قومی

معیشت پر بےبنیاد پروپیگنڈے کا حقائق کیساتھ جواب دیا جائے،وزیراعظم کی ترجمان کو ہدایت

 اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے معاشی ٹیم اور ترجمان کو ہدایت کی ہے کہ وہ معیشت پر بے بنیاد پروپیگنڈے کا حقائق کے ساتھ  جواب دیں۔ 

وزیرِاعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی معاشی ٹیم کا اجلاس ہوا، اجلاس میں وزیرِ برائے اقتصادی امور حماد اظہر، وزیرِ منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ، مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات ڈاکٹر عشرت حسین، معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق، و دیگر سینئر افسران شریک ہوئے۔

اجلاس میں حکومتی معاشی ٹیم نے وزیرِاعظم کو معیشت کی بہتری اور استحکام کے لئے اٹھائے جانے والے اقدامات اور ان کے اثرات پر تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ معیشت کی بہتری کی غرض سے کی جانے والی اصلاحات کے مثبت نتائج برآمد ہونا شروع ہوگئے ہیں اور رواں مالی سال کے پہلے دو ماہ میں برآمدات اور درآمدات کے ضمن میں تجارتی خسارے میں 38 فیصد  کمی،  ٹیکسوں کی وصولیوں میں بہتری، ٹیکس نیٹ میں اضافہ اور نجی کاروباری سرگرمیوں میں تیزی کا رجحان دیکھنے میں آیا ہے۔

اجلاس میں سیکرٹری خزانہ کی جانب سے مختلف وزارتوں بشمول کامرس، صنعت و حرفت، نیشنل فوڈ سیکیورٹی، وزارتِ پٹرولیم، ایف بی آر، سرمایہ کاری بورڈ، ایوی ایشن ڈویڑن کی جانب سے مالی سال کی ہر سہ ماہی کے لئے مقرر کیے گئے اہداف پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے  کہا کہ چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعتوں کا فروغ ہماری ترجیح ہے، وزیراعظم نے بیمار صنعتی اداروں کی بحالی کے لیے خصوصی اقدامات کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ماضی میں بے انتظامی پر بند کارخانوں اور بیمار صنعتوں کی بحالی پر توجہ دی جائے اور صنعتی اداروں کی بحالی کے لیےلائحہ عمل بنایا جائے، تعمیرات کو صنعت کا درجہ دینے اور اس شعبے میں فکس ٹیکس کے نفاذ کی  تجاویز کو جلد حتمی شکل دی جائے، اپارٹمنٹس کی تعمیرات میں سرمایہ کاری کیلیے مراعاتی پیکیج کی تجویز پرغور کیا جائے۔

وزیراعظم نے کہا کہ معیشت کی بہتری کے لیے روایتی طریقہ کار سے ہٹ کر حل پیش کیا جائے، معیشت پر بے بنیاد پروپیگنڈے کا حقائق کے ساتھ  جواب دیا جائے، معیشت پرمعلومات کی فراہمی کے لیے متحرک کردارادا کیا جائے، زراعت کی بہتری کے لیے مفصل پالیسی دی ہےعوام کو اس سے آگاہ کیا جائے۔

بھارتی فوج کی ایل او سی پر فائرنگ سے پاک فوج کا اہلکار اور خاتون شہید

راولپنڈی: ایل او سی پر بھارتی فوج کی بلا اشتعال فائرنگ سے پاک فوج کے حوالدار ناصر حسین اور ایک خاتون شہید ہوگئیں۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر) کے مطابق بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول حاجی پیر سیکٹر میں بلا اشتعال فائرنگ کی ہے جس کے نتیجے میں 33 سالہ حوالدار ناصر حسین شہید ہوگئے۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ شہید حوالدار ناصر حسین کا تعلق نارووال سے تھا۔ ناصر حسین 16 سال سے پاک فوج میں خدمات سرانجام دے رہے تھے

ایکسپریس نیوز کے مطابق بھارتی گولہ باری سے لائن آف کنٹرول نکیال سیکٹر کے سرحدی گاؤں بالاکوٹ میں خاتون بھی شہید ہوگئیں، اس کے علاوہ بھارتی فورسز کی فائرنگ سے اندروٹھ دریاڑی میں 4 خواتین زخمی ہو گئیں جن کی شناخت نازیہ بی بی، گْل یاسمین، شاہ بیگم اور شمائلہ کے نام سے ہوئی، جن میں سے ایک شدید زخمی ہے جسے کوٹلی ریفر کر دیا گیا۔ بھارتی گولہ باری سے 2 بھینسیں اور 2 بکریاں بھی ہلاک ہوئیں۔

کراچی کوسندھ سے الگ ہونے نہیں دیں گے، فروغ نسیم

اسلام آباد: وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم کا کہنا ہے کہ اگر لوگ آرٹیکل 149 میں ایسی کوئی چیز پڑھیں جو اس میں نہیں لکھی ہوئی تومیں کیا کرسکتا ہوں اور ہم توخود کہتے ہیں کراچی کو سندھ سے الگ نہیں ہونے دیں گے۔

اسلام آباد میں معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان، پنجاب اور خیبر پختونخوا کے وزرائے قانون کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ لیگل ایڈ اینڈ جسٹس اتھارٹی کا قانون جلد لارہے ہیں، لیگل ایڈ جسٹس اتھارٹی کا فوکس بچوں اور خواتین کے جرائم کی طرف ہوگا، جو لوگ وکیل نہیں کرسکتے سالہا سال جیلوں میں پڑے رہتے ہیں لیکن خواتین کو اب اپنے حق کے لیے عدالتوں کے چکر نہیں کاٹنا پڑیں گے خواتین کی جائیداد سے متعلق خواتین محتسب سول کورٹ میں ریفرنس دائر کرے گی۔

وزیرقانون نے کہا کہ تحریک انصاف اور اتحادیوں نے عوام کی فلاح کے قوانین بنائے ہیں، عمران خان نے قوم سے وعدہ کیا تھا تھا عوام کو سستا اور فوری انصاف ملے، نئے قوانین کے لیے تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی ہے، اوورسیزپاکستانیوں کی پراپرٹیز سے متعلق نیا قانون لایا جا رہا ہے، نئے قوانین سے ججز،وکلا اور عوام کو آگاہ کرنے کی ضرورت ہے، شکایات آرہی تھیں کہ جیل میں بڑی کرپشن کرنے والوں کو سہولیات دی جاتی ہیں لیکن اب نیب میں اگر کسی پر 50 کروڑ سے زائد کرپشن کا الزام ہو تو اس کو جیل میں سی کلاس ملے گی۔

فروغ نسیم نے کہا کہ چیف جسٹس آف پاکستان کی ویڈیو لنک کے ذریعہ عدالت قائم کرنے کو سراہتا ہوں، ہم بھی ماتحت عدالتوں میں ویڈیو لنک کو متعارف کرانے جارہے ہیں، بے نامی ٹرانزیکشن قانون میں وسل بلور قانون کو شامل کررہے ہیں جب کہ پنجاب اور کے پی کے میں نئے قوانین جلد رائج ہوجائیں گے اور بلوچستان کے وزیراعلی سے بھی ان قوانین سے متعلق جلد بات ہوگی، سندھ حکومت بھی اگر چاہے تو یہ اچھے قوانین رائج کرے، ہم ویلکم کریں گے۔

کراچی سے متعلق بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ میں نے نئے صوبے کی بات نہیں کی، میرے بیان پر سیاست کی جارہی ہے، اگر لوگ آرٹیکل 149 میں ایسی کوئی چیز پڑھیں جو اس میں نہیں لکھی ہوئی تومیں کیا کرسکتا ہوں اور ہم توخود کہتے ہیں کراچی کو سندھ سے الگ نہیں ہونے دیں گے جب کہ اندرون سندھ میں ایڈز اور ہیپاٹائٹس پھیل چکا ہے، کراچی کی بہتری سے سب سے زیادہ فائدہ سندھ کا ہے، کراچی اسٹریٹجک کمیٹی نے معاملات کو حتمی شکل نہیں دی، کمیٹی سے متعلق رابطہ کرنا وفاق کا صوابدید ہے، ناصر شاہ اچھے آدمی ہیں ضرورت پڑی تو رابطہ کریں گے۔

اس سے قبل فردوش عاشق اعوان نے بات کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ان قوانین کو بدل رہی ہے جو گلے سڑے نظام سے ملک کو باہر نکالنے میں رکاوٹ تھے جب کہ وزیراعظم پاکستان کی طرف سے کل کشمیر کاز کے لیے مظفرآباد پہنچنے والے ہر فرد کا شکریہ ادا کرتی ہوں، اپوزیشن اپنا کشمیر ایشو پر کردار ہندوستان کے میڈیا پر دیکھیں۔

پاکستان کشمیریوں کے حقوق کے لئے ہر حد تک جائے گا، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان کشمیریوں کے حقوق کے لئے ہر حد تک جائے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کو انٹریو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ جب سے ہماری حکومت آئی ہے ہم نے اس بات کو یقیینی بنایا ہے کہ مذہب سے بالا تر ہوکر ہر پاکستانی کو اس کے حقوق دئیے جائیں، ہم نے سکھوں کے جذبات کو مدنظر رکھتے ہوئے کرتارپور راہداری کھولنے کا فیصلہ کیا جب کہ بھارت اقلیتوں کو بھارتی شہری ہونے کے بنیادی حقوق سے محروم رکھتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ خراب معیشت کو سہارا دینے کے لیے قرضہ لینا پڑتا ہے، اس کے بعد ہی آمدن کو بڑھایا جاسکتا ہے، اصلاحات کرنے میں وقت لگتا ہے، ہمارے 13 ماہ کی حکومت میں ایک بھی کرپشن اسکینڈل سامنے نہیں آیا، جب میرے 5 سال مکمل ہوجائیں گے تو عوام دیکھے گی کہ یہ آخری آئی ایم ایف پیکج ہے جو پاکستانی حکومت لے گی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جوہری تنازعہ کا نتیجہ ناقابل تصور ہے اور اگر جوہری سے لیس دو ریاستیں ایک دوسرے کے خلاف جنگ میں داخل ہوجائیں تو کچھ بھی ممکن ہے، پاکستان اور بھارت کے مابین ایٹمی جنگ سے عالمی برادری سنگین نتائج سے خبردار رہے، پاکستان ایسی قوم ہیں جو آخری سانس تک لڑے گی، کوئی سمجھدار شخص ایٹمی جنگ کی بات نہیں کرسکتا جب کہ پاکستان کشمیریوں کے حقوق کے لئے ہر حد تک جائے گا اور برے وقت میں چین ہمارا سب سے بہترین دوست ثابت ہوا ہے۔

کشمیریوں پر ہونے والے ظلم کا ردعمل آئےگا، وزیراعظم

مظفر آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کشمیریوں پر جو ظلم ہو رہا ہے اس سے انتہاپسندی بڑھے گی اور کشمیریوں پر ہونے والے ظلم کا ردعمل آئے گا۔

مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی دہشت گردی کے خلاف مظفرآباد میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ 40 روز سے کشمیری کرفیو میں پھنسے ہوئے ہیں، نریندر مودی جس میں انسانیت ہو وہ کبھی عورتوں اور بچوں پر ظلم نہیں کر سکتا تاہم مودی کبھی اپنے ارادے میں کامیاب نہیں ہوسکتا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ساری دنیا میں کشمیر کا سفیر بن کر جاؤں گا اور دنیا کو بتاؤں گا، آرایس ایس کے بانی ہٹلر کو اپنا ہیرو مانتے تھے، آرایس ایس وہ جماعت ہے جس میں مسلمانوں کے خلاف نفرت بھری ہے، بھارت میں اقلیتوں کو برابر کا شہری نہیں سمجھا جاتا تاہم نریندر مودی تم کشمیریوں کو شکست نہیں دے سکتے، جس طرح ہٹلر نے ظلم کیا اسی طرح یہ بھی ظلم کر رہے ہیں اور اب وہ ہندوستان بننے جارہا ہے جو نہ نہرو چاہتا تھا نہ گاندھی چاہتے تھے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 50 سال بعد سلامتی کونسل میں کشمیرکی بات ہوئی، 58 ملکوں نے پاکستان کے موقف کی حمایت کی، او آئی سی نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جاری کرفیو ختم کرے، آئندہ ہفتے نیویارک میں جنرل اسمبلی کے اجلاس میں مسئلہ کشمیر پر بات کروں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کہا کہ کشمیر کا مسئلہ بین الاقوامی مسئلہ بن چکا ہے، پوری دنیا کے سوا ارب مسلمان آج کشمیر کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان نے بھارت کا جہاز گرایا،پائلٹ واپس بھجوانے پر مودی نے کہا دیکھو پاکستان ڈرگیا ہے، مودی کان کھول کر سن لو ایمان والا موت سے نہیں ڈرتا، بھارت کاپائلٹ ڈر کر نہیں امن کے لیے واپس کیا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کشمیریوں پر جو ظلم ہو رہا ہے اس سے انتہاپسندی بڑھے گی، ظلم پر ہر انسان ذلت کی زندگی پر موت کو ترجیح دیتاہے، اگر مجھے اس طرح بند کیا جاتا تو میں اس ظلم کے خلاف لڑتا، جب انسانوں کو دیوار سے لگا دیا جائے تو وہ انتہاپسندی کی طرف جاتے ہیں، آج سوا ارب مسلمان کشمیر کی طرف دیکھ رہے ہیں، کشمیر پر ہونے والے ظلم کا ردعمل آئے گا، مودی کو اینٹ کا جواب پتھر سے ملے گا، دنیا کو کہتا ہوں کہ ہندوستان کے ہٹلر کو روکے، یہ قوم آخری وقت تک تمہارا مقابلہ کرےگی۔

ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب شہباز گل مستعفی، مشیر عون چوہدری برطرف

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار کے ترجمان شہباز گل مستعفی ہوگئے ہیں جبکہ مشیر عون چوہدری کو بھی عہدے سے ہٹادیا گیا ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل نے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق اختلافی بیان کے باعث شہباز گل سے استعفیٰ لیا گیا ہے اور اس حوالے سے پارٹی کارکنان کا کافی دباؤ تھا۔

شہبازگل نے چند روز قبل ایک بیان دیا تھا کہ جسے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی شکل پسند نہیں تو وہ پارٹی چھوڑ دے، کیونکہ جو لوگ عثمان بزدار کو وزیراعلیٰ رکھیں گے وہی اس پارٹی میں رہیں گے۔

وزیراعلی پنجاب کے مشیر عون چوہدری کو بھی عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے۔ عون چوہدری وزیراعظم عمران خان کے سابق پولیٹکل سیکریٹری اور قریبی ساتھی ہیں۔ ذرائع کے مطابق پارٹی کے اندر پریشر گروپ سے نمٹنے کے لیے یہ تمام تر انتظامات کیے گئے ہیں۔

عون چوہدری کی جگہ راولپنڈی سے تعلق رکھنے والے آصف محمود کو وزیراعلیٰ کا مشیر مقرر کردیا گیا ہے۔ آصف محمود گزشتہ دور حکومت میں پی ٹی آئی کے ایم پی اے تھے اور راجہ بشارت کو ایڈجسٹ کرنے کے لیے انہیں ٹکٹ نہیں دیا گیا تھا۔ انہیں مشیر بناکر تحریک انصاف پنڈی کی ناراضگی دور کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

پنجاب کابینہ میں بڑی تبدیلیاں متوقع

وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار عمرہ کی ادائیگی کیلئے سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں تاہم اس سے قبل انہوں نے صوبائی وزراء کی کارکردگی کی رپورٹ طلب کرلی ہے جس کا واپسی پر جائزہ لیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ تبدیلی کا مشن پورا نہ کرنے والے وزیروں کے بارے میں نو ٹالرینس پالیسی اپنائیں گے اور وزراء کی کارکردگی کی سخت جانچ پرکھ کر کے کابینہ میں ردوبدل کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق بعض وزراء بارہا مواقع ملنے کے باوجود تسلی بخش کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کرسکے اور اپنے محکموں میں عوامی توقعات کے مطابق تبدیلیاں لانے میں ناکام رہے، نااہلی کامظاہرہ کرنے والے وزیروں کی کارکردگی حکومت پنجاب کی ساکھ کو متاثر کررہی ہے۔

عوام کی فلاح وبہبود کے تقاضے پورے نہ کرنے والے وزراء اپنے منصب پر برقرار نہیں رہ سکیں گے اور وزیراعظم عمران خان کے تصور کے مطابق کام نہ کرنے والے وزراء کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

بھارت کے سفاکانہ طرزِعمل کے خلاف دنیا بھر میں آوازیں اٹھ رہی ہیں، وزیرخارجہ

اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ ہندوستان کے سفاکانہ طرز عمل کے خلاف دنیا بھر میں آوازیں اٹھ رہی ہیں اور بھارت کے جھوٹے بیانیے کی قلعی کھل رہی ہے۔ 

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی زیرصدارت وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر تشکیل دیئے گئے “کشمیر سیل” کا تیسرا باضابطہ اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم، وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، سول و عسکری حکام اور وزارت خارجہ کے سینئر افسران بھی شریک ہوئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اجلاس کے شرکاء کو اپنے حالیہ دورہ جنیوا اور اس میں ہونے والی میٹنگز کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے یہ بتاتے ہوئے اطمینان محسوس ہو رہا ہے کہ ہماری کاوشیں بارآور ثابت ہو رہی ہیں، دنیا نے جس طرح مقبوضہ جموں و کشمیر کی گھمبیر صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا وہ غیر معمولی ہے۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ سول سوسائٹی، ہیومن رائٹس تنظیموں اور بین الاقوامی میڈیا نے ہندوستان کی جانب سے مقبوضہ جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر شدید تحفظات اور تشویش کا اظہار کیا ہے، کشمیر کی حمایت میں 58 ممالک کا مشترکہ بیان جاری ہونا انتہائی حوصلہ افزا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج ہندوستان کے سفاکانہ طرز عمل کے خلاف دنیا بھر میں آوازیں اٹھ رہی ہیں اور ہندوستان کے جھوٹے بیانیے کی قلعی کھل رہی ہے، یورپی یونین کی طرف سے بھی مثبت رد عمل سامنے آ رہا ہے اور اب کشمیر پہلی دفعہ یورپین پارلیمنٹ میں بطور ایجنڈا زیر بحث آئے گا۔

وزیرخارجہ نے بتایا کہ  رواں ماہ اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے اجلاس میں وزیر اعظم مقبوضہ جموں و کشمیر کے مظلوم انسانوں کے مقدمے کو دنیا بھر کے سامنے پیش کریں گے، وزیر اعظم  نے آج مظفرآباد میں ہندوستان سمیت دنیا بھر کو واضح اور دوٹوک پیغام دیا ہے کہ پاکستان اپنے کشمیری بھائیوں کو کسی صورت تنہا نہیں چھوڑے گا۔

عالمی برادری نے انسانیت پر تجارت کو ترجیح دی اس لیے کشمیرپر سخت ردعمل نہیں دیا، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ غیر ملکی ممالک کے لیے معیشت اور تجارت انسانوں سے زیادہ اہم ہے اسی وجہ سے عالمی برادری نے مقبوضہ کشمیر پر وہ ردعمل نہیں دیا جو دینا چاہیے تھا۔

روسی ٹی وی کو دیے گئے انٹرویو میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کا یہ حق ہے کہ وہ اس بات کا فیصلہ کریں کہ وہ بھارت کے ساتھ الحاق چاہتے ہیں، پاکستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں یا پھر آزاد ملک کی طرح رہنا چاہتے ہیں، ہم نے کشمیر کے لیے تین جنگیں لڑی ہیں، بھارت کے طاقت کے استعمال سے مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی نے زور پکڑا، اس وقت مقبوضہ کشمیر میں 9 لاکھ سے زائد قابض بھارتی فورسز تعینات ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگ آزادی چاہتے ہیں اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت ان کو حق خودارادیت ملنا چاہیے، بدقسمتی کے ساتھ بھارت کشمیریوں کو یہ حق دینے سے قاصر ہے، بھارت نے مقبوضہ کشمیر کا یکطرفہ طور پر فیصلہ کیا، بھارت مقبوضہ وادی کی جغرافیائی خدوخال بدلنا چاہتا ہے اور وادی کی مسلم اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنا چاہتا ہے تاہم بھارت کا یہ اقدام کشمیریوں کو قبول نہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ غیر ملکی ممالک کے لیے معیشت اور تجارت انسانوں سے زیادہ اہم ہے اسی وجہ سے عالمی برادری نے مقبوضہ کشمیر پر وہ ردعمل نہیں دیا جو دینا چاہیے تھا، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال شام سے بھی بدتر ہوسکتی ہے، بی جے پی کا ہندو قوم پرست نظریہ پورے بھارت میں عروج پر ہے، بی جے پی کا ایجنڈا انتخابات میں ہی واضح تھا۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مقبوضہ وادی میں بھارتی حکومت مسلمانوں کی نسل کشی کرنا چاہتی ہے، بھارتی اقدام اقوام متحدہ کی قراردادوں کے خلاف ہے، 2 ایٹمی ممالک کے درمیان چھڑنے والی جنگ خطے کے لیے شدید خطرہ ہوگی، اگر عالمی ممالک خاموش رہے تو وادی میں حالات مزید بگڑ جائیں گے۔

Google Analytics Alternative