قومی

عوام کے پیسے واپس نہ لے سکے تو ہمیں حکومت کا حق نہیں، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ ہم عوام کے پیسے واپس نہ لے سکے تو پھر تحریک انصاف کو حکومت کا حق نہیں۔

قومی اسمبلی میں اظہارخیال کرتے ہوئے وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ سعد رفیق کی گرفتاری درخواست ضمانت منسوخ ہونے پر ہوئی، عدالت نے انہیں مکمل سنا پھر ضمانت منسوخ کی۔ پچھلے دس سال میں جس طرح ملک کوچلایا گیا وہ سب کے سامنے ہے، ملک سے چوری کیا گیا پیسا منی لانڈرنگ کرکے باہر بھیجا گیا اور منی لانڈرنگ میں ملوث لوگوں کو اہم عہدوں پر تعینات کیا گیا۔

وفاقی وزیرنے کہا کہ نیب آزاد ادارہ ہے اور ہمارے ماتحت نہیں ہے، نیب کا موجودہ موجودہ سیٹ اپ اسی وقت کا ہے جب یہ اقتدار میں تھے، چیئرمین نیب کا تقررکرنے والے بھی شاہد خاقان عباسی ہیں،  جب تک معاملہ دوسروں کے لیے چل رہا تھا تو وہ درست تھا، اب جب وہ اقتدار سے باہر نکلے اور ہاتھ ان پر پڑا تو قانون میں خامیاں یاد آگئی ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ انوکھے لاڈلے کھیلنے کو چاند مانگ رہے ہیں، پہلے ہی دن فروغ نسیم کی قیادت میں کمیٹی بنائی جو اپوزیشن سے بات کررہی ہے، کالج کے باہر بسیں روک کر ٹکٹ دینے والے کے پاس ہاؤسنگ سوسائٹیاں کیسے بنیں،سائیکل چلانے والے سے پوچھیں پیسا کہاں سے آیا تو جمہوریت کو خطرہ ہوجاتا ہے۔ خزانہ کیسے خرچ ہوا ہے آپ کو حساب دینا ہوگا اور دینا بھی چاہیے، اگر ہم ان سے عوام کے پیسے واپس نہ لے سکے تو پھر تحریک انصاف کو حکومت کا حق نہیں۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ حکومت عوام کی خواہشات کی ترجمان ہے اور عوام احتساب چاہتے ہیں ، عوام چاہتے ہیں کہ 10سال میں لوٹ مار کا جو بازار گرم رہا اس کا حساب لیا جائے، چور کی داڑھی میں تنکا ہے، لگتا ہے ساری اپوزیشن کا اپنا خطرہ پڑا ہے، سب کو اپنے اپنے کرتوت یاد ہیں اس لیے گھبرائے ہوئے ہیں، اپوزیشن چاہتی ہے حکومت اس میں رکاوٹ ڈالے مگر ایسا نہیں ہوگا۔ پاکستان میں پہلی بار شفاف احتساب ہورہا ہے، وزیراعظم اس معاملے میں پرعزم ہیں، کوئی بھی کسی بھی پارٹی کا ہو اس کا حکومت پر کوئی کنٹرول نہیں۔

منظور پشتین کو گلے لگانے کو تیار ہوں، شہریار آفریدی

 اسلام آباد: وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے پشتون تحفظ موومنٹ (پی ٹی ایم ) کے رہنما منظور پشتین کو گلے لگانے کا اعلان کردیا۔

اسلام آباد میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے پہلے بڑے مگرمچھوں پر ہاتھ ڈالنے کی پالیسی بنائی ہے، اب سندھ کا پیسہ کسی کو نہیں کھانے دیں گے، جنوبی پنجاب کو محرومیاں دینے والوں کو کٹہرے میں کھڑا کریں گے، گلگت بلتستان کی محرومیاں دور کریں گے، شور مچانے والوں سے حساب لیں گے۔

شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ ریاست پاکستان بلوچستان کے تمام اسٹیک ہولڈرز کو گلے لگانے کو تیار ہیں،  قبائلی علاقہ میں جلد امن ہوگا، چاہے کوئی ناراض ہو یا خوش میں منظور پشتین کو گلے لگاؤں گا اور اس کا ماتھا چوموں گا، سب پاکستانیوں کو عزت دیں گے ، مذہبی انتہاپسندی کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا، جو آئین پاکستان کو چیلنج کریگا ریاست اس پر ہاتھ ڈالے گی۔

وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے مزید کہا کہ ہندوستان پاکستان کو مجبور نہ کرے ہم امن پسند ملک ہیں، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مسئلہ کشمیر دنیا کو بتایا ہے۔

بشریٰ بی بی 2018 کے دوران پاکستان میں سب سے زیادہ سرچ کی جانے والی شخصیت

لاہور: وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی 2018 کے دوران گوگل پر سب سے زیادہ سرچ کی جانے والی شخصیت قرار پائی ہیں ۔

دنیا میں سب سے بڑے سرچ انجن گوگل نے 2018 میں سرچ کی گئی شخصیات کے حوالے سے رپورٹ شائع کردی ہے جس کے مطابق پاکستان میں رواں برس سب سے زیادہ سرچ کی گئی شخصیت وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی ہیں۔

بشریٰ عمران

رواں برس فروری میں عمران خان کی تیسری اہلیہ بننے والی  بشریٰ بی بی  پاکستان کی خاتون اول ہونے کے ساتھ ساتھ  ملک میں گوگل پرسرچ کئے جانے والوں میں بھی اول نمبر پر آئی ہیں۔

میگھن مارکل

امریکی اداکارہ میگھن مارکل اور برطانوی شہزادہ ہیری رواں سال مئی میں رشتہ ازدواج سے منسلک ہوئے، اور ٹویٹر پر شاہی خاندان کے آفیشل اکاؤنٹ سے 15 اکتوبر کو شہزادی میگھن مارکل کے امید سے ہونے کی خوشخبری سنائی گئی تھی۔ میگھن مارکل کو پاکستان میں دوسرے نمبر پر سب سے زیادہ سرچ کیا گیا۔

میشا شفیع

میشا شفیع گلوکاری کے میدان میں تو کوئی خاطر خواہ کامیابی حاصل نہیں کرسکیں تاہم گلوکار علی ظفر پر ہراسانی کے الزامات نے رواں سال میشا کو خبروں کی زینت بنائے رکھا، اور شاید یہی وجہ ہے کہ گوگل کی رپورٹ کے مطابق انہیں پاکستان میں گوگل پر سرچ کئے جانے والوں میں تیسرے نمبر پر جگہ ملی۔

ریحام خان

عمران خان کی دوسری بیوی بننے والی ریحام خان اپنی ازدواجی زندگی میں بری طرح ناکام ہوگئیں، جب کہ ان کی کتاب کو بھی وہ پذیرائی حاصل نہ ہوسکی جس کی انہوں نے امید لگا رکھی تھی، تاہم پاکستان میں گوگل پر سرچ کئے جانے والوں میں ان کا نمبر چوتھا ہے۔

سلویسٹر اسٹالون

ہالی ووڈ کے نامور اداکارسلویسٹر اسٹالون اپنی منفرد جسامت اور اداکاری کی وجہ سے دنیا بھر میں جانے جاتے ہیں، رواں برس 71  سالہ اداکار کی مرنے کی افواہیں بھی سوشل میڈیا پر گردش کرتی رہیں تاہم انہوں نے خود ٹویٹر پیغام میں اپنے مداحوں کو اپنی زندگی اور بہترین صحت سے آگاہ کیا۔ انہیں پاکستان میں گوگل پر سرچ کئے جانے والی شخصیات میں پانچواں نمبر ملا۔

سونالی باندرے

بھارت کی معروف و خوبرو اداکارہ سونالی باندرے نے اپنے مداحوں کو کئی سپرہٹ فلمیں دیں تاہم  ان دنوں وہ کینسر جیسے موذی مرض سے نبردآزما ہیں،  انہوں نے اپنی بیماری کے حوالے سے عوام کو خود بتایا۔ سونالی پر 1998ء میں فلم ’’ہم ساتھ ساتھ ہیں‘‘ کی شوٹنگ کے دوران غیر قانونی طور پر کالے ہرن کے شکار کا بھی الزام ہے۔ سونالی  پاکستان میں سرچ کئے جانے والوں میں چھٹے نمبر پر ہیں۔

عاطف میاں

پاکستان میں گوگل پر سرچ کئے جانے والوں میں ساتویں  نمبر پر وزیرِاعظم کی بزنس ایڈوائزری کمیٹی میں شمولیت پر تنقید کا نشانہ بننے والے ماہرِمعیشت عاطف میاں ہیں۔

حنیف عباسی

مسلم لیگ (ن) کے رہنما حنیف عباسی پاکستان میں سرچ کی گئیں ٹاپ ٹین شخصیات میں آٹھویں نمبر پرہیں، حنیف عباسی ان دنوں کوٹ لکھپت جیل میں ایفی ڈرین کیس میں عمرقید کی سزا کاٹ رہے  ہیں.

اقراء عزیز

ڈرامہ سیریل’’سنو چندا‘‘ کے ذریعے اقراعزیز کا شمار راتوں رات پاکستان کی صف اول کی اداکاراؤں میں ہونے لگا ہے، رپورٹ کے مطابق پاکستان میں سرچ کئے جانے والوں میں اقراء عزیز نویں نمبر پر ہیں۔

سنی لیون

بالی ووڈ کی بے باک اداکارہ سنی لیون اپنے فلمی کیرئیر میں بولڈ مناظر کی عکس بندی کے حوالے سے شہرت رکھتی ہیں اور اب تک بالی ووڈ میں متعدد فلموں میں کام کرچکی ہیں، سنی لیون کو پاکستان میں گوگل پر سرچ کرنے والوں نے دسویں نمبر پر جگہ دی۔

 

امریکا نے پاکستان کومذہبی پابندیوں کی خصوصی تشویشی ’بلیک لسٹ‘ سے نکال دیا

اسلام آباد: امریکی محکمہ خارجہ نے پاکستان کومذہبی پابندیوں کی خصوصی تشویشی فہرست سے استثنیٰ دے دیا۔

امریکی وزیرخارجہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق امریکا نے پاکستان کو مذہبی پابندیوں کی خصوصی تشویشی فہرست سے استثنیٰ دے دیا۔ پاکستان کو استثنیٰ امریکا کے اہم قومی مفاد کے تحت دیا گیا ہے۔

اس سے قبل امریکا نے پاکستان سمیت دیگر کئی ممالک کو مذہبی آزادی کے منافی کام کرنے والے ممالک کی فہرست میں شامل کرلیا تھا جس کے بعد پاکستان کی جانب سے بھی احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔

پاکستان نے امریکی محکمہ خارجہ کی رپورٹ سے متعلق بیان مسترد کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ جیوری کی ساکھ اور غیر جانبداری پر سنجیدہ سوالات موجود ہیں کیونکہ پاکستان ایک کثیرمذہبی معاشرہ ہے جہاں مختلف مذاہب کے لوگ ساتھ رہتے ہیں۔

قومی اسمبلی اجلاس؛ سعد رفیق کی گرفتاری پر اپوزیشن نے حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران مسلم لیگ (ن) کے رہنما سعد رفیق کی گرفتاری کے معاملے پر حکومت اور اپوزیشن میں شدید گرما گرمی ہوئی اور دونوں نے ایک دوسرے پر کڑی تنقید کی۔

ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا تو سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سعد رفیق کی گرفتاری کا معاملہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن کو دبانے کے لیے نیب کو استعمال کیا جا رہا ہے، اگر سعد رفیق کی گرفتاری سے حکومت کا تعلق نہیں تو پھر کون یہ کروا رہا ہے، جب احتساب انتقام میں بدل جائے تو جمہوریت بھی خطرے میں ہوتی ہے اور پارلیمان کی بالادستی بھی، قتل کا ریمانڈ بھی چودہ دن کا ہوتا ہے، اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کا اس سے بھی زیادہ ریمانڈ دیا گیا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ چیئرمین نیب نے ارکان پارلیمان اور سیاستدانوں کے خلاف بے بنیاد الزامات لگائے، وزیراعظم عمران خان کے خلاف بھی ہیلی کاپٹر کیس ہے، اگر قائد حزب اختلاف گرفتار ہو سکتے ہیں تو قائد ایوان کو بھی گرفتار کیا جائے، علیم خان، علیمہ خان، پرویز خٹک صاحب، اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہیٰ کو بھی گرفتار کر لیا جائے، زلفی بخاری کا نام وزیراعظم ای سی ایل سے نکلوا کر عمرے پر لے جاتے ہیں کوئی پوچھنے والا نہیں، لیکن حمزہ شہباز کو روک لیا جاتا ہے۔

قومی اسمبلی کا اگلا اجلاس اڈیالہ جیل میں

پیپلز پارٹی کے رہنما نوید قمر نے خواجہ سعد رفیق کے فوری پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح سے اپوزیشن ارکان اسمبلی کی گرفتاریاں ہورہی ہیں لگتا ہے قومی اسمبلی کے اگلے اجلاس اڈیالہ جیل میں کرنا پڑیں گے، جعلی بینک اکاؤنٹس کیس میں بلاول بھٹو زرداری سے اس وقت کے سوالات کیے جا رہے ہیں جب وہ ایک سال کے تھے، حکومت کا مقصد صرف اپوزیشن کو گندہ کرنا ہے، حکومت صرف ایک جماعتی حکمرانی کرنا چاہتی ہے، آمریت میں اپوزیشن کو جیلوں میں ڈالا جاتا ہے۔ جمہوریت میں نہیں۔

فواد چوہدری کے الفاظ اسمبلی کی کارروائی سے حذف

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے اس تنقید پر ردعمل دیتے ہوئے اپوزیشن پر خوب تیر برسائے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی تربیت میں مسئلہ ہے اور یہ دوسروں کی بات نہیں سنتے، ضیاء الحق نے ان کی پارٹی بنائی اور تربیت کی۔ فواد چوہدری کی اس بات پر اپوزیشن ارکان اسمبلی برہم ہوگئے اور شور کرتے ہوئے کہا کہ اسپیکر سے کہا کہ انہیں آداب سکھائیں۔ ڈپٹی اسپیکر نے نازیبا الفاظ استعمال نہ کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے فواد چوہدری کے الفاظ حذف کردیے۔

مریم اورنگزیب کی متوقع گرفتاری

فواد چوہدری نے مریم اورنگزیب کو ٹوکتے ہوئے اور ان کے خلاف نیب تحقیقات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے متوقع گرفتاری کا عندیہ بھی دے دیا۔ فواد چوہدری نے مریم اورنگزیب سے کہا کہ آپ نے بھی ابھی جانا ہے حوصلہ رکھیں، ان کو اپنے کرتوتوں کا اچھی طرح پتا ہے، حکومت نیب کی کارروائی نہیں روکے گی، ان داغدار لوگوں سے لوٹے گئے پیسے واپس لیں گے، کیونکہ اگر نہ لے سکے تو تحریک انصاف کو حکومت کرنے کا حق نہیں، احتساب کے عمل کو متنازعہ بنانے کا کچھ فائدہ نہیں ہوگا، شاہد خاقان عباسی ایک بات کو نظر انداز کر گئے، چیئرمین نیب کا تقرر کرنے والے بھی وہ خود ہیں۔

70 فیصد وزرا جیل میں ہوں گے

فواد چوہدری کی باتوں پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اس ایوان کے دونوں اطراف کے اراکین کی تضحیک ہو رہی ہے، جو معیار ن لیگ کے رہنمائوں کے لئے اپنایا گیا وہ کابینہ پر لگائیں تو 70 فیصد وزرا جیل میں ہوں گے، ہم نے مشرف کی جیلیں بھگتیں ان کی جیلیں بھی بھگت لیں گے، حکومت کام کرے اور مسائل حل کرے، کیونکہ گالی گلوچ کا زمانہ چلا گیا ہے۔

این آر او مانگنے والا ایوان میں موجود

قومی اسمبلی اجلاس میں وزیر مملکت مراد سعید نے کہا کہ کرپشن کرنے والوں کو ڈی چوک میں پھانسی دینے کی قرارداد منظور کریں اور عمل درآمد کریں۔ کیا صاف پانی، میٹرو بس، آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم بڑا اسکینڈل نہیں ہے، جس نے بھی عوام کا پیسہ لوٹا اس کے اثاثے نیلام کئے جائیں اور ڈی چوک پر پھانسی دی جائے، ن لیگ کے 7 لوگوں نے مجھ سے این آر او مانگا لیکن ان پر کیسز چلیں گے، سب سے پہلے جو شخص این آر او کے لیے میرے پاس آیا وہ اس ایوان میں موجود ہے۔

ملک سے زیادتی کرنے والوں کا احتساب

وفاقی وزیر شفقت محمود نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ جس نے قوم کا ایک بھی پیسہ کھایا اسے معاف نہ کرنے کی قرارداد آنی چاہیے، جس نے ملک کے ساتھ زیادتی کی ہے اس کا حساب کتاب ہونے دیں۔

نیب نے سعد رفیق اور سلمان رفیق کو گرفتار کرلیا

لاہور: نیب نے خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کو گرفتار کرلیا۔

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس طارق عباسی کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے سابق وزیر ریلوے سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی ضمانت قبل از گرفتاری میں توسیع کی درخواست پر سماعت کی، اس موقع پر وکیل خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کا خواجہ برادران کی بے نامی جائیداد ہونے کا الزام غلط ہے، خواجہ برادران کا ایک ایک پیسہ قانونی اور گوشواروں میں ظاہر کیا گیا جب کہ نیب آج تک کوئی اکاؤنٹ یا بے نامی جائیداد کا ثبوت پیش نہیں کرسکا۔

نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ خواجہ برادران کا پیراگون سے تعلق ہے، سعد رفیق کی بیوی نے قیصر امین بٹ سے مل کر پیراگون ہاؤسنگ سٹی میں پارٹنر شپ کی لہذا خواجہ برادران کی درخواست ضمانت خارج کر دی جائے۔

عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد خواجہ برادران کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد کردی جس کے بعد سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کو نیب نے کمرہ عدالت سے گرفتار کرلیا۔

دوسری جانب احاطہ عدالت میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی بڑی تعداد موجود تھی، خواجہ سعد رفیق نے احاطہ عدالت میں کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کارکن صبر کا پیمانہ ہاتھ سے نہ چھوڑیں، ہمارا دامن صاف ہے، فیصلے کروانے والے عوام کی آواز کو سن لیں۔

گرفتاری کے بعد خواجہ برادران کو نیب آفس منتقل کردیا گیا ہے جب کہ کل انہیں احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا اور پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کے حوالے سے تحقیقات کے لیے ریمانڈ کی درخواست کی جائے گی۔

واضح رہے کہ نیب کی جانب سے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی میں مبینہ فراڈ کے معاملے کی تحقیقات جاری ہے جس پر خواجہ سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق تفتیش کے لیے نیب لاہور کے سامنے بھی پیش ہوچکے ہیں، خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق نے گرفتاری سے بچنے کے لیے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کررکھی تھی۔

پاکستان کو ریاستِ مدینہ کے اصولوں پر چلانے کا عہد کر رکھا ہے، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہم نے عہد کیا ہے کہ پاکستان کو ریاستِ مدینہ کے اصولوں پر چلائیں گے۔

کیڈٹ کالج مستونگ کے طلبا سے بات کرتے ہوئے وزیرِاعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ انسان کی پہچان اس کے ارادوں اور اس کی سوچ سے ہوتی ہے، جو انسان جتنے بڑے چیلنجز قبول کرتا ہے وہ اتنا ہی بڑا انسان ہوتا ہے، ہر چھوٹی کامیابی انسان کو بڑی کامیابیوں کے لیے تیار کرتی ہے، انسان ہارتا اس وقت ہے جب وہ ہار مان لیتا ہے اور جب تک محنت جاری رکھتا ہے بڑا شخص بنتا جاتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ 3 طرح کے نظامِ تعلیم نے مسائل کوجنم دیا، ہماری کوشش ہے کہ ملک بھر میں یکساں اور معیاری نصابِ تعلیم رائج کیا جائے، ہم نے عہد کیا ہے کہ پاکستان کو ریاستِ مدینہ کے اصولوں پر چلائیں گے، طالب علموں کے لیے ضروری ہے کہ وہ دنیا کے سب سےعظیم لیڈر ہمارے  پیغمبر حضور اکرمﷺ کی حیاتِ مبارکہ کے بارے میں تعلیم حاصل کریں تاکہ سیرتِ طیبہ سے رہنمائی حاصل کی جا سکے، اس کے لیے حضور اکرمﷺ کی سیرت طیبہ پر تحقیق کے فروغ کے لیے ملک کی 3 بڑی جامعات میں سیرت چیئر قائم کی جا رہی ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ  بلوچستان میں پانی کا مسئلہ بہت سنگین ہے، اس پر قابو پانے کے لیے جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے، نئے بلدیاتی نظام میں ترقیاتی فنڈز نچلی سطح پر منتقل کیے جائیں گے، ویلیج کی سطح پر ترقیاتی فنڈز کی فراہمی سے بلوچستان کے علاقوں کی پسماندگی دور کرنے میں مدد ملے گی، ملک بھر میں اسپورٹس کا نیا نظام لائیں گے تاکہ نوجوانوں کو کھیل کے میدان میں اپنی صلاحیتیوں کے جوہر دکھانے کے مواقع میسر آئیں۔

سیاسی رہنماؤں کی گرفتاریوں سے حکومت کے عزائم بے نقاب ہو رہے ہیں، آصف زرداری

کراچی: سابق صدر اور پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین آصف زرداری کا کہنا ہے کہ سیاسی رہنماؤں کی گرفتاریوں سے حکومت کے عزائم بے نقاب ہو رہے ہیں۔

مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں خواجہ سعدرفیق اور سلمان رفیق کی گرفتاری پر ردِعمل کا اظہار کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کا کہنا تھا کہ انتقامی کارروائیوں سے سیاسی قیادت اور سیاسی پارٹیاں ہرگز کمزور نہیں ہوں گی بلکہ سیاسی رہنماؤں کی گرفتاریوں سے حکومت کے عزائم بے نقاب ہو رہے ہیں۔

آصف زرداری نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی خواہش ہے کہ  ہرحکومت اپنی مدت پوری کرے لیکن اپنے مخالفین کو جیلوں میں ڈال کر کوئی بھی حکومت مضبوط اور پائیدار نہیں ہوگی، سلیکٹڈ وزیراعظم نہیں چاہتے کہ پارلیمنٹ مضبوط ہو اور ہر فیصلہ پارلیمنٹ میں ہو۔

Google Analytics Alternative