قومی

فواد چوہدری کابیانہ ہی عمران خان کی اصل پالیسی ہے، بلاول بھٹو زرداری

رتو ڈیرو: چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری کا کہنا ہے کہ آزادی مارچ میں مولانا فضل الرحمان کے ساتھ ہیں اورحکومت کو جانا ہوگا۔

رتوڈیرو میں ایچ آئی وی ٹریٹمنٹ سپورٹ سینٹر کا افتتاح کرنے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری نے کہا کہ ایک سال میں سازش کے تحت بہت سے لوگ بے روزگارکیے گئے ہیں، فواد چوہدری کابیانہ ہی خان صاحب کی اصل پالیسی ہے۔ روزگارکی سہولت پیدا کرنے کے بجائے 400 اداروں کوبند کیا جارہا ہے جس سے مزید لوگ بے روزگارہوں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ پیپلزپارٹی مولانا فضل الرحمان کے ساتھ ہے حکومت کوجانا ہوگا، ہم ہمیشہ عوام دوست رہے ہیں اورعوام دوست رہیں گے۔

بلاول بھٹوزرداری کا کہنا تھا کہ لاڑکانہ کے ضمنی الیکشن میں (ن) لیگ ہماری حمایت کررہی ہے جس میں ہمارا مقابلہ جی ڈی اے سے ہے۔ پیپلزپارٹی چاہتی ہے کہ پاکستان میں آزاد اور شفاف الیکشن ہوں، لاڑکانہ میں دھاندلی نہ ہوئی تو جیت پیپلزپارٹی کی ہوگی۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ہمیں صحت سے متعلق شارٹ اورلانگ ٹرم پالیسی ترتیب دینی ہے، لوگوں کواسپتال لانےکیلیے ٹرانسپورٹ کابھی بندوبست کریں گے، رتو ڈیرومیں ایچ آئی وی سینٹربنادیا ہے، ہم چاہتے ہیں کہ یہ سینٹر ایک ماڈل بنے تاکہ باقی اسپتال بھی اس پر عمل کریں، ہم نے اپنے بچوں کوآگہی دینی ہے کہ ایچ آئی وی سے کیسے بچنا ہے۔

ہر سنگین جرم دہشت گردی کے زمرے میں نہیں آتا،چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ ہر سنگین جرم دہشت گردی کے زمرے میں نہیں آتا۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے دہشت گردی کے مجرم کی عمر قید کے خلاف اپیل کی سماعت کی۔ عدالت عظمیٰ نے سماعت کے بعد دہشت گردی کے مجرم کالے خان کورہا کر دیا۔

کالے خان نے عدالتی احاطہ میں اپنے مخالف غلام محمد کو قتل کیا تھا۔ اسے ٹرائل کورٹ نے سزائے موت اور ہائیکورٹ نے عمر قید کی سزا سنائی تھی جس کے خلاف اس نے سپریم کورٹ میں اپیل کی تھی۔

چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے ریمارکس دیے کہ اس کیس میں قتل ذاتی دشمنی کی بنا پر ہوا، ہر سنگین جرم دہشت گردی کے زمرے میں نہیں آتا، دہشت گردی کی تعریف پر اس ماہ فیصلہ دینگے، جس کے بعد  بہت سے ابہام دور ہو جائیں گے۔

وزیراعظم کی شاہ سلمان سے ملاقات، سعودی ایران مذاکرات پر بات چیت

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کی سعودی فرمانروا شاہ سلمان سے ملاقات ہوئی جس میں سعودی عرب اور ایران کے درمیان حالیہ کشیدگی کم کرنے اور مذاکرات کی راہ اختیار کرنے پر بات چیت ہوئی۔

وزیراعظم عمران خان  مختصر دورے پر ریاض پہنچے جہاں ان کی سعودی فرمانروا شاہ سلمان سے ملاقات ہوئی۔ ان کے ہمراہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، ڈی جی آئی ایس آئی، معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانیز سید ذوالفقار عباس بخاری اور دیگر سینئر افسران شریک تھے۔

ملاقات میں دونوں رہنماوٴں نے دو طرفہ تعلقات، خطے میں امن و امان اور عالمی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے علاقائی امن و استحکام کی خاطر خطے میں اختلافات اور تنازعات کے سیاسی اور سفارت کاری کے ذریعے حل پر زور دیا  جب کہ وزیراعظم نے شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کو مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال اور بھارت کے پانچ اگست کے جابرانہ اقدام سے بھی آگاہ کیا۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے ملاقات

بعدازاں وزیراعظم نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے ملاقات کی اور جس میں ایران کے سپریم لیڈر اور صدر حسن روحانی سے ملاقاتوں میں آنے والی تجاویز پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ملاقات کے دوران خطے میں کشیدگی کے خاتمے کے لیے اقدامات پر بات ہوئی ساتھ ہی وزیر اعظم نے کشمیر کے معاملے پر بھی بات چیت کی۔

وزیر اعظم مدینہ منورہ روانہ

ملاقاتوں کے بعد وزیراعظم عمران خان وفد روضہ رسولﷺ پر حاضری کے لیے مدینہ منورہ روانہ ہوگئے۔

کراچی کے سابق پولیس چیف شاہد حیات انتقال کرگئے

کراچی: کراچی کے سابق پولیس چیف شاہد حیات طویل علالت کے باعث انتقال کرگئے۔

کراچی کے سابق پولیس چیف شاہد حیات طویل علالت کے باعث کراچی کے نجی اسپتال میں انتقال کرگئے، وہ کینسر کے مرض میں مبتلا تھے اور نجی اسپتال میں زیر علاج تھے۔

شاہد حیات کی نماز جنازہ کل پولیس ہیڈ کوارٹرز میں ادا کی جائے گی جب کہ تدفین کے لیے میت ان کے آبائی علاقے ڈیرہ اسماعیل خان لے جائی جائے گی۔

شاہد حیات نے بطور کراچی پولیس چیف ذمہ داریاں نبھائیں اور وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف ائی اے) میں بھی بطور ڈائریکٹر خدمات سر انجام دیں جب کہ ایڈیشنل آئی جی موٹر وے پولیس اور ڈپٹی انسپکٹر جنرل سی آئی ڈی کے عہدے پر بھی فائز رہے۔

400 محکمے بند کررہے ہیں لوگ نوکریوں کیلیے حکومت کی طرف نہ دیکھیں، فواد چوہدری

اسلام آباد: وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت 400 محکمے بند کررہی ہے لوگ نوکریوں کے لیے حکومت کی جانب نہ دیکھیں۔

اسلام آباد میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ نوکریاں حکومت نہیں نجی سیکٹر دیتا ہے یہ نہیں کہ ہر شخص سرکاری نوکری ڈھونڈے ، حکومت تو 400 محکمے ختم کررہی ہے مگر لوگوں کا اس بات پر زور ہے کہ حکومت نوکریاں دے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ یہ 70 کی دہائی کی سوچ تھی کہ نوکریوں کے لیے حکومت کی طرف دیکھا جائے، اب نجی شعبہ نوکریاں دیتا ہے، حکومت کی ذمہ داری ایسا ماحول پیدا کرنا ہے جہاں لوگوں کو روزگار میسر ہوں۔

بعدازاں ٹویٹر پر اپنے بیان کی وضاحت کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ’ کہا تھا کہ نوکریاں حکومت نہیں پرائیویٹ سیکٹر دیتا ہے، حکومت نے ماحول پیدا کرنا ہے جہاں نوکریاں ہوں، یہ نہیں کہ ہر شخص سرکاری نوکری ڈھونڈے‘۔

ہانگ کانگ کی کمپنی کا پاکستان میں 37 ارب روپے کی سرمایہ کاری کا اعلان

کراچی: ہانگ کانگ کی کمپنی ہوچی سن پورٹ ہولڈنگز نے کراچی پورٹ پر 24 کروڑ ڈالر (37 ارب 45 کروڑ 20 لاکھ روپے) کی سرمایہ کاری کا اعلان کیا ہے وزیر اعظم عمران خان نے کمپنی کے اقدام کا خیر مقدم کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان سے منگل کو ہوچی سن پورٹ ہولڈنگز کے ایم ڈی ارک لپ کی سربراہی میں ایک وفد نے ملاقات کی جس میں وفاقی وزیر بحری امورعلی  زیدی، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، معاون خصوصی ذوالفقار بخاری، سفیر برائے بیرونی سرمایہ کاری علی جہانگیر صدیقی، چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ زبیر حیدر گیلانی اور دیگر حکام موجود تھے۔

ہوچی سن پورٹ ہولڈنگز گروپ کے ایم ڈی ارک اپ نے وزیراعظم کو بتایا کہ اس سرمایہ کاری سے کراچی پورٹ پر نئے کنٹینر ٹرمینل کی استعداد میں اضافہ ہوگا، مذکورہ تازہ سرمایہ کاری سے ہماری پاکستان میں سرمایہ کاری کی مالیت ایک ارب ڈالر تک پہنچ جائے گی۔

وزیراعظم کو بتایا گیا کہ اس سرمایہ کاری سے ہوچی سن میں ملازمین کی تعداد میں بھی 3 ہزار تک اضافہ ہوگا۔ ملاقات کے دوران وزیر اعظم کو ہوچی سن پورٹ ہولڈنگز کی ترقی، اس کی پیرنٹ کمپنی سی کے ہوچی سن ہولڈنگز اور پاکستان کی اقتصادی ترقی کے حوالے سے گروپ کے کردار سے بھی آگاہ کیا گیا۔

مزید براں وزیر اعظم کو کراچی کی بندرگاہ کی ترقی کے ذریعے اسے ایشیاء میں تجارت کا مرکز بنانے کے حوالے سے تعاون کی تفصیلات بتائی گئیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے کمپنی کی جانب سے پاکستان میں سرمایہ کاری اور پاکستان کی اقتصادی خوشحالی کے لیے اس کے عزم کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ حکومت سرمایہ کاری کے سلسلے میں ہر ممکن سہولیات فراہم کرے گی اور کاروبار کو آسان بنانے پر بھر پور توجہ دے رہی ہے جس سے ملک میں اقتصادی ترقی اور روزگار کے مواقع بڑھیں گے۔

اس موقع پر علی جہانگیر صدیقی نے کہا کہ کرنسی کی قدر اور برآمدات میں اضافے کے نتیجے میں کنٹینر ٹرمینلز کی استعداد بڑھانے کی ضرورت ہے تاکہ ملک کے برآمدی مسابقت میں مدد مل سکے اور کراچی پورٹ ٹرسٹ اور قومی خزانے کے لیے زیادہ ریونیو حاصل ہوگا۔

واضع رہے کہ ہوچی سن پورٹ ہولڈنگز دنیا کی سب سے بڑی پورٹ کمپنی ہے جس کے 30 ہزار سے زائد ملازمین ہیں اور یہ کمپنی ایشیاء، مشرق وسطیٰ، افریقا، یورپ، امریکا اور آسٹریلیا سمیت 27 ممالک میں 52 بندر گاہوں اور ٹرمینلز پرخدمات انجام دے رہی ہے۔

وزیراعظم اور صدر سے برطانوی شاہی جوڑے کی ملاقات

اسلام آباد: برطانوی شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن نے وفاقی دارالحکومت میں مصروف دن گزارا اور اہم شخصیات سے ملاقاتیں کیں جبکہ بہت سے مقامات کے دورے کیے۔

شہزادہ ولیم اور شہزادی کیٹ مڈلٹن نے ایوان صدر میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم ہاؤس میں عمران خان سے ملاقات کی۔ شاہی جوڑے نے حکومت کے موسمیاتی تبدیلی اور غربت کے خاتمے کے اقدامات کی تعریف کی۔

شاہی جوڑے نے اسلام آباد میں سرکاری اسکول کا بھی دورہ کیا۔ پرنس ولیم اور ان کی اہلیہ کلاسز میں گئے، بچوں سے ملاقات کی اور اساتذہ سے مصافحہ کیا۔  شاہی جوڑا الگ الگ میزوں پر بچوں کے ساتھ بیٹھ گیا اور ان میں گھل مل گیا۔ انہوں نے بچوں سے مزے مزے کی باتیں کیں اور سبق بھی سنا۔

برطانوی شاہی جوڑے نے مارگلہ ہلز میں ندی کی سیر کی اور حکام نے انہیں مارگلہ نیشنل پارک پر بریفنگ بھی دی۔ شاہی جوڑا مارگلہ نیشنل پارک کی خوبصورتی سے بہت متاثر ہوا۔ شاہی جوڑے نے ٹریل فائیو کا بھی دورہ کیا جبکہ ماحولیاتی تحفظ سے متعلق تقریب میں بھی شرکت کی۔

گزشتہ روزبرطانوی شہزادہ ولیم اورشہزادی کیٹ مڈلٹن 5 روزہ دورے پر پاکستان پہنچے ہیں اور 18 اکتوبر کو وطن واپس روانہ ہوں گے۔ برطانوی شاہی جوڑا لاہور اور چترال کا دورہ بھی کریں گے۔ گزشتہ 10 سال میں کسی برطانوی شاہی جوڑے کا یہ پہلا دورہ پاکستان ہے۔

دریں اثناء شاہی جوڑا پاکستان کے روایتی سجے سجائے رکشا میں بیٹھ کر پاکستان مونومنٹ پہنچا جہاں سے انہوں نے برطانوی ہائی کمیشن میں ہونے والی تقریب میں شرکت کی۔ شہزادہ ولیم نے شیروانی اور کیٹ مڈلٹن نے ہرے رنگ کی لانگ فراک پہنی ہوئی تھی۔

پولیس تشدد سے جاں بحق صلاح الدین کے والد نے پولیس کو معاف کردیا

گوجرانوالا: پولیس تشدد سے جاں بحق ہونے والے صلاح الدین کے والد نے رب کی رضا کے لیے پولیس کو معاف کردیا۔

ڈپٹی کمشنر کی موجودگی میں صلاح الدین کے والد نے گورائی گاؤں کی مسجد میں کھڑے ہوئے پولیس اہلکاروں کو اپنے بیٹے کا خون معاف کرنے کا اعلان کیا۔ والد محمد افضال نے کہا کہ وہ رب کی رضا کی خاطر پولیس کو بیٹے کا خون معاف کررہے ہیں۔

واضح رہے کہ اے ٹی ایم کر اس میں سے کارڈ نکالنے کے الزام میں رحیم یار خان پولیس نے ملزم صلاح الدین کو گرفتار کیا تھا لیکن پولیس تشدد کی وجہ سے وہ حراست میں ہی دم توڑ گیا تھا۔ پولیس نے اپنی رپورٹ میں صلاح الدین کی ہلاکت کو طبعی موت قرار دیا تھا جب کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں موت کہ وجہ تشدد قرار دی گئی تھی۔

Google Analytics Alternative