پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف نے شہباز شریف کے کاموں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف کی شاندار کارکردگی کی وجہ سے پنجاب میں مسلم لیگ(ن) مضبوط رہی ہے بالخصوص جنوبی پنجاب میں شہباز شریف کے کام قابل قدر ہیں۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ نئے صوبے کے نعرے پر سیاست کرنے والے اور مسلم لیگ(ن) کے ٹوٹنے کی باتیں کرنے والے بے نقاب اور ناکام ہو چکے ہیں جب کہ  جو فصلی بیٹرے تھے وہ مسلم لیگ(ن) چھوڑ کرگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کہا جارہا تھا کہ  حکومت کی مدت پوری ہوگی تو  پارٹی چھوڑنے والوں کی قطار لگ جائے گی لیکن ایسا نہیں ہوا۔

چین میں صدرممنون حسین سے بھارتی وزیراعظم اور روسی صدر کی ملاقات

بیجنگ: چین میں شنگھائی تعاون تنظیم کے اجلاس کے موقع پر صدر مملکت ممنون حسین نے بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی اور روسی ہم منصب سے مختصر ملاقات میں دو طرفہ باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ 

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق چین میں جاری شنگھائی کانفرنس کے درمیان صدر ممنون حسین نے بھارتی وزیراعظم  نریندرا مودی اور رو س کے صدر ولادی میر پیوٹن سے ملاقات کی، یہ ملاقات شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس کے موقع پر سائیڈ لائن پر ہوئی جہاں ان رہنماؤں نے ایک دوسرے سے مصافحہ کیا اور کچھ دیر گفتگو کی۔

روسی صدر سے ملاقات میں علاقائی اور عالمی مسائل پر بات چیت

روس کے صدر سے ہونے والی ملاقات میں دو طرفہ تعلقات، علاقائی اور عالمی مسائل سمیت باہمی دلچسپی کے امورپرتبادلہ خیال کیا گیا  جب کہ دونوں رہنماؤں نے تعلقات کو مضبوط بنانے پربھی اتفاق کیا۔

ملاقات میں دو طرفہ تجارت، توانائی، دفاع اور تعلیم کے شعبوں میں تعاون کے فروغ  پر زور

دونوں رہنماؤں نے  تجارت، توانائی، دفاع، ثقافت اور تعلیم کے شعبوں میں تعاون کے فروغ  پر زور دیا، دوران گفتگو صدرممنون حسین نے شنگھائی تعاون تنظیم کے حوالے سے باہمی دلچسپی، مساوات اور مشاورت کے لیے مواقع  کی تلاش پر بھی زور دیا۔

واضح رہے کہ شنگھائی تعاون تنظیم میں پاکستان اور بھارت پہلی مرتبہ بطور رکن شرکت کررہے ہیں۔ دونوں ممالک کو اس تنظیم کی مستقل رکنیت گزشتہ برس ہی دی گئی تھی۔ اس سربراہ اجلاس میں شنگھائی تعاون تنظیم کے مستقبل کے لائحہ عمل سے متعلق بیس سے زائد دستاویزات پر دستخط ہوئے۔

سپریم کورٹ کے حکم پر شہباز شریف کے گھر، ن لیگ سیکرٹریٹ کے باہر سے بنکر اور چوکیاں ختم

لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں مسلم لیگ(ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ کے باہر بنکر اور چیک پوسٹوں کا خاتمہ کردیا گیا۔

چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں ماڈل ٹاؤن میں تجاوزات کے خاتمے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ ڈی آئی جی لیگل عبدالرب نے عدالت کے روبرو پیش ہوکر بتایا کہ تجاوزات ہٹانے سے متعلق حکم پر عملدرآمد جاری ہے اور مکمل رپورٹ کل عدالت میں پیش کریں گے۔

چیف جسٹس نے حکم دیا کہ ماڈل ٹاؤن میں تمام غیر ضروری تجاوزات ہٹا دیں، تمام برجیاں ختم کر دیں، ماڈل ٹاؤن میں تجاوزات کے خاتمے سے متعلق رپورٹ کل عدالت میں جمع کروائیں۔

عدالتی حکم پر متعلقہ حکام نے مسلم لیگ(ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ کے باہر بنکر اور چیک پوسٹوں کا خاتمہ کردیا  جب کہ  سابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی رہائش گاہ 96 ایچ بلاک ماڈل ٹاؤن کے باہر قائم بنکر اور رکاوٹیں بھی ہٹادی گئیں۔ سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق رکاوٹیں اور بنکر ہٹانے کے لئے ضلعی حکومت، مقامی پولیس اور ٹریفک پولیس کی نفری نے آپریشن میں حصہ لیا۔

چوہدری نثار نے 4 نشستوں پر کاغذات نامزدگی جمع کرا دیئے

 راولپنڈی: سابق وزیرِ داخلہ اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما چوہدری نثار نے قومی اسمبلی  اورصوبائی اسمبلی کی 2, 2 نشستوں کے لیے کاغذات جمع کرادیئے ہیں۔

عام انتخابات 2018 میں حصہ لینے کے لئے سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار نے 4 نشستوں پر کاغذاتِ نامزدگی جمع کرادیئے ہیں۔ چوہدری نثار نے قومی اسمبلی کے حلقہ 59 راولپنڈی اور این اے 63 ٹیکسلا جب کہ  صوبائی اسمبلی کے حلقوں پی پی 10 اور 12 کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائے۔ چوہدری نثار کے کاغذات نامزدگی شیخ اسلم اورشیخ ساجد نےجمع کرائے اور انہیں پی پی 10 کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے لیے 13 جون کوطلب کرلیا گیا ہے۔

این اے 59 سے (ن) لیگ کے انجینئر قمرالاسلام نے بھی چوہدری نثار کے خلاف کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں۔ این اے 59 سے تحریک انصاف کے غلام سرور خان اور پاکستان پیپلز پارٹی کے چوہدری کامران اسلم بھی الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

چوہدری نثار اور نواز شریف میں اختلافات کھل کر سامنے آچکے ہیں اور انہوں نے اپنی ایک سے زائد پریس کانفرنسز اور انٹرویوز میں نواز شریف اور پارٹی کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ادھر شہباز شریف چوہدری نثار کو منانے کی کوششیں کرتے نظر آرہے ہیں۔

گزشتہ روز چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے کے معاملے پر نوازشریف اور شہباز شریف میں اختلافات کی خبر بھی سامنے آئی تھی۔ ذرائع کے مطابق شہباز شریف چوہدری نثار کو ٹکٹ دینے کے معاملے پر نرم رویہ رکھتے ہیں لیکن نوازشریف نے ٹکٹ جاری کرنے کے لیے شرط رکھی ہے کہ وہ پہلے درخواست دیں اس کے بعد ہی ٹکٹ جاری کیا جائے گا تاہم چوہدری نثار ٹکٹ کے لیے درخواست دینے سے انکار کرچکے ہیں۔

سپریم کورٹ نے خدیجہ صدیقی کیس جسٹس آصف سعید کھوسہ پر مشتمل بنچ کو بھیج دیا

لاہور: سپریم کورٹ نے خدیجہ صدیقی کیس جسٹس آصف سعید خان کھوسہ پر مشتمل بنچ کو بھجوادیا ہے۔

چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں قانون کی طالبہ خدیجہ صدیقی کیس کے ملزم کی بریت کے خلاف از خود نوٹس کیس کی سماعت کی، اس موقع پر چیف جسٹس نے خدیجہ صدیقی کے معاملے پر ہائی کورٹ بار کی قرارداد پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے سپریم کورٹ کے خلاف قرارداد کیسے پاس کروائی۔ چیف جسٹس نے ملزم کے والد سے استفسار کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے عدالت کے خلاف مہم کس طرح چلائی، اگر کسی وکیل کی بیٹی کے ساتھ ایسا ہوتا تو کیا آپ کا رویہ یہی ہوتا۔

سماعت کے دوران قانون کی طالبہ خدیجہ نے عدالت کو بتایا کہ میری کردار کشی کی جارہی ہے، مجھے انصاف فراہم کیاجائے، ٹرائل کورٹ میں میری کردار کشی کی گئی اس کا مداوا کون کرے گا۔

عدالت عظمیٰ نے از خود نوٹس نمٹاتے ہوئے خدیجہ صدیقی کی اپیل جسٹس آصف سعید خان کھوسہ پر مشتمل بنچ کو بھجوادی اور فریقین کو ہدایت کی کہ وہ بیان بازی سے گریز کریں۔

بجلی کی طویل بندش کے خلاف پی ٹی آئی کا ملک گیر احتجاج کا اعلان

 اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف نے بجلی کی طویل بندش کے خلاف ملک بھر میں احتجاج کا اعلان کردیا۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے ملک بھر میں بڑھتی ہوئی بجلی کی بندش کے خلاف  منگل کو ملک گیر احتجاج کا اعلان کرتے ہوئے کارکنوں کو یونین کونسل کی سطح پر مظاہرے کرنے کی ہدایت کردی۔ عمران خان نے مرکزی قائدین، قومی وصوبائی اسمبلی کے امیدواروں اور مقامی عہدے داروں کو نچلی سطح تک بجلی کی عدم دستیابی پر بھرپور احتجاج کرنے کی بھی ہدایت کی۔

عمران خان نے بجلی کی لوڈشیڈنگ پر سابقہ حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ نواز شریف نے بجلی بحران کے خاتمے کے لیے ڈھنگ کا ایک قدم نہیں اٹھایا، وزیر اعظم بلا تاخیر مداخلت کریں اور صورتحال میں بہتری کے لیے تدبیر اختیار کریں جب کہ نگران وزیر اعظم گردشی قرضوں اور بجلی کی حقیقی صورتحال بھی قوم کے سامنے رکھیں تاکہ قوم کو علم ہونا چاہیے کہ لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کے دعووں کی حقیقت کیا ہے اور کون اس بحران کا ذمہ دار ہے۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ نگران حکومت عوام کو بجلی کی زیادہ سے زیادہ فراہمی یقینی بنانے کے لیے اقدامات اٹھائے، بجلی میں خود کفالت کے لیے پن بجلی سمیت دیگر سستے اور دیرپا پیداواری وسائل پر منتقلی کی منصوبہ بندی ضروری ہے۔

آئین اور پارلیمنٹ بالادست لیکن عدلیہ کو نظرثانی کا اختیار حاصل ہے، چیف جسٹس

لاہور: چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ ریٹائرمنٹ کے بعد کوئی عہدہ قبول نہیں کروں گا، آئین اور پارلیمنٹ سپریم ہے لیکن عدلیہ کو نظرثانی کا اختیار حاصل ہے۔

سپریم کورٹ میں کسانوں کو گنے کے معاوضے کی عدم ادائیگی کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی۔  عدالت نے دو ملوں کی جانب سے ادائیگی کے لیے مزید وقت کی استدعا مسترد کرتے ہوئے دو روز میں بقایا جات ادا کرنے کا حکم دیا۔ ملز مالکان نے کہا کہ 23 ملوں نے 20 ارب روپے کی مکمل ادائیگی کردی ہے۔ بعض کسان پیسے وصول کرنے نہیں آئے، ان کی رقم باقی ہے۔

دوران سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیے کہ ریٹائرمنٹ کے بعد کوئی عہدہ قبول نہیں کروں گا، ریٹائرمنٹ سے ایک دن پہلے کہہ کر جاؤں گا، مجھے ریٹارمنٹ کے بعد کوئی عہدہ آفر کر کے شرمندہ نہ ہوں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ اگر لوگوں کے لیے اسپتال جاتا ہوں تو کیا غلط ہے، بلوچستان میں لڑکیوں کے چھ ہزار اسکولوں میں بیت الخلا نہیں، ان اسکولوں میں سہولیات دینے کا کہتا ہوں تو کیا غلط کیا، لوگوں کو صاف پانی نہیں مل رہا، آئین اور پارلیمنٹ سپریم ہے لیکن عدلیہ کو جوڈیشل ریویو کا اختیار حاصل ہے، اگر رولز غلط ہوں گے تو عدالت مخالفت کرے گی۔

Google Analytics Alternative